مزید خبریں

سیاسی غیر یقینی ،اقتصادی ومعاشی بدحالی تشویشناک

چھینے گئے آئینی حقوق عوام کو واپس کئے جائیں

سرینگر//نیشنل کانفرنس کے ارکین پارلیمان محمداکبرلون اورحسنین مسعودی نے جموں کشمیر میں سیاسی غیر یقینی ،اقتصادی ومعاشی بدحالی پر تشویش کااظہار کرتے ہوئے کہا کہ جموں کشمیر میں حالات کو پٹری پرلانے کیلئے ریاست کے لوگوں سے غیرآئینی طریقے سے چھینے گئے ان کے آئینی حقوق کو واپس کیا جائے۔انہوں نے ایک بیان میں کہا کہ جموں کشمیرکو دومرکزی زیرانتظام علاقوں میں تقسیم کرناموجودہ مرکزی سرکار کی سب سے بڑی غلطی ہے جس پر سیاسی رہنمائوں، ماہرین قانون اور دانشوروں نے اپنی تشویش کااظہار کیا۔ انہوں نے میریج ہالوں میں نیم فوجی دستوں کو ٹھہرانے ،فورسزاہلکاروں کی تعیناتی میں اضافہ کرنے کوسراسرقانون کی خلاف ورزی قرار دیا۔انہوںنے مزیدکہا کہ لوگوں کوہرسطح پرآئینی اور جمہوری حقوق سے محروم کردیاگیا ہے۔
 
 
 
 

سرحدپارلانچنگ پیڈمتحرک

دراندازی کو ناکام بنانے کیلئے فورسزچوکس:آئی جی بی ایس ایف

سرینگر//سرحدی حفاظتی فورس کے انسپکٹر جنرل راجا بابو سنگھ نے کہا ہے کہ سرحدوں پر کسی بھی دراندازی کی کوشش کو ناکام بنانے کیلئے سیکورٹی فورسز چوکس اور متحر ک ہیں ۔ سی این آئی کے مطابق ایک نجی چینل کے ساتھ بات کرتے ہوئے آئی جی پی بی ایس ایف راجا بابو سنگھ نے کہا کہ امسال درنداز ی کی کم کوششیں ریکارڈ کی گئیں۔ انہوں نے کہا کہ امسال جنگ بندی معاہدے پر عملدر آمد کے بعد سرحدوں پر امن قائم ہو ا جس کے بعد دراندازی کے واقعات میں بھی کمی ریکارڈ کی گئی  ۔ انہوں نے کہا کہ سرحدوں پردراندازی کی کسی بھی کوشش کو ناکام بنانے کیلئے بی ایس ایف متحرک ہے اور جو بھی اُس پار سے کوشش کی جاتی ہے اسکا بھر پور انداز میںجواب دیا جاتا ہے ۔ بابو نے کہا کہ اس وقت کنٹرول لائن کے پار تمام لانچ پیڈ سرگرم ہیں جو اس تاک میںہے کہ دراندازی کرکے کشمیر میں داخل ہو سکے ۔ انہوں نے بتایا کہ سرحدوںپر بی ایس ایف اور دیگر سیکورٹی فورسز اہلکار متحرک ہے اور پاکستان کی جانب سے کی جانے والی ہر کوشش کو ناکام بنانے کیلئے چوکس ہے ۔ انہوں نے کہا کہ برفباری کے پیش نظر سرحدوں پر دراندازی کی کوششوں میں اضافہ ہو سکتا ہے تاہم سرحدوں پر سیکورٹی فورسز الرٹ ہیں اور کسی بھی کوشش کو کامیاب نہیں ہونے دیا جائے گا ۔ انہوں نے بتایا کہ تمام راستوں کو پہلے ہی سیل کر دیا گیا ہے اور دراندازی کی جب بھی کوئی کوشش ہو گی اس کو کامیاب نہیں ہونے دیا جائے گا ۔ 
 
 
 

ساوجیاں میں سڑک حادثہ میں ایک شہری زخمی 

حسین محتشم
مینڈھر//پونچھ ضلع کی تحصیل منڈی میں ہوئے ایک سڑک حادثے میں ایک لڑکی زخمی ہوگیا ۔منڈی سے ساوجیاں کی طرف جانے والی ایک ٹاٹا سومو زیر نمبر1548-JK12سندری نالہ پر ڈرائیور کے کنٹرول سے باہر ہو کر حادثے کا شکار ہو گئی جس کے نتیجے میں ایک لڑکی زخمی ہوگئی ۔اس کی شناخت شاہین اختر دختر ممتاز احمد عمر 18برس کے طور پر ہوئی ہے جس کو علاج معالجہ کیلئے پرائمری ہیلتھ سنٹر ساوجیاں منتقل کر دیا گیا ۔ڈاکٹروں نے بتایا کہ زخمی لڑکی کی حالت مستحکم ہے جبکہ اس کا علاج معالجہ کیاجارہاہے ۔
 
 
 
 
 

 فورسزکامیریج ہالوں کو قبضے میں لینا

’نارملسی ‘ کے دعوئوں کے برعکس: تاریگامی

کنڈ قاضی گنڈ// سی پی آئی (ایم)  رہنما یوسف تاریگامی نے اتوار کو کہا کہ سری نگر میں سی آر پی ایف کے شادی ہالوں کو اپنے قبضے میں لینے اور وادی بھر میں نئے سیکورٹی بنکروں تعمیر نے جموں و کشمیر میں بی جے پی حکومت کے’’معمول‘‘ کے دعوئوں کو کھوکھلا کر دیا ہے۔ایک بیان کے مطابق دفعہ 370 کے تحت سابق ریاست کی خصوصی حیثیت کو غیر آئینی طور پر منسوخ کرنے کے بعد جنوبی کشمیر کے کنڈ قاضی گنڈ میں پارٹی کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے، انہوں نے کہا کہ سری نگر کے ہر کونے میں سیکورٹی بنکر بن رہے ہیں اور کشمیر میں نئی نیم فوجی کمپنیاں بلائی گئی ہیں۔ صورتحال اس مرحلے پر پہنچ گئی ہے جہاں شادی ہالوں میں اضافی سی آر پی ایف اہلکار تعینات کیے جا رہے ہیں جو یہاں لوگوں کے لیے واحد نجی جگہ رہ گئی تھی۔انہوں نے کہا کہ 5 اگست 2019 کے بعد جموں و کشمیر میں ’’ترقی اور ترقی‘‘ کے بارے میں بی جے پی کا فرضی بیان اس طرح کے واقعات سے ردی کی ٹوکری میں پڑ جاتا ہے۔ لوگوں کو خاموش کرنے کے واحد مقصد کے ساتھ ہر روز مزید سخت قوانین لائے جاتے ہیں۔پچھلے تین برسوں میں صرف ایک ہی پیش رفت ہوئی ہے جبرسے آوز کو دبانا۔ انہوں نے مزیدکہا کہ جموں و کشمیر کو ایک ماڈل پولیس سٹیٹ بنایا گیا ہے جس کے ازالے کا کوئی طریقہ کار یا آئینی ادارہ نہیں ہے۔ جموں و کشمیر میں سب سے زیادہ بے روزگاری کی شرح 21.6 فیصد اور مہنگائی کی حیرت انگیز شرح 7.39 فیصد ہے جو2019 کے بعد خطے میں بی جے پی کے ’’ترقی‘‘کے دعوئوں کو جھٹلاتی ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ اگست 2019 کے بعد سے، غیر رسمی شعبے سے وابستہ جموں و کشمیر کے لوگوں کی آمدنی بے روزگاری کی ایک بڑی لہر کی وجہ سے تیزی سے کم ہو گئی ہے۔ متاثر ہونے والے افراد میں تعمیراتی کارکن، آٹو اور بس ڈرائیور، چھوٹی دکانوں کے مالکان اور یومیہ اجرت والے مزدور شامل ہیں۔ جموں و کشمیر میں آشا اور آنگن واڑی کارکنوں کو ان کی معمولی اجرت وقت پر ادا نہیں کی جا رہی ہے۔ گزشتہ تین دہائیوں کے تنازعات کے باوجود، جموں و کشمیر میں باغبانی کی صنعت جسے خطے کی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی سمجھا جاتا ہے، چند سال پہلے تک پھل پھول رہی تھی۔ تاہم، نومبر 2018 اور 2019 میں غیر موسمی برف باری کے بعد سیب کی فصل اور درختوں کو نقصان پہنچا اور کشمیر میں پھلوں کی صنعت کو اگست 2019 کے لاک ڈان کی وجہ سے معاشی نتائج کا سامنا کرنا پڑا جس کے بعد کوویڈ 19 لاک ڈان نے پھلوں کی صنعت کو تباہ کر دیا۔ انہوں نے کہا کہ اس سال اکتوبر کے اوائل میں ہونے والی برف باری نے خاص طور پر جنوبی کشمیر کے کولگام اور شوپیاں اضلاع میں کسانوں کو ایک اور دھچکا پہنچایا۔ برفباری کی وجہ سے نہ صرف ابھی تک توڑے جانے والے پھلوں کو نقصان پہنچا ہے بلکہ اس سے پھل دار درختوں کو بھی نقصان پہنچا ، جس کی تلافی کسانوں کے لیے مشکل ہوگی۔ ابھی تک متاثرہ کسانوں کو کوئی معاوضہ ادا نہیں کیا گیا اور نقصان کا صحیح تخمینہ بھی نہیں لگایا گیا۔ انہوں نے ان متاثرہ باغبانوں کو مناسب معاوضہ دینے کا مطالبہ کیا-
 
 
 

صحافی شاہدبخاری دل کادورہ پڑنے سے انتقال

صحافتی،سیاسی،سماجی اوردینی تنظیموں کا اظہار تعزیت

مشتاق الحسن
سرینگر//معروف صحافی اورکے ٹی وی اردوکے ایڈیٹر شاہدبخاری کا اتوار سہ پہر کو دل کا شدیددورہ پڑنے سے انتقال ہوگیا۔سیاسی ،سماجی،مذہبی اورصحافی تنظیموں نے ان کی رحلت پررنج والم کااظہار کیا ہے۔کے ٹی وی اردو کے چینل ایڈیٹرشاہد بخاری کااتوار کو ساڑھے چار بچے دل کاشدیددورہ پڑنے سے انتقال ہوگیا۔ان کے انتقال کی خبرپھیلتے ہی صحافتی برادری دم بخود ہو کررہ گئی۔50برس  کے شاہد اپنے گھر میں تھے اور اس دوران انہوں نے سینے میں شدید دردکی شکایت کی جس کے بعدانہیں  سب ضلع اسپتال ماگام پہنچایا گیا،جہاں ڈاکٹروں نے انہیں مردہ قرار دیا۔جونہی ان کی میت آبائی گائوں پہنچائی گئی تو وہ وہاں کہرام مچ گیا۔مرحوم کی نمازجنازہ شام دیر گئے اداکی گئی جس میںسینکڑوں لوگ شریک ہوئے۔مرحوم کواشک بار آنکھوں سے مقامی قبرستان میں سپردخاک کیاگیا۔ مرحوم اپنے پیچھے دو فرزند، ایک دختر اور جواں سال اہلیہ کو چھوڑگئے۔کے این ایس کے چیف ایڈیٹر و  ایڈیٹرس فورم کے معاون کنوینئرمحمد اسلم بٹ نے شاہد بخاری کے انتقال پردکھ اورافسوس اور مرحوم کے اہل خانہ کے ساتھ اظہارتعزیت کیا۔ادھرانجمن اردوصحافت نے بھی شاہدبخاری کی وفات پرگہرے دکھ کااظہار کرتے ہوئے پسماندگان کے ساتھ یکجہتی کااظہار کیا۔جموں کشمیر پردیش کانگریس صدرغلام احمد میر نے سینئرصحافی شاہدبخاری کی اچانک وفات پردکھ اور افسوس کااظہار کرتے ہوئے پسماندگان کے ساتھ تعزیت کااظہار کیا۔ایک بیان میں پردیش کانگریس صدر نے مرحوم کے روح کے ابدی سکون کی دعاکی اوران کی موت کوایک نقصان قراردیا۔میرنے کہا کہ میرے پاس ان کے انتقال پر اظہارغم کرنے کیلئے الفاظ ہی نہیں ہیں۔ سابق کابینہ وزیر اور اپنی پارٹی سینئر نائب صدر غلام حسن میر نے شاہد مسعود بخاری کی اچانک وفات پر گہرے دکھ اور صدمے کا اظہار کیا۔ایک تعزیتی پیغام میں میر نے دکھ کی اس گھڑی میں اہل خانہ کے ساتھ دلی ہمدردی اور یکجہتی کا اظہار کیا۔ غلام حسن میر نے تعزیتی بیان میں کہاکہ شاہد بخاری ایک بہترین شخص تھے جن میں عاجزی، انکساری، سادگی اور ہمدردی تھی۔ انہوں نے کہا کہ انہیں ایک دیانتدار صحافی کے طور ہمیشہ یاد رکھاجائے ۔سول سوسائٹی فورم کے چیئرمین اور سابق ایجیک صدرعبدالقیوم وانی نے بھی صحافی شاہدبخاری کی وفات پر غم اور افسوس کااظہار کیا ہے۔ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ ان کے وفات سے صحافت کے میدان میں ایک خلاء پیدا ہوگیا۔انہوں نے کہا کہ ان کی موت ان کیلئے ذاتی نقصان ہے۔وانی نے غمزدہ خاندان کے ساتھ تعزیت کااظہار کرتے ہوئے دعاکہ اللہ تعالی مرحوم کو جواررحمت میں جگہ دیں اورلواحقین کو یہ صدمہ برداشت کرنے کی توفیق عطا فرمائیں۔حقانی میموریل ٹرسٹ نے بھی صحافی شاہد مسعود بخاری کے انتقال پر تعزیت کا اظہار کیا ہے۔ ٹرسٹ کے جنرل سکریٹری بشیر احمد ڈار نے انکی وفات پر دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کی صحافتی خدمات بہت دیر تک یاد کی جائیں گی۔ حقانی ٹرسٹ سے وابستہ ادارے تحریک اسلامی جموں وکشمیر، ابن حقانی یوتھ فانڈیشن ، ٹرسٹ کے مرکزی کونسل کے سینئرممبران منظور احمد ملک، سمیع اللہ حقانی ،زونل صدر ٹنگمرگ غلام محمد حقانی ، ضلع صدور ٹرسٹ بارہمولہ، سرینگر ، پلوامہ و اسلام آباد محمد اسداللہ، مولانا محمد شفیع ، مولانا سمیع اللہ بٹ ،مشتاق احمد حقانی ، شعبہ تعلیم کے سربراہ مفتی قمرالدین ،مفتی طارق مصباحی نے بھی انکی وفات پر دکھ کا اظہار کیا ہے۔  ادھر اُن کے انتقال پر ، سابق ممبر اسمبلی گلمرگ محمد عباس وانی ،نیشنل کانفرنس کے شیخ مصطفی کمال اور فاروق احمد شاہ ،پی ڈی پی کے شبیر احمد میر ،ٹیچررس فورم ٹنگمرگ،لیکچررس فورم،رہبر تعلیم فورم ،ٹریڈرس ایسوسی ایشن ٹنگمرگ،چندی لورہ کنزر ماگام  کے علاوہ ٹنگمرگ ورکنگ جرنلسٹ ایسوسی ایشن نے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے سوگوار خاندان سے تعزیت کی۔
 
 
 

ناظم اطلاعات کی صدارت میں تعزیتی میٹنگ

سوگوار کنبے کے ساتھ ہمدردی اور یکجہتی کا اِظہار

سری نگر//محکمہ اطلاعات و تعلقات عامہ ( ڈی آئی پی آر ) نے ممتاز صحافی شاہد بخاری کے اَچانک اِنتقال پر گہرے دُکھ کا اِظہار کیا ہے جن کا دل کا دورہ پڑنے سے اِنتقال ہو ا۔اِس سلسلے میں  یہاں ناظم اطلاعات و تعلقات عامہ راہل پانڈے کی صدارت میں ایک تعزیتی میٹنگ منعقد ہوئی جس میں شاہد بخاری کے اِنتقال پر گہرے رنج و غم کا اِظہا ر کیا گیا۔  اُنہوں نے مرحوم کی روح کے ابدی او ر دائمی سکون کے لئے دعا کی اورسوگوار کنبے کے ساتھ ہمدردی اور یکجہتی کا اِظہار کیا ہے۔
 
 

وادی میں’بندکمروں‘ میں زعفران کی کامیاب کاشت متعارف

فصل بہتر،معیاراعلیٰ ،پیداوار دُگنی،آمدن زیادہ ،ناسازگارموسم سے نقصان صفر 

سرینگر//وادی کشمیر میں زعفران صنعت کو فروغ دینے کیلئے سرکاری سطح پراقدامات جاری ہیں ۔ اس بیچ زرعی یونیورسٹی نے ’’انڈور‘‘ زعفران کاشت متعارف کی ہے اور اس کے بہترین نتائج سامنے آئے ہیں ۔ اس انڈور کاشت سے موسم کی تباہی سے زعفران کو بچایا جاسکتا ہے ۔ سی این آئی کے مطابق وادی میں زعفران کی کاشت کو فروغ دینے کے لیے حکومت ہند نے کئی نئی اسکیمیں اور تیکنیکیں متعارف کروائی ہیں۔ گزشتہ سال مئی میں متعارف کرائی گئی جی آئی ٹیگنگ اور پروسیسنگ کی نئی ٹیکنالوجی کے ذریعے کشمیر کے زعفران کے معیار کو دنیا میں پہلے نمبر پر لے جانے کے ساتھ ساتھ اب  زرعی یونیورسٹی کشمیر نے پہلی بار کسانوںکو’ انڈور‘ کاشتکاری سے متعارف کرایا ہے۔ ماہرین کا خیال ہے کہ معیار کے ساتھ ساتھ اب مقدار کو بھی اس ٹیکنالوجی سے فائدہ ہوگا۔ اس تکنیک کو اپنانے والے کسان اچھے نتائج کی توقع کر رہے ہیں۔ اگر ہم عام کاشتکاری کی بات کریں تو گزشتہ سال کے مقابلے میں 50 فیصد سے زیادہ اضافہ ہوا ہے۔اس سلسلے میں کئی زعفران کاشتکاروں نے بتایا ہے کہ بہت سے کسانوں نے زعفران کی بند کمروں میں کاشت کو اپنایا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ یہ ٹیکنالوجی پہلی بار اپنائی گئی ہے۔ فصل بہت اچھی ہوئی ہے، آنے والے ایک دو دن میں کاٹ لیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ اس تکنیک کے عام کاشتکاری کے مقابلے بہت زیادہ فوائد ہیں۔ پہلا فائدہ یہ ہے کہ اگر کسی کے پاس کام کی زمین ہے تو وہ اس تکنیک کو اپنا سکتا ہے، دوسرا فائدہ یہ ہے کہ زمین کم مل رہی ہے، اس لیے اس ٹیکنالوجی سے عمودی کاشتکاری کے مقابلے پانچ گنا زیادہ پیداوار حاصل کی جا سکتی ہے، اور تیسرا فائدہ یہ ہے کہ ٹیکنالوجی سے اگائی جانے والی فصل کا معیار عام کاشتکاری سے بہت بہتر ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ اس سال تقریباً 500 کلوگرام زعفران کاشت کی گئی ہے۔ گزشتہ سال پیداوار کم تھی لیکن اس سال فصل عام کاشت سے 50.60 فیصد زیادہ ہے۔ جی آئی ٹیگنگ کی تکنیک کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ پچھلے سال صرف 10.15 کلو زعفران سیفران پارک میں کوالٹی چیک کرنے کے لیے آیا تھا لیکن جب دوسرے کسانوں نے دیکھا کہ جی آئی ٹیگنگ کرنے والوں کو دوہرا منافع ملا تو اس سال 500 سے زائد کسان اس سے جڑے ہیں۔زعفران کی معیار کی پیمائش کے لیے آٹھ پیرامیٹرز ہیں جن کی بنیاد پر ان نمونوں کی جانچ کی جاتی ہے، جنہیں بین الاقوامی سطح پر تسلیم کیا جاتا ہے۔ کسان نے بتایا کہ ان آٹھ پیرامیٹرز میں سے نمی، غیر ملکی مادہ تین اہم پیرامیٹر ہیں۔ اس کے بعد زعفران کی درجہ بندی کی جاتی ہے اور پھر ای نیلامی کی جاتی ہے۔ زعفران کے کھیتوں میں تین سے چار کنال ایک کلو باریک زعفران پیدا ہوتا ہے۔ معیار اور مانگ کے لحاظ سے ہر کلوگرام کی قیمت 1.6 لاکھ سے 2.2 لاکھ روپے کے درمیان ہے۔اس دوران کاشتکاروں نے بتایا کہ ایک دہائی قبل کشمیر میں زعفران کی کاشت کرنے والے 22 ہزار خاندان تھے لیکن یہ تعداد کم ہو کر تقریباً 16 ہزار خاندان رہ گئی ہے۔ زعفران سے سالانہ تقریباً 300 کروڑ روپے کی آمدنی ہوتی ہے۔ محکمہ زراعت کے سرکاری اعدادوشمار کے مطابق کشمیر میں زعفران کی کاشت کا رقبہ 1996 میں تقریباً 5.707 ہیکٹر سے 43.9 فیصد کم ہو کر 3.200 ہیکٹر رہ گیا ہے۔ کشمیری زعفران کی پیداوار گزشتہ دو دہائیوں میں 65 فیصد کم ہو کر 16 میٹرک ٹن سالانہ سے 5.6 MT تک پہنچ گئی ہے۔ایک عہدیدار نے کہا کہ سیفرون پارک ان تمام پیرامیٹرز کو محفوظ کرتا ہے جو کشمیر کے زعفران کو بہترین درجہ حاصل کرنے میں مدد کرتے ہیں۔ کشمیر کا زعفران سپین اور ایران کے زعفران سے بہتر سمجھا جاتا ہے۔ اس کوالٹی اشورینس اور جی آئی ٹیگنگ کے ساتھ کوئی بھی زعفران کو تمام قومی اور بین الاقوامی پلیٹ فارمز پر فروخت کر سکتا ہے۔ اس سے نہ صرف خریدار کو خالص کشمیری زعفران ملتا ہے بلکہ کسانوں کو اچھی قیمت بھی ملتی ہے۔کشمیری زعفران میں ایرانی زعفران کے 6.82 فیصد کے مقابلے میں 8.72 فیصد کریمین مواد ہے، جو اسے گہرا رنگ اور بہترین طبی قدر دیتا ہے۔
 
 
 

گاندربل میںمنظورشدہ33واٹرسپلائی اسکیموں میں22کیلئے کوئی پیسہ واگزار نہیں کیا گیا

ارشاداحمد
گاندربل//آبی وسائل سے مالا مال گاندربل ضلع کے بیشتر علاقوں میں پینے کے صاف پانی کی شدیدقلت پائی جاتی ہے۔ضلع میں متعددپانی سپلائی  اسکیموں پرکام شروع کرنے کے بعد اُنہیں ادھوراچھوڑا گیاجس کی وجہ سے موسم گرما میں متعدد علاقوں میں پانی کی شدیدقلت پائی جاتی ہے۔ضلع گاندربل میں منظور شدہ33واٹرسپلائی اسکیموں میں سے22اسکیموں یا پروجیکٹوںکیلئے ایک روپیہ بھی واگزار نہیں کیا گیا جس کے نتیجے میں یہ اسکیمیں شروع ہونے سے قبل ہی دم توڑ بیٹھی ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ محکمہ جل شکتی ڈویژن گاندربل کی طرف سے ہاتھ میں لئے گئے ان پروجیکٹوں میں سے دیگر اسکیمیں بھی سست رفتاری کا شکار ہے۔کشمیر عظمی کے پاس موجود دستاویزات کے مطابق جن22اسکیموں یا پروجیکٹوں کیلئے منظوری  کے باوجود بھی ابھی تک کوئی بھی رقم واگزار نہیں کی گئیں ہے، ان میں2کروڑ22لاکھ 99ہزار کی لاگت والی گاندربل ٹان کا دوسرا مرحلہ اور 7کروڑ48لاکھ 23ہزار روپے کی لاگت والی گاندربل اور کنگن حلقوں میں11پانی سپلائی اسکیموں کیلئے سربند کی تعمیر بھی شامل ہے۔زیر التوا پروجیکٹوں و اسکیموں میں72لاکھ روپے کی لاگت سے تعمیر ہونے والی گوگجی گنڈ ملک پورہ، 3کروڑ 14 لاکھ22ہزار روپے کی منظوری سے چونٹی ولی وار میں مختلف چشموں پر تعمیراتی کام اور ایک کروڑ19لاکھ روپے سے گنگ پتھری ،چنا گراڑ اور لار چشموںکے گرد حفاظتی دیوار کی تعمیر بھی شامل ہیں۔ ورپش نادر باغ میں پانی کے پروجیکٹ کیلئے 6 کروڑ 79 لاکھ14ہزار روپے کی منظور کی گئی تھی تاہم اس کیلئے ابھی تک کوئی بھی رقم واگزار نہیں کی گئی جبکہ وتشن منیگام نئی زیر تعمیر واٹر سپلائی سکیم میں 5 کروڑ 58لاکھ32ہزار،بنواس اندرون (نیو)کیلئے3کروڑ5لاکھ91ہزار اور ہاری پورہ بونہ زل میں 5 کروڑ 45لاکھ29ہزار روپے منظور ہوئے تھے، تاہم ابھی تک ان پروجیکٹوں کیلئے کوئی بھی رقم واگزار نہیں کی گئی۔ دستاویزات میں درج اعداد شمار کے مطابق اکہال(نیو)کیلئے  ایک کروڑ92لاکھ روپے،نیلہ نجون کیلئے ایک کروڑ57لاکھ28ہزار،یچھ ہامہ ہائین (نیو) کیلئے ایک کروڑ50لاکھ48ہزار ،مامر کیلئے ایک کروڑ21لاکھ57ہزار ،سمبل بالا سرفراو میں4کروڑ51لاکھ74ہزار اور وانگت(نیو)میں ایک کروڑ31لاکھ روپے کی لاگت سے یہ اسکیمیں اور پروجیکٹ منظور ہوئے تھے تاہم ان پروجیکٹوں کیلئے بھی ابھی تک کوئی بھی رقم واگزار نہیں کی گئی۔ کنگن میں پروجیکٹ کو وسعت دینے کیلئے11کروڑ41لاکھ73ہزار جبکہ نارن نا(نیو) کیلئے2کروڑ86لاکھ 63ہزار،کچ نمبل بارولہ کیلئے5کروڑ8لاکھ 45ہزارخانن کنگن (نیو)کیلئے3کروڑ22لاکھ 97ہزار،ریزن(نیو)میں ایک کروڑ30لاکھ اور سونمرگ میں3کروڑ48لاکھ77ہزار روپے کی رقم منظور کی گئی تھی تاہم ان پینے کے پانی کے پروجیکٹوں کیلئے بھی ابھی تک ایک روپے کی رقم بھی واگزار نہیں کی گئی۔ذرائع کے مطابق ان پروجیکٹوں پر یا تو سرے سے کام ہی شروع نہیں ہوا،یا اگر کسی پروجیکٹ پر شروع بھی ہوا، تو وہ بھی نامعلوم وجوہات کی بنا پر پر ادھورا چھوڑ دیا گیا۔ محکمانہ ذرائع نے بتایا کہ جن11پروجیکٹوں یا اسکیموں کیلئے رقومات واگزار کئے گئے وہ بھی آٹے میں نمک کے برابر تھے،جس کی وجہ سے ان پروجیکٹوں کا کام التوا میں پڑ گیا، یا نہایت ہی سست رفتاری سے چل رہا ہے۔مقامی آبادی نے لیفٹینٹ گورنر انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ متعلقہ حکام کو ہدایت دی جائے کہ ان نامکمل اسکیموں کو جلد مکمل کرکے آبادی کو راحت دلائی جائے۔ 
 
 

بجلی کا کرنٹ لگنے سے ایک زخمی 

راجوری //راجوری ضلع ہیڈ کوارٹر پر اتر پردیش کا ایک شہری کو بجلی کے کرنٹ لگنے کے بعد ہسپتال داخل کروایا گیا ہے ۔مقامی ذرائع نے بتایا کہ ضلع ہیڈکوارٹر کے ورکشاپ پل کے نزدیک کرایہ کے کمرے میں رہائش پذیر یوپی کے ایک شہری کو اچانک بجلی کے کرنٹ لگے جس کی وجہ سے وہ شدید زخمی ہو گیا ۔زخمی کی شناخت 28سالہ نعیم علی ولد ابرار حسین سکنہ رام پور اتر پردیش کے طورپر ہوئی ہے ۔جموں وکشمیر پولیس نے بتایا کہ مذکورہ شخص ایک کرایہ کے مکان میں رہائش پذیر تھا جہاں اس کو کئی کرنٹ لگے اور اس کو زخمی حالت میں گور نمنٹ میڈیکل کالج راجوری داخل کروا دیا گیا ہے جہاں پر اس کی حالت تشویش ناک بتائی جارہی ہے ۔
 
 
 

راجوری ۔تھنہ منڈی سڑک پرٹریفک بحال 

سمت بھارگو 
راجوری //راجوری ۔تھنہ منڈی سڑک ایک دن بند رہنے کے بعدٹریفک کیلئے کھول دی گئی ہے ۔تھنہ منڈی سب ڈویژن کو ضلع ہیڈ کوارٹر راجوری کیساتھ جوڑنے والی رابطہ سڑک گزشتہ دنوں سب ڈویژن کے کبھلاں علاقہ میں شروع کردہ آپریشن و محاصرے کی وجہ سے گاڑیوں کی آمد ورفت کیلئے بند کردی گئی تھی ۔اتوار شام کو سیکورٹی فورسز کی جانب سے تلاشی آپریشن کو ختم کر دیا گیا جس کے بعد سڑک کو بھی گاڑیوں کی آمد ورفت کیلئے بحال کر دیا گیا ہے ۔سرکاری ذرائع نے بتایا کہ آپریشن کے چلتے سنیچر کے روز راجوری تھنہ منڈی سڑک کو ٹریفک کیلئے بند کردیا گیا تھا لیکن اتوار کو آپریشن ختم ہونے کے بعد گاڑیوں کی آمد ورفت بھی بحال کر دی گئی ۔ڈپٹی ایس پی ٹریفک افتاب شاہ نے بتایا کہ سڑک پر گاڑیوں کی آمد ورفت معمول کے مطابق بحال کر دی گئی ہے ۔
 
 
 

ممتاز شاعر ستیش ومل کے شعری مجموعے جاری

سرینگر//ہندی، انگریزی اور کشمیری زبانوں کے ممتاز شاعر ستیش ومل کے شعری مجموعے اتوار کو سرینگر میں میزان پبلشرز کے ذریعہ دو قومی سطح کے پبلشنگ پلیٹ فارمز کے اشتراک سے منعقدہ ایک بک ریلیز کم ریڈنگ سیشن میں جاری کئے گئے۔ کاویہ پبلی کیشنز نئی دہلی کے ذریعہ شائع کردہ ہندی میں ومل کا نیا شعری مجموعہ’کھوئے ہوئے پرشتھ‘ جاری کیا گیا۔ اس موقع پر معروف مصنف اور انگریزی زبان کے مترجم مشتاق برق کی طرف سے ومل کی شاعری کی کتاب کا انگریزی ترجمہ ’فولیوز آف لاسٹ ٹریجر‘ بھی جاری کیا گیا۔ انگریزی ترجمہ Evincepub India نے شائع کیا تھا۔ ستیش ومل کی کتاب کا کشمیری ترجمہ بھی جاری کیا گیا۔ کشمیری ترجمہ معروف ادیب، مفکر اور شاعر ڈاکٹر غلام نبی حلیم نے کیا ہے اور اسے میزان پبلشرز سرینگر نے شائع کیا ہے۔ ومل نے ہندی میں چند چھوٹی نظمیں پڑھیں جو مشتاق برق کے انگریزی ترجمہ اور ڈاکٹر غلام نبی حلیم کے کشمیری ترجمہ سے تھیں۔ نامور ادیب شہباز ہاکبابری اور ڈاکٹر آفاق عزیز نے تراجم کا جائزہ لیا جبکہ نوجوان مصنف توصیف رضا نے شاعری اور انگریزی ترجمہ کے حوالے سے اپنا جائزہ پیش کیا۔ ستیش ومل کی شاعری کی خوبی پر گفتگو کرنے والے دیگر ممتاز ادیبوں میں رحیم رہبر، اقبال انجم، ڈاکٹر شبنم عشائی، شبیر ماٹجی، اشرف راوی، محمد شفیع راتھر، آصف صفیل، ڈاکٹر شہزادہ سلیم، شکیل الرحمان اور اشرف ضیاء شامل ہیں۔ ستیش ومل نے مترجمین مشتاق برق اور ڈاکٹر غلام نبی حلیم کے شاندار کام کو سراہا۔ ڈاکٹر ومل نے کہا کہ دونوں تراجم اصل کے بہت قریب ہیں اور یہ تراجم میری نظموں کی روح کو انگریزی اور کشمیری کے وسیع تر لسانی شعبوں تک لے جانے کی صلاحیت رکھتے ہیں"۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ ستیش کی شاعری کا یہ مجموعہ ان کی اٹھائیسویں کتاب ہے۔ اس موقع پر ایک گھنٹہ طویل شعری مباحثہ ہوا ۔
 
 

کولگام میںنویں جماعت کاطالب علم حرکت قلب بند ہونے سے فوت

کولگام//فرصل کولگام میں ایک سترہ برس کالڑکا دل کا شدید دورہ پڑنے سے انتقال کرگیا۔مقامی لوگوں کے مطابق نثارحسین میر ولدمحمد حسین ساکن کجراپنے گھر میں تھا اور اچانک بیہوش ہوگیا۔ اُسے نزدیکی ہسپتال لیجایا گیاجہاں ڈاکٹروں نے اُسے مردہ قرار دیا۔نثار نویں جماعت کا طالبعلم تھا۔
 
 
 
 
 
 
 
 
 

کنگن میں دو قمارباز گرفتار

دائو پر لگائی گئی رقم برآمد

 
غلام نبی رینہ
 
کنگن//کنگن پولیس نے دو قمار بازو ںکو گرفتار کرکے ان کے قبضے سے دا ئو پر لگائی گئی نقدی اور تاش کے پتے برآمد کرلئے۔ پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ کنگن پولیس نے ایک مصدقہ اطلاع ملنے پر ایس ڈی پی او سید یاسر قادری کی نگرانی میں ایس ایچ او کنگن ظہور احمد کی سربراہی میں  مامر کنگن میں ایک چھاپہ مار کارروائی کے دوران دو افراد کو جوا کھیلتے ہوئے رنگے ہاتھوں گرفتار کرلیااور ان کے قبضے سے دا ئو پر لگائے گئے رقم 10900اور تاش کے پتے برآمد کرلئے۔ گرفتار کئے گئے افرادکی شناخت منظور احمد ماگرے ساکن ژیرون کنگن، ارشد احمد خان ساکن مرگنڈ کنگن کے بطور ہوئی ہے۔ کنگن پولیس نے اس ضمن میں ایف آئی آر نمبر 129/2021درج کرکے تحقیقات شروع کردی ہے۔
 
 
 

 پی ڈی پی نے کئی عہدیداروں کا تقرر عمل میں لایا

سرینگر// پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی نے ایڈوکیٹ داؤد بشیر بٹ کو لولاب اسمبلی حلقہ کے حلقہ انچارج کے طور پر نامزد کیا ہے۔پارٹی ترجمان کے مطابق پارٹی نے گلزار احمد لون کو کپوارہ ضلع کیلئے  یوتھ ونگ کا ضلعی کوآرڈی نیٹر نامزد کیا ہے جبکہ اشتیاق احمد میر اور عرفان علی لون کو بالترتیب کپوارہ اور سوپور زون کے لیے یوتھ زون انچارج کے طور پر نامزد کیا گیا ۔دریں اثناء پارٹی ترجمان نے ڈاکٹر شوکت زرگر کی والدہ کے انتقال پر تعزیت کا اظہار کیا ہے ۔پارٹی لیڈران غلام نبی لون ہانجورہ، حاجی پرویز حمید اور عارف لائیگرو سمیت متعدد رہنماؤں نے ڈاکٹر زرگر اور اہل خانہ کے ساتھ گہرے دکھ کا اظہار کیا ہے۔انہوں نے مرحومہ کی روح اور اہل خانہ کے لیے صبر جمیل کی دعا کی۔
 
 
 

گاندربل پولیس کی مہلوک اہلکاروں کے اہل خانہ سے ملاقات

 
سرینگر//پولیس نے مہلوک اہلکاروں کے اہل خانہ سے اظہار یکجہتی اور ان کی خیریت جاننے کے لیے گاندربل میںان خاندانوں کے ساتھ بات چیت کی۔ مہلوک اہلکاروں کے اہل خانہ نے اطمینان کا اظہار کیا اور سماجی دوری کے اصولوں اور دیگر پروٹوکول پر عمل کرتے ہوئے اس بندھن کو مزید مضبوط کرنے کی امید ظاہر کی۔اس موقع پر ڈی وائی ایس پی (ڈار) گاندربل اور دیگر اعلیٰ افسران بھی موجود تھے جنہوںنے  غمزدہ اہل خانہ سے بات چیت کے ۔پولیس افسران نے ان کی شکایات کو تحمل سے سنا اور انہیں یقین دلایا کہ ان کے حقیقی مسائل کو بروقت حل کرنے کے لیے مناسب سطح پر اٹھایا جائے گا۔ افسران نے ان پر زور دیا کہ وہ محکمہ پولیس کو ایک خاندان کے طور پر سمجھیں اور خاص طور پر ضرورت کی صورت میں اپنے مسائل شیئر کریں۔ 
 
 
 

کشمیر عظمیٰ کے نامہ نگار برائے بارہمولہ فیاض بخاری کو صدمہ

 اہلیہ کے دادا انتقال کرگئے، مذہبی، سماجی اور سیاسی جماعتوں کا اظہارِ تعزیت
بارہمولہ//کشمیر عظمیٰ کے نامہ نگار برائے ضلع بارہمولہ فیاض بخاری کی اہلیہ کے دادا عبدالعزیز ملک ساکن زم زم پورہ زنڈ فران شیری بارہمولہ طویل علالت کے بعد انتقال کرگئے۔اس سلسلے میں فیاض بخاری کے ساتھ مذہبی، سماجی اورسیاسی جماعتوں نے تعزیت کا اظہارکرتے ہوئے مرحوم کے ایصال ثواب کیلئے مغفرت کی دعا کی اور غمزدہ خاندان کے ساتھ دلی ہمدردی کا اظہار کیا۔نارتھ کشمیر جرنلسٹ ایسوسی ایشن، بارہمولہ، ہیومن ایڈ سوسائٹی کشمیر، ایمپائر جوائنٹ ایکشن کمیٹی جے کے، جموں کشمیر ٹیچرز فورم، نیشنل کانفرنس کے سینئر رہنما ڈاکٹر سجاد شفیع اوڑی نے بھی تعزیت کا اظہار کیا۔ کشمیر عظمیٰ کے سبھی اراکین نے سوگوار کنبے بالخصوص فیاض بخاری سے تعزیت کا اظہار کیا ہے۔
 
 
 

Ingenious سکول نے گریجویشن ڈے کا اہتمام کیا

سرینگر//Ingenious اسکول نے گریجویشن ڈے کی تقریب کا اہتمام کیا۔ اس موقع پر طلباء نے اپنی شاندار کاکردگی کا مظاہرہ کیااور مہمانوں نے لطف لیا ۔ تقریبات کا سلسلہ تلاوت کلام پاک سے ہوا جس کے فوراً بعد سریلی آواز میں نعت پیش کی گئی۔اس کے فوراً بعد ایک دلکش آواز میں ایک ملی نغمہ پیش کیا گیا جس نے حاضرین کے دلوں کو چھو لیا۔ اس کے بعد کشمیری روف اور لوک رقص پیش کیا گیا ۔ یہ وہ لمحہ تھا جس نے واقعی ماحول میں دلکشی کا اضافہ کیا۔ آخر میں ایک زبردست کراٹے شو کا انعقاد ہوا۔ طلباء نے اس شومیں کمال کیا جس کی وجہ سے حاضرین ایک ساتھ تالیاں بجانے لگے۔ اس گریجویشن ڈے پر ہر ایک نے جس قدر جذبات کو محسوس کیا وہ ناقابل یقین تھا۔ادارے نے ڈاکٹر اے آر یوسف ، نگٹوپی پروین، ڈاکٹر آصف فاضلی، پروفیسر نصیر احمد صوفی، پروفیسر نثار احمد،پروفیسر نذیر احمد، ممتاز احمد،شبانہ،لبنیٰ میر، غلام نبی وارصدر پرائیویٹ سکول ایسوسی ایشن،تنویر احمد ایس ایچ او صورہ،منظور احمد کمار چیف ایجوکیشن افسر سرینگرسمیت کئی افسراد نے شرکت کی ۔
 

 نالہ دودھ گنگاکی صفائی مہم جاری

سرینگر// نالہ دودھ گنگا کی صفائی کے سلسلے میں میونسپل کمیٹی چاڈورہ نے جاری ایک مہم پر لوگوں نے اطمینان کا ظہار کیا ہے ۔اس دوران میونسپل کمیٹی چاڈورہ کے ایگزیکٹیو افسر مشتاق احمد نے بتایا کہ آنے والے دنوں میں صفائی کا کام مکمل کیا جائے گا۔
 
 

فوج نے ماور میں کینسر سے متعلق میڈیکل کیمپ کا انعقاد کیا

ہندوارہ//کینسر سے متعلق آگاہی کے قومی دن کے موقع پر ہندوستانی فوج کے میڈیکل آفیسر کی طرف سے ایک گفتگو کے بعد ایک میڈیکل کیمپ کا انعقاد کیا گیا۔ابتدائی پتہ لگانے پر توجہ مرکوز کی گئی جو کینسر کے انتظام اور علاج میں اہم ہے۔ اس کے علاوہ طرز زندگی میں ضروری تبدیلیوں کے لیے احتیاطی تدابیر پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ مقامی لوگوں کو کینسر کے خطرے کے عوامل، علامات، اسکریننگ کے طریقوں اور علاج کے بارے میں آگاہ کیا گیا۔
 
 
 

 پیپلز جسٹس فرنٹ کے اہتمام سے عطیہ خون کا کیمپ

سرینگر//جموں و کشمیر پیپلز جسٹس فرنٹ نے گورنمنٹ میڈیکل کالج بارہمولہ میں عطیہ خون کا ایک کیمپ منعقد کیا جس میں تقریباً 50 رضاکاروں نے خون کا عطیہ پیش کیا۔ تقریب کے اختتام پر پارٹی چیئرمین آغا سید عباس رضوی نے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ایسے کیمپ زندگی بچانے کیلئے انتہائی اہمیت کے حامل ہیں۔