مزید خبریں

 آیوشمان بھارت کی چوتھی گورننگ کونسل میٹنگ | چیف سیکریٹری کامفت طبی سہولیات کے فوائدیقینی بنانے پرزرو

جموں//چیف سیکرٹری ڈاکٹر ارون کمار مہتا نے آیوشمان بھارت کی چوتھی گورننگ کونسل میٹنگ کی صدارت کی۔میٹنگ کو بتایا گیا کہ سٹیٹ ہیلتھ ایجنسی اور بجاج الیا نزجی آئی سی کے درمیان موجودہ معاہدہ 25 دسمبر 2021ء کو ختم ہو جائے گا اور ایک نئے اِنشورنس کنٹریکٹر کی خدمات حاصل کرنے کے لئے نئے ٹینڈر جلدہی جاری کئے جائیں گے ۔چیف سیکرٹری نے آیوشمان بھارت۔ پردھان منتری جن آروگیہ یوجنا ( پی ایم۔ جے اے وائی ) اور ایس اِی ایچ اے ٹی سکیموں کے تحت موجودہ اِنتظامات کی معیاد ختم ہونے کی تاریخ کے بعد بھی مفت اور کیش لیس صحت کی دیکھ ریکھ کے مسلسل فوائد کو یقینی بنانے کے لئے ٹینڈر نگ کے عمل کو فوری طور پر شروع کرنے کی ہدایت دی۔چیف سیکرٹری نے نظر ثانی شدہ آبادی کے تخمینے پر غور کرتے ہوئے نیشنل ہیلتھ اَتھارٹی کی سفارش پر ، نیشنل فوڈ سیکورٹی ایکٹ ( این ایف ایس اے) کے تحت موجودہ ایس اِی سی سی 2011 ڈیٹا بیس سے تازہ ترین ڈیٹا میں تبدیل کرنے کے لئے محکمہ صحت و طبی تعلیم کی تجویز کو منظور ی دی۔چیف سیکرٹری نے کووِڈ پیچیدگیوں کے علاج کو شامل کرنے کے لئے صحت سے متعلق فوائد کے ایک ترمیم شدہ پیکیج کو اَپنانے کی منظور ی دی۔ ڈاکٹر ارون کمار مہتا نے محکمہ کو مشور ہ دیا کہ وہ این ایچ اے سے درخواست کرے کہ وہ طبی آنکو لوجی میں ٹارگٹیڈ تھرا پیز ، امیونو موڈیو لٹرز اور بچوں میں ایک سے زیادہ سوزش والے سنڈ روم کو صحت سے متعلقہ فوائد کے نظر ثانی شدہ پیکیج میں شامل کرنے پر غور کرے۔سکیم کے تحت اَب تک کی مالی پیش رفت کے بارے میں محکمہ سے کہا گیا کہ وہ تمام اَخراجات کا محکمہ خزانہ سے آڈِٹ کرائے تاکہ مالیاتی لین دین میں احتساب اور شفافیت کو یقینی بنایا جاسکے ۔
 
 
 
 

’ہرہفتے معصوم کاخون بہایاجاتاہے‘:محبوبہ مفتی

مجرموں کو کیفرکردارپہنچایاجائے:میر

سرینگر//پی ڈی پی صدر محبوبہ مفتی اور پردیش کانگریس صدرغلام احمد میر نے بہوری کدل سرینگر میں نامعلوم اسلحہ برداروں کے ہاتھوں سیلزمین کی ہلاکت کی مذمت کی ہے۔ کے این ایس کے مطابق محبوبہ مفتی نے منگل کو ٹویٹ کرتے ہوئے کہا،’ ’جموں و کشمیر میں حالات اس حد تک بگڑچکے ہیں کہ ہر ہفتے ایک معصوم شہری کا خون بہایا جاتا ہے‘‘۔ انہوںنے مزید کہا، ’’یہ بدقسمتی کی بات ہے کہ سیکورٹی کے نام پر جابرانہ اقدام کرنے کے باوجود بھی لوگوں کو مارا جا رہا ہے اور لوگوں کو وقار اور نارملسی کا کوئی احساس نہیں ہے، میں پسماندگان کی خدمت میں تعزیت کرتی ہوں‘‘۔ محبوبہ مفتی نے جموںوکشمیر کی موجودہ سیکورٹی صورتحال پر حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا۔ادھرجموں کشمیرپردیش کانگریس صدرغلام احمدمیرنے پیر کومحمدابراہیم خان نامی سیلزمین کی ہلاکت کی مذمت کی ہے۔ایک بیان میں انہوں نے اس قتل کو بیہمانہ قراردیاتاکہ ماحول کوخراب کیا جائے۔میرنے کہا کہ کسی بھی مہذب سماج میں اس طرح کی ہلاکتیں قابل قبول نہیں ہیں ۔انہوں نے کہا کہ مجھے اس قتل سے سخت دکھ پہنچا  ہے اورمیں غمزدہ کنبے کے ساتھ تعزیت کااظہار کرتا ہوں۔انہوں نے اس قتل میں ملوث ملزموں کو کیفردار پہنچانے کا مطالبہ کیا۔ 
 
 
 

ملوثین کوبخشانہیں جائیگا:رویندر رینہ

جموں//یواین آئی// جموں وکشمیر بی جے پی کے صدر روندر رینہ نے بہوری کدل سری نگر میں عام شہری کی ہلاکت پر شدید غم وغصے کا اظہا رکرتے ہوئے کہاکہ پاکستان کشمیر کے پُر امن حالات کو درہم برہم کرنے کی سازشوں میں مصروف ہے ۔موصوف نے ان باتوں کا اظہار منگل کے روز یہاں نامہ نگاروں سے بات چیت کے دوران کیا۔انہوں نے کہاکہ پاکستان کشمیری مسلمانوں کا سب سے بڑا دشمن ہے اور یہ کہ وہ نہیں چاہتا کہ کشمیر میں امن کی فضا قائم ہوسکے ۔روندر رینہ نے مزید بتایا کہ بہوری کدل سری نگر میں جنگجوئوں نے ایک عام شہری محمد ابراہیم خان کا بے دردی کے ساتھ قتل کیا جو انسانیت سوز ہے اور اس کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے۔بی جے پی صدر نے بتایا کہ مہلوک شہری اپنے عیال کی کفالت کی خاطر کام میں مصروف تھا کہ اُس پر گولیاں چلائیں گئیں جس کے نتیجے میں وہ موقع پر ہی دم توڑ بیٹھا۔انہوں نے کہاکہ چونکہ سیکورٹی فورسز نے جموں وکشمیر میں سرگرم ملی ٹینٹوں کے خلاف حالیہ ایام کے دوران متعدد کامیاب آپریشن کئے جس وجہ سے پاکستان اور ملک دشمن عناصر ذہنی کوفت کا شکار ہو کرعام شہریوں کو نشانہ بنا رہے ہیں تاکہ امن و قانون کی صورتحال کو درہم برہم کیا جاسکے ۔بھاجپا صدر کے مطابق رات کی تاریکی میں ایک عام شہری پر فائرنگ کرنا کون سی بہادری ہے ۔روندر رینہ نے بتایا کہ پچھلے 30برسوں کے دوران پاکستان نے ہزاروں بے گناہ کشمیریوں کا قتل کیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ شہری ہلاکتوں میں ملوث افراد کو کسی بھی صورت میں بخشا نہیں جائے گا اور اُنہیں بہت جلد کیفر کردار تک پہنچایا جائے گا۔
 
 
 

مینڈھر میں مشکوک موت | بیوی اور عاشق گرفتار 

جاوید اقبال 
مینڈھر //جموں وکشمیر پولیس نے مینڈھر سب ڈویژن میں ایک مشکوک موت کے معاملے کو ایک ہفتے کے اندر حل کرتے ہوئے مرنے والے کی بیوی اور اس کے عاشق کو گرفتار کرلیا ۔ایس ڈی پی او مینڈھر ظہیر عباس جعفری نے ایک پریس کانفرنس کے دوران بتایا کہ سب ڈویژن کے دھار گلون علاقہ میں 2اکتوبر کو ایک نوجوان کی مشکوک حالت میں مو ت واقعہ ہوگئی تھی جبکہ اس سلسلہ میں پولیس کو اطلاع ملی تھی جس کے بعد پولیس نے لاش کو اپنی تحویل میں لے کر پوسٹ مارٹم ودیگر لورزامات مکمل کرنے کے بعد اہل خانہ کے حوالے کردیا تھا ۔انہوں نے بتایا کہ نوجوان کی شناخت طاہر محمود ولد محمد صدیق سکنہ دھار گلون کے طور پر ہوئی تھی ۔انہوں نے بتایا کہ پولیس ابتدائی طورپر پولیس سٹیشن گورسائی میں 174سی آر پی سی کے تحت ایک معاملہ درج کر کے تحقیقات شروع کی جس کے دوران مرنے والے نوجوان کی بیوی او ر ایک سرکاری ٹیچر کے درمیان تعلقات کا معاملہ سامنے آیا جس کے بعد تحقیقات کے دوران دونوں اس مشکوک موت کے ملزم پائے گئے ۔پولیس نے بتایا کہ معاملہ تین افراد پر درج ہے تاہم لڑکی کا بھائی غائب ہے ۔پولیس نے بتایا کہ گور نمنٹ ٹیچر کی جانب سے طاہر محمود کو مبینہ طورپر بلیک میل بھی کیا جاتارہا ہے ۔انہوں نے بتایا کہ بیوی زینب النساء اور اس کا عاشق محمد اقبال ولد مرحوم محمد اسحاق سکنہ دھار گلون کر گرفتار کر کے مزید تحقیقات شروع کر دی گئی ہیں ۔انہوں نے بتایا کہ معاملہ حل ہونے کے بعد پولیس نے ایک ایف آر آر زیر نمبر 115/2021زیر دفعات 306,111،اور 134آئی پی سی کے تحت مزید تحقیقات شروع کر دی ہیں ۔
 
 
 

یونیسکوکے تخلیقی شہروںمیں سرینگر کاشمار

سوزکی مبارکباد،شیخ عاشق کاخیرمقدم،میئر کاایک ماہ کے جشن کااعلان

سرینگر//سابق مرکزی وزیر پروفیسر سیف الدین سوز  اور کشمیر چیمبرآف کامرس اینڈانڈسٹری کے صدرشیخ عاشق نے سرینگر کو عالمی تنظیم یونیسکو کی طرف سے سرینگرشہرکوتخلیقی شہروں کے زمرے شامل کرنے کاخیرمقدم کرتے ہوئے ہنرمندوں اورکاریگروں کومبارکباد دی ہے جبکہ سرینگرمیونسپل کارپوریشن اس خوشی میں ایک ماہ تک جشن منائے گی۔ایک بیان میں  پروفیسرسوز نے کہا،’’میں جموں وکشمیر کے لوگوں کو مبارکباد دیتا ہوں کہ عالمی تنظیم یونیسکو نے سرینگر شہر کو دنیا کے اُن شہروں میں شامل کیا ہے ،جن کو عالمی سطح پر اپنے ہنر مندوں اور کاریگروں کی ماہرانہ لیاقت کیلئے تسلیم کیا گیا ہے۔‘‘ اس پس منظر میں عالمی سطح پر پہلی بار سرینگر شہر کے دستکاروں ،کاریگروں اور ہنر مندوں کو اپنی ماہرانہ قابلیت کیلئے تسلیم کیا گیا ہے ۔اس طرح سرینگر اور اس کی معرفت دستکاروں کو وراثت میں ملی ہوئی لیاقت کیلئے عالمی سطح پر پہلی بار تسلیم کیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ یونیسکو کے اس اقدام سے نہ صرف دستکاروں کو مرحبا اور شاباشی ملی ہے بلکہ اسی وساطت سے دستکاروں کی زندگی میں اچھا بدلائو آئیگا اور وہ اس نفع بخش صنعت سے وابستہ رہیں گے۔سوزنے کہا کہ اس موقع پر میں ہنر مند دستکاروں کو مبارکباد دیتا ہوں اور اسی کے ساتھ میں اُن کو مشورہ دیتا ہوں کہ وہ اگلے دنوں میں لیفٹیننٹ گورنر انتظامیہ کے ذریعے یونیسکو سے رابطہ قائم کریں اور دستکاری کو مزید تقویت دینے کیلئے کوشاں رہیں۔اُن کو یہ راستہ بھی تلاش کرنا چاہئے کہ اگلے دنوں میں نونیسکو کے ذریعے اُن کو کیا امداد مل سکتی ہے۔ـ‘‘ادھرکشمیرچیمبرآف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدرشیخ عاشق احمد نے سرینگر شہرکو یونیسکو کے تخلیقی شہروں کی فہرست میں شامل کرنے کی سراہنا کرتے ہوئے کہا کہ یہ ہم سب خاص طور سے دستکاروں اورہنرمندوں کیلئے باعث فخر ہے کہ دیر سے ہی سہی مگر ہمارے دستکاروں کے ہنر کو عالمی سطح پر تسلیم کیا گیا۔انہوں نے کہا کہ اس کامیابی سے سرینگر شہر کو ورثہ کاپلیٹ فارم مہیاہوا ہے اوراس سے دستکاریوں اور فنون سے مالا مال کشمیر کے  لاکھوںکاریگروں کومددملے گی۔ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ ہمارے ہنر نہ صرف ہمارے اقتصادی اثاثے ہیں ،بلکہ یہ ہمارے سماج کی شناخت بھی ہیں۔تخلیقی شہروں کے زمرے میں سرینگر کوشامل کئے جانے سے ہمیں ہمارے دستکاریوں اورہنرمندیوں کو عالمی سطح پر یونیسکو کے ذریعے پیش کرنے کی راہ ہموار ہوئی ہے۔ سری نگر کو یونیسکو کے ٹیگ سے نوازنے کو پورے ضلع کیلئے ایک عظیم دن قرار دیتے ہوئے سری نگر میونسپل کارپوریشن کے میئر، جنید عظیم متو نے منگل کو کہا کہ انہوں نے ایک ماہ طویل جشن منانے کا فیصلہ کیا ہے۔ ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے، متو نے کمشنر سرینگر میونسپل کارپوریشن اطہرعامر خان، ڈائریکٹر انڈسٹریز محمود شاہ اور دیگر افسراں کے ہمراہ کہا کہ سری نگر کو اس سنگ میل کو حاصل کرنے کو یقینی بنانے کے لیے ان کی طرف سے سنجیدہ کوششیں کی گئیں۔ان کا کہنا تھا’’ہم نے یہ سنگ میل کافی محنت اور لگن کے بعد حاصل کیا ہے۔ ‘‘ انہوں نے مزید کہا’’ہم 2018 سے اس کی پیروی کر رہے ہیں اور آخر کار سرینگر میونسپل کارپوریشن کمشنر اور دیگر متعلقہ افسران کی سخت محنت اور سنجیدہ کوششوں کے بعد ہم نے آخر کار یہ سنگ میل حاصل کر لیا،جبکہ یہ پورے سری نگر کے لیے عظیم دن ہے۔‘‘ متو نے کہاکہ انہوں نے آرٹس اینڈ کرافٹس کے حوالے سے ایک ماہ تک جاری رہنے والی تقریبات کو آگے بڑھانے کا فیصلہ کیا ہے۔ سرینگر میونسپل کارپوریشن کے کمشنر اطہر عامر خان نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ یونیسکو ٹیگ کے لیے سرینگر میونسپل کارپوریشن کی تجویز کی توثیق سب کی بھرپور کوششوں کے بعد کی گئی۔انہوں نے کہا’’ہم مستقبل میں مزید سنگ میل حاصل کرنے کے لیے مل کر کام کر رہے ہیں‘‘۔اس موقع پر کئی دیگر افسران نے بھی خطاب کیا۔
 
 
 
 
 

ضلع ترقیاتی کونسل بڈگام کے این سی ممبران صوبائی صدر سے ملاقی

انتظامیہ پر روز اول سے جانبداری سے کام لینے کا الزام 

سرینگر//نیشنل کانفرنس سے تعلق رکھنے والے بڈگام کے ضلع ترقیاتی کونسل ممبران نے ایک اجلاس میں پارٹی صوبائی صدر ناصر اسلم وانی کو ضلع میں پارٹی سرگرمیوں، عوامی مسائل و مشکلات اور ممبران کے نقل و حمل پر لگائی گئی پابندی کے بارے میں آگاہی دلائی۔ اس موقعے پر وسطی زون صدر علی محمد ڈار، صوبائی سکریٹری ایڈوکیٹ شوکت احمد میر، جوائنٹ سکریٹری غلام نبی بٹ اور ضلع صدر بڈگام حاجی عبدالاحد ڈار اور 7ڈی ڈی سی ممبران موجو دتھے۔ ناصر اسلم وانی نے اس موقعے پر کہاکہ نیشنل کانفرنس ضلع بڈگام کے لوگوں اور خصوصاً ڈی ڈی سی ممبران کے مشکلات سے بخوبی واقف ہیں۔ انتظامیہ نے روز اول سے ہی جانبداری سے کام لیا اور ڈی ڈی سی چیئرمین کی ووٹنگ سے لیکر عدم اعتماد کی تحریک تک جمہوری اور آئین کی دھجیاں اُڑائیاں گئیں۔ پہلے ووٹنگ کے عمل میں ہیرا پھیرا کی گئی اور بعد میں جب 9ممبران نے ڈی ڈی سی چیئرمین کیخلاف عدم اعتماد کی تحریک پیش کی تو اُس پر نامعلوم وجوہات کی بنا کر عملدرآمد نہیں کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ عدم اعتماد کی تحریک پر عملدرآمد نہ کرنے سے ثابت ہوگیا ہے کہ ووٹنگ کے وقت بھی انتظامیہ نے جانبداری سے کام لیکر دھاندلی کی ہے۔ ناصر نے کہا کہ نیشنل کانفرنس نے اس سلسلے میں عدالت کا دروازہ کھٹکھٹایا ہے اور اُمید ہے کہ عدالت سے ہمیں انصاف ملے گا۔ اس موقعے پر ڈی ڈی سی ممبران چودھری نذیر احمد، مولوی بشیر احمد بٹ، انشاء شوکت، سالکہ جی، میڈم افروزہ بھی موجود تھے۔
 
 
 

مشتاق چایہ پی ایچ چیمبرآف کامرس اینڈانڈسٹری دہلی میں شامل

سرینگر //کشمیر وادی کے معروف تاجر مشتاق احمد چایا کو پی ایچ ڈی چیمبرآف کامرس اینڈ انڈ سٹری نئی دہلی کی مینیجنگ کمیٹی میں شامل کیا گیا ہے، جبکہ بلدیو سنگھ رینا کو پی ایچ ڈی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کشمیر خطے میں 2021-22کیلئے دوبارہ چیئرمین مقرر کیا گیا ہے ،جبکہ ارشد نظام شال کو کشمیر ریجن کا شریک چیئرمین دوبارہ سے مقرر کیا گیا ۔صدرپی ایچ ڈی سی سی آئی پردیب ملتانی نے کہا کہ ہم پی ایچ ڈی سی سی آئی کی مینیجنگ کمیٹی میں مشتاق احمد چایا کو خوش آمدید کہتے ہوئے یہ خوشی محسوس کر رہے ہیں کہ ان کے طویل تجربات سے کمیٹی کو فائدہ پہنچے گا ۔مشتاق احمد چایا نے اس موقع پر کہا کہ اس عزت افزائی کیلئے وہ بہت خوش ہیں ۔انہوں نے پی ایچ ڈی سی سی آئی نئی دہلی کا شکریہ ادا کیا ۔جبکہ بلدیو سنگھ نے بھی دوبارہ سے چیئرپرسن بننے پر شکریہ ادا کیا ۔انہوں نے کہا کہ یہ پوزیشن مجھے پی ایچ ڈی سی سی آئی کے فریم ورک کے اندر میں کام کرنے کا ایک اور موقع فراہم کرتی ہے تاکہ ایک سطح پر صنعت کی ترقی اور دوسری سطح پر ملک کی ترقی کے مقاصد کو پورا کیا جا سکے۔ انہوں نے کہا کہ پی ایچ ڈی سی سی آئی نے تجارت اور صنعت کے مسائل کو حل کرنے اور جموں و کشمیر کی مرکز اور UT حکومتوں کی پالیسیوں کی تشکیل میں بہت زیادہ تعاون کیا ہے۔الائنس ایڈورٹائزنگ اینڈ مارکیٹنگ کے بانی و ڈائریکٹر اور کشمیر مانیٹر (انگریزی ڈیلی) کے شریک مالک ارشد شال نے پی ایچ ڈی سی سی آئی کشمیر کے شریک چیئرمین کے طور پر دوبارہ منتخب ہونے پر اظہار تشکر کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ میں شکر گزار ہوں کہ پی ایچ ڈی سی سی آئی کی قیادت نے مجھ پر اعتماد کا اظہار کیا ہے۔یہ نئی تقرریاں پردیپ ملتانی، سکیٹ ڈالمیا، سنجیو اگروال کے بالترتیب نئی دہلی میں منعقدہ 116ویں سالانہ جنرل میٹنگ میں پی ایچ ڈی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر، سینئر نائب صدر اور نائب صدر کا عہدہ سنبھالنے کے بعد کی گئی ہیں۔
 
 

دیہی روزگار ضمانتی پروگرام،2390 معاملات کو منظور ی

جموں//جے اینڈ کے کھادی اینڈ وِلیج اِنڈسٹریز بورڈ ( کے وِی آئی بی ) کی وائس چیئرپرسن ڈاکٹر حنا شفیع بٹ نے  جے کے آر اِی جی پی اور پی ایم اِی جی پی سکیموں کے تحت بینک وار کارکردگی کا جائزہ لینے کے لئے منعقدہ بینکرس میٹنگ کی صدارت کی۔میٹنگ میں جے کے رورل ایمپلائمنٹ جنریشن پروگرام ( جے کے آر اِی جی پی ) اور پرائم منسٹرس ایمپلائمنٹ جنریشن پروگرام ( پی ایم اِی جی پی ) کو عملانے میں جموں صوبہ کے ضلعی دفاتر کی بینک وار کارکردگی کا جائزہ لیا گیا۔وائس چیئرپرسن نے معاملات کی منظوری میں کے وی آئی بی کے ساتھ مل کر کام کرنے پر بینکوں کی تعریف کی۔اُنہوں نے کلیدی مسائل پر روشنی ڈالی اور جموںوکشمیر یوٹی میں تعلیم یافتہ بے روزگارنوجوانوں کے لئے بے روزگاری کے مسئلے کو حل کرنے کے لئے بینکرس سے تعاون اور عزم کی خواہش کی۔ اُنہوں نے کے وِی آئی بی سکیموں  کے ذریعے سابق فوجیوں اور بیواؤں کے حق میں معاملات کی منظوری پر بھی زور دیا۔کے وی آئی بی کی پی ایم اِی جی پی اور جے کے آر اِی جی پی سکیموں کی بینک وار کارکردگی کا موجودہ سال کے لئے جائزہ لیا گیا اور دونوں سکیموں کے تحت بینکوں کی جانب سے 1122.91 لاکھ روپے کی مارجن منی(قرض خواہ کاسرمایہ کاری میں حصہ) پر مشتمل 2390 معاملات منظور کئے گئے ہیں۔میٹنگ میں بینک کی سطح پر زیر اِلتوأ معاملات، دعوئوں کو اَپ لوڈ کرنے ، جے کے آر اِی جی پی کے تحت اِی ڈی پی ٹریننگ ، کے وی آئی بی کے ذریعے نافذ کئے جانے والے پی ایم اِی جی پی کے بارے میں غور و خوض ہوا۔
 
 
 
 
 
 
 
 
 

گاندربل میںڈسٹرکٹ لیگل سروسز اتھارٹی کے زیر اہتمام قومی قانون کا دن منایا گیا

ارشاد احمد
گاندربل//ڈسٹرکٹ لیگل سروسز اتھارٹی گاندربل کی جانب سے یوم قومی قانونی خدمات منایا گیا۔اس موقع پر سکریٹری ڈسٹرکٹ لیگل سروس اتھارٹی گاندربل، ممبران، عملہ اور پی ایل وی موجود تھے۔قومی لیگل سروس دن کا پروگرام تمام شہریوں کے لیے معقول اور منصفانہ طریقہ کار کو یقینی بنانے کے مقصد کے حصول کے لئے منایا گیا۔اس موقع پرسکریٹری ڈسٹرکٹ لیگل سروس اتھارٹی گاندربل تبسم جی نے  انصاف کی فراہمی کے لیے امیر اور غریب مدعی کے درمیان فرق کو کم کرنے کے لیے کوشش کرنے کی فوری ضرورت پر زور دیا۔مفت قانونی امداد کی تحریک کی جڑیں اس خیال میں ملتی ہیں کہ تمام افراد کو بغیر کسی امتیاز کے انصاف فراہم کیا جانا چاہئے۔اس سلسلے میں ڈسٹرکٹ لیگل سروسز اتھارٹی گاندربل کی طرف سے ایک پہل کی گئی جس میں تمام پنچایتیں شامل تھیں۔ پروگرام میں گاندربل کے تقریبا تمام علاقوں سے تعلق رکھنے یوتھ کلبوں نے شرکت کی جس کا مقصد ہر شہری کو بلا لحاظ و ملت کے قانونی آگاہی فراہم کرنا ہے۔ایڈووکیٹ سبرینہ فیاض نے معاشرے کے کمزور طبقات کو انصاف کی فراہمی کو یقینی بنانے میں لیگل سروسز اتھارٹی کے کردار کی وضاحت کی۔ شرکا کو لیگل سروسز اتھارٹی کے اغراض و مقاصد اور ان کے مقصد کے بارے میں آگاہ کیا گیا تاکہ وہ مفت اور قابل قانونی خدمات فراہم کر کے انصاف کو یقینی بناسکے ۔
 
 
 
 

باندی پورہ میں نقب زنی

تین رہائشی مکانوں سے سازوسامان اڑا لیا گیا

عازم جان 
بانڈی پورہ//بانڈی پورہ قصبہ کے نوپورہ اور کھارپورہ میں نقب زنوں نے گذشتہ شب کے دوران تین رہائشی مکانوں سے سازوسامان اڑالیا۔ ظہور احمد نامی ایک شہری نے کہا کہ نقب زنوں نے مکانوں کی کھڑکیوں اور دروازے کو توڑ ڈالا ہے ۔انہوں نے کہا’’ ہم شادی کی تقریب پر تھے اورنقب زنوں نے گھریلو سازوسامان اور سونے کے زیورات اڑالئے ہیں ‘‘۔دریں اثنا ء نقب زنوں نے ڈاکٹر مکھن لال اور عابد حسین لون کے گھروں کی کھڑکیاں توڑ ڈالی ہیں۔ پولیس ذرائع نے بتایا کہ ایف ایس ایل ٹیم کو واردات کی جگہ شواہد اکھٹے کرنے کے لیے روانہ کردیا گیا ہے۔
 
 
 
 

ڈی آئی جی وسطی کشمیر کا بڈگام دورہ

 سیکورٹی صورتحال اور دیگر مسائل کاجائزہ لیا

سرینگر//ڈپٹی انسپکٹر جنرل پولیس وسطی کشمیر سجیت کمارنے ضلع بڈگام میں سیکورٹی صورتحال، عسکریت پسندی مخالف کارروائیوں، امن و امان، منشیات مخالف مہم، غیر قانونی کان کنی اور دیگر مسائل سے متعلق جائزہ میٹنگ کی صدارت کی۔ میٹنگ میں ایس ایس پی بڈگام طاہر سلیم ، ڈی وائی ایس پی ہیڈکوارٹر ، ایس ڈی پی او چرار شریف، ایس ڈی پی او ماگام، ایس ڈی پی او خانصاحب، ڈی وائی ایس پی( ڈار)، ڈی وائی ایس پی پی سی بڈگام اور ضلع کے دیگر سینئرافسران نے شرکت کی۔ایس ایس پی بڈگام طاہر سلیم نے پولیسنگ کے مختلف پہلوؤں کے علاوہ عوام پر مبنی منصوبوں اور ضلع میں جرائم کی صورتحال کے بارے میں تفصیلی پریزنٹیشن دی۔ڈی آئی جی وسطی کشمیر نے ضلع میں امن و امان برقرار رکھنے کیلئے بڈگام میں پولیس کی کوششوں کو سراہا۔ انہوں نے مجموعی سیکورٹی صورتحال، انسداد بغاوت کی کارروائیوں اور ضلع میں کووڈ19 کے پھیلاؤ کو روکنے کیلئے کیے گئے اقدامات کا جائزہ لیا۔ڈی آئی جی نے تمام افسران کو زیر التوا مقدمات کی تحقیقات ترجیحی بنیادوں پر مکمل کرنے کی ہدایت کی۔ انہوں نے پولیس اور پبلک ریلیشنز کو مضبوط بنانے پر بھی زور دیا جس سے عام لوگوں کا اعتماد حاصل کرنے میں مدد ملے گی۔ انہوں نے افسران پر زور دیا کہ وہ انسداد بغاوت کی کارروائیوں سے نمٹنے کے دوران پیشہ ورانہ انداز اپنائیں ۔اس سے قبل ڈی آئی جی کو پولیس کے دستے نے رسمی گارڈ آف آنر پیش کیا۔
 
 
 

وادی کشمیر میںمنشیات مخالف مہم تیز 

14افراد گرفتار، بھاری مقدار میںبرائون شوگر،چرس اورنقدرقم برآمد

سرینگر//منشیات مخالف مہم کے دوران پولیس نے وادی کشمیر میں 14افراد کو گرفتار کیا ہے جن کے قبضے سے بھاری مقدار میں ممنوعہ اشیاء اور 2.70لاکھ روپے نقدی برآمد ہوئی ہے۔ پلوامہ میںگڈورہ پل سے تین افراد کو گرفتار کیا گیا اور ان کے انکشاف پر ایک اورشہری جنید خورشید عرف جنی کٹہ ساکن زوسو ٹہاب کے گھر پر چھاپہ مارا جہاںبراؤن شوگر اوربھاری مقدار میں خشخاش پوست کا بھوسا اور نقد ی 270471 روپئے کو بھی برآمد کیا گیا۔ مذکورہ شہری کے علاوہ 9دیگر منشیات کے عادی افراد کو بھی مختلف علاقوں میں گرفتار کیا گیا۔ اس سلسلے میں ایف آئی آر نمبر 305/2021 کے تحت ایک کیس پلوامہ تھانہ میں درج کیا گیا اور مزید تفتیش جاری ہے۔دریں اثناء ٹہاب روڈ پر ناکہ چیکنگ کے دوران ایک مشکو ک شخص کو دیکھ کر اُس کی تلاشی لی گئی۔ تلاشی کے دوران اُس کے قبضے سے 1200ملی لیٹر کوڈین برآمد ہوئی۔ اس کی شناخت بشیر احمد ساکن ٹہاب پلوامہ کے بطور ہوئی ہے۔ اس کو گرفتار کرکے تھانہ منتقل کردیا گیا۔ اس سلسلے میں ایف آئی آر نمبر 308/2021کے تحت پلوامہ تھانہ میں کیس درج کیا گیا۔ایک اور کارروائی میں لیترتھانہ کی ایک پارٹی نے نائن  بٹہ پورہ میں چھاپہ مارا۔ تلاشی کے دوران خورشید احمد کوکا ساکن نائن بٹہ پورہ کے رہائشی مکان سے 1کلو گرام چرس برآمد کیا گیااور ایف آئی آر نمبر 112/2021 کے تحت ایک کیس درج کیا گیا۔ادھرگاندربل پولیس کو ایک مخصوص اطلاع ملی جس پر ایس ایچ او کنگن کی قیادت میں ایس ڈی پی او کنگن  یاسر قادری کی نگرانی میں ایک پولیس ٹیم نے ایک شہری کو گرفتار کیا اور اس کے قبضے سے 140گرام چرس اور کلوگرام بھنگ پتری برآمد کی۔ مذکورہ شہری کی شناخت مشتاق احمد بجاڑ ساکن لامن وانگت کے بطور ہوئی ہے۔ اس مناسبت سے ایف آئی آر نمبر 132/2021  کنگن تھانہ میں درج کیا گیا۔بڈگام میں ہردو پونزو کراسنگ کے قریب ناکہ چیکنگ کے دوران پولیس نے 2  مشتبہ افراد کو گھومتے ہوئے روکا اور   تلاشی لی۔ تلاشی کے دوران پولیس نے ان کے قبضے سے 220گرام چرس برآمد کیا گیا اورموقع پر ہی گرفتار کر لیا گیا۔ دونوں افراد کی شناخت فردوس احمد شیخ ساکن لربل دسن اور نثار احمد بٹ ساکن ہردو لٹن کے طور پر ہوئی ہے۔ اس مناسبت سے ایف آئی آر نمبر 156/2021کے تحت بیروہ تھانہ میں کیس درج کیا گیا ۔سی این آئی
 
 
 

اردو کونسل کا الیکشن 13نومبرکو متوقع

سرینگر//جموں کشمیر اردو کونسل کے ایک اجلاس میں کونسل کیلئے نئے عہدیداروں کے انتخاب کے سلسلے میں کئی تجاویز پیش کی گئیں۔اجلاس میںیہ بات محسوس کی گئی کہ موجودہ نظم کی معیاد مکمل ہونے کے بعد کورونا اور دیگر حالات کی وجہ سے انتخابات کا بر وقت انعقاد ممکن نہ ہوسکا۔بیان کے مطابق اب یہ انتخابات منعقد ہونے چاہئیں چنانچہ اتفاق رائے سے فیصلہ لیا گیا کہ 13نومبر 2021 سنیچر وار کو نئی باڈی تشکیل دینے کے لئے الیکشن منعقد کرائے جائیں گے۔ 
 
 

عالمی یوم اردوکی مناسبت سے کئی تقاریب کا اہتمام

انجمن اردو صحافت نے کئی سینئرصحافیوں کو خلعت اردو صحافت2021سے نوازا

جموںوکشمیر میں اردو صحافت : ماضی ،حال اور مستقبل کے عنوان پر ایواان صحافت میں سمینار
سرینگر// عالمی یوم اردو کی مناسبت سے ایوان صحافت کشمیر میں انجمن اردوصحافت جموںوکشمیر سے یک روزہ سمینار بعنوان’’جموںوکشمیر میں اردو صحافت : ماضی ،حال اور مستقبل ‘‘ منعقد ہوا جس میں جموںوکشمیر میں اردو صحافت کے ماضی ،حال اور مستقبل کے حوالہ سے گفتگو ہوئی۔سمینارکی صدارت سینئر صحافی یوسف جمیل نے کی جبکہ سینئر صحافی عبدالغنی راسخ مہمان خصوصی کی حیثیت سے سمینار میں شامل رہے۔سینئر صحافی ریاض مسرور ،مدرس شعبہ صحافت کشمیریونیورسٹی پروفیسر ناصر مرزا مہمانان ذی وقار کی حیثیت سے موجود رہے ۔سمینار کے آغار میں انجمن کے سینئر رکن اور سینئر صحافی منوہر لالگامی نے خطبہ استقبالیہ پیش کرتے ہوئے انجمن کے اغراض و مقاصد اور اہداف بیان کئے ۔سینئر صحافی اور بی بی سی نامہ نگار ریاض مسرورنے اپنی مدلل تقریر میں اردو صحافت کے کردار پر مفصل روشنی ڈالی ۔انہوںنے کہا کہ اردو صحافت کے کردار کو نکارا نہیں جاسکتا ہے اور اردو صحافت کا مستقبل بالکل تابناک ہے کیونکہ ڈیجیٹل میڈیا کے اردو کو ایک وسیع میدان ملا ہے جہاں نہ صرف جموںوکشمیر بلکہ برصغیر کی غالب آبادی ان کی خریدار ہے۔انہوںنے صلاحیت سازی پر زور دیتے ہوئے اردو صحافیوں کو احساس کمتری کے کھول سے باہرآنا چاہئے کیونکہ وہ کسی سے کم تر نہیں ہیں۔سینئر صحافی حکیم عرفان نے اردو صحافت کے حوالے سے کسی بھی قسم کی مایوسی کو مسترد کرتے ہوئے کہاکہ ہمیں صحافت کے معیار پر دھیان دیناچاہئے اور اردوصحافت کو اجرتوں کے تعلق سے انگریزی صحافت کے ہم پلہ بناناچاہئے ۔صحافتی مدرس پروفیسر ناصر مرزا نے اپنی تقریر میں جموںوکشمیر کے صحافتی منظر نامہ میں اردو کے کردار کو یاد کرتے ہوئے کہا کہ اردو صحافت کا ماضی تابناک ہے اور حال میں بھلے ہی مسائل ہیں لیکن مستقبل کے حوالہ سے پریشان ہونے کی ضرورت نہیں ہے۔سرکردہ صحافی عبدالغنی راسخ نے بھی اپنے زریں خیالات کا اظہار کیا ۔صدارتی خطبہ میں سینئر صحافی یوسف جمیل نے اردو صحافت کو کسی بھی طور کم پایہ ماننے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ اردوصحافت نے نہ صرف جموںوکشمیر بلکہ برصغیر میں اپنی چھاپ چھوڑی ہے اور اردو صحافیوں کو کسی بھی طور احساس کم تری کا شکار نہ ہونا چاہئے بلکہ انہیں اپنے اندر اعتماد پیدا کرکے صحاتی سفر کو آگے بڑھاناچاہئے ۔انہوںنے کہا کہ اردو صحافت کا مستقبل بالکل تابناک ہے اور اردو صحافت سے جڑے لوگوں کو پریشان ہونے کی بجائے اپنی استعداد کار بڑھانے پر توجہ مرکوز کرنی چاہئے۔انجمن اردو صحافت کے صدر ریاض ملک نے شکریہ کی تحریک پیش کرتے ہوئے اعلان کیا کہ انجمن 10دسمبرکوسوپور میں شمالی کشمیر کے عامل صحافیوں کے لئے تربیتی ورکشاپ منعقد کرے گی جبکہ اسی نومبر مہینہ میں خطہ پیر پنچال کے راجوری میں دو روزہ تربیتی ورکشاپ منعقد ہوگا۔انہوںنے یہ بھی اعلان کیا کہ نومبر کے آخری ہفتہ میں انجمن وادی کشمیر سے شائع ہونے والے اردو اخبارات کے مالکان اور مدیران سے ایک نشست کا اہتمام کرے گی جس میں ان کی خدمات کو سراہنے کے علاوہ اردو صحافت کو درپیش مسائل پر گفتگو ہوگی اور اردو صحافت کے معیار کو بہتر بنانے کے حوالہ سے ایک مشترکہ لائحہ عمل مرتب کرنے کی کوشش کی جائے گی۔تقریب کے اختتام پر جموںوکشمیر میں اردو صحافت کے تئیں گراں قدر خدمات انجام دینے کے اعتراف میں انجمن اردو صحافت کی جانب سے روزنامہ آفتاب کے بانی مدیر خواجہ ثناء اللہ بٹ ،روزنامہ سرینگر ٹائمز کے بانی مدیر صوفی غلام محمد،روزنامہ وادی کی آواز کے بانی مدیر غلا م نبی شیدا ،ہفت روزہ شہاب کے بانی مدیر قاسم سجاد اور سینئر صحافی و مصنف مقبول ساحل کو بعد از مرگ خلعت اردو صحافت۔2021سے نوازاگیا جبکہ زمانہ حال میں اردو صحافت میں نمایاں کارکردگی دکھاکر اپنی چھاپ چھوڑنے والے سینئر صحافی یوسف جمیل،سینئر صحافی عبدالغنی راسخ،سینئر صحافی ریاض مسرور اور شعبہ صحافت کے مدرس پروفیسر ناصر مرزا کو توصیف نامہ و خلعت سے نوازا گیا۔
 

کلام اقبال خدا اعتمادی اور خود اعتمادی سے لبریز:ڈاکٹر فاروق/مولاناہمدانی 

سرینگر// نیشنل کانفرنس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے شاعر مشرق علامہ اقبالؒ کے یوم پیدائش پر انہیں خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ علامہ نے اپنے فلسفہ حیات، علمی بصیرت اور جذبہ حب الوطنی سے برصغیر کے عوام میں بیداری کی لہر پیدا کردی ، جس کے نتیجے میں سارا برصغیر آزادی کی نعمت سے مالا مال ہوگیا۔ایک بیان میںڈاکٹر عبداللہ نے موصوف کوخراج عقیدت ادا کرتے ہوئے انہیں کشمیر کا مایہ ناز سپوت قرار دیا۔ انہوں نے کہاکہ کشمیر کی سیاست کے ساتھ علامہ اقبال کی گہری دلچسپی تھی اور مرحوم شیخ محمد عبداللہ نہ صرف شاعر مشرق کے فلسفہ خودی سے متاثر تھے بلکہ ان کے جذبات سے بھی آگاہ تھے۔ انہوںنے مزید کہاکہ کشمیر کے لوگ خاص طور سے علامہ کے تئیں جذبہ عقیدت رکھتے ہیں اور اِس عظیم شاعر کے خیالات سے بے حد متاثر ہیں۔ انہوں نے برصغیر کے عوام سے اپیل کی کہ ڈاکٹر اقبال کے یوم پیدایش کے موقعہ پر برصغیر کے سارے خطے کو امن آشتی کا گہوارہ بنانے کا عزم کریں۔ادھر جمعیت ہمدانیہ کے سربراہ مولانا ریاض احمد ہمدانی نے شاعر مشرق علامہ اقبالؒکو خراج عقیدت ادا کرتے ہوئے کہاہے کہ پوری دنیا کے لوگ خصوصاً برصغیر میں علامہ اقبال کے کلام پر رہتی دنیا تک لوگ عش عش کرتے رہیں گے۔ایک بیان میںانہوں نے کہاکہ ڈاکٹر  اقبالؒ کا کلام خدا اعتمادی ، خود اعتمادی ، خوف خدا اور عشق رسولؐ سے لبریز تھا۔ اُن کی شعر وشاعری عالم انسانیت کی بقا کیلئے مشعل راہ ہے۔مولانا نے کہا کہ اہل کشمیر کو اِس بات پر فخر ہے کہ شاعر مشرق اِسی سرزمین کے سپوت تھے۔
 
 

اقبال انسٹی ٹیوٹ کشمیر یونیورسٹی کی طرف سے بین الاقوامی سمینار کا انعقاد

سرینگر//اقبال انسٹی ٹیوٹ آف کلچر اینڈ فلاسفی کشمیر یونیورسٹی کے زیراہتمام دو روزہ بین الاقوامی سمینار کا انعقاد ہوا۔ تقریب کی افتتاحی نشست میں ریاست اور بیرونی ریاست کی کئی مقتدر شخصیات نے حصہ لیا۔ تقریب کی صدارت وائس چانسلر کشمیر یونیورسٹی پروفیسر طلعت احمد نے کی۔ جامعہ ملیہ اسلامیہ کے سابق صدر شعبہ اردو عبید الرحمان ہاشمی نے بحیثیت مہمان ذی وقار کی حیثیت سے حصہ لیا۔ شعبہ اقبالیات کے سا بق صدر اور سابق ڈین فیکلٹی آف آرٹس پروفیسر بشیر احمد نحوی نے کلیدی خطبہ پیش کیا۔ پروفیسر طلعت احمد نے اپنے صدارتی خطبہ میں کوارڈی نیٹر اقبال انسٹی ٹیوٹ ڈاکٹر مشتاق احمد گنائی کی سراہنا کرتے ہوئے یقین دلایا کہ شعبہ کے تمام مسائل عنقریب حل کئے جائیں گے۔ افتتاحی نشست میں انسٹی ٹیوٹ کی طرف سے شائع شدہ ایک کتاب ’خطبات اقبال کا تنقیدی مطالعہ‘ از پروفیسر حمید نسیم رفیع آبادی کی رسم رونمائی بھی انجام دی گئی۔ اقبال انسٹی ٹیوٹ کے کوارڈی نیٹرڈاکٹر مشتاق احمد گنائی نے تمام معزز مہمانوں کا استقبال کیا اور سمینار کی افادیت اور ماہئیت سے سامعین کو روشناس کرایا۔ انہوں نے شعبہ کو درپیش مسائل سے یونیورسٹی حکام کو آگاہ کیا۔ 
 
 
 

شاہد مسعود کی فاتحہ خوانی آج

مشتاق الحسن
 ٹنگمرگ //صحافی شاہد مسعود بخاری کی اجتماعی فاتحہ خوانی آج یعنی 10نومبر قاضی پورہ ٹنگمرگ میں انجام دی جارہی ہے ۔اس دوران تیسرے روز بھی مرحوم کے گھر پر سینکڑوں مردو زن نے سوگوار کنبے کے ساتھ تعزیت پرسی کی ۔ ادھر پیپلز کانفرنس سینئر لیڈر سید بشارت بخاری نے موصوف کے گھر جاکر اہل خانہ کے ساتھ اظہار یکجہتی کیا ۔ ادھر شاہد مسعود بخاری کے اہل خانہ نے فاتحہ خوانی کی تقریب میں شرکت کرنے والوں سے گزارش کی ہے کہ وہ اپنے ساتھ کسی بھی قسم کے پھل فروٹ و دیگر کوئی بھی اشیاء ساتھ نہ لائیں ۔
 
 

ڈاکٹر فاروق عبداللہ کا اظہار تعزیت

سرینگر//نیشنل کانفرنس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے درگارہ حضرت بل جاکر مرحوم محمد سلطان شاخسازکے لواحقین کے ساتھ تعزیت پرسی کی۔ اس موقع پر مرحوم کے حق میں دعائے مغفرت کی گئی۔ مرحوم پارٹی لیڈر  علی محمد شاخساز کے برادر تھے۔ پارٹی جنرل سکریٹری علی محمد ساگراور صوبائی صدر ناصر اسلم وانیسمیت دیگر پارٹی لیڈران نے بھی تعزیت کا اظہار کیا ہے۔
 
 
 

 سکل ڈیولپمنٹ محکمہ کے کام کاج کا جائزہ لیاگیا

ڈاکٹر سامون کی افسران کو جاری کام بروقت مکمل کرنے کی ہدایت

جموں//پرنسپل سیکریٹری سکل ڈیولپمنٹ ڈیپارٹمنٹ ڈاکٹر اصغر حسن سامون نے سول سیکرٹریٹ جموں میں سکل ڈیولپمنٹ محکمہ کے کام کاج اور مختلف ترقیاتی سرگرمیوں کی پیش رفت کا جائزہ لینے کے لئے سکل ڈیپارٹمنٹ اور دیگر متعلقہ محکموں کے سینئر اَفسران کے ساتھ ایک میٹنگ کی صدارت کی۔میٹنگ میں سکل ڈیولپمنٹ ڈیپارٹمنٹ سے متعلق مختلف اَمور پر تبادلہ خیا ل کیا گیا جن میں ماڈل آئی ٹی آئی جموں کے لئے اِنسٹی چیوٹ مینجمنٹ کمیٹی کی تشکیل ، اِدارہ جاتی ترقیاتی فنڈ ( آئی ڈی ایف) کے لئے رہنما خطوط کو حتمی شکل دینا ، لنگویشنگ پروجیکٹوں کے تحت پولی تکنیک کیمپس کی تکمیل اور سٹرائیو پروجیکٹ کے تحت چار آئی ٹی لیبارٹریوں کا قیام شامل ہے۔میٹنگ میں کیپکس 2021-22 کے تحت جاری کاموں /نئے کاموں کی تکمیل ، کشتواڑ ، پونچھ ، ڈوڈہ ، رام بن ، اودھمپور اور کپواڑہ ضلع میں پولی تکنیک کے سول کاموں کی تکمیل ، سی ایس ایس ( سات آئی ٹی آئیز سٹرائیو کے تحت اور دو ماڈل آئی ٹی آئیز )کی عمل آوری کے طریقۂ کاراور پولی تکنیکوں او رآئی ٹی آئیز میں فیکلٹی کی نئی بھرتی پر بھی غور وخوض ہوا۔پرنسپل سیکرٹری نے سکل ڈیولپمنٹ محکمہ کے کام کاج کا جائزہ لیتے ہوئے پی ڈبلیو ڈی کشمیر / جموں اور جے کے پی سی سی کے چیف اِنجینئران کو نئے تعمیر شدہ احاطے کی تعمیراتی کاموں میں تیزی لانے کے لئے ہدایات دیں تاکہ نئی تعمیر شدہ عمارتوں میں کلاسوں کو شروع کیا جاسکیں۔ڈاکٹراَصغر حسن سامون نے ڈائریکٹر سکل ڈیولپمنٹ ڈیپارٹمنٹ کو ہدایت دی کہ وہ مختلف عمل آوری ایجنسیوں کے مختلف کاموں کی طبعی و مالیاتی پیش رفت کو یقینی بنائیں تاکہ کام کو مقررہ مدت میں مکمل کیا جاسکے۔
 
 

ڈاکٹر سحرش اصغر نے پروگرام ’ ساتھ‘ کی پیش رفت کا جائزہ لیا

سرینگر//مشن ڈائریکٹر جموں وکشمیر رورل لائیو لی ہڈس مشن ( جے کے آر ایل ایم ) ڈاکٹر سیّد سحرش اصغر نے ’اُمید‘ کے تمام اَفسران اور اِنڈیا ایس ایم اِی فورم کے ممبران کے ساتھ پروگرام ’ ایس اے اے ٹی ایچ‘ کے تحت ہونے والی پیش رفت پر تبادلہ خیال کرنے کے لئے ایک ورچیول میٹنگ طلب کی۔ میٹنگ میں ڈسٹرکٹ پروگرام منیجر ان، بلاک پروگرام منیجران، وِنود کمار ( صدر اِنڈیا ایس ایم اِی فورم ) ، سشمامارتھانی ( ڈائریکٹر جنرل اِنڈیا ایس ایم اِی فورم ) اور مشن کے دیگر اَفسران نے شرکت کی۔اِس موقعہ پر ڈاکٹر سیّد سحرش اَصغر نے اَفسران سے کہا کہ جے کے آر ایل ایم کی جانب سے اِس پروگرام کو حکمت عملی بنانے ، تیار کرنے اور اس کو آگے بڑھانے کے لئے کوششیں کی گئی ہیں۔اُنہوں نے مشن کے ضلعی پروگرام کے اَفسران کو تاکید کی کہ وہ تمام سیشنوں کے لئے تربیتی پروگراموں کے تحت منتخب ایس ایچ جی اراکین کو شامل کریں اور پروگرام کا بھرپور فائدہ اُٹھائیں تاکہ انہیں کاروبار ی منصوبوں کے بارے میں مکمل جانکاری حاصل ہو۔ڈائریکٹر جنرل اِنڈیا ایس ایم ای فورم سشما مور تھانی نے میٹنگ کو جانکاری دی کہ ٹریننگ کا پہلا مرحلہ مکمل ہوا جہاں جموںوکشمیر کے زائد از 5000 ایس ایچ جیز نے حصہ لیا۔ 
 
 
 

 شاہ اسرار الدین بغدادی ؒ کے عرس پرمبارکباد

سرینگر//نیشنل کانفرنس کے صدرڈاکٹر فاروق عبداللہ نے ولی کامل حضرت شاہ اسرار الدین بغدادی ؒ کے سالانہ عرس پر لوگوں کو مبارک باد پیش کی ہے۔پارٹی کے صوبہ جموں کے لیڈران سجاد احمد کچلو ،خالد نجیب سہروردی ،اعجاز جان ، مشتاق بخاری اور سجاد شاہین نے بھی عرس مبارک کے موقع پر عوام کو مبارکباد پیش کی ہے اور ساتھ ہی انتظامیہ سے زائرین کیلئے مناسب اور معقول انتظامات کی اپیل کی ہے۔