مزید خبریں

اننت ناگ میں افسران کی میٹنگ

اننت ناگ// ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر اننت ناگ غلام حسن شیخ نے عید میلاد النبیؐ کی تقریبات کے حوالے سے کئے جانے والے انتظامات پر تبادلہ خیال اور جائزہ لینے کے لئے افسران کے ایک اجلاس کی صدارت کی۔میٹنگ کے دوران ضروری اشیاء اور کھانے پینے کی اشیاء کی دستیابی اور ٹرانسپورٹ انتظامات ، ٹریفک مینجمنٹ ، زیارت شریفوں کی صفائی ، مساجد اور گلیوں ، ایمبولینس سروسز ، بجلی اور پانی کی فراہمی اور اسٹریٹ لائٹس کے مناسب کام پر تبادلہ خیال کیا گیا۔میلاد کی تقریبات کے دوران تمام شرکاء کی جانب سے کووڈ مناسب رویہ کی پاسداری کو یقینی بنانے پر خصوصی زور دیا گیا۔اے ڈی سی نے مرکزی زیارت شریف اور مساجد میں پانی اور بجلی کی فراہمی ، مناسب صفائی اور صفائی اور ایمبولینس خدمات وغیرہ کی فراہمی کو یقینی بنانے پر زور دیا۔چیف میڈیکل آفیسر کو ہدایت دی گئی کہ وہ ایمبولینس سروس کو تیار حالت میں رکھیں اور اس بات کو یقینی بنائیں کہ اہم مذہبی مقامات پر ڈاکٹر اور پیرا میڈیکل سٹاف دستیاب ہو۔
 
 
 

بانڈی پورہ میں کئی وفود کو مرکزی وزیر سے ملنے کا موقع نہیں دیا گیا

عازم جان 
بانڈی پورہ//بانڈی پورہ منی سیکریٹریٹ میں بیشتر وفود کو مرکزی وزیر برائے سماجی انصاف وبہبود سے ملاقات کی اجازت نہیں دی گئی اور نہ میڈیا سے وابستہ افراد کوہی اجازت دی گئی۔ ٹریڈرس فیڈریشن بانڈی پورہ ،ٹرانسپورٹ ایسوسی ایشن ، ماہی گیر ایسوسی ایشن اورسماج کے دیگر شعبوںسے تعلق رکھنے والے وفود نے کہا ’’ ہم مرکزی وزیر برائے سماجی انصاف وبہبود سے مطالبات لیکر ملنے آئے تھے لیکن ضلع انتظامیہ بانڈی پورہ نے ملنے کی اجازت نہیں دی جس کی وجہ سے انہیںمایوس ہوکر واپس لوٹنا پڑا‘‘۔ادھرضلع میںمیڈیا سے وابستہ افرادنے بھی الزام لگایا ہے کہ انہیںبھی اجازت نہیں دی گئی ۔
 

بانڈی پورہ میں پرانے ہسپتال کے پاس گندگی کے ڈھیر

عازم جان 
بانڈی پورہ//بانڈی پورہ میں پرانا ضلع ہسپتال انتظامیہ کی نظروں سے اوجھل رہنے سے خستہ حالی کا منظر پیش کر رہا ہے۔ہسپتال کے بڑے گیٹ کے سامنے سڑک پر گندگی کے ڈھیر جمع ہونے سے لوگوں کا عبور ومرور دوبھر بن گیا ہے ۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ ضلع انتظامیہ بانڈی پورہ نے آزادی کا امرت مہااتسو کے عنوان سے پندرہ روز صفائی تقریب منعقد کرکے لوگوں کو ماحول صاف رکھنے کی نصیحت کررہی ہے اور بڑی بڑی تقریبات جاری ہیں لیکن اولڈ ہسپتال جو منی سیکریٹریٹ سے محض پانچ سو میٹر کی دوری پر واقع ہے ،سے گندگی کو نہیں ہٹایا جارہاہے۔ لوگوں نے بتایا کہ ضلع انتظامیہ نے مرکزی وزیر کے دورے پر بڑے پیمانے پر صفائی کی تھی لیکن گندگی کے اس ڈھیر کو نہیں ہٹایا۔لوگوں نے کہا کہ بانڈی پورہ کی جندرکول بھی گندگی سے بھری پڑی ہے۔ لوگوں نے ضلع انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ جندرکول اور دیگر جگہوں کی صفائی پر دھیان دیا جائے۔
 
 

یوم شہادت امام حسنؑ پر وادی بھر میں تقاریب

بڈگام اور حسن آباد میں سب سے بڑے اجتماعات

سرینگر// انجمن شرعی شیعیان کے زیر اہتمام وادی کے اطراف و اکناف میں یوم شہادت امام حسنؑ کے سلسلے میںخصوصی تقریبات کا انعقاد کیا گیا۔ مرکزی امام باڑہ بڈگام اورقدیم امام باڑہ حسن آباد میں سب سے بڑے اجتماعات منعقد ہوئے جہاں ہزاروں کی تعداد میں عقیدتمندوں نے شرکت کی ۔مرکزی امام باڑہ بڈگام میں آغا سید محمد عقیل اور حسن آباد میں آغا سید مجتبیٰ عباس نے خطاب کیا۔انجمن صدر  آغا سید حسن کئی ہفتوں سے جاری علالت کے باعث کسی بھی تقریب میں شرکت نہیں کرسکے ۔ آغا حسن نے ڈاکٹر بندرو اور دیگرمہلوکین کے لواحقین سے تعزیت کا اظہار کیا اور اس دلدوز سانحہ کی آزادانہ تحقیقات کا مطالبہ کیا۔ مٹن پہلگام میں مشہور مندر میں توڑ پھوڑ کے واقع پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے آغا حسن نے کہا کہ ہر مذہب کی عبادت گاہوں کا تقدس ایک مسلمہ حقیقت ہے۔انہوں نے کہا کہ ایسے واقعات صرف اور صرف کشمیر کے روایتی بھائی چارے اور رواداری کو نقصان پہنچانے کے لئے رونما کئے جا رہے ہیں ۔
 
 
 

ڈرین کی خستہ حالی،  ہمدانیہ کالو نی بمنہ میں لوگ پریشان

سرینگر //ہمدانیہ کالو نی بمنہ( سیکٹر(1 اے  میں ایک ڈرین کی خستہ حالی سے راہگیروں کیلئے ہمیشہ خطرہ بنا رہتا ہے ۔اسکول کے بچوں کو اسکول جانے میں نہایت مشکلات کا سامنا رہتا ہے لیکن انتظامیہ اور عوامی نمائندگان کی طرف سے اس ڈرین کی خستہ حالی کو دور کرنے کے لئے اب تک کوئی مثبت قدم نہیں کیا گیا جس کی وجہ سے یہاں کے لوگ کافی ناراض نظر آرہے ہیں۔لوگوں کا کہنا ہے کہ علاقہ میں چا ر سو گھروں کی آبادی ہے۔ مقامی لوگوںنے بتایا کہ سرینگر میونسپل کار پوریشن نے مین روڈ سے سیکٹرA تک اس ڈرین کی تعمیر کیلئے19 لاکھ اور65 ہزار روپے مالیت کی رقم کا منصوبہ تیار کیا ہے لیکن ابھی تک اس پر کام شروع نہیں کیا جارہاہے۔ انہوںنے کہا کہ یہ ڈرین گذ شتہ 20برسوں سے خستہ حا لت میں ہے اور اسکی کی خستہ حالی کا یہ عالم ہے کہ برسات کے دنوں میں اس سڑک سے گذرنا موت کو دعوت دینے کے مترادف ہے۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ مذکورہ علاقہ میں مکمل ڈرینیج سسٹم نہ ہونے سے پانی سڑکوں پر جمع ہو جاتا ہے۔لوگوں نے مزید کہا کہ معمولی بارش کے بعد بھی پانی سڑک کے اوپر بہنے لگتا ہے۔ جس کے بعد سڑک تالاب کی شکل اختیار کرتی ہے۔مقامی لوگوں نے ایل جی انتظامیہ سے اپیل کی کہ وہ علاقے میں اس جگہ پختہ ڈرنیج سسٹم تعمیر کریں جس سے لوگوں کو بار بار کی ان پریشانیوں سے نجات مل سکے۔
 
 

بینک آف انڈیا کا ’کسٹمر آؤٹ ریچ‘ پروگرام 

سرینگر// وادی کشمیر میں مین اسٹریم بینکنگ کو وسعت دینے کے لئے بینک آف انڈیا نے بدھ کے روز یہاں’کسٹمر آؤٹ ریچ‘ پروگرام کا اہتمام کیا۔بینک کے ایم ڈی اور سی ای او اے کے داس نے اس موقع پر بتایا کہ اس طرح کے پروگراموں کا مقصد بینک کاری کو لوگوں کی دہلیز تک پہنچانا ہے تاکہ بینک لوگوں کی معاشی بحالی کے لئے ایک شراکت دار کا رول ادا کر سکے ۔انہوں نے کہا کہ وادی میں بینک کاری کاروبار کے لئے وسیع پیمانے پر صلاحیتیں اور وسائل موجود ہیں جنہیں استعمال میں لانے کی ضرورت ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ بینک کی مختلف اسکیموں سے فائدہ اٹھا کر نہ صرف خطے کی سماجی و معاشی ترقی کو تیز تر کیا جاسکتا ہے بلکہ لوگوں کے معاشی حالات کو بھی بہتر بنایا جا سکتا ہے ۔موصوف سی ای او نے کہا کہ بینک اپنے صارفین کو معیاری سہولیات فراہم کرنے کی کوشش کرے گا اور وادی میں بینک آف انڈیا کا ایک اور براچ کھولا جائے گا۔انہوں نے مختلف بینک اسکیموں کے تحت قرضے حاصل کرنے والے مستحقین میں منظوری کی سرٹیفکیٹس بھی تقسیم کیں۔اس موقع پر فیلڈ منیجر ارن کمار جین، جنرل منیجر اشوک پاٹھک، زونل منیجر واسو دیو اور برانچ منیجر زاہد منصور بھی موجود تھے ۔یو این آئی
 
 

کولگام میں بلاک دیوس کا انعقاد

کولگام//ضلع انتظامیہ کولگام نے عوامی مسائل ، شکایات اور مطالبات کا جائزہ لینے کیلئے ضلع کے 3 بلاکوں پر میگا بلاک دیوس کا اہتمام کیا۔بلاک دیوس کے دوران ضلع کے پہلو ، کولگام اور ڈی کے مارگ بلاکوں میں تقریبات کا اہتمام کیا گیا اور افسران ، لائن محکموں کے افسران نے تینوں مقامات پر عام لوگوں کے مسائل ، شکایات اور مطالبات کو ان کے بروقت ازالے کے لیے سنا۔دریں اثناء عوامی شکایات اور مطالبات کا پہلے سے جائزہ لینے کیلئے ڈپٹی کمشنر کولگام ڈاکٹر بلال محی الدین بٹ کولگام میں دستیاب رہے جہاں انہوں نے عوام کی بات سنی۔تمام علاقوں بشمول قیموہ ، فرصل ، کولگام ، کتراسو اور دیگر علاقوں کے لوگوں نے ڈپٹی کمشنر کو مختلف مسائل سے آگاہ کیا اور اپنے مطالبات کے ازالے کے لیے پیش کیا۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ڈی سی نے کہا کہ پروگرام کا بنیادی مقصد لوگوں کے مسائل اور شکایات کو کم کرنا ہے۔نوجوانوں کے ایک وفد سے خطاب کرتے ہوئے انہوںنے بے روزگار نوجوانوں پر زور دیا کہ وہ خود روزگار پیدا کرنے والی مختلف اسکیموں کے فوائد حاصل کریں تاکہ وہ اپنی آمدنی پیدا کرنے والے یونٹ قائم کریں۔
 
 

کولگام میں جے اینڈ کے پنشنرس کی کانفرنس

سرینگر// جموں و کشمیر پنشنرس ویلفیئر فیڈریشن نے ٹائون حال کولگام میں یک روزہ کانفرنس کاانعقاد عمل میں لایا۔کانفرنس میں فیڈریشن کے ریاستی صدر سمپت پرکاش،ضلع صدر عبدالحمید،سیکریٹری کولگام جی ایم پروانہ کے علاوہ ضلع کولگام سے تعلق رکھنے والے پنشنرس موجود تھے۔اس موقع پر انہوں نے اپنے مطالبات اور مسائل کے حل کیلئے سرکار سے پر زورمطالبہ کیا۔
 
 

لائوڈا کی انہدامی مہم

سرینگر// لیکس اینڈ واٹر ویز ڈیولپمنٹ اتھارٹی نے کل لشکری محلہ اور دوجی محلہ میں غیر قانونی طور تعمیر کئے گئے متعدد ڈھانچوں کو مسمار کیا ۔یہ مہم تحصیلدارشمال کے علاوہ انفورسمنٹ افسر (زون اے اینڈ بی) کی نگرانی میں چلائی گئی۔انہدامی مہم کے دوران یک منزلہ ، ایک عارضی پالی تھین اسٹال،دکان اور دو ٹن شاپ اور ایک کمرہ مسمار کیا گیا۔اس موقعہ پر ہجوم کی طرف سے تھوڑی مزاحمت دیکھنے میں آئی لیکن پولیس اور انہدامی ٹیم نے یہ کوشش ناکام بنائی۔اس کے علاوہ خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف قانونی کارروائی بھی شروع کی گئی۔مہم کے دوران این ایف آر کے علاقے کے ساتھ کئی چشموں کو دوبارہ حاصل کیا گیا جن پر مقامی لوگوں نے غیر قانونی طور پر قبضہ کر رکھا تھا۔
 
 

کشمیر یونیورسٹی میںسابق آئی اے ایس افسر کی تصنیف کا اجراء 

سرینگر//کشمیریونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر طلعت احمد نے یہاں سابق آئی اے ایس افسر ڈاکٹر جی آر غنی کی تصنیف ’’جموں کشمیراکانومی۔اسٹرنگتھ اینڈ اوپرچیونٹیز‘‘جاری کی۔اس کتاب میں جموں کشمیرکی موجودہ اقتصادی منظر نامے اورمستقبل کاخاکہ پیش کیا گیاہے۔اس موقعہ پر اپنے خطاب میں پروفیسر طلعت نے کہا کہ ڈاکٹرغنی کی کتاب اکنامکس کے طلبہ کے لئے معلومات کاذخیرہ ہونے کے علاوہ نوجوان کاروباریوں کیلئے بھی ایک اثاثہ ہے۔پروفیسرطلعت نے کہا کہ جموں کشمیرکے باغبانی،دستکاری،ماہی پالن،اوردیگرشعبوں میں کافی صلاحیتیں ہیں۔ہمیں بس ان شعبوں کی صلاحیتوں کو بروئے کار لانے کیلئے کام کرنا ہے ۔انہوں نے کتاب کے مصنف کو متعددنازک معاملات اور مشکلات کوکتاب میں بیان کرنے پر مبارکباد دی۔کتاب کی اجرائی کی تقریب کا اہتمام فاصلاتی تعلیمی نظام کے ڈائریکتوریٹ نے کیاتھا۔اس موقعہ پرڈاکٹر غنی نے کتاب جار ی کرنے کیلئے وائس چانسلر کا شکریہ اداکیا۔
 
 

جے سی بی کلینرکی لاش کو بازیاب کیاجائے

واکورہ کی آبادی کااحتجاج

ارشاداحمد
 
گاندربل //تین روزقبل نالہ سندھ میں غرقاب ہوئے جے سی بی ہیلپر کی تلاش میں سرعت لانے کے مطالبے کولیکر واکورہ میں مردوزن نے احتجاج کیا۔ہنگ سونہ مرگ میں تین د ن قبل ایک جے سی بی نالہ سندھ میں جاگراتھااوراس میں سوارڈارئیوراوراس کا معاون نالہ سندھ میں غرق ہوئے تھاتاہم اس موقع پرڈرائیور کوبچایاگیاتھا جبکہ اس کا معاون شاہد احمدگھاسی ولدحبیب اللہ ساکن گزہامہ واکورہ کو نہیں بچایاجاسکااورہنوزاس کی تلاش جاری ہے۔شاہداحمد کی لاش کو بازیاب کرنے کے حق میں بدھ کوواکورہ سے آئے متعدد لوگوں نے گاندربل صفاپورہ شاہراہ پردودرہامہ کے مقام پر احتجاج کیا۔اس موقعہ پر احتجاج میں شامل افراد نے سڑک پر رکاوٹیں کھڑی کرکے ٹریفک کی نقل و حرکت بند کی۔احتجاج میں شامل افراد نے اس موقع پر بتایا کہ تین روز قبل سونمرگ کے ہنگ میں المناک حادثہ میں جی سی بی سڑک سے لڑھک کر نالہ سندھ میں گرگئی جس کے نتیجے میں اس میں موجود شاہد احمد گوسی پانی کے تیز بہاو میں غرقاب ہوگیا جس کی لاش گزشتہ تین روز سے بازیاب نہیں کی جاسکی ۔انہوں نے کہاکہ ہمارا مطالبہ ہے کہ شاہد احمد گھاسی کی لاش تین دن گزرنے کے بعد بھی بازیاب نہیں کی جاسکی۔ ہمارا مطالبہ ہے کہ لاش کی بازیابی میں سرعت لائی جائے  اوراس کی لاش ڈھونڈنے میں نیوی اور دیگر ماہر غوطہ خوروں کی خدمات حاصل کی جائے۔اس موقع پر پولیس کے اعلیٰ حکام نے احتجاج میں شامل افراد کو یقین دہانی کرائی جس کے بعد احتجاج پرامن طور منتشرہوا۔
 
 

نالہ سندھ میں لاپتہ ہیلپر کی تلاش جاری 

غلام نبی رینہ
 
کنگن//ہنگ سونہ مرگ سڑک حادثے میں لاپتہ جے سی بی ہیلپر کی لاش تیسرے روز بھی برآمد نہیں ہوئی ۔ ایس ایچ او سونہ مرگ یونس بشیر نے کشمیر عظمی کو بتایا کہ تیسرے روز بھی مذکورہ لاپتہ جوان کی لاش کو نالہ سندھ سے برآمد کرنے کے لئے سونہ مرگ پولیس کے اہلکار ،ایس ڈی آر ایف بچائو ٹیم کنگن جس کی قیادت بشیر احمد میر کررہے تھے، نے مذکورہ لاپتہ ہوئے نوجوان عرفان احمد بٹ کے لواحقین اور رشتہ داروں کی مدد سے لاش کو برآمد کرنے کی کوشش کی لیکن شام دیر گئے تک بھی لاش کو برآمد نہیں کیا جاسکا۔ انہوں نے بتایا کہ آج ہنگ سونہ مرگ سے ریزن تک نالہ سندھ میں لاش کو ڈھونڈا گیا لیکن لاش برآمد نہیں ہوئی ۔ 
 

بینک لوٹنے میں استعمال کی گئیں کاریں ضبط

سرینگر//جموں کشمیر پولیس نے جنگجوکارروائیوں کیلئے استعمال ہونے والی دو گاڑیوں کوضبط کرنے کو منظوری دی ہے۔پولیس بیان کے مطابق ماروتی آلٹوK-10زیرنمبرJK05G-5626اورآلتوK-10زیرنمبر JK21C- 8461جنہیں بالائے زمین کارکنوں نے 22اپریل2021کوجموں کشمیربینک  شیرآبادپٹن کو لوٹنے کیلئے استعمال کیاتھا،کوضبط کرنے کو منظوری دی گئی۔پولیس سربراہ نے غیرقانونی سرگرمیوں کی روکتھام سے متعلق قانون کی شق25کے تحت ان دوگاڑیوں کوضبط کرنے کو منظوری دی۔ان دوگاڑیوں کی ضبطی کے ساتھ اب تک پولیس ہیڈ کوارٹر نے 74گاڑیوں جن میں اکثرچارپہیوں اوردوپہیوں والی گاڑیاں شامل ہیں،پانچ مکان،چھ دکانیں،اراضی اور نقدی شامل ہیں ،ضبط کئے ہیں۔ 
 
 

  ہفت چنار،جہانگیر چوک سڑک بندروکے نام سے منسوب کی جائے گی

سرینگر//بلال فرقانی// سرینگر کے میئر جنید اعظم متو نے اعلان کیا کہ ہفت چنار سے لیکر جہانگیر چوک تک کی سڑک کو گزشتہ شام نامعلوم بندوق برداروں کے ہاتھوں ہلاک ہوئے معروف دوا فروش’ایم ایل بندرو‘‘ کا نام دیا جائے گا۔ جنید متو نے سماجی رابطہ گاہ ٹیوٹر پر تحریر کیا،’’ہفت چنار چوک سے جہانگیر چوک (جہاں بندرو میڈیکیٹ واقع ہے) کی سڑک کو شہید مکھن لال بندرو روڈ کا نام دیا جائے گا تاکہ معاشرے میں ان کی شراکت کو خراج تحسین پیش کیا جاسکے۔‘‘ انہوں نے مزید تحریر کرتے ہوئے کہا ’’ سرینگر میونسپل کارپوریشن کی جنرل کونسل میں باضابطہ طور پر ایک قرارداد پیش کی جائے گی‘‘۔قابل ذکر بات یہ ہے کہ نامعلوم مسلح افراد نے 68 سالہ بندرو پر اس وقت فائرنگ کی جب وہ منگل کی شام 7 بجے کے قریب سری نگر کے اقبال پارک علاقے کے قریب اپنی دکان پر تھے۔بندرو کوگولی لگنے سے کئی زخم آئے تھے اور وہ ہسپتال جاتے ہوئے دم توڑ گئے۔
 
 

سوپور کے غرقآب کمسن کی لاش ہنوزبرآمد نہ ہوئی

سوپور //غلام محمد//سوپورمیںچوبیس دن قبل غرقاب ہوئے کمسن لڑکے کے والدین نے انتظامیہ پرالزام عاید کیا ہے کہ ان کے لخت جگر کی لاش کودریائے جہلم سے برآمد کرنے کی کارروائی کو نامعلوم وجوہات کی بناپربند کیاگیا ۔انہوں نے لیفٹینٹ گورنر سے استدعا کی کہ ان کے بیٹے کی لاش کو دریائے جہلم سے برآمد کرنے کیلئے اقدام کئے جائیں۔کشمیرعظمیٰ سے بات کرتے ہوئے غرقاب ہوئے کمسن کے والدطارق احمد نے کہا کہ 12ستمبر کو ان کا لخت جگر سلمان طارق ساکن مہاراج پورہ سوپورنہانے کے دوران دریائے جہلم میں غرق ہوا۔انہوں نے کہا کہ ان کے بیٹے کودریائے جہلم میں غرق ہوئے 24روز ہوگئے لیکن اُس کی لاش کو ابھی تک بازیاب نہیں کیا گیا۔ انہوں نے ضلع انتظامیہ پر الزام کیا کہ اس کے لخت جگر کی بازیابی کے لئے کوئی ٹھوس اقدامات نہیں کئے گئے، اگر چہSDRF اور نیوی کے اہلکاروں نے پہلے کچھ دنوں تک بچا ئوآپریشن جاری رکھاتاہم بعد میں نامعلوم وجوہات کی بنا پر اُسے بند کر دیا گیا اور آج 24 روز گزر جانے  کے بعد بھی میرے لخت جگر کی نعش دریائے جہلم سے بازیاب نہیں کی گئی۔انہوں نے لیفٹینٹ گورنر اورانتظامیہ سے اپیل کی کہ اُس کے لخت جگر کی نعش کو بازیاب کرانے کے لئے ضروری اور ٹھوس اقدامات کئے جائیں ۔