مزید خبریں

 مارتنڈ سوریہ مندرکو سیاحتی نقشہ پر لایاجائے: مرکزی وزیر

اننت ناگ// مرکزی حکومت کے عوامی رسائی پروگرام کے ایک حصے کے طور پر مرکزی وزیر مملکت برائے تعلیم انو پورنا دیوی نے اتوارکو مارتنڈ سوریہ مندر کا دورہ کیا جو دُنیا کے قدیم سورج مندروں میں سے ایک ہے۔اِس موقعہ پر مرکزی وزیر مملکت کو آرکیو لوجیکل سروے آف اِنڈیا( اے ایس آئی ) کے اَفسران نے جانکاری دی کہ مندر کونارک اور موڈیرا مندورں سے قدیم ہے ۔ اُنہوں نے وزیرموصوفہ کو تاریخی مقام کی اہمیت اور بحالی سرگرمیوں کے بارے میں بھی جانکاری دی۔مرکزی وزیر موصوفہ نے ضلع اِنتظامیہ کو ہدایت دی کہ وہ مندر کو سیاحتی نقشے پر لانے کے لئے ضروری اِقدامات کریں ۔اُنہوں نے کہا کہ مندر ایک اہم آثار قدیمہ کی یاد گار ہے اور اس کی سیاحتی صلاحیت ملحقہ علاقوں کی مقامی معیشت کو فروغ دے سکتی ہے۔مرکزی وزیر مملکت کے ہمراہ ناظم تعلیم کشمیر ، ضلع اِنتظامیہ کے سینئر اَفسران اور اے ایس آئی بھی تھے۔
 
 

سول سروسز امتحان | جموں اورسرینگرکے85مراکزپرمنعقد

۔20ہزار سے زائداُمیدوار شامل

سری نگر//جموںوکشمیر پبلک سروس کمیشن ( پی ایس سی) نے کمبائنڈ کمپٹیٹیو ( پری لیمنری ) اِمتحان2021ء جموں اور سری نگر اور ڈوڈہ ، راجوری ، اننت ناگ اور بارہمولہ کے چار اَضلاع میں منعقد ہوئے۔پی ایس سی نے اِمتحانات کے احسن اور منظم اِنعقاد کے لئے سیکورٹی اور فریسکنگ کے لئے چار درجے کے وسیع انتظامات کئے تھے اور کووِڈ ۔19 کے پروٹوکول کی مناسب پابندی کو یقینی بنانے کے لئے تمام اِمتحانی مراکز کو سینی ٹائز کیا گیا تھا اور اُمید واروں کو داخل ہونے سے قبل اِمتحانی ہال میں تھرمل سکیننگ کرائی گئی تھی۔کووِڈ مناسب طرز عمل ( سی اے بی ) پر عمل کرنیکی اہمیت کو مد نظر رکھتے ہوئے اور کسی بھی تکلیف سے بچنے کے لئے تمام اُمید واروں کو ہدایت دی گئی  تھی کہ وہ کم از کم دو گھنٹے قبل اِمتحانی مقام پر رِپورٹ کریں جس کے لئے پبلک سروس کمیشن نے بذریعہ پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا وسیع پیمانے پر تشہیر کی تھی۔مجموعی طورپر 20,777 اُمیدوار جنرل سٹیڈیز پرچہ اوّل اور 20,624 نے جنرل سٹیڈیزپرچہ دوم میں شرکت کی۔مجموعی طور پر 30,888 اُمید وار اِمتحان دینے کے اہل تھے اور دونوں صوبوں کے 85مراکز میں کل 66.78 حاضری کا تناسب رہا۔کمبائنڈ کمپٹیٹو ( پری لیمنری ) اِمتحان کو تین مراحل کے عمل کے طور پر ڈیزائن کیا گیا ہے اور آج کا اِمتحان پہلا مرحلہ تھاجس  کے بعد مینز امتحان لیا جائے گا جس میں ابتدائی مرحلے کے بعد شارٹ لسٹ کئے گئے اُمید وار حاضر ہوں گے۔جموںوکشمیر پبلک سروس کمیشن کے چیئرمین نے جموںوکشمیر یوٹی اِنتظامیہ اور پولیس حکام کا ان کے تعاون کے لئے شکریہ اَدا کیااور اِمتحانات کے انعقاد میں شامل مبصرین ، سپر وائزروں ،اِن ویجی لیٹروں اور معاون عملے کو بھی ان کی انتھک کوششوں کے لئے سراہا۔
 
 
 

زینہ پورہ ہلاکت پر سیاسی رہنما برہم

ظالمانہ:الطاف بخاری، تحقیقات ہو:تاریگامی،حکومتی دعوئوں کے برعکس:حکیم یاسین،بلا جواز: پیپلز کانفرنس

سرینگر//اپنی پارٹی صدر سید محمد الطاف بخاری،کمیونسٹ پارٹی مارکسسٹ رہنما یوسف تاریگامی ،پی ڈی ایف چیئرمین حکیم یاسین، پیپلز کانفرنس اور عوامی نیشنل کانفرنس نے ضلع شوپیان میں زینہ پورہ علاقہ میں سی آر پی ایف کیمپ کے نزدیک شہری ہلاکت کی کڑے لفظوں میں مذمت کی ہے۔  ایک بیان میں بخاری نے معیاد بند تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے تاکہ یہ پتہ لگایاجاسکے کہ کن حالات کی وجہ سے نوجوان کی ہلاکت ہوئی جس کا کسی سے کچھ لینا دینا نہیں تھا اور نہ ہی وہ قابل ِ اعتراض سرگرمیوں میں ملوث تھا۔ انہوں نے کہاکہ س طرح شہری ہلاکت انتہائی ظالمانہ ہے اور ایسے واقعات کی محض مذمت سے کام نہیں چلے گا۔ واقعہ کی شفاف طریقہ سے معیاد بند تحقیقات ہونی چاہئے تاکہ قیمتی جان کے اتلاف کے لئے ذمہ داران کو جوابدہ بنایاجاسکے۔ بخاری نے سنتھن ٹاپ پربھاری برف باری میں پھنس جانے سے کشتواڑ سے تعلق رکھنے والے دو شہریوں امتیاز احمد میر اور داؤد مجید کی اموات پر گہرے دکھ اور صدمے کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے بیان میں کہاکہ میں مہلوکین کی مغفرت اور سوگوار ان ِ کنبہ کے لئے دعا گو ہوں کہ اُنہیں یہ ناقابل ِ تلافی نقصان بردداشت کرنے کی ہمت عطا ہو۔ انہوں نے واقعہ میں زخمی ہوئے دو افراد کی جلد صحت یابی کے لئے دعا کی ہے۔دوران ِ شپ بچاؤ آپریشن شروع کرنے کے لئے ضلع انتظامیہ اننت ناگ کی تعریف کی جس سے دو قیمتی جانوں کو بچایاجاسکا۔ انہوں نے انتظامیہ پرزور دیا ہے کہ زخمیوں کو خصوصی علاج ومعالجہ فراہم کیاجائے تاکہ وہ جلد صحت یاب ہوں۔ انہوں نے جاں بحق ہوئے افراد کے لواحقین کو فوری ایکس گریشیا ریلیف فراہم کرنے اور کوکرناگ سے کشتواڑ تک مہلوکین کی جسد ِ خاکی کو فضائیہ کے ذریعے پہنچانے کا مطالبہ کیا ہے تاکہ بروقت اُن کی آخری رسومات ادا کی جاسکیں۔شوپیان زینہ پورہ میں سی آر پی ایف کیمپ کے قریب ایک شہری کی ہلاکت کی مذمت کرتے ہوئے کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا مارکسسٹ کے رہنما یوسف تاریگامی نے اس ہلاکت کی تحقیقات کرنے کاحکام سے مطالبہ کیا تاکہ معلوم ہوسکے کہ اس کے ذمہ دار کون ہیں۔ایک بیان میں تاریگامی نے کہا کہ جن حالات میں شہری کی ہلاکت ہوئی اس کی تحقیقات کی جانی چاہیے۔انہوں نے کہا کہ ایک قیمتی جان کھونابدقسمتی ہے اور زبانی جمع خرچ سے کام نہیں چلے گا۔انہوں نے غمزدہ کنبے کے ساتھ یکجہتی کابھی اظہار کیا۔پیپلزڈیموکریٹک فرنٹ کے چیئرمین حکیم محمد یاسین نے زینہ پورہ شوپیان میں شاہد اعجازنامی شہری کی سی آر پی ایف کیمپ کے قریب ہلاکت پردکھ اورصدمے کااظہار کیا ہے ۔ایک بیان میں انہوں نے اُن حالات جن کی وجہ سے شہری ہلاک ہوا ،کی تحقیقات کرنے کا مطالبہ کیا۔انہوں نے شہری ہلاکت حکومت کے ان بلند بانگ دعوئوں کے برعکس ہے جن میں تشدد کو کسی طور برداشت نہ کرنے کادعویٰ کیاجاتا ہے۔ایک بیان میں حکیم یاسین نے غمزدہ کنبے کے ساتھ اظہارتعزیت کیا۔درایں اثناء پیپلزکانفرنس نے بھی زینہ پورہ شوپیان میں ایک شہری کو ہلاک کئے جانے کی مذمت کرتے ہوئے اس کی معینہ مدت کے اندرتحقیقات کرنے کا مطالبہ کیا۔پارٹی ترجمان نے ایک بیان میں اس واقعہ کو بدقسمتی سے تعبیر کرتے ہوئے اِسے قابل مذمت قرار دیا۔ترجمان نے کہا کہ معصوم شہریوں کی ہلاکت ہرسطح پر قابل مذمت ہے اور ان کا کوئی جواز نہیں ہے۔شوپیاں میں ایک نوجوان کے قتل کی مذمت کرتے ہوئے عوامی نیشنل کانفرنس ترجمان نے ایک بیان میں وادی کشمیر میں شہری ہلاکتوں کو بند کرنے کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ شوپیان واقعہ کی تحقیقات ہونی چاہئے اور مجرموں کو انصاف کے کٹہرے میں لایا جانا چاہئے۔
 
 
 

نئی دہلی میں آج سے فوجی کمانڈروں کی اعلیٰ کانفرنس شروع ہوگا

مشرقی لداخ اورجموں کشمیرکی صورتحال کے علاوہ اہم معاملات پر غور

نئی دہلی//فوج کے اعلیٰ کمانڈر ملک کودرپیش حفاظتی چیلنجوں کا نئی دہلی میں آج سے شروع ہونے والی چارروزہ کانفرنس میں  جائزہ لیں گے جن میں مشرقی لداخ کے علاوہ چین کے ساتھ لگنے والی سرحد پر حقیقی کنٹرول لائن کے نازک مقامات کی صورت حال بھی شامل ہیں۔واقف کارذرائع کے مطابق فوج کے اعلیٰ کمانڈر حالیہ ہلاکتوں کے پس منظر میںجموں کشمیرکی صورتحال پر بھی تبادلہ خیال کریں گے۔ ذرائع نے کہا کہ فوجی سربراہ جنرل ایم ایم نروانے ،اور دیگراعلیٰ کمانڈر مشرقی لداخ میں چین کے ساتھ لگنے والی سرحد پر ملک کی حفاظتی تیاریوں پربھی غور کریں گے جہاں گزشتہ17 ماہ سے بھارت اور چین کی فوجیں دوبدوں کھڑی ہیں اورصورتحال تلخ ہے،گرچہ دونوں طرفین نے نوک جھونک کے کئی مقامات پر فوجیوں کے انخلا کو پوراکیا ہے ۔فوجی کمانڈرافغانستان میں طالبا ن کے برسراقتدار آنے کے ممکنہ اثرات پر بھی غورکریں گے جوبھارت کی سلامتی اورخطے کی سیکورٹی پرپڑسکتے ہیں۔فوجی کمانڈروں کی دوسری کانفرنس2021،اکتوبر25سے28تک نئی دہلی میں منعقد ہورہی ہے ۔یہ ششماہی کانفرنس فوجی کمانڈروں کی اعلیٰ سطحی کانفرنس ہوتی ہے جو اپریل اوراکتوبر مہینو ں میں منعقد ہوتی ہے۔وزیردفاع راجناتھ سنگھ کانفرنس سے خطاب کریں گے اور13لاکھ کی مضبوط فوج کے اعلیٰ کمانڈروں سے تبادلہ خیال کریں گے۔چیف آف ڈیفین اسٹاف جنرل بپن راوت،بحریہ کے سربراہ ایڈمرل کرم بیرسنگھ اور فضائیہ کے سربراہ ائرچیف مارشل وی آرچودھری بھی کانفرنس سے خطاب کریں گے ۔ 
 
 
 

افغان بحران جموں کشمیر اورشمال مشرق کیلئے خطرہ:بپن رائوت

 پاکستان پردرپردہ جنگ جاری رکھنے کاالزام

 سرینگر //پاکستان پر ایک مرتبہ پھر بھارت کے خلاف در پردہ جنگ جاری رکھنے کا الزام عائد کرتے ہوئے چیف آف ڈیفنس اسٹاف نے افغا نستا ن کے بحرا ن کو جموں کشمیر کیلئے خطرہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ جموں کشمیر میں امن وامان کی صورتحال کو بنائے رکھنے کیلئے ہر ممکن اقدامات کئے جا رہے ہیں ۔ شہری ہلاکتوں پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہر ایک شہری ہلاکت کا بدلہ لیا جائے گا اور ملوثین کو کسی بھی قیمت میں بخشا نہیںجائے گا ۔ سی این آئی مانیٹرنگ کے مطابق آسام پولیس کی جانب سے منعقدہ ایک پروگرام میں شرکت کرتے ہوئے اپنے خطاب میں چیف آف ڈیفنس اسٹاف جنرل بیپن رائوت نے کہا کہ افغا نستا ن کا بحرا ن جموں کشمیر کیلئے خطرہ ہے اور ہمیں اس کے لیے تیار رہنے کی ضرورت ہے۔ ہماری سرحدوں کو سیل کرنا اور وہاں اضافی سیکورٹی انتظامات وقت کی ضرورت ہے ۔ انہوں نے کہا کہ میں ملک کو اس بات کی یقین دہانی کراتا ہوں کہ پڑوس میں عدم استحکام کے نتائج سے نمٹا جائے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ افغا نستا ن میں طالبا ن کے اقتدار کے بعد وہاں کی صورتحال کی وجہ سے جموں و کشمیر کے ساتھ ساتھ شمال مشرقی خطے کو بھی خطرہ ہو نے کا خدشہ ہے۔رائوت نے مزید کہا کہ برصغیر میں موجود خطرات سے  سیکورٹی نظام میں بہتری لانے اور  اس کے لیے تیار رہنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ درست ہے کہ جموں و کشمیر میں سخت چیکنگ کی وجہ سے وہاں کے مقامی لوگوں اور سیاحوں کو پریشا نیوں کا سامنا کر نا پڑتا ہے۔ لیکن انہیں یہ سمجھنے کی ضرورت ہے کہ یہ سب ا ن کی حفاظت کیلئے ہے۔ ملک کے ہر شہری کو داخلی سلامتی کے بارے میں خود کو آگاہ کر ناہو گا۔انہوں نے کہا کہ کوئی ہماری حفاظت کیلئے نہیں آئے گا۔ ہمیں اپنی حفاظت خود کرنی ہے۔ پاکستان پر بھارت کے خلاف در پردہ جنگ جاری رکھنے کا الزام عائد کرتے ہوئے جنرل رائوت نے کہا کہ جموں کشمیر میں امن وا مان کی صورتحال سے پاکستان خوش نہیں ہے اور اس کو بگاڑنے کیلئے وہ سرحد پار سے درپردہ جنگ جاری رکھے ہوئے ہے ۔ انہوں نے کہا کہ جب بھی جموں کشمیر میں حالات معمول پر آتے ہیں تو پاکستان کوئی نہ کوئی نیا طریقہ استعمال کرکے حالات کو خراب کرنے کی کوشش کر تا ہے جس کی تازہ مثال شہری ہلاکتیںہے ۔ انہوں نے کہا کہ شہری ہلاکتوں کا مقصد روایتی ہند مسلم بھائی چارے کو نقصان پہنچانے اور اقلیتی طبقے میں خوف و دہشت پیدا کرنا تھا ،تاہم انہوں نے کہا کہ میں واضح کر دینا چاہتا ہوں ایسی کسی بھی کوشش کو کامیاب نہیں ہونے دیا جائے گا اور جوکوئی بھی اس طرح کی کارورائیوں میںملوث پایا جائے گا ان کے خلاف سختی سے نمٹا جائے گا ۔ روات نے مزید کہا کہ جموں کشمیر میںہوئی ہر شہری ہلاکت کا بدلہ لیا جائے گا ۔ چین کے بارے میں بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ چین کے ساتھ معاملات کو حل کرنے کیلئے کارروائی جاری ہے اور کہا کہ میں عوام کی یقین دہانی کرانا چاہتا ہوں کہ وہ سسٹم پر یقین رکھیں تمام معاملات کو حل کیا جائے گا ۔ 
 
 
 

جموںوکشمیر کھلی جیل میں تبدیل

کشمیرمیں مزید پابندیوں کے راوت کے بیان پرمحبوبہ برہم

سرینگر//پیپلزڈیموکریٹک پارٹی کی صدر محبوبہ مفتی نے اتوار کو الزام لگایا کہ ’’جبر‘‘جموں کشمیرکے حالات سے نمٹنے کا مرکز کا واحد طریقہ ہے۔چیف آف ڈیفین اسٹاف جنرل بپن راوت کے بیان جس میں جموں کشمیر کے لوگوں کو متنبہ کیا گیا کہ حالیہ تشدد کوروکنے کیلئے کشمیر میں مزید سختی کی جائے گی ،پر ردعمل کااظہار کرتے ہوئے محبوبہ مفتی نے کہا کہ ان کا بیان حکومت کے بیانیہ کہ وادی میں سب کچھ ٹھیک ٹھاک ہے،کے ’’برعکس‘‘ہے۔ انہوں نے ٹوئٹر پر ایک ٹوئٹ میں الزام لگایا،’’جموں کشمیر کوایک کھلی جیل میں تبدیل کرنے کے باوجود،بپن راوت کا بیان کوئی حیرانگی نہیں ہے کیوں کہ جموں کشمیرمیں حالات سے نمٹنے کیلئے جبرمرکزی حکومت کا واحدطریقہ ہے۔ اس  سے ان کے سرکاری بیانیہ کی بھی نفی ہوتی ہے جس میں سب کچھ ٹھیک ٹھاک ہونے کا دعویٰ کیا جاتا ہے‘‘۔ روی کانت سنگھ یادگاری تقریر کے دوران راوت نے آسام میں کہا کہ حال ہی میں جموں کشمیرکے لوگوں نے جو نقل وحرکت کی آزادی سے لطف اندوزہونا شروع کیاتھا،اس میں موجودہ حالات کی وجہ سے رکاوٹ آسکتی ہے اورلوگوں سئے حالات کو قابو کرنے کیلئے تعاون طلب کیاتھا۔پیپلزڈیموکریٹک پارٹی صدر نے کہا کہ سخت ترین اقدامات جیسے ’’اجتماعی گرفتاریاں‘‘،انٹرنیٹ پر جب چاہے پابندی لگانااورنئے سیکورٹی بنکروں کی تعمیر کے بعد اور کیا سخت اورجابرانہ اقدام ہوسکتے ہیں جنہیں عملانا باقی ہیں۔
 
 
 

کولگام اوربجبہاڑہ میں کم عمر لڑکے اور جوان کی لاشیں برآمد

خالدجاوید+عارف بلوچ

کولگام+اننت ناگ//کولگام اور بجبہاڑہ میں ایک کم عمر لڑکے اورایک نوجوان کی لاشیں برآمد ہوئی ہیں ۔اتوار کو کوکولگام میں بدرویاری پورہ میں ایک نالے کے قریب لوگوں نے ایک کم عمر لڑکے کی لاش دیکھی اور پولیس کو مطلع کیا۔پولیس نے موقعہ پر پہنچ کر لاش کو اپنی تحویل میں لیا۔پولیس کے مطابق لاش کی شناخت 15برس کے توصیف احمدبٹ ولدخورشیداحمد بٹ کے طور ہوئی ہے۔قانونی لوازمات پورا کرنے کے بعد پولیس نے لاش کو وارثین کے حوالے کیا اورکیس درج کرکے تحقیقات شروع کی۔ادھربجبہاڑہ میں اتوار شام کو نوجوان کی لاش بر آمد ہوئی ۔گورنمنٹ ہائر اسکینڈری اسکول آرونی بجبہاڑہ کے نزدیک اتوارشام ایک نوجوان کی لاش کیچرڑ سے بر آمد کی گئی ۔لاش کی پہچان شاکراحمد صوفی ساکن برین نشاط کے طورہوئی ہے۔پولیس نے لاش کو تحویل میں لے کر تحقیقا ت شروع کی ہے۔
 
 
 

سرینگرجموں شاہراہ پر32گھنٹوں بعدٹریفک بحال 

محمد تسکین
بانہال //32گھنٹے بند رہنے کے بعد سرینگرجموں شاہراہ پرٹریفک کو بحال کیا گیا۔اس دوران رام بن میں کیفٹیریا موڈ پرگرآئی پسی کے دونوں طرف درماندہ500گاڑیوں کو اپنی منزلوں کی طرف کوچ کرنے کی اجازت دی گئی،جبکہ بانہال فورلین ٹنل کے دوسری طرف درماندہ گاڑیوں کو بھی جموں کیلئے روانہ کیاگیا۔ایس ایس پی ٹریفک نیشنل ہائی وے شبیر احمد ملک نے کشمیر عظمی کو بتایا کہ جموں سرینگر شاہراہ پر کیفٹیریا موڈ اور پیڑا کے مقام پر گر آئی تازہ پسی کو صاف کرنے کے بعد ناشری ٹنل اور بانہال کے درمیان 500 کے قریب گاڑیوں جن میں سے بیشتر کشمیر جانے والے درماندہ مال برادر ٹرک تھے ، کو ترجیحی طور کشمیر جانے کی اجازت دی گئی جبکہ بانہال فورلین ٹنل کے دوسری طرف کچھ درماندہ مال بردار ٹرکوں کو بھی جموں روانہ کیا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ شاہراہ پر سرینگر اور جموں سے کسی بھی قسم کے تازہ ٹریفک کو چلنے کی اجازت نہیں دی گئی کیونکہ شاہراہ کی حالت کچھ مقامات پر ابھی خراب اور یکطرفہ ہے اور سختی سے درماندہ اور یکطرفہ ٹریفک کو ہی چلنے کی اجازت ہے۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ رات پیڑا کے مقام پتھروں اور بولڈروں پر مبنی ایک پہاڑی سڑک پر گر آئی تاہم اتوار کی صبح یہاں سڑک کو یکطرفہ ٹریفک کے قابل کی بنایا گیا۔اس دوران اتوار کی سہ پہر کچھ درماندہ مسافر گاڑیوں کو بھی ادہمپور سے کشمیر جانے کی اجازت دی گئی۔
 
 
 

مغل شاہراہ پر دوسرے روز بھی ٹریفک بند رہی 

بحالی کیلئے سرنکوٹ کی جانب سے برف ہٹالی گئی 

بختیار کاظمی
سرنکوٹ//جموں وکشمیر کے پہاڑی سلسلے میں جمعہ اور سنیچر کی درمیانی شب ہوئی برفباری کی وجہ سے مغل شاہراہ دوسرے روز بھی مسلسل بند رہی جبکہ میکینکل شعبہ کی جانب سے شاہراہ کی بحالی کیلئے اقدامات اٹھائے جارہے ہیں ۔محکمہ موسمیات کی پیشنگوئی کے مطابق موسم میں آئی تبدیلی کی وجہ سے خطہ پیر پنچال میں جہاں بارشیں و برفباری ہوئی ہے وہائیں سردی لہر بھی شروع ہو گئی ہے ۔خطہ پیر پنچال کو وادی کیساتھ جوڑنے والی مغل شاہراہ پیر گلی و ملحقہ علاقوں کیساتھ ساتھ پوشانہ وغیرہ میں ہوئی موسم کی پہلی برفباری کی وجہ سے سنیچر سے ہی گاڑیوں کی آمد ورفت بند ہے۔مغل شاہراہ کی بحالی کا کام کرنے والی امیکینکل ایجنسی کے ایک آفیسر نے بتایا کہ شاہراہ کی بحالی اور برف ہٹانے کیلئے مشینری کو روانہ کردیا گیا تھا جبکہ سرنکو ٹ کی جانب سے پیر گلی تک برف کو ہٹالیا گیا ہے جبکہ شوپیاں کی جانب سے ابھی تک برف نہیں ہٹائی جاسکی ۔انہوں نے امید ظاہر کرتے ہوئے کہاکہ جلد ہی شاہراہ کو بحال کر دیا جائے گا ۔
 
 
 

23فیصد بے روزگاری بھاجپاکا جموں کشمیرکوبڑاتحفہ

کانگریس نے وزیرداخلہ کے دعوئوں کو بے بنیاد اورمن گھڑت قراردیا

 سرینگر// جموں کشمیر پردیش کانگریس نے وزیرداخلہ امت شاہ کے جموں کشمیرمیں ترقی کے بلند بانگ دعوئوں پر اپنے ردعمل کااظہار کرتے ہوئے مرکزی حکومت کی جموں کشمیر کوپسماندگی کی طرف دھکیلنے کیلئے ہدف تنقید بناتے ہوئے کہا کہ وزیرداخلہ پروجیکٹوں کی گنتی کررہے ہیں جنہیں سابق حکومتوں نے منظور کیا ہے ۔پارٹی نے وزیرداخلہ کے پنچایتی راج اداروں سے متعلق دعوئوں کو بھی بے بنیاد اورمن گھڑت قراردیتے ہوئے کہا کہ تین دائروں والاپنچایتی راج نظام کانگریس کا ملک اورجموں کشمیرکوتحفہ ہے۔جموں کشمیر پردیش کانگریس نے وزیرداخلہ کے جموں کشمیرکے جاری سہ روزہ دورہ پر ردعمل کااظہا رکرتے ہوئے مزید کہا کہ جموں کشمیر کی ترقی جو متحدہ ترقی پسند اتحاد کے دور میں ہورہی تھی،اس میں بھاجپا کے دوراقتدارمیں شدیدرکاوٹیں آئی ہیں۔ پارٹی نے کہا کہ متحدہ ترقی پسند اتحاد کے دورمیں منظور کئے گئے منصوبوں کاافتتاح کرنے سے حقیقت تبدیل نہیں ہوسکتی جسے کوئی ردنہیں کرسکتا۔پارٹی نے کہا کہ حقیقت یہ ہے کہ 5اگست2019کے بعد جموں کشمیر نے بدترین دیکھا ہے،ترقیاتی عمل بری طرح متاثر ہواہے ،بے روزگاری میں اضافہ ہورہا ہے جو ملک میں سب سے زیادہ23فیصد ہے ،لوگوں کو اقتصادی بحران اوردیگر مسائل لوگوں کو درپیش ہیں جبکہ ترقیاتی عمل جس کا وزیرداخلہ دورے کے دوران دعویٰ کررہے ہیں کہیں نظرنہیں آتا۔جموںکشمیرپردیش کانگریس نے وزیرداخلہ امت شاہ کے اس دعویٰ پر بھی حیران گی کا اظہار کیا جو انہوں نے پنچایتوں کے بارے میں کیااورکہا کہ یہ کانگریس پارٹی نے سورگیہ راجیو گاندھی کے دورپنچایتی راج نظام ملک کودیا۔اس قانون کو 2014میں نیشنل کانفرنس اور کانگریس کے دوراقتدار میں ترمیم کی گئی جس کے نتیجے میں جموں کشمیر میں تین دائروں والا پنچایتی راج نظام متعارف کیاگیا۔پارٹی نے کہا کہ حیرانگی کی بات ہے کہ متحدہ ترقی پسند اتحاد کے دورمیں منظور کئے گئے پروجیکٹوں کووقت وقت پر بھاجپا کے کھاتے میں ڈالاجارہا ہے،تاکہ اُس کی ناکامیوں پر پردہ ڈالاجائے۔پارٹی نے کہا کہ بھاجپا کی طرف سے قیمتوں میں بے تحاشہ اضافہ،ٹول پلازوں کا قیام اوردیگر عوام کُش اقدامات کو لوگ بھول نہیں پائیں گے جوبھاجپا نے جموں کشمیرکودیئے ہیں۔بھاجپا کشمیرمیں پرامن ماحول قایم کرنے میں ناکام ہوئی ہے ۔
 
 
 

کشمیر میں جنگل راج کادور: عوامی نیشنل کانفرنس

سری نگر // عوامی نیشنل کانفرنس کے ترجمان اعلی نے اتوار کو کہا کہ وادی کشمیر میں مکمل جنگل راج  ہے۔انہوں نے کہا کہ مرکزی وزیر داخلہ امیت شاہ کی سری نگر آمد پر مکمل افراتفری تھی۔ترجمان اعلی کا کہنا تھا کہ بلیوارڈ روڈ سرینگرکو لوگوں کے لیے بند کیا گیا اور بڈیاری چوک سے نشاط تک سڑک سنسان نظر آنے سے لوگوں کو شدید پریشانی کا سامنا کرنا پڑا۔ ان کا کہنا تھا کہ موٹر سائیکل سواروں کو مشکلات میں ڈال دیا گیا کیونکہ ان کے موٹر سائیکلوں اور اسکوٹروں کو بغیر کسی جواز کے ضبط کر لیا گیا۔  انہوں نے کہا کہ 2 لاکھ افراد کو غلط طریقے سے محصور رکھا گیا جبکہ نصف ملین کی آزادانہ نقل و حرکت کو روک دیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ بی جے پی انتظامیہ کی جانب سے یہ کارروائیاں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی کے مترادف ہیں ۔
 
 
 

ڈوڈہ سڑک حادثے میں شہری کی موت

چندرکوٹ اور شیربی بی حادثوں میں ایک زخمی

محمد تسکین
بانہال// ڈوڈہ میں ایک سڑک حادثے میں ایک شخص کی موت واقع ہوگئی جبکہ جموں سرینگر شاہراہ پر چندرکوٹ اور شیر بی بی علاقوں میں پیش آئے سڑک کے دو الگ الگ حادثات میں ایک شخص زخمی ہوا ۔ اتوار کی صبح کھیلانی ڈوڈہ میں عاشق حسین شاہ ولد غلام شاہ ساکنہ اکرم آباد ڈوڈہ ماروتی زیر نمبرJK02T-5058میں جارہا تھا کہ اس دوران گاڑی کو حادثہ پیش آیا ۔ پولیس، مقامی لوگ اوراین جی او ابابیل سے وابستہ افراد نے جائے حادثہ پر پہنچ کر مذکورہ شہری کو گاڑی سے باہر نکالا۔ حادثہ میں مذکورہ شہری کی موقعہ پر ہی موت واقع ہوگئی تھی۔ طبی لوازمات پورا کرنے کیلئے لاش کو گورنمنٹ میڈیکل کالج ڈوڈہ لایا گیا۔ اس دوران پولیس نے کیس درج کرکے تحقیقات شروع کی ہے۔ ادھر اتوارکوہی چندرکوٹ کے نزدیک مندر علاقے میں ایک بس اور ایک ٹرک میں ٹکر کے نتیجے میں بس ڈرائیور زخمی ہوا ، جسے چندرکوٹ کے مقامی لوگوں اور پولیس نے ضلع ہسپتال رام بن منتقل کیا ۔ بتایا جاتا ہی کہ زخمی  ڈرائیورکی حالت خطرے سے باہر ہے ۔ اس حادثے میں ٹکر کی وجہ سے بس اور ٹرک کو نقصان سے دوچار ہونا پڑا ہے ۔دوسرا حادثہ شاہراہ پر واقع شیر بی بی  علاقے میں ایک ٹرک کو اسوقت پیش آیا جب سیبوں سے لدے ٹرک پر ڈرائیور قابو کھو بیٹھا اور ٹرک سڑک کے پچھلی طرف پہاڑی کے ساتھ ٹکرایا ۔اس حادثے میں ٹرک کو نقصان پہنچا تاہم اس میں سوار دو افراد بچ نکلے ہیں۔(مشمولات کے این ایس)
 
 
 

سرینگرجموں شاہراہ کی خستہ حالی سے میوہ صنعت کونقصان

باغ مالکان اور تاجراورٹرانسپورٹرپریشانیوں میں مبتلا

 سرینگر / /وادی کشمیر کی معیشت میں سیاحتی شعبے کے علاوہ میوہ صنعت ریڑھ کی ہڈی تصور کی جاتی ہے۔ میوہ صنعت سے وابستہ افراد آج کل عجیب پریشانی میں مبتلا ہو گئے ہیں۔ سرینگرجموں شاہراہ پر سیب کی ٹرکوں کو روکنے سے سیب کی کوالٹی متاثر ہونے کے ساتھ ہی میوہ صنعت سے جڑے افراد کو بھاری مالی نقصان سے دوچار ہونا پڑ رہا ہے۔ سی این آئی کے مطابق وادی کے دیگر حصوں کی طرح ہی جنوبی کشمیر میں بھی رواں برس سیب کی فصل اُتارنے کا کام جہاں چل رہا ہے، وہیں کولگام کی فروٹ منڈیوں میں بھی سیب کا کاروبار عروج پر جاری ہے۔ جہاں دو سال کے بعد کولگام کی فروٹ منڈیوں میں سیب کا کاروبار بہتر طریقے سے شروع ہوا اور سیب کی قیمتوں میں اضافہ سے بھی میوہ کاشتکاروں نے کچھ راحت پائی تھی تاہم اس بار سرینگرجموں شاہراہ کی خستہ حالی اور ٹریفک جام کی وجہ سے سیب ملک کی مختلف فروٹ منڈیوں تک وقت پر نہیں پہنچ پا رہا ہے جبکہ راستے میں ہی سیب کی کوالٹی بھی خراب ہورہی ہے جس کے سبب میوہ کاشتکاروں اور تاجروں کے علاوہ ٹرانسپورٹروں کو بھی نُقصان کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ سرینگرجموں شاہراہ پر بانہال سے لیکر رام بن تک شاہراہ کے فورلین کا تعمیراتی کام جاری ہے، وہیں موجودہ شاہراہ کی حالت کافی خستہ ہو گئی ہے۔ اکثر موسم سرما میں شاہراہ بارشوں اور برف باری سے بند رہتی تھی لیکن اب توسال بھر شاہراہ آئے دن ٹریفک کی آمدورفت کے لیے بند رہتی ہے جس سے نہ صرف وادی میں اشیائے خوردو نوش کی کمی ہوتی ہے بلکہ گذشتہ کُچھ برسوں سے اب وادی میں پیدا ہونے والے سیب اور دیگر میوہ جات کو ملک کی مختلف منڈیوں تک پہنچانے میں بھی تاخیر ہورہی ہے جس کا اثر یہاں کی فروٹ منڈیوں میں سیب کے کاروبار پر پڑ رہا ہے۔قاضی گنڈ کے فروٹ گروورس محمد یوسف راتھر اور غلام مصطفی  ملک کے علاوہ بیرونی ریاستوں سے آئے ہوئے میوہ تاجروں نے کہا کہ وہ چاہتے ہیں کہ سیب سے لدی گاڑیوں کو ترجیحی بُنیادوں پر شاہراہ پرچلنے کی اجازت دی جائے تاکہ سیب کی کوالٹی خراب ہونے سے قبل ہی ملک کی مختلف منڈیوں تک وہ پہنچ جائے۔ اس حوالے سے ہارٹیکلچر مارکٹنگ کے آفیسر نے کہا کہ اُنہوں نے یہ معاملہ کولگام اور رام بن ضلع انتظامیہ کے علاوہ فورلین پر کام کررہی تعمیراتی ایجنسی کے ساتھ اُٹھایا ہے تاکہ سیب سے لدی گاڑیوں کو بنا خلل آگے جانے کی اجازت دی جائے اور سیب خراب ہونے سے پہلے ہی ملک کی مختلف منڈیوں تک پہنچ جائے۔
 
 
 

ناظم اعلیٰ باغبانی کا کولگام دورہ

میوہ باغات کو ہوئے نقصان کاجائزہ لیا

کولگام// باغبانی محکمہ کے ڈائریکٹر جنرل اعجازاحمدبٹ نے اتوار کوکولگام ضلع کے ژولگام،نیہامہ،کے بی پورہ،کھل،احمدآباد،نورآباد،واری پورہ،میرہامہ،کولگام اور ڈی کے مرگ کا دورہ کیااوریہاں23اکتوبر کی برف باری کی وجہ سے میوہ فصل اور باغات میں درختوں کو ہوئے نقصان کا جائزہ لیا۔ان کے ہمراہ محکمہ کے جوائنٹ ڈائریکٹرکشمیر،متعلقہ چیف ہارٹیکلچرافسراوردیگر فیلڈ عملہ بھی تھا۔ڈائریکٹر جنرل کے ہمراہ متعلقہ ایس ڈی این ،تحصیلدار اور پنچایتی راج ممبران بھی تھے۔ڈائریکٹر جنرل نے اس موقعہ پر کہا کہ محکمہ نے اس سلسلے میں پہلے ہی ایڈوائزری جاری کی تھی اورکسانوں پرزوردیا کہ وہ محکمہ کی ایڈوائزری کی سختی سے پاسداری کریں۔انہوں نے کہا کہ ایل جی کے مشیر فاروق خان اورباغبانی کے پرنسپل سیکریٹری نوین چودھری نے باغات کو ہوئے نقصان کی مکمل رپورٹ تیار کرنے کی ہدایت دی ہے۔انہوںنے متعلقہ فیلڈ عملہ کوہدایت دی کہ وہ معینہ مدت کے اندر اس سلسلے میں رپورٹ تیار کریں۔
 
 
 

مرکزی وزراء کاکٹرہ دورہ 

دیشاہوم میں طلباء میں تحائف تقسیم کئے

رِیاسی//مرکزی حکومت کے عوامی رَسائی پروگرام کے ایک حصے کے طور پر مرکزی وزیر مملکت برائے آیوش، خواتین و ترقی اطفال ڈاکٹر منج پارہ مہندر بھائی اور مرکزی وزیر مملکت برائے جنگلات و ماحولیات ، موسمیاتی تبدیلی ، امور صارفین ، خوراک اور عوامی تقسیم اشونی کمار چوبے نے کٹرہ کا دورہ کیا۔دونوں وزراء نے دیشا ہوم میں قیدیوں سے بات چیت کی۔ قیدیوں کی جانب سے ثقافتی پروگرام پیش کیا گیا ۔ ڈسٹرکٹ چائلڈ پروٹیکشن آفیسر نے وزراء کو چائلڈ پروٹیکشن سروسز ( سی پی ایس) رِیاسی کی سرگرمیوں کے بارے میں بالخصوص کووِڈ اوقات اور ایس اے ایس سی ایم سکیم کے بارے میں جانکاری دی۔وزراء مملکت نے دیشا ہوم کے احاطے میں چنار کے پودے لگائے اور طلباء میں سٹیشنری اشیاء، تحائف ، پوشن کِٹس ، آیوش امیونٹی بوسٹر کِٹس اور سپورٹس کِٹس تقسیم کی۔ بعدمیں وزیر نے ہوم میںرہ رہے بچوں کو گجرات میں سٹیچو آف یونٹی دیکھنے کے لئے مد عو کیا ۔دونوں وزراء نے تقریباً دو گھنٹے دیشا ہوم میں گزارے۔
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 

ڈاکٹر فاروق عبداللہ کا اظہارِ تعزیت

سرینگر//نیشنل کانفرنس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے مجاہد منزل کے خواجہ محمد صدیق وانی المعروف ٹوپی ساز کے انتقال پر گہرے صدمے کا اظہار کیا ہے ۔انہوںنے مرحوم کے جملہ سوگواران کے ساتھ دلی تعزیت کا اظہار کیا اور مرحوم کی جنت نشینی کیلئے دعا کی۔ مرحوم کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے ڈاکٹر عبداللہ نے کہا کہ موصوف نے نیشنل کانفرنس کیلئے بہت بہا قربانیاں دی ہیں ۔ نائب صدر عمر عبداللہ، جنرل سکریٹری علی محمد ساگراور صوبائی صدر ناصر اسلم وانی سمیت دیگر لیڈران نے بھی تعزیت کا اظہار کیا اور مرحوم کی جنت نشینی کیلئے دعا کی۔ 
 
 

بڈگام میں 2افرادنشیلی ادویات سمیت گرفتار

 سرینگر // پولیس نے بڈگام میںدو افرادکو گرفتار کرکے اُن کے قبضے سے ممنوعہ نشیلی ادویات بر آمد کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔ پولیس چوکی ہمہامہ نے ریلوے اسٹیشن کے نزدیک دو مشتبہ ا شخاص کو رکنے کا اشارہ کیا لیکن انہوں نے فرار ہونے کی کوشش کی لیکن پولیس پارٹی نے انہیں پکڑلیا۔دونوں افراد کی شناخت مدثر مقبول گنائی ساکن کراکشون کالونی سوپور اور منظور حسین بٹ ساکنمیر محلہ ہائیگام سوپورکے طور پر ہوئی ہے۔ تلاشی کے دوران ان کے قبضے سے 19کوڈین بوتلیںبرآمد کی گئیں۔بڈگام تھانہ نے اس سلسلے میں کیس زیر ایف آئی آر نمبر 321/2021درج کیا ہے ۔
 
 

ڈپٹی کمشنر شوپیان نے برف سے متاثرہ علاقوں کا دورہ کیا

شوپیان// ڈپٹی کمشنر شوپیاں سچن کمار ویشیا نے افسروں کی ایک ٹیم کے ہمراہ برف سے متاثرہ علاقوں کا دورہ کیا اور جام نگری، میمندر، وہیل، دانگم، بیمنی پورہ، ریشنگری، رتنی پورہ اور کژھ ڈورہ سمیت ضلع کے تباہ شدہ سیب کے باغات کا معائنہ کیا۔ ضلع کے رام نگری کژھ ڈورہ میں برف باری کی وجہ سے ہونے والے نقصانات کا جائزہ لینے اور ضلع کے دور دراز علاقوں میں دستیاب شعبہ صحت ، پانی کی فراہمی اور کھانے پینے کی اشیاء کے انتظامات کے علاوہ نقصانات کا جائزہ لیا جائے گا اور اس کی بحالی کا کام کیا جائے گا۔ ڈی سی نے افسران کو ہدایت دی کہ وہ اپنے ہیڈ کوارٹر میں موجود رہیں اور ضلع میں برف باری کے باعث پیدا ہونے والے کسی بھی مسئلے سے نمٹنے کے لیے تیار رہیں۔اپنے دورے کے دوران انہوں نے پی ایچ سی وہیل کا بھی معائنہ کیا اور عوام کو صحت کی بہتر سہولیات فراہم کرنے پر زور دیا۔ڈی سی نے تحصیلداروں کو یہ بھی ہدایت دی کہ وہ اپنے اپنے دائرہ کار میں باقاعدگی سے اس مشق کی نگرانی کریں تاکہ درختوں اور پھلوں کو پہنچنے والے نقصان کا جائزہ لیا جائے اور باغبانوں کو ہر ممکن تعاون فراہم کیا جائے۔
 
 

بانڈی پورہ کے کئی سیاسی کارکن پیپلز کانفرنس میں شامل

سجاد لون نے پارٹی میں خیرمقدم کیا
سرینگر// بانڈی پورہ سے تعلق رکھنے والے کئی سیاسی کارکنوں نے اتوارکو پیپلز کانفرنس میں شمولیت اختیار کی ۔اس موقع پر پارٹی چیئرمین سجاد غنی لون ،جنرل سیکریٹری عمران رضا انصاری اور سینئر رہنما نظام الدین بٹ بھی موجود تھے ۔ ایک بیان میں پارٹی ترجمان نے کہا کہ بانڈی پورہ سے تعلق رکھنے والے پارٹی کے سیاسی کارکن مشتاق احمد نے 60 کارکنوں اور 3 پنچوں میمہ بیگم،عبدالجبار اور عبدالرشید سمیت پارٹی میں شمولیت اختیار کی۔سجاد غنی لون نے ان کا استقبال کرتے ہوئے کہا کہ وادی بھر سے زمینی سطح کے کارکنوں کی شمولیت عوام کے ایک بڑے حصے میں پارٹی کی بڑھتی ہوئی مقبولیت کی عکاسی کرتی ہے۔انہوں نے کہا کہ پیپلز کانفرنس واحد ایسی سیاسی جماعت ہے جس میں ذات ، مسلک اور حیثیت کی کوئی اہمیت نہیں ۔لون نے کہا ’’ ہماری طاقت یہ ہے کہ پیپلز کانفرنس ایک غیرت مند پارٹی ہے۔ لیڈر اور کارکن یکساں طور پر قابل احترام ہیں اور فیصلہ سازی کے عمل میں سارے شامل ہوتے ہیں۔ ہماری صفوں میں کہیں بھی ہائی کمانڈ کلچر نہیں ہے اورہم پارٹی کا حصہ ہونے پر فخر محسوس کرتے ہیں جس میں ہرایک کے ساتھ دوسرے رہنماؤں کے برابر سلوک کیا جاتا ہے‘‘۔ عمران انصاری نے کہا کہ 43 سال سے پہلے معرض وجود میں آنے والی پارٹی کے پیچھے جدوجہد کی قابل فخر تاریخ ہے ۔انہوں نے کہا’’ ہم کشمیر کے لوگوں کی بہتری کے لیے انتھک کوششیں جاری رکھیں گے‘‘۔سینئر پارٹی لیڈر نظام الدین بٹ نے کہا کہ نئے آنے والوں کو اپنے لیے ایک باوقار پلیٹ فارم ملے گا جس میں وہ معاشرے کی بہتری کے لیے کام کریں گے اور بے آوازوں کی طاقتور آواز بنیں گے۔ 
 
 

 میوہ باغات کو بھاری نقصان پہنچاہے:مبارک گل

 خصوصی مالی پیکیج کا اعلان کیا جائے

سرینگر//جموں و کشمیر رورل ڈیولپمنٹ سوسائٹی کے چیئرمین مبارک گل نے برف باری سے کشمیر میں باغات کو ہونے والے نقصانات پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے ایل جی انتظامیہ سے اپیل کی ہے کہ وہ متاثرہ باغ مالکان میں معاوضہ فراہم کریں۔مبارک گل نے کہا کہ  برف باری نے جنوبی ، شمالی اور وسطی کشمیر کے مختلف اضلاع بالخصوص شوپیاں اور کولگام کے بالائی علاقوں میں سیب کے باغات کو بہت زیادہ نقصان پہنچایا ہے۔برف باری کی وجہ سے پورے کشمیر صوبے میںمیوہ صنعت کو بھاری نقصان پہنچا ہے جس کا فوری طور پر اندازہ لگایا جانا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو متاثرہ باغبانوں کی بحالی کے لیے فصل بیمہ اسکیم کے نفاذ کو بھی یقینی بنانا چاہئے۔‘‘ انہوں نے لیفٹیننٹ گورنرسے اپیل کی کہ متاثرہ باغات کیلئے خصوصی مالی پیکیج کا اعلان کیا جائے جنہیں بے وقت برفباری کی وجہ سے بڑے پیمانے پر نقصان پہنچا ہے۔
 
 

اشتیاق بیگ کا سکمز ملازم کے ساتھ اظہار یکجہتی 

 
 سرینگر//نگوا صدر اشتیاق احمد بیگ نے سکمزمیں میڈیکل ریکارڈ افسر آفتاب احمد بٹ کی والدہ کے انتقال پرگہرے دکھ کا اظہار کیا ہے ۔  بیگ نے کہا کہ دکھ کی اس گھڑی میں وہ غمزدہ خاندا ن کے ساتھ بر ابر شریک ہیں اور اللہ تعالیٰ سے دعا گو ہیں کہ مرحومہ کو جنت الفردوس میں جگہ دے۔
 
 
 

آریانز کالج میں ’کڑواچوتھ منایا گیا 

سرینگر//آریانز گروپ آف کالجز نے ہندوستانی تہواروں کی اہمیت سے آگاہ کرنے کیلئے اتوار کو کروا چوتھ کو بہت جوش و خروش سے منایا گیا۔ آریانز کے سبھی اداروں سے وابستہ طلباء نے کیمپس میں منعقد ہونے والی مختلف سرگرمیوں میں حصہ لیا۔اس موقع پر مہندی اور دیگرمقابلوںکا اہتمام کیا گیا۔ سبھی نے جوش و خروش سے سرگرمیوں میں حصہ لیا اور ان تمام شعبوں میں اپنی صلاحیتوں کا مظاہرہ کیا۔ تمام خواتین نے اس دن کو مزید خاص بنانے کیلئے گانے گائے اور گروپوں میں رقص کیا۔ ڈاکٹر پروین کٹاریہ ، ڈائریکٹر جنرل ، آریانز گروپ آف کالجز نے اس موقع پر تمام عملے کو مبارکباد دی۔واضح رہے کہ اس تہوار پر شادی شدہ خواتین اپنے شوہروں کی خوشحالی، اچھی صحت اور لمبی عمر کے لیے دعا کرتی ہیں۔