مزید خبریں

گلگت بلتستان کیلئے صوبے کا درجہ 

پاکستانی حکام نے قانونی مسودہ تیار کرلیا

اسلام آباد//پاکستانی حکام نے دفاعی اہمیت کے حامل گلگت اور بلتستان کوصوبائی درجہ دیئے جانے کے قانون کوحتمی شکل دی ہے۔بھارت نے پاکستان کو مطلع کیا ہے کہ گلگت بلتستان سمیت جموں کشمیراورلداخ مکمل طور قانونی اورناقابل تنسیخ الحاق کی رو سے بھارت کااٹوٹ حصہ ہےں۔بھارت کا ماننا ہے کہ حکومت پاکستان اور اس کی عدالت کااس کے جبری زیر تسلط علاقہ پر مداخلت کاکوئی حق نہیں ہے۔ اخبار’ڈان‘ کے مطابق مجوزہ قانون کے مطابق گلگت بلتستان کے سپریم اپیلیٹ کورٹ کو ختم کیاجائے گااور خطے کے الیکشن کمیشن کو پاکستان کے الیکسن کمیشن میں ضم کیاجائے گا۔وزارت قانون کے ذرائع کے مطابق بل جسے26ویں آئینی ترمیمی بل کا نام دیاگیا ہے ،وزیراعظم عمران خان کو بھیج دی گئی ہے ۔ جولائی کے پہلے ہفتے میں وزیراعظم نے وفاقی وزیر بیرسٹرفارق نسیم کو قانون تیار کرنے کی ہدایت دی تھی۔ذرائع کے مطابق بل کا مسودہ پاکستان کے آئین،بین الاقوامی قوانین ،اقوام متحدہ کے جموں کشمیرمیں رائے شماری کرائے جانے کی قراردادوں اورآئینی قوانین اور مقامی قوانین کابغور مطالعہ کرنے کے بعدتیار کیاگیا ہے ۔ذرائع کے مطابق اس سلسلے میں پاکستانی زیرانتظام کشمیر ،گلگت بلتستان کی حکومتوں سے مشورہ کیاگیا ہے اورمجوزہ آئینی ترامیم کے بارے میں ان سے مشورہ لیاگیا ۔مجوزہ قانون کے مطابق خطے کے نازک ہونے کی وجہ سے اِسے صوبے کا درجہ دیاجاسکے گا اور اس کے لئے آئین کی دفعہ1میں ترمیم کرنی ہوگی جوصوبوں اور علاقوں سے متعلق ہے۔
 

ریاستی درجے کے حصول کےلئے لیہہ اور کرگل متحد

مطالبات آگے لے جانے کےلئے مشترکہ کمیٹی بنائیں گے:اصغر کربلائی

لیہہ//مرکزی زیرانتظام علاقہ قرار دیئے جانے کی دوسری سالگرہ سے بند روزقبل لداخ اور کرگل کے نمایندوں نے یکجا ہوکر خطے کو آئینی تحفظات سمیت مکمل ریاست کادرجہ دینے کا مطالبہ کیا ہے۔لیہہ کی ایپکس تنظیم پیپلزمومنٹ برائے6ویں شیڈول اور کرگل ڈیموکریٹک الائنس رہنمااس بات پر متفق ہوئے ہیں کہ خطے کےلئے دو لوک سبھا نشستیں اور دوراجیہ سبھا سیٹیں ہونی چاہیے اورایک ماہ کے اندر خطے کے10ہزار نوجوانوں کو نوکری فراہم کرنے کے اقدام کئے جانے چاہیے ۔ کرگل ڈیموکریٹک الائنس کے شریک چیئرمین اصغر علی کربلائی نے بتایا کہ یہ تاریخی اورسنہری موقعہ ہے اور ہم ایپکس باڈی کی دعوت پر یہاں (سنیچروار)پہنچے ہیں اورہم نے لداخ کےلئے مکمل ریاست کے درجے سمیت چار نکات پر تفصیلی بحث ومباحثہ کیا۔کربلائی جن کے ہمراہ کرگل ڈیموکریٹک الائنس اور ایپکس باڈی کے ممبران جن میں اس کے رہنمااور سابق ممبر پارلیمان تھپسن چیوانگ بھی شامل ہیں،نے کہاہم اپنی مانگوں کو آگے لیجانے کےلئے جوبھی ضروری ہو،کرنے کےلئے تیار ہیں۔ہم ایک مشترکہ کمیٹی بنائیں گے جومرکزی وزارت داخلہ کے سامنے ہمارے معاملات اُجاگرکریں گی۔ 
 
 

بادل پھٹنے سے ہوئے نقصان

ڈی ڈی سی چیئرپرسن گاندربل کا متاثرہ علاقوں کا دورہ

گاندربل//بادل پھٹنے سے ہوئے نقصان کا جائزہ لینے کےلئے ضلع ترقیاتی کونسل چیئرپرسن نزہت اشفاق نے اتوار کو متاثرہ علاقوں کا دورہ کیا۔ضلع کے اعلیٰ حکام کے ہمراہ ڈی ڈی سی چیئرپرسن نے نونر،چاپرگنڈ،اور دیگر پائین علاقوں کا دورہ کیا۔انہوں نے متاثرہ کنبوں کے ساتھ یکجہتی کااظہار کیااورانہیں یقین دلایا کہ انکی بازآباد کاری کےلئے ہرممکن اقدام کیاجائے گاتاکہ وہ حالات کا مقابلہ کرسکیں ۔انہوں نے محکمہ جل شکتی اور بجلی پر زوردیا کہ وہ متاثرہ علاقوں میں پینے کے صاف پانی اور بجلی کی سپائی بحال کرنے کےلئے فوری طور اقدام کریں ۔آبپاشی اور سیلابوں کی روکتھام کے محکمے کے چیف انجینئر سے کہاگیا کہ وہ نقصان زدہ ندی نالوں کی مرمت کا کام فوری طور ہاتھ میں لیں اوراس کے علاوہ نجی اور عوامی املاک کومزید نقصان سے بچانے کےلئے فوری طورتحفظاتی اقدام کریں۔
 
 

ہندوارہ محکمہ باغبانی کی جانب سے بیداری مہم پروگرام

سرینگر//شمالی کشمیر کے چوگل ہندوارہ میںہفتہ کے روز ایک باغبانی محکمہ کی جانب سے بیداری کیمپ کا اہتمام کیا گیا جس میں سینکڑوں زمینداروںاور میوہ کاشتکاروں نے شرکت کی ۔ انہیں سیب اوراخروٹ کے درختوں کی حفاظت سے متعلق آگاہ کیا گیا۔ پروگرام میں محکمہ کے ایچ او ڈی چوگل بلال احمد کے علاوہ دیگر عہدیداروں نے پروگرام میں آئے لوگوں کو باغبانی کے حوالے سے معلومات فراہم کیں۔ اس کے علاوہ محکمہ کے فیلڈ اسٹاف نے بھی پروگرام میں حصہ لیا۔
 

ستورہ ترال میں مواصلاتی نظام بیکار

سرینگر////ترال کے ستورہ نامی گاﺅں میںموبائل نیٹ ورک کی عدم موجود گی سے لوگوں کومشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ گاﺅں میں ایک ٹاور بھی نصب ہے جس کو استعمال میں لا کر لوگوں کے مسائل کو حل کیا جا سکتا ہے ۔انہوں نے بتایا کہ چند سال قبل بستی میںائیر سیل نامی موبائل کمپنی کی سروس ٹھیک مل رہی تھی اوراس کے بند ہونے کے بعد لوگوں کو کوئی بہتر موبائل نیٹ ورک نصیب نہیں ہورہاہے ۔انہوں نے اس سلسلے میں مواصلاتی کمپنی سے مداخلت کی اپیل کی ہے۔ 
 

انجمن شرعی شیعیان صوبائی انتظامیہ سے برہم

کہا مشاورت کشمیر کی شیعہ برادری کے ساتھ ایک بھونڈا مذاق

سرینگر// انجمن شرعی شیعیان نے محرم تقریبات کے سلسلے میں صوبائی کمشنر کشمیر کی طرف سے بلائے گئے اجلاس میں شیعیان کشمیر کی نمائندہ دینی تنظیموں کو حاشیہ پر رکھکر’فرضی‘ جماعتوں کے ساتھ صلاح مشورے کو مضحکہ خیز اور بے معنی قرار دیا گیا۔انہوں نے صوبائی انتظامیہ کے اس رویہ پر شدید ردعمل کا اظہار کیا ۔ایک بیان میںانجمن کے صدرآغا سید حسن نے کہا کہ چند فرضی گروپوں جن کا زمینی سطح پر کوئی وجود اور اعتباریت نہیں ہے،کے ساتھ محرم تقریبات کے سلسلے میں مشاورت کشمیر کی شیعہ برادری کے ساتھ ایک بھونڈا مذاق ہے۔ بیان میں واضح کیا گیا کہ اگر صوبائی انتظامیہ کسی پالیسی کے تحت اس طرح کا طرز عمل اختیار کر رہی ہے تو ہم واضح کرنا چاہتے ہیں کہ ایسا کرنے سے شیعیان کشمیر کی مسلمہ نمائندہ دینی و سیاسی جماعتوں کی سیاسی ساکھ اور اعتباریت و اہمیت متاثر نہیں ہو سکتی۔ آغا حسن نے کہا کہ جن فرضی گروپوں کا محرم جلوسوں کے انتظام و اہتمام کے ساتھ دور کا بھی تعلق نہیں انکے ساتھ مشاورت کرنا کسی بھی طور پر مناسب سوچ و اپروچ نہیں۔انہوں نے کہاکہ انجمن شرعی شیعیان اور دیگر معروف انجمنیں جلوس عاشورہ پر 30سال سے عائد حکومتی قدغن کے خلاف صدائے احتجاج بلند کرتے ہوئے پولیس تشدد کا سامنا اور گرفتاریاں پیش کرتی رہی ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ جن جماعتوں کا اس احتجاجی مہم میں کہیں کوئی رول نہیں انہیں جلوس عاشورہ سے متعلق فیصلہ اور مشاورت کا کوئی اختیار نہیں۔انوں نے اس بات پر شدید رد عمل کا اظہار کیاکہ حکومتی لسٹ میں محرم جلوسوں سے متعلق مقام و منزل اور تاریخ کا تذکرہ کیا گیا ہے اس کا حقیقت حال سے کوئی تعلق نہیں ۔انجمن صدر نے جلوس عاشورہ ،مرکزی جامع مسجد سرینگر میں جمعہ اور لالچوک سرینگر میں روایتی جلوس میلا دالنبی ؓ پر عرصہ دراز سے قدغن کو اہل کشمیر کے دینی جذبات سے جڑے اہم معاملات قرار دیتے ہوئے کہا کہ ان پابندیوں کو فوری طور پرہٹایاجائے۔انہوںنے کہا کہ تاریخی جلوس عاشو رہ زمانہ قدیم سے اپنے روایتی مقام اور راستے آبی گزر سرینگر سے برآمد ہو کر علی پارک جڈی بل سرینگر میں اختتام پذیر ہوتا ہے لیکن اس جلوس کو صرف لالچوک تک محدود رکھنے کی کوشش کی جا رہی ہے تاکہ اس کی شان واہمیت کو نقصان پہنچایا جا سکے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اگر حکومت جلوس پر پابندی ہٹانے کا فیصلہ کرتی ہے اور اپنے روایتی مقام اورمنزل تک لے جانے کی اجازت دی گئی تو انجمن شرعی شیعیان جلوس عاشورہ میں شامل ہو گی ۔بیان میں مزید کہا گیا کہ انجمن شرعی شیعیان اس امید کا اظہار کرتی ہے کہ جلوس عاشورہ کے روایتی راستے کے ارد گرد رہنے والے عوام اور دینی معززین بالخصوص میر واعظ کشمیر مولوی محمد عمر فاروق اور مفتی اعظم مفتی ناصر الاسلام حسب روایت قدیم اپنی گرانقدر خدمات اور تعاون شامل حال رکھیں گے۔ 
 

معروف تاجر شوکت چودھری کو صدمہ

ہوٹل اینڈ ریسٹورنٹ ایسوسی ایشن کی تعزیت

سرینگر//جموں کشمیر ہوٹل اینڈ ریسٹورنٹ ایسوسی ایشن نے ایسوسی ایشن کے صدر شوکت چودھری کی ایک قریبی رشتہ دارکے انتقال پر دکھ اور افسوس کااظہار کیا ہے ۔ ایسوسی ایشن نے سوگوار کنبہ بالخصوص شوکت چودھری کے ساتھ یکجہتی اور تعزیت کااظہار کیا ہے ۔ ایسوسی ایشن کے ممبران منظور پختون سیکریٹری جنرل ایسوسی ایشن کی قیادت میں وفد نے سوگوار کنبے کے گھر جاکر تعزیت پرسی کی اور مرحومہ کے حق میں دعائے مغفرت کی ۔بیان کے مطابق چودھری ہاﺅس کرسو راجباغ سرینگر میں تعزیت صرف تین دن تک تعزیت رہے گی۔
 

شوپیان میں5گائیںچرالی گئیں

شاہد ٹاک
 شوپیان//جنوبی کشمیر میں مویشی چوری کے واقعات میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے جس کی وجہ سے لوگوں میں سخت تشویش کی لہر پائی جاتی ہے ۔ شوپیان میں گزشتہ ہفتہ کے دوران مویشی چوری کے کئی واقعات رونما ہوئے اور لاکھوں روپے کے مویشی چرالئے گئے۔ 31جولائی اوریکم اگست کی درمیانی شب کوچوروں نے ہیددگنڈ زینہ پورہ میں محمد ایوب ملک، فاروق احمد ریشی،ہلال احمد ملک،نثار احمد اور غلام حسن ملک کے گاﺅ خانوں سے پانچ گائیں چرا لیں ۔ لوگوں نے انتظامیہ اور پولیس سے مو¿ثر اقدامات کی اپیل کی ہے۔
 
 

جمعیت ہمدانیہ کا غلام محی الدین نقیب کے ساتھ تعزیت 

سرینگر// جمعیت ہمدانیہ کے صدر مولانا ریاض احمد ہمدانی نے مولوی غلام محی الدین نقیب کے برادر اکبر عبدالاحد نقیب کے انتقال پر گہرے صدمے کا اظہا ر کیاہے ۔انہوں نے سوگوارکنبے کے ساتھ تعزیت کرتے ہوئے مرحوم کی جنت نشینی کے لئے دعا کی ۔اس سلسلے میںتنظیم کے ایک وفد نے فاتحہ خوانی میںشرکت کی ۔
 

ایوان ادب ،شہنشاہ پیلس سرینگر میں مظفر ایرج کو خرج عقیدت پیش 

زبیر قریشی 
سرینگر//نامور ادیب اور شاعر مظفر ایرج کی یاد میں اتوار کو ایوان ادب ہوٹل شہنشاہ پیلس سرینگر میں ایک نشست کا اہتمام کیا گیا جس دوران مظفر ایرج کو خراج عقیدت پیش کیا گیا۔ اس نشست کا اہتمام نگینہ انٹرنیشنل نے کیا تھا۔ تقریب کی صدارت نامور ادیب پرفیسر محمد زماں آزردہ نے کی جبکہ ایوان صدارت میں، نگینہ انٹرنیشنل کے چیف ایڈیٹر وحشی سعید بھی موجود تھے۔ آغاز میں نامور عالم دین مولانا شوکت حسین کینگ نے مظفر ایرج کے ساتھ ساتھ نامور فکشن نگار نور شاہ کے برادر زادہ عمران حسین شاہ، وحشی سعید کی والدہ نسبتی اور اختر معراج کی اہلیہ کے ایصال ثواب کے لئے دعائے مغفرت کی۔ جس کے بعد معروف ادیب و شاعر شبیب رضوی کا تحریر کردہ نزرانہ عقیدت، ڈاکٹر مشتاق حیدر نے سامعین کی نذر کیا۔ نشست کے دوران نور شاہ کی طرف سے ایک قرار داد پیش کی گئی جس میں انہوں نے مظفر ایرج کے آخری مجموعہ کے بعد کے کلام کو محفوظ کرنے کے لئے ایک کمیٹی تشکیل دینے پر زور دیا جس کی سبھی مقررین و حاضرین نے تاعید کی۔اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے سبھی مقررین نے مظفر ایرج کی خدمات کو شاندار الفاظ میں یاد کرتے ہوئے اسے ایک ایسے خلا سے تعبیر کیا جو کبھی پر نہیں کیا جا سکتا۔ان مقررین میں، پرفیسر محمد زماں آزردہ، وحشی سعید، رخسانہ جبین، خالد حسین، محمد امین بٹ اور محمد سلیم سالک قابل ذکر ہیں۔اس موقعے پر مظفر ایرج کے فرزند ارجمندمحمد انور نقشبندی اور داماد خالد نقشبندی بھی موجود تھے۔ جنہوں نے منجملہ اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے نورشاہ کی طرف سے پیش کی گئی قرارداد کو پایہ تکمیل تک پہنچانے کے لئے اپنی خدمات وقف رکھنے کا یقین دلایا۔
 
 

ناظم اطلاعات کا تیج کرشن کی والدہ کے اِنتقال پراظہار تعزیت

سرینگر//ناظم اِطلاعات و تعلقات عامہ راہل پانڈے نے اتوار کوڈائریکٹوریٹ کے ایک ملازم تیج کرشن کی والدہ کے اِنتقال پر گہرے دُکھ کا اِظہار کیا۔اَپنے تعزیتی پیغام میں ناظم اطلاعات نے کہا کہ یہ ایک ناقابل تلافی نقصان ہے جسے لفظوں میں بیان نہیں کیا جاسکتا ۔اُنہوں نے کہا کہ زمین پر کوئی بھی ایسا نہیں ہے جس کو ماں کی محبت ، دیکھ بھال، شفقت اور بے لوث پیار نہ ملا ہو۔ ماں پیارومحبت اور ممتا کا خزانہ ہے۔ناظم اطلاعات نے مرحومہ کی روح کے اَبدی اور دائمی سکون کے لئے دعا کی ۔ اُنہوں نے سوگوار کنبے کے ساتھ یکجہتی کا اِظہار کرتے ہوئے غم اور دُکھ کی اِس گھڑی میں ان کے لئے ہمت اور صبر کی دعا کی۔اِس موقعہ پر ڈپٹی ڈائریکٹر پبلک ریلیشنز مردھو سلاتھیہ نے سوگوار کنبے کو یہ صدمہ عظیم برداشت کرنے کے لئے ہمت اور صبروجمیل کی دعا کی۔
 

کلاروس میں آگ ،رہائشی مکان خاکستر 

اشرف چراغ 
کپوارہ // شمالی ضلع کپوارہ کے کلاروس علاقہ میں آگ کی ایک واردات میں ایک رہائشی مکان خاکستر ہوگیا تاہم فائر برگیڈئر اور فوج نے بروقت کارروائی کرکے باقی آبادی کو بچا لیا۔ اتوار کی سہ پہر کو تھین کلاروس میں محمد اکبر کے مکان میں اچانک آگ نمودار ہوئی جس نے فوری طور مکان کو اپنی لپیٹ میں لیا۔آگ کے شعلے بھڑکنے کے ساتھ ہی فوج اور فائر ٹینڈر جائے واردات پر پہنچ گئے اور بچاو¿ کارروائی شروع کی تاہم رہائشی مکان آگ کی اس واردات میں خاکستر ہوگئی۔فوج اور فائرٹینڈر نے فوری کارروائی کر کے باقی آبادی کو بچا لیا۔
 

پریس کلب کے نائب صدر کے والد فوت

انجمن اردو صحافت کا اظہار تعزیت

سرینگر//وادی کے نوجوان صحافی ،انگریزی روز نامہ کشمیر ریڈر کے مدیر معاون اور ایوان صحافت کشمیر کے نائب صدرمعظم محمد کے والد رحمت حق ہوگئے۔اس سلسلے میں ا نجمن اردو صحافت جموںوکشمیر کی مجلس عاملہ کے ممبران کا ایک تعزیتی ورچول اجلاس منعقد ہوا۔صدر انجمن ریاض ملک کی زیر صدارت اس تعزیتی اجلاس میں جنرل سیکریٹری امتیاز احمد خان،نائب صدر عشرت بٹ،آرگنائزر فردوس رحمان،ترجمان اعلیٰ زاہد مشتاق،معاون ترجمان وسوشل میڈیا انچارج شوکت ساحل،صوبائی صدر کشمیر بلال فرقانی،صوبائی صدر جموں اشتیاق بھلیسی،صدارتی مشیر ناظم نذیر،انجمن کے سینئرا راکین منوہرلالگامی ،شبیر احمد ملک اور انچارچ مالیات اظہر رفیقی نے شرکت کی۔تعزیتی اجلاس کے دوران نوجوان صحافی معظم محمد کے والد کے انتقال پر دکھ اور رنج کا اظہار کیا گیا اور نوجوان صحافی سمیت جملہ غمزدگان کے ساتھ تعزیت وہمدردی کا اظہار کیا گیا۔ورچول اجلاس کے آخر میں مرحوم کے حق میں دعائے مغفرت کی گئی اور دعا کی گئی کہ اللہ تعالیٰ مرحوم کو اپنے جوار رحمت میں جگہ دے اور جملہ سوگواراں کو یہ صدمہ برداشت کرنے کی توفیق وصلاحیت عطا فرمائے۔ادھر ادارہ سی این آئی نے بھی مرحوم کے انتقال پر گہرے صدمے کا اظہار کرتے ہوئے دکھ زدہ خاندان سے تعزیت پرسی کی ہے ۔جبکہ کشمیر پریس کلب نے بھی وادی کے نوجوان صحافی ،انگریزی روز نامہ کشمیر ریڈر کے مدیر معاون اور ایوان صحافت کشمیر کے نائب صدرمعظم محمد کے والد رحمت حق ہونے پر گہرے رنج و غم کا اظہار کیا ہے۔