مزید خبریں

پٹرول اورڈیزل گاڑیوں پرانحصار ختم کرنے کی مہم | 150سے 200الیکٹرک بسیں شامل کی جائیں گی | حکومت بجلی بسوں کو متعارف کرانے کیلئے سنجیدہ:لیفٹیننٹ گورنر

جموں//جموں کشمیرمیں بین الشہراوراندرون شہر بہتر اور صاف ٹرانسپورٹ مہیا رکھنے کیلئے لیفٹینٹ گورنر نے یہاں اولیکٹراگرین ٹیک لمیٹڈ کے چیئرمین اورمنیجنگ ڈائریکٹرکے وی پردیپ کے ساتھ میٹنگ میں بجلی سے چلنے والی بسوں کو متعارف کرانے کے معاملے پرتبادلہ خیال کیا۔میٹنگ کے دوران لیفٹیننٹ گورنرنے کہا کہ بجلی سے چلنے والی بسیں مستقبل کاٹرانسپورٹ ہیں کیوں کہ ماحول دوست  ہونے کے علاوہ شہری ماحولیات کیلئے موزوں ہیں اور ان سے ماحولیاتی آلودگی کو کم کرنے میں مددملے گی۔لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ حکومت کا مدعاومقصد پٹرول سے چلنے والے ایندھن پرانحصارکم کرنا ہے تاکہ سرسبزاوردیرپانقل وحمل کے انتظامات کو یقینی بنایا جائے۔اولیکٹراگرین ٹیک لمیٹڈ کے چیئرمین اورمنیجنگ ڈائریکٹرکے وی پردیپ نے کہا کہ ان کی کمپنی نے600بسیں بھارت بھر میں سڑکوں پر لائی ہیں اور مزید2500بسیں تیاری کے عمل سے گزررہی ہیں۔لیفٹیننٹ گورنر نے اولیکٹراگرین ٹیک لمیٹڈ کے چیئرمین اورمنیجنگ ڈائریکٹرکے وی پردیپ کو بتایا کہ وہ جموں کشمیر میں دو بسوں کو آزمائشی طور چلانے کیلئے بھیجیں جن میں سے ایک سرینگراورایک جموں میں چلائی جائے گی۔آزمائش کے دوران کی کارکردگی کی بنیاد پرحکومت اس بارے میں مستقبل کا کوئی فیصلہ لے گی تاکہ بین الشہر اور اندرون شہر ان بسوں کو سڑکوں پردوڑایا جائے یانہیں۔لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ حکومت سرینگراورجموں شہروں کو جدید اور اقتصادی طور سرگرم شہروں میں بدلنے کیلئے پرعزم ہے ۔قابل ذکر ہے کہ حکومت ہند نے بجلی بسوں کوفروغ دینے کیلئےFAME-IIاسکیم شروع کی ہے ۔اس اسکیم کے تحت بجلی سے چلنے والی گاڑیوں کو بنانے اورخریدنے پرسبسڈی دی جاتی ہے۔150 سے200بجلی سے چلنے والی بسوں کومتعارف کرانے سے محفوظ،اورمعتبرٹرانسپورٹ کی فراہمی یقینی بن جائے گی۔
 
 
 
 

پولیس سربراہ کی صدارت میں ریلویز سیکورٹی کمیٹی کی میٹنگ

ریل مسافروں کی سلامتی کیلئے تیکنالوجی کابھر پور استعمال کیاجائے:دلباغ سنگھ

جموں//پولیس سربراہ دلباغ سنگھ کی صدارت میں یہاں اعلیٰ سطحی حفاظتی کمیٹی کی میٹنگ میں ریلویز کی سیکورٹی کاجائزہ لیاگیا۔میٹنگ میں سپیشل ڈی آئی جی ،سی آئی ڈی،جموں کشمیر آرآر سوین،پرنسپل چیف سیکورٹی کمشنرآئی جی پی ریلوے پولیس فورس ایس این پانڈے،ایڈیشنل ڈائریکٹرجنرل پولیس ریلویزسنیل کمار اورفیروزپورڈویژن کے کمانڈنٹ رجنیش نے شرکت کی۔ میٹنگ کے دوران گزشتہ میٹنگ کے دورانایجنڈانکات پرعمل درآمد پر سیرحاصل گفتگو کی گئی جس میں لازمی تنصیبات کاحفاظتی آڈٹ،شیشے کی چھت والی بوگیوں کو آزمائشی طور چلانا،سامان کی جانچ کیلئے ایکسرے مشینوں کااستعمال  وغیرہ شامل ہیں۔میٹنگ کے دوران سی سی ٹی وی کی تنصیب پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا اورکمیٹی کوبتایاگیا کہ 235سی سی ٹی وی کیمرے 12ریلوے اسٹیشنوں پر لگائے گئے ہیں اس کے علاوہ مزید اسٹیشنوں پر ان کی تنصیب کی ضرورت ہے۔اس موقعہ پر پولیس سربراہ نے جی آر پی،آرپی ایف اور دیگر محکموں کے درمیان تال میل پر اطمینان کااظہار کیا اور افسروں سے تلقین کی کہ وہ لوگوں کی سلامتی اورتحفظ کو یقینی بنانے کیلئے زمینی سطح پربہتر کارکردگی کامظاہرہ کرنے کو یقینی بنائیں۔انہوں نے کہا کہ مستقبل میں ریلویزکی سلامتی کیلئے حفاظتی معاملات زیادہ اہم ہوں گے اور مزید اسٹیشن جڑرہے ہیں اور ،اورزیادہ لوگ سامان اور سفر کیلئے ریلوے کی خدمات حاصل کریں گے۔انہوں نے کہا کہ ماضی میں کئی عناصرریلوے کی جائیداد کو نقصان پہنچانے میں ملوث تھے تاہم انہوں نے کہا ایسے واقعات میں اب کمی آئی ہے۔پولیس سربراہ نے افسروں پرزوردیا کہ وہ تیکنالوجی کا زیادہ سے زیادہ استعمال کریں۔ 
 
 
 

کانگریس ممبرشپ مہم کاآغاز

بھاجپا’پھوٹ ڈالواورحکومت کرو‘کی پالیسی پرگامزن:میر

یواین آئی
سری نگر//جموں وکشمیر پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر غلام احمد میر کا کہنا ہے کہ جموں وکشمیر کے موجودہ حالات کو بہتر بنانے کے لئے کانگریس کا ساتھ دینا لازمی ہے ۔انہوں نے کہا کہ بی جے پی’پھوٹ ڈالو اور حکومت کرو‘ کی پالیسی پر گامزن ہے اور کانگریس وہ پارٹی ہے جس نے کبھی بھی سیکولرزم کے اپنے موقف سے منہ نہیں موڑا۔موصوف صدر نے ان باتوں کا اظہار منگل کے روز یہاں پارٹی ممبرشپ مہم کا آغاز کرنے کے موقع پر نامہ نگاروں کے ساتھ بات کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا،’’ہم آج پارٹی ممبر شپ مہم کا آغاز کر رہے ہیں جو پارٹی آئین کے مطابق ہر چار سال کے بعد کیا جاتا ہے اور ملک میں یہ مہم یکم نومبر سے شروع ہوئی ہے‘‘۔ان کا کہنا تھا،’’ملک کا کوئی بھی 18 سال سے زیادہ کی عمر کا شہری پانچ روپے فیس ادا کرکے کانگریس کا ممبر بن سکتا ہے اور پھر اپنی صلاحیتوں کی بنیاد پر آگے چل سکتا ہے‘‘۔ میر نے کہا کہ جموں وکشمیر کے حالات کو بہتر بنانے کے لئے کانگریس کا ساتھ دینا ہی واحد راستہ ہے ۔انہوں نے کہا،’’جموں وکشمیر میں آج حالات ایسے ہیں کہ اگر سرحدی بستیوں سے لے کر میدانی علاقوں تک کوئی نوجوان صبح کو گھر سے نکلتا ہے تو اس کے شام تک گھر لوٹنے کی کوئی ضمانت ہی نہیں ہوتی ہے‘‘۔ان کا کہنا تھا،’’بی جے پی’پھوٹ ڈالو اور حکومت کرو‘ کی پالیسی پر چل رہی ہے جبکہ کانگریس نے کبھی بھی اپنے موقف سے منہ نہیں موڑا ہے‘‘۔موصوف صدر نے کہا کہ جموں و کشمیر میں بے روز گاری اور مہنگائی عروج پر ہے جس سے لوگ پریشان ہیں۔انہوں نے کہاِ’’جموں وکشمیر میں بے روزگاری اور مہنگائی عروج ہے اگر یہی نیا کشمیر ہے تو یہ ان ہی کو مبارک ہے ‘‘۔ان کا کہنا تھا،’’جیسا راہل گاندھی نے بھی کہا کہ ملک میں جمہوریت کہیں نہیں ہے اور یہاں آئین کو بالائے طاق رکھا جا رہا ہے ‘‘۔انہوں نے کہا کہ کانگریس نے اپنے دور میں منریگا اسکیم متعارف کی تھی جس کو بند کیا گیا ہے ۔
 
 
 
 
 

جموں بس اڈے سے لاپتہ بڈگام کی خاتون لکھنو سے بازیاب

ارشاداحمد
بڈگام//بڈگام کے علاقہ آری پانتھن کی خاتون چند روز قبل جموں کے بس اڈے سے لاپتہ ہوگئی تھی جسے لکھنو پولیس نے بازیاب کرکے جموں کشمیر پولیس کے سپرد کیا۔پولیس بیان کے مطابق چند روز قبل جموں بس اڈے سے بڈگام کے علاقہ آری پانتھن کی شادی شدہ خاتون اچانک لاپتہ ہوگئی تھی جس کی گمشدگی کی رپورٹ پولیس تھانہ گھمٹ میں درج کرائی گئی تھی۔پولیس نے اس سلسلے میں جدید تیکنیک کا سہارا لیتے ہوئے گمشدہ خاتون کا سراغ لکھنو میں پایا اور لکھنو پولیس سے رابطہ کیا گیا جنہوں نے گمشدہ خاتون کو لکھنو سے بازیاب کرکے جموں کشمیر پولیس کے سپرد کردیا۔پولیس نے مزید کہا کہ لاپتہ خاتون کے والد اور شوہر جموں میں ہیں اور قانونی کارروائیوں کو مکمل کرنے کے بعد خاتون کے ان  کے سپرد کردی جائے گی۔
 
 
 
 
 
 

سنگھ پورہ پٹن میں لاش بر آمد

پولیس کاشناخت کیلئے عوام سے تعاون طلب

  سرینگر//بارہمولہ پولیس نے نامعلوم نعش کی شناخت کے لئے عام لوگوں سے مدد طلب کی ہے۔بارہمولہ کے سنگھ پورہ پٹن علاقے میں جھیل پل کے قریب پولیس نے ایک لاش برآمد کی۔ بعد ازاں لاش کو پوسٹ مارٹم اور دیگر طبی وقانونی لوازمات کے لیے اسپتال لے جایا گیا۔ لاش جوکہ ایک مردکی ہے، کی شناخت نہیں ہوسکی۔پولیس بیان کے مطابق اگر کسی کو بھی متوفی کی شناخت کے بارے میں کوئی معلومات ہو تو بارہمولہ پولیس کو درج ذیل نمبر 9596767706، 9596767716، 9596767763، 9596767768 یا پولیس کنٹرول روم کشمیر 112 پر اطلاع دیں۔
 
 
 

نصابی کتاب میں اہانت آمیز موادقابل مذمت

اشاعتی ادارے پر پابندی عائد کی جائے:پردیش کانگریس

سرینگر//جموں کشمیر پردیش کانگریس کمیٹی کے صدرغلام احمدمیر نے منگل کو اسکول نصابی کتابوں میں اہانت آمیزموا دکی زبردست مذمت کی ۔میر نے جے سی پبلیکیشنز پرپابندی عائد کرنے کی بھی مانگ کی۔ پردیش کانگریس صدر غلام احمدمیر نے اسکول نصابی کتب میں اہانت آمیزمواد کی موجودگی کی سخت مذمت کی ہے اورکہا کہ اشاعتی ادارے پر پابندی عائد کی جانی چاہیے۔پردیش کانگریس صدرنے دسری کتب میں اہانت آمیز مواد کی جودگی کے ذمہ دار افراد کیخلاف کارروائی کرنے کی مانگ کی۔انہوں نے کہا کہ یہ دانستہ حرکت ہے تاکہ مسلمانوں کے جذبات کو مجروح کیا جائے جو کسی طور قابل قبول نہیں ہے اور اسے برداشت نہیں کیا جائے گا۔غلام احمدمیر نے کہا کہ اس غلطی کو سرسری طور نہیں لیاجاناچاہیے اورحاکموں کو اسمیں ملوث افراد کو قانون کے شکنجے میں لانا چاہیے ۔
 
 
 

جعلی مارکس کارڈ تیارکرنے کا معاملہ

کرائم برانچ نے تین سال سے مفرور ملزم گرفتار کیا

سرینگر// پولیس کے کرائم برانچ کشمیر نے منگل کو بتایا کہ وادی کے مختلف کالجوں میں داخلہ حاصل کرنے کے لیے جعلی نمبروں کے سرٹیفکیٹ تیار کرنے کے معاملے میں 3سال سے گرفتاری سے بچنے والے ایک ملزم کو گرفتار کیا گیا ہے۔کرائم برانچ نے کہا کہ ملزم اعجاز احمد ملک ولد عبدالغنی ملک ویلگام ہندواڑہ کپواڑہ کو ایف آئی آر نمبر  34/2007 دفعہ 420,468,471,120-B آر پی سی کے تحت میں ملوث ہونے کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا ،جو وادی کے مختلف کالجوں میں داخلہ لینے کے لیے کہ اعلیٰ درجے کے جعلی نمبروں کے سرٹیفکیٹ تیار کرتا تھا۔بیان میں کہا گیا کہ اعجاز اور دیگر 5 ملزمان کے خلاف کیس ثابت ہونے پر تفتیش بند کر دی گئی اور کیس میں چارج شیٹ 28 دسمبر 2010 کو عدالت میں پیش کی گئی،تاہم اس میں کہا گیا ہے کہ، ملزم اعجاز احمد ملک 2018 سے مفرور تھا اور گرفتاری سے بچ رہا تھا۔ وارنٹ زیر دفعہ512 کورٹ آف سٹی جج سری نگر نے جاری کیا تھا، اور اس کے مطابق وارنٹ پر کرائم برانچ کشمیر نے عمل کیا تھا اور ملزم کو گرفتار کیا گیا ۔
 
 
 
 
 
 

بھرتی بورڈ کاکمپوٹرپرمبنی تحریری امتحان،3 مبصرین کا ردوبدل

سرینگر// بلال فرقانی//سرکار نے سروس سلیکشن بورڈکی جانب سے کمپیوٹر کی بنیاد پر تحریری امتحانات کیلئے3مبصرین کا ردو بدل کیاہے۔سرکاری حکم نامہ میں کہا گیا کہ عمومی انتظامی محکمہ کی جانب سے جاری سابق نوٹیفکیشن میں جزوی ترمیم کی گئی اور7دسمبر،11دسمبر،20دسمبر اور27دسمبر کو سرینگر اور جموں کے مختلف امتحانی مراکز پر کمپیوٹر کی بنیاد پر تحریری امتحانات لینے کیلئے3افسران کو بطور مبصر نامزد کیاگیا۔ حکم نامہ کے مطابق ان افسراں میں جموں سینٹر کیلئے محکمہ انفارمیشن ٹیکنالوجی کے ڈپٹی سیکریٹری آفاق احمد کے بجائے محکمہ سماجی بہبود کے ڈپٹی سیکریٹری وریندر کمار مانیال اور سرینگر مرکز کیلئے اسسٹنٹ لیبر کمشنر بڈگام ضمیر علی گنائی کے بجائے محکمہ اطلاعات و تعلقات عامہ کے کلچرل افسر برہان حسین اور ضلع صنعتی مرکز پلوامہ کے پروجیکٹ منیجر عامر علی حق ناتھ کے بجائے کاپرایٹو سرینگر کے ڈپٹی آڈیٹ افسر محمد یونس میر کو نامزد کیا گیا۔ حکم نامہ میں کا گیا ہے کہ سروس سلیکشن بورڈ ی ان افسراں کی عین تعیناتی کرنے کی مجاز ہوگی۔
 
 
 
 
 
 
 
 
 
 

 مریضوں کو عام دوائیاں تجویز کریں

 ڈاکٹروں کو ڈرگ کنٹرولرکو مشورہ،بڈگام میں جن آشدھی یوجنا پر بیداری پروگرام

بڈگام//پردھان منتری بھارتیہ جن اوشدھی پریوجنا (پی ایم بی جے اے پی) پر ایک دن بھر بیداری پروگرام بڈگام کے ایک کانفرنس ہال میں منعقد ہوا۔ پروگرام کا انعقاد چیف میڈیکل دفتر بڈگام نے ڈرگ کنٹرول آرگنائزیشن کے اشتراک سے کیا تھا۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ڈرگ کنٹرولر جے اینڈ کے لوتیکا کھجوریہ نے کہا کہ جموں و کشمیر کے جن اوشدھی کیندروں پر دستیاب جنرک ادویات نہ صرف سستی ہیں بلکہ معیاری اور افادیت کی بات کرنے پر برانڈڈ نام کی دوائیوں کے مساوی ہیں۔ جن اوشدھی کے فوائد کو یقینی بنانے کیلئے لوگ بڑے پیمانے پر دوائیاں حاصل کرتے ہیں۔ انہوں نے ڈاکٹروں پر زور دیا کہ وہ مریضوں کو وہی تجویز کریں۔جنرک ادویات کے معیار کے بارے میں شکوک و شبہات کو دور کرنے پر زور دیتے ہوئے کھجوریہ نے کہا کہ دوائیوں کے معیار اور ساخت پر کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جاتا، وہ  ایسی تمام ادویات صرف NABL سے منظور شدہ لیبارٹری میں ٹیسٹ کے بعد منظور کی جاتی ہیں۔اس موقع پر سی ایم او بڈگام ڈاکٹر تجمل حسین خان نے بھی عام لوگوں کو سستی اور افادیت کے ساتھ ادویات فراہم کرنے میں جن اوشدی کیندر کی اہمیت کو اجاگر کیا۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ عوام میں بیداری کی ضرورت ہے کیونکہ ضلع میں پانچ مرکز کام کر رہے ہیں جبکہ کچھ اور کیندر پائپ لائن میں ہیں۔ڈاکٹر زرکا نے بھی اس موقع پر خطاب کیا اور پروگرام کے فوائد اور جنرک ادویات پر روشنی ڈالی۔ڈاکٹر رفعت صدیق نے ضلع بھر میں ادویات کی دستیابی کے حوالے سے تفصیلی پریزنٹیشن بھی دی۔ انہوں نے شرکاء کو آن لائن موڈ کے ذریعے جنرک ادویات کی دستیابی کے بارے میں آگاہ کیا۔ اس موقع پر مقررین میں ڈاکٹر عرفانہ ڈپٹی ڈرگ کنٹرولر (کشمیر) ،سریندر موہن تکوڈپٹی ڈرگ کنٹرولر (جموں)، اقبال پالا اسسٹنٹ ڈرگ کنٹرولر (جموں)، ڈاکٹر نشاط شاہین صوبائی نوڈل افسر جن اوشدی شامل رہے۔پروگرام کے دوران مختلف مراکز کے مالکان کو بھی اپنے نقطہ نظر کے اظہار اور اپنے تجربے سے آگاہ کرنے کا موقع ملا۔ جن اوشدھی کیندروں کے استفادہ کنندگان نے بھی پروگرام میں حصہ لیا۔
 
 
 
 

بھارتی نژاد کشمیری پنڈت 

امریکی سماج کا کامیاب حصہ:کرشنامورتی

واشنگٹن//کشمیری پنڈت امریکہ میں ایک کامیاب بھارتی طبقہ ہے۔ا س بات کااظہار ایک بھارتی نژاد امریکی رکن قانون سازنے امریکہ اور پوری دنیا کو کشمیری پنڈتوں کی دین کی تعریف کرتے ہوئے کیا۔بھارتی نژادامریکی کانگریس کے رکن راجاکرشنامورتی نے ایک استقبالیہ پر اور’دی کشمیرفائلز‘فلم کی ایک نجی نمائش کے موقعہ پرکہا ،’’جب آپ کی اپنی جان پر بن آئی ہو،جب آپ کوآپ کی جائیداد سے بیدخل کیاگیا ہو ،توآپ زندگی کے حقیقی معنی سمجھتے ہیں۔آپ جانتے ہیں کہ اس کی کس طرح سراہنا کی جانی چاہیے ،اسے فروغ دینا چاہیے اورآپ جو بھی ہیں اس بات کو یقینی بنائیں کہ سبھی اپنی جڑوں اور وراثت کویادرکھیں‘‘۔ گلوبل کشمیری پنڈت ڈایاسپوراکے اہتمام سے تقریب پر بولتے ہوئے انہوں نے کہا،’’کشمیری پنڈت بھارتی نژادامریکی طبقوں کاایک کامیاب طبقہ ہے ۔آپ کو جو مشکلات پیش آئی ہیں اور ان مشکلات نے دیگر مشکلات کوکم تر کیاہے۔‘‘وویک اگنی ہوتری کی ہدایت میں بنی پلو ی جوشی کی اس فلم میں کشمیری پنڈتوں کی ہلاکتوں اور نسلی صفائی پر مبنی ہے۔فلم کو16امریکی شہروں میں نمائش کیلئے پیش کیاجائے گا۔رکن کانگریس اینڈری بارنے ہندامریکہ تعلقات اور بھارتی نژاد امریکیوں کی دین کواُجاگر کیا۔ایک پیغام میں سینٹرمارک وارنرنے استقبالیہ میں موجودمہمانوں کو نیک خواہشات کا پیغام بھیجا۔اگنی ہوتری نے اپنے کلیدی تقریرمیں کہا کہ کشمیرکی پاک سرزمین سے جو بھائی چارے کی تہذیب ابھری ہے اورکشمیر نے فن ،موسیقی اورادب کے میدان میں دنیا کو کافی کچھ دیاہے۔انہوں نے کہا کہ کشمیرکی تباہی علم کی تباہی ہے اور دنیا کو جانناچاہیے کہ انسانیت کیا ہے۔
 
 
 

اننت ناگ میں سکوٹی کی ٹکر سے 

شہری لقمہ اجل

اننت ناگ//اننت ناگ میں ایک بزرگ شہری اسکوٹی کی ٹکر سے ہلاک ہوگیا۔سرکاری ذرائع کے مطابق 65برس کے مشتاق احمد خان ساکن ایس کے کالونی اننت ناگ کو لازبل میں ایک سکوٹی نے ٹکر مار دی۔مشتاق کو شدیدچوٹیں آئی اوراُسے فوری طور گورنمنٹ میڈیکل کالج اسپتال پہنچایاگیاجہاں ڈاکٹروں نے اُسے مردہ قرار دیا۔پولیس نے کیس درج کرکے تحقیقات شروع کردی ہے۔
 
 
 
 

خصوصی پوزیشن کی بحالی تک امن اور خوشحالی ناممکن

ہندوارہ میں نیشنل کانفرنس خواتین ونگ کے کنونشن میں لیڈران کا اظہار خیال

سرینگر//نیشنل کانفرنس خواتین ونگ کا ایک روزہ کنونشن منگل کو کولنگام ہندوارہ میں منعقد ہوا۔ کنونشن سے خواتین ونگ کی ریاستی صدر شمیمہ فردوس، سینئر لیڈر و ضلع صدر کپوارہ قیصر جمشید لون، صوبائی صدر خواتین ونگ انجینئر صبیہ قادری نے خطاب کیا۔ موصولہ بیان کے مطابق پارٹی لیڈران نے کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ نیشنل کانفرنس جموں وکشمیر کے عوام کے حقوق کی بحالی کیلئے جدوجہد میں مصرف ہے اور یہاں اُس وقت تک امن ، تعمیر و ترقی اور خوشحالی کا تصور بھی نہیں کیا جاسکتا جب تک خصوصی پوزیشن بحال نہیں کی جاتی ہے۔پارٹی لیڈران نے کہا کہ کشمیر کے عوام اس وقت نہ صرف انتظامی نااہلی اور غفلت شعاری سے روزمرہ کی ضروریاتِ زندگی سے محروم ہیں بلکہ حکمرانوں کی غلط پالیسی سے یہاں خوف و دہشت کا ماحال ہے۔ ہر روز خونین واقعات پیش آرہے ہیں اور معصوم اور کمسن مارے جارہے ہیں۔ مصلحت اور افہام و تفہیم کے بجائے طاقت کا بے تحاشہ استعمال کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آئے روز سرکاری ملازمین کو مختلف بہانے بناکر برطرف کیا جارہا ہے۔ نئی دلی جموں وکشمیر میں افسر شاہی کو دوام بخش کر عوام کو پشت بہ دیوار کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ دفعہ370کی فوری بحالی عمل میں لائی جانی چاہئے کیونکہ یہی ایک ایسا واحد راستہ ہے جو یہاں کے عوام میں نہ صرف اعتماد بحال کرسکتا ہے بلکہ یہاں کے حالات بھی سدھار سکتا ہے۔ کنونش میں ضلع صدر خواتین ونگ، ڈی ڈی ممبران اور دیگر عہدیداران بھی موجود تھے۔ 
 
 
 

کیلئے اجازت ملنے پر عوام کو مبارک:حج و عمرہ ایسو سی ایشن 

خواہشمند افراد سے جلد بازی سے کام نہ لینے کی اپیل

سرینگر//حج اور عمرہ ایسوسی ایشن کے صدر شیخ فیروزنے سعودی عرب کی جانب سے حج اور عمرہ کیلئے ہندوستان سمیت 6ممالک کے لائسنس یافتہ اور تسلیم شدہ ٹور آپریٹروں کواجازت ملنے پر عوام کو مبارکباد پیش کی ہے۔ایسوسی ایشن کے جنرل سکریٹری محمد یونس کی جانب سے جاری ایک بیان میں شیخ فیروز نے کہا ہے ’’ ہم جموں و کشمیر کے معزز شہریوں کو مطلع کرنا چاہتے ہیںکہ سعودی عرب نے ہندوستان سمیت 6 ممالک کے لائسنس یافتہ اور تسلیم شدہ ٹور آپریٹروں کو اجازت دی ہے،جن میںانڈونیشیا، پاکستان، مصر اور پاکستان عمرہ ویزا جاری کریں گے اور اسی کے مطابق عمرہ پیکجز ڈیزائن کریں گے۔ نئی ہدایت 6دسمبر 2021  سے نافذ ہو گیا ہے۔ حکومت ہند نے بھی سرکاری طور پر سفر میں نرمی کر دی ہے۔ تجارتی سیاحت اور تجارتی پروازوں کیلئے پابندیاں 15 دسمبر 2021 سے چلانے کی اجازت ہے جو 2 سال بعد ہٹا دی گئی ہے کیونکہ مارچ 2020 میں کورونا کی وجہ سے حکام کی جانب سے پورا ٹریول ایکو سسٹم روک دیا گیا تھا۔انہوںنے عوام بالخصوص عمرہ کے خواہشمندوں سے اپیل کی ہے کہ جلد بازی نہ کریں اور صبر سے کام لیںکیونکہ  ٹریول ایجنٹوں کو دستاویزات کو حتمی شکل دینے کے لیے تقریباً 2 (دو) ہفتے مزید درکار ہوتے ہیں۔شیخ فروز کا کہنا ہے کہ عمرہ پیکجوں کی بکنگ سے پہلے فرم کی آپریشنل صلاحیت اور خیر سگالی کو اچھی طرح چیک کریں۔انہوں نے کہا’’ ہم چاہتے ہیں کہ لوگ چوکس رہیں اور کسی جعلی پیکیج کا شکار نہ ہوں، ہم لوگوں کو مشورہ دیتے ہیں کہ وہ تمام خصوصیات کو چیک کریں اور ان کا جائزہ لیں‘‘۔
 
 
 
 
 

سائبر پولیس کی کارروائی

 لاکھوں روپے مالیت کے سمارٹ فون برآمدکئے

سرینگر// سائبر پولیس کشمیر زون سرینگر نے لاکھوں روپے مالیت کے گمشدہ موبائل فون برآمد کرکے حقیقی مالکان کے سپرد کئے۔ سائبر پولیس کشمیر کو عام لوگوں سے ان کے موبائل فون گم ہونے کی شکایات موصول ہو رہی تھیں۔ یہ مختلف آن لائن دھوکہ دہی، گھوٹالوں اور سائبر سے متعلق دیگر جرائم کے علاوہ سائبر پولیس اسٹیشن کشمیر زون میں معمول کی بنیاد پر رپورٹ کیے جا رہے ہیں۔سائبر پولیس کشمیر کی طرف سے خصوصی ٹیموں کے ذریعے مسلسل 24×7 کوششیں کی جا رہی ہیں تاکہ جدید تکنیکی اور روایتی طریقوں کا استعمال کرتے ہوئے گمشدہ موبائل فونوں کا سراغ لگانے کے علاوہ ایسے جرائم کی تحقیقات کی جا سکے۔ اسلئے سائبر پولیس شہریوں کی روزمرہ کی زندگی میں مختلف تکنیکی چیلنجوں کا سامنا کرنے میں شہریوں کی مدد کرنے میں سب سے آگے ہے۔سائبر پولیس کشمیر لاکھوں روپے مالیت کے مختلف ایسے 53 سمارٹ فون کا سراغ لگا کر اپنی کوششوں میں کامیاب رہی اور انہیں منگل کو سائبر پولیس سٹیشن ہیڈ کوارٹر سرینگر میں حقیقی مالکان کے حوالے کر دیا گیا۔آئی جی پی کشمیر زون کی ہدایت پر سائبر پولیس کشمیر کی جانب سے مختلف بیداری پروگرام بھی شروع کیے گئے ہیں، جن میں عوام کو مختلف عصری آن لائن فراڈز اور گھوٹالوں وغیرہ کے بارے میں آگاہ کیا جاتا ہے۔عام لوگوں نے عام لوگوں کو اس طرح کی خدمات فراہم کرنے میں سائبر پولیس کشمیر کے کردار اور کوششوں کو سراہا ۔
 

ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ سیکھنے کے نتائج کو بڑھانے کیلئے ’’ مینٹر ٹیچر‘‘ اقدام شروع کریگا: چیف سیکرٹری

قومی تعلیمی پالیسی کے مطابق تمام پرائمری سکولوں میں 31؍ مارچ 2022تک کندر گارٹنز ہوںگے

جموں//چیف سیکرٹری ڈاکٹر ارون کمار مہتا نے آج محکمہ سکول ایجوکیشن کے کام کاج اور جاری مالی سال کے دوران مختلف سکیموں کی حصولیابیوں کی پیش رفت کا جائزہ لینے کے لئے ایک میٹنگ کی صدارت کی۔ میٹنگ میں فائنانس سکول ایجوکیشن کے محکموں کے اِنتظامی سیکرٹریوں ، ڈائریکٹر سکول ایجوکیشن جموں/ کشمیر اور ڈائریکٹر سماگراہ شکھشا نے شرکت کی۔میٹنگ میں بتایا گیا کہ اِس تعلیمی سال کے دوران یونین ٹیریٹری میں سرکاری اور پرائیویٹ سکولوں کے 22,07,296 طلاب کا مجموعی اندراج رجسٹرکیا جس میں 80 فیصد سکول سرکاری شعبے میں کا م کر رہے ہیں۔یو آئی دی اے آئی کی طرز پر نظر ثانی شدہ آبادی کے تعلیمی اِشاریوں کے مطابق جموںوکشمیر میں پرائمری سطح ، اپر پرائمری سطح ، ہائی سکول اور ہائیر سکینڈری سطح پر مجموعی اندراج کا تناسب 111.65 فیصد، 80.53فیصد ،72.52 فیصد اور 60.53 فیصد بالترتیب ہیں۔میٹنگ میں مزید بتایا گیا کہ محکمہ نے سکول ایجوکیشن سیکٹر میں کئی اہم اصلاحات عملائے ہیں جن میں شفاف اور آسان ٹرانسفر پالیسی کا اجرأ ، کے جی بی وی رہنما خطوط پر عمل درآمد ، اَفیلیشن اور شناختی پورٹل کو برقراررکھنا ، فیس فکسیشن کمیٹی کے لئے قواعد وضع کرنا اور پی ایف ایم ایس پر مبنی کیش لیس لین دین کو یقینی بنانا شامل ہے۔محکمہ نے تعلیمی میدانوں میں صنفی مساوات کو فروغ دینے کے لئے قبائلی اور پسماندہ علاقوں پر خصوصی توجہ دی ہے اور نشاندہ شدہ علاقوں میں لڑکیوں کے 15 ہوسٹل تعمیر کئے ہیں جبکہ اِسی طرح کی 25 سہولیات رواں مالی سال کے آخر تک مکمل کی جائیں گی۔مِڈڈے میل سکیم کے تحت محکمہ خشک راشن اور تمام مستفید ین کو کھانا پکانے کی لاگت کے مساوی نقد رقم کی تقسیم یقینی بنارہا ہے جب تک کہ سکول آف لائن تعلیم دوبارہ شروع نہیں کیا جاتا ۔چیف سیکرٹری نے محکمہ کو ہدایت دی کہ وہ متعلقہ پنچایتوں کے ذریعے سکیم کے تحت فوائد کی تقسیم کی توثیق کرے۔چیف سیکرٹری نے جموںوکشمیر میں قومی تعلیمی پالیسی کے جلد عمل آوری پر زور دیا اور محکمہ کو ہدایت دی کہ تمام 8,000 سرکاری سکولوں میں تیزی سے کندر گارٹن کھولے جائیں جس میں کیپکس اور منریگا کے تحت ذرائع کے ساتھ مناسب ہم آہنگی ہو۔محکمہ سے کہا گیا ہے کہ وہ وِنٹر زون کے سکولوں میں دو ماہ کے اندر اور سمر زون سکولوں میں 31 ؍ مارچ 2022ء تک کندر گارٹنز کو فعال کرنے کو یقینی بنائیں۔چیف سیکرٹر ی نے تلاش سکیم کے تحت سکول ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ سے کہا کہ وہ پنچایتوں میں حصہ لیں اور سکول سے باہر تمام بچوں کا داخلہ کریں اور جموںوکشمیر میں طلاب کے اندرا ج کو یقینی بنائیں۔چیف سیکرٹری نے سرکاری سکولوں میں سکول چھوڑنے کی شرح کا سنجیدگی سے نوٹس لیتے ہوئے محکمہ سکول ایجوکیشن کو ہدایت دی کہ وہ ان اساتذہ پر اَپنی ذمہ داری عائد کرے جو ان نوجوان ذہنوں کو معیاری تعلیم فراہم کرنے میں ناکام رہے۔ڈاکٹر ارون کمار مہتا نے محکمہ سے مزید کہا کہ تمام سرکاری سکولوں میں فوری طور پر بائیو میٹر ک حاضری کے آلات نصب کئے جائیں تاکہ اساتذہ کی حاضری پر نظر رکھی جاسکے بالخصوص دُور دراز علاقوں میں اور عادت سے غیر حاضر رہنے والوں کے خلاف تادیبی کارروائی عمل میں لائی جائے۔اُنہوں نے 31 ؍مارچ 2022 ء سے قبل کلاس VI اور اس سے آگے کے طلباء میں پیشہ ورانہ تربیت کو فروغ دینے کے لیے تمام سکولوں میں ڈیجیٹل لیبارٹریوں کے قیام کی ہدایت دی۔اُنہوں نے محکمہ سکول ڈیولپمنٹ فنڈ کے تحت فراہم کردہ وسائل کو مکمل طور پر استعمال کرنے اور تمام سکولوں میں پینے کے پانی ، بجلی کی فراہمی اور صفائی کی بنیادی سہولیات کے کام کو یقینی بنانے کی ہدایت دی۔
 
 

 کولگام میں بھائی چارہ کی مثال پھر تازہ

مسلمانوں نے راجپوت خاتون کے آخری رسوم ادا کئے 

سرینگر //کولگام کے بیگام علاقے میں مسلمانوں نے ایک بار پھر مذہبی ہم آہنگی او رکشمیریت کی عمدہ مثال قائم کرتے ہوئے ایک عمر رسیدہ راجپوت خاتون کے آخری رسوم اداکئے ۔بیگام کولگام نامی گائوں میں رہائش پذیر راجپوت خاتون لاجونتی دیوی کی موت پیر کی شام قریب سات بجے مختصر علالت کے بعدواقع ہوئی ۔ان کے آخری رسوم ادا کرنے کیلئے گاؤں کے مرد ہی نہیں بلکہ خواتین بھی پہنچیں۔مقامی مسلمانوں نے ان کے آخری رسومات کا انتظام کیا۔ مسلمانوں نے سوگوار کنبہ کے شانہ بشانہ آ نجہانی کے آخری رسوم انجام دئے ۔مذکورہ خاتون کے فرزند راجندر سنگھ نے کہا کہ کشمیر میں بھائی چارہ کی یہ مثال صدیوں سے قائم ہے جس کیلئے انہیں فخر ہے۔انہوں نے کہا ’’میری ماں کی موت جونہی واقع ہوئی تو مقامی مسلم برادری نے آناً فاً سبھی تیاریاں کرلیں جس کیلئے وہ ان کے مشکور ہیں۔سی این ایس