مزید خبریں

خراب موسمی صورتحال کے دوران لوگ احتیاط برتیں

 بجلی،پانی اورسڑک رابطہ کو فورہ طور بحال کیا جائے:ڈی ڈی سی چیئرپرسن

زاہدبشیر
رام بن//2روز سے لگاتار میدانی علاقوں میں شدیدبارشوں کے پیش نظر لوگ احتیاط برتیں اور تمام محکمہ جات بالخصوص محکمہ پی ڈی ڈی، جل شکتی آر اینڈ بی، پی ایم جی ایس وائی لوگوں کودرپیش آ رہے مسائل جلد حل کریں۔ ان باتوں کااظہار پریس کے نام جاری ایک بیان میں ڈی ڈی سی چیئرپرسن ضلع رام بن ڈاکٹرشمشادہ شان نے کیا۔انہوں عام لوگوں سے اپیل کی کہ وہ بارشوں اور برف باری کے دوران احتیاط برتیں اور اپنے جان ومال کاخیال رکھیں۔ڈاکٹر شمشادہ شان نے دوروز سے لگاتار بالائی علاقوں میں برف باری اورمیدانی علاقوں میں بارشوں سے پیداشدہ صورتحال پرتمام محکمہ جات کومتحرک رہنے کوکہا۔انہوں نے محکمہ پی ڈی ڈی کوضلع رام بن میں بجلی سپلائی بحال کرنے کی ہدایت دی اورتمام رابطہ سڑکوں پر برف ہٹانے اور جہاں جہاں پسیاں گری ہیں وہ ہٹانے کی ہدایت دی۔ اس دوران انہوں نے محکمہ جل شکتی کوعام لوگوں تک پینے کاصاف پانی کی فراہمی کویقینی بنانے کی بھی ہدایت دی۔ڈاکٹر شمشادہ شاہ نے اس سلسلے میں تمام محکمہ جات کے آفیسران۔کے علاوہ ڈی ڈی سی ممبران سے بھی بات کی کہ دوردراز علاقوں میں لوگوں کے مسائل کی طرف توجہ دیں بالخصوص برف باری اوربارشوں سے پیداشدہ صورتحال پرکڑی نظر رکھیں اورلوگوں کوان مشکلات سے باہرنکالیں۔
 

چھاترو کے بونڑا گائوںکی عوام سہولیات سے محروم 

علاقے میں سڑک، بجلی و پانی کا کوئی معقول بند و بست نہیں

عاصف بٹ
کشتواڑ// ضلع ہیڈکوارٹر سے 50کلومیڑ کی دوری پر واقع سب ڈویژن چھاترو کے بونڑا علاقہ کی گوجر بکروال آبادی اس دورجدید میں بھی بنیادی سہولیات سے محروم ہے۔ اگرچہ مرکزی و جموں کشمیر کی انتظامیہ گوجر کے لئے ہر ممکن مدد و سہولیات کا وعدہ کرتی ہے لیکن زمین سطح پر یہ سبھی وعدے صرف بیان بازی تک ہی محدود رہتے ہیں۔ تین وارڈوں پر مشتمل علاقہ کی عوام نے بتایا کہ علاقہ کی عوام کو ہر بنیادی سہولیات سے محروم ہیں۔ بشیر احمد نے بتایا کہ علاقہ کی اگرچہ سال 2018  میں علاقہ میں بجلی نظام کے لئے کمپنی نے پول لگائیں لیکن چار سال گزرجانے کے بعد بھی علاقہ میں بجلی کا بلب نہ جل سکا۔ ایک ماہ قبل بجلی ٹرانسفارمر نصب کیا گیا لیکن باوجود اسکے علاقہ میں بجلی کی دستیابی کا خواب ادھوراہی رہا۔علاقہ میں عوام کو پانی دستیاب ہے۔ لوگوں کے پینے کا پانی کئی کلومیڑردور سے لانا پڑرہاہے جبکہ علاقہ کے لئے تعمیر کی جاری سڑک کا کام بھی ادھورا ہے۔ سال 2011میں علاقہ میں مڑل سکول کی تعمیر مکمل ہوئی جبکہ اسکی حالت ابتر ہے جہاں کتوں و جانوروں نے ڈیرہ جمایا ہوا ہے۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ وقت پر ہمارے ساتھ دعوے کئے گئے لیکن آج تک ہمیں صرف ووٹ بینک کے لئے استعمال  کیا گیا۔ انھوں نے انتظامیہ سے بجلی، سڑک و پانی کی بنیادی سہولیات کو فراہم کرنے کی اپیل کی تاکہ عوام کو مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے۔
 

میونسپلٹی کے ملازمین کی مانگیں تسلیم کی جائیں: نصیر باغوان

کشتواڑ//ضلع کشتواڑ کے سماجی کارکن نصیر احمد باغوان نے لیفٹیننٹ گورنر منوج سہنا سے درخواست کی کہ وہ ضلع کشتواڑ اور دوسرے اضلاع کے میونسپلٹی کے ملازمین کے معاملے میں مداخلت کریں جو گزشتہ ہفتے سے مکمل ہڑتال پر ہیں اور ضلع کے قصبے کے علاقوں کی حالت بدترین ہورہی ہے۔ پریس بیان جاری کرتے ہوئے نصیر باغوان نے ضلع ترقیاتی کمشنر کشتواڑ سے اپیل کی کہ وہ اس معاملے کو علی حکام کے ساتھ اٹھائیں تاکہ بلدیہ ملازمین کے مطالبات کا جلد از جلد ازالہ کیا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت بلدیہ کے ملازمین کے تمام مسائل کو جلد از جلد حل کرے کیونکہ وہ کسی بھی معاشرے میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں، صفائی کرنے والوں اور بلدیہ کے دیگر ملازمین کے بغیر معاشرہ صاف ستھرا نہیں رہ سکتا۔ انہوں نے ڈپٹی کمشنر کشتواڑ و ایس ایس پی کا بھی شکریہ ادا کیا کہ انہوں نے ذاتی طور پر معاملے میں مداخلت کی اور کشتواڑ قصبے کے تمام نالوں کی گندگی کو صاف کرنے کے لیے گزشتہ روز عملے اور مشینری کا کام لگایا۔انہوں نے اے سی آر تحصیلدار اور ایس ایچ او کشتواڑ کا بھی شکریہ ادا کیا کہ انہوں نے کام پر عملے و مشینری کا استعمال کرکے قصبہ میں صفائی کی پیروی کی۔
 

ڈوڈہ میں کویڈ- 19 کے 3 نئے مثبت معاملات 

۔2 مریض صحتیاب ،اب تک 6لاکھ سے زائد ٹیکے لگائے گئے 

اشتیاق ملک 
ڈوڈہ //ضلع ڈوڈہ میں بدھ کو کویڈ- 19 کے 3 نئے مثبت معاملات سامنے آئے ہیں اور دو مریض صحتیاب ہوئے ہیں اس دوران 15 سے 18 سال تک عمر کے بچوں کے لئے ٹیکہ شروع کی گئی ٹیکہ کاری کی مہم بدستور جاری ہے۔ اطلاعات کے مطابق بدھ کے روز ڈوڈہ ضلع کے مختلف مقامات پر ہوئی کوؤڈ جانچ کے دوران صرف 3 افراد کی ٹیسٹ رپورٹ مثبت آئی ہے جنہیں ہوم قرنطینہ میں رکھا گیا ہے اور 2 مریض صحتیاب ہوئے ہیں۔ اس طرح سے ضلع میں فعال کیسوں کی تعداد 55 و شفایاب ہوئے مریضوں کی مجموعی تعداد 7891 پہنچ گئی ہے۔ ضلع میں اب تک کوؤڈ 19 سے 137 افراد فوت ہوئے ہیں اور 633028 ٹیکے لگائے گئے ہیں۔
 
 

رام بن میں کویڈ ایس او پیز کا سختی سے نفاذ

ٹیکہ کاری اور جانچ کا عمل بھی تیزی سے جاری

رام بن// محکمہ صحت رام بن نے بدھ کو 826 لوگوں کو کویڈ ٹیکے لگائے ، جن میں 15سے17 سال کی عمر کے 712 بچے شامل ہیں۔ ضلع امیونائزیشن آفیسر ڈاکٹر سریش کے مطابق میڈیکل بلاک بانہال میں 220، بٹوت میں 272، اکھڑہال میں 95 اور گول میں 125 بچوں کو ویکسین کی خوراک دی گئی۔ دریں اثنا، پورے ضلع رام بن میں کویڈ پروٹوکول کو لاگو کرنے کے لیے نفاذ کی مہم کو جاری رکھتے ہوئے، انفورسمنٹ ٹیموں نے خلاف ورزی کرنے والوں کو چہرے کے ماسک پہنے بغیر گھومنے اور جسمانی فاصلہ برقرار نہ رکھنے پر جرمانہ عائد کیا۔ گزشتہ روز انفورسمنٹ ٹیموں نے اپنے اپنے دائرہ کار میں معائنہ کے دوران 12ہزار 800 روپے جرمانہ وصول کیا۔ تفصیلات کے مطابق یکم اپریل 2021 سے اب تک جرمانے کی کل 79لاکھ 47 ہزار 300 روپے وصول کی گئی۔ انفورسمنٹ افسران نے لوگوں سے چہرے کے ماسک پہننے اور جسمانی فاصلہ برقرار رکھنے کے علاوہ اپنے قریبی کویڈ ویکسی نیشن پر کوویڈ ویکسین کی خوراک لینے کی تاکید کی۔ چیف میڈیکل آفیسر رام بن ڈاکٹر محمد فرید بھٹ کی طرف سے جاری کردہ روزانہ بلیٹن کے مطابق، محکمہ صحت نے 2271 نمونے اکٹھے کیے ہیں جن میں 494 آر ٹی-پی سی آر اور 1777آر اے ٹی نمونے شامل ہیں۔ اس کے علاوہ ضلع میں مخصوص ویکسی نیشن مراکز میں 826 افراد کو کووِڈ ویکسین دی گئی ہے۔
 
 
 
 

ایس ٹی او جموں نے تپ دق کے متعلق بیداری مہم کا انعقاد کیا

جموں// ریاستی تپ دق دفتر (ایس ٹی او) جموں نے بدھ کو ’’ہر گھر دستک‘‘ مہم کے تحت تپ دق کے نئے کیسوں کی شناخت کے لیے ایک وسیع مہم چلائی۔ قومی تپ دق کے خاتمے کا پروگرام جموں و کشمیر میں 6 دسمبر 2021 کو شروع کیا گیا تھا تاکہ تپ دق کے لاپتہ کیسوں کا پتہ لگایا جا سکے۔ جموں صوبہ میں اس مہم کے تحت وسیع مہم چلانے کے لیے ریاستی تپ دق افسر کی نگرانی میں 339 ہیلتھ ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں۔ اس طرح تشکیل دی گئی ٹیموں کی کوششوں سے، 4 جنوری 2022 تک 20 لاکھ (20لاکھ 07ہزار 52) سے زیادہ آبادی کی اسکریننگ کی گئی اور 10ہزار 860 نمونے جو کہ علامتی علامات والے مریضوں سے جمع کیے گئے۔
 
 
 

کشتواڑ میں کیپیکس بجٹ 2021-22 کے تحت 81 فیصد فنڈ کا استعمال 

اے ڈی ڈی سی نے مختلف شعبوں کے تحت کاموں کی پیش رفت کا جائزہ لیا

کشتواڑ// ایڈیشنل ضلع ترقیاتی کمشنر کشتواڑ شام لال نے بدھ کویہاں کانفرنس ہال ڈی سی دفتر میں ضلع اور سیکٹرل افسران کی ایک میٹنگ کی صدارت کی اور ضلع کیپیکس بجٹ اور دیگر مرکزی اسپانسرڈ اسکیموں کے تحت مالی سال 2021-22 کے لیے کیے گئے کاموں کی پیش رفت کا جائزہ لیا۔ اجلاس میں جوائنٹ ڈائریکٹر پلاننگ محمد اقبال نے شرکت کی۔ اے سی آر اختر حسین قاضی، اے سی ڈی کشور سنگھ کٹوچ، اے سی پی ذاکر حسین وانی، ڈی پی او سنیل بھٹیال کے علاوہ بی ڈی اوز اور دیگر متعلقہ افسران بھی موجود تھے۔ شروع میں میٹنگ کو مالی سال 2021-22 کے لیے ڈسٹرکٹ کیپیکس بجٹ اور مرکزی طور پر اسپانسر شدہ اسکیموں کے تحت کیے گئے کاموں کی سیکٹر وار جسمانی اور مالی حالت کے بارے میں آگاہ کیا گیا۔ اسی دوران بتایا گیا کہ ضلع نے کل 195.55 کروڑ روپے کے مقابلے میں 158.61 کروڑ روپے کے اخراجات ریکارڈ کیے ہیں، جو کل دستیاب فنڈز کا 81.11 فیصد بنتا ہے۔ میٹنگ میں مزید بتایا گیا کہ اب تک 54.80 کروڑ روپے کے کام مکمل ہوچکے ہیں جو کہ ہدف بنائے گئے کاموں کا 35.51 فیصد ہیں۔ دریں اثناء ایڈیشنل ڈسٹرکٹ ڈویلپمنٹ کمشنر نے گزشتہ ضلعی ترقیاتی کونسل کے اجلاس میں کئے گئے فیصلوں پر کارروائی کی رپورٹ کا بھی جائزہ لیا۔ انہوں نے عملدرآمد کرنے والی ایجنسیوں اور متعلقہ افسران پر زور دیا کہ وہ فنڈز کے درست استعمال کو یقینی بنائیں۔ جسمانی اور مالیاتی تناسب کا جائزہ لیتے ہوئے، انہوں نے متعلقہ افسران پر زور دیا کہ وہ حکومت کی طرف سے مقرر کردہ ٹائم لائن اور رہنما خطوط پر سختی سے عمل کریں۔انہوں نے تمام محکموں کو ہدایت دی کہ وہ اپنے لائحہ عمل تیار کریں اور زیادہ سے زیادہ کاموں کو ٹائم لائن کے اندر مکمل کرنے کے لیے مردوں اور مشینری کو متحرک کر کے پیش رفت کو بہتر بنائیں۔ اس کے علاوہ، اے ڈی ڈی سی نے فنڈز کے ضائع ہونے سے گریز کرنے پر زور دیا اور خبردار کیا کہ محکموں کے سربراہ ذمہ دار ہوں گے اور ان کے خلاف تادیبی کارروائی ہوگی۔