مزید خبریں

نیوز ڈیسک
رام بن میں 278 ٹیکے لگائے گئے، 1178 نمونے جمع

رام بن//محکمہ صحت نے ضلع میں 278 افراد کو ٹیکہ لگایا۔پورے ضلع رامبن میں کووڈ پروٹوکول کو نافذ کرنے کی مہم جاری رکھتے ہوئے، انفورسمنٹ ٹیموں نے چہرے کے ماسک پہنے بغیر گھومنے اور جسمانی فاصلہ برقرار نہ رکھنے پر 2400روپے جرمانہ عائد کیا۔ انفورسمنٹ افسران نے لوگوں سے چہرے کے ماسک پہننے اور جسمانی فاصلہ برقرار رکھنے کے علاوہ اپنے قریبی کووڈ ٹیکہ کاری مراکز پر کووڈ ویکسی نیشن کی خوراک لینے کی تاکید کی۔ادھر محکمہ صحت نے 1178 نمونے اکٹھے کیے ہیں جن میں 412آر ٹی پی سی آراور 766آر اے ٹی نمونے شامل ہیں۔ علاوہ ازیں ضلع کے مختلف مخصوص ویکسی نیشن مراکز میں 278 افراد کو کووِڈ ویکسین دی گئی ہے۔ 

 

 

یوم مئی پر سی آئی ٹی یو کا جموںمیں احتجاج 

مزدوروں کا استحصال ختم کرنے اور معقول اجرت دینے کی مانگ

نیوز ڈیسک

جموں// سینٹر آف انڈین ٹریڈ یونینزسٹیٹ کمیٹی کے اراکین نے مزدور طبقے کے استحصال کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔مظاہرین یہاں جمع ہوئے اور جموں و کشمیر میں کم از کم اجرت کے قانون کو لاگو کرنے کے اپنے مطالبے کی حمایت میں احتجاج کیا۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ یہ احتجاج یوم مئی کے موقع پر منعقد کیا گیا تھا – جو آٹھ گھنٹے کام کے مطالبے کے لیے ایک انقلاب تھا۔تاہم، لیبر قوانین کو کمزور کیا گیا ہے اور ان کو فراہم کی جانے والی سہولیات نے صنعتی یونٹوں کے مالکان کو اپنے مزدوروں کا استحصال کرنے میں مدد دی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ حکومت نے مختلف محکموں، ہائیڈرو الیکٹرک پراجیکٹس، بینکوں، ریلوے اور دیگر شعبوں میں عارضی ملازمین کو شامل کرکے ملازمتوں کو آؤٹ سورس کرنا شروع کیا ہے اور اس سے روزگار کی تبدیلیوں میں کمی آئی ہے۔

 

 

شیر کشمیر بھون میں یوم مئی منایا گیا 

این سی نے مزدور طبقہ کی فلاح و بہبوداور بااختیار ی کیلئے تاریخی اقدامات کئے: گپتا

نیوز ڈیسک

جموں// ایک ترقی پسند، خوشحال اور پرامن ریاست کا خواب دیکھنے والوں کے خوابوں کے مطابق نیا جموں و کشمیر کی تعمیر میں ان کی مسلسل کوششوں کے لیے ورک فورس کی لچک اور استقامت کوسلام پیش کرتے ہوئے نیشنل کانفرنس کے سینئر رہنماؤں نے اتوار کو کہا کہ یوم مئی مزدوروں کی یاد دلاتا ہے۔ اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے جموں کے صوبائی صدر رتن لال گپتا نے کہا”یہ ہم سب کے لیے خود پر غور کرنے کا دن ہے کہ کیا ہم ان کی امنگوں اور خواہشات کو پورا کرنے میں کامیاب ہوئے ہیں  اور مزدور یونین کے حقیقی مقصد کے لیے لڑنے والی انتھک مہم کی تعریف کی‘‘۔گپتا نے کہا کہ نیشنل کانفرنس نے ہمیشہ مزدور طبقے کے مقصد کے لیے جدوجہد کی ہے اور کہا کہ ان کی فلاح و بہبود نئے جموں و کشمیر چارٹر کا ایک لازمی حصہ ہے۔ انہوں نے شیخ محمد عبداللہ کی طرف سے کمزور طبقات خصوصاً مزدور قوت کو بااختیار بنانے کے لیے دی گئی دلچسپی کا خاص طور پر ذکر کیا اور کہا کہ یہ پارٹی کے لیے ایک رہنما قوت بنی ہوئی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ لیبر فورس قوم کی معمار اور سماجی و اقتصادی تبدیلی کی اتپریرک ہوتی ہے۔ گپتا نے مزدوروں کی فلاح و بہبود کو نظر انداز کرنے پر بی جے پی کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ لیکن تقسیم کی سیاست میں الجھے رہنے کی وجہ سے پارٹی نے جموں کے لوگوں خصوصاً کمزور طبقوں کو دھوکہ دیا۔ انہوں نے نیشنل کانفرنس کے خلاف بدنیتی پر مبنی مہم چلانے پر بی جے پی کے ایک سینئر لیڈر پر بھی تنقید کی اور اسے لوگوں کی طرف سے مسترد کئے جانے کی وجہ سے مایوسی کی علامت قرار دیا۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے سابق وزیر اور مرکزی سکریٹری اجے کمار سدھوترہ نے کہا کہ ہر دن مزدوروں کا دن ہے لیکن یکم مئی کو منانے کی تاریخی اہمیت ہے کیونکہ تقریباً دو صدیاں قبل شکاگو میں Haymarket قتل عام کے دوران سینکڑوں لوگوں نے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا تھا۔ اپنے حقوق کے لیے جدوجہد کر رہے ہیں۔ “اس دن کو منانا ایک رسم نہیں ہونا چاہئے بلکہ مزدور طبقے کی فلاح و بہبود کے عہد اور ورک فورس کے وقار اور عزت کے لئے جدوجہد کرنے کا موقع ہونا چاہئے”۔ انہوں نے دہائیوں قبل دنیا کے دیگر حصوں کی طرح جموں و کشمیر میں عوامی تحریک کی تشکیل میں مزدوروں کے اہم کردار کو یاد کیا۔اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی سیکرٹری شیخ بشیر احمد نے اس دن کے پس منظر کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ یکم مئی کو پوری دنیا میں یہ دن منایا جا رہا ہے تاکہ مزدوروں کے حقوق کی بحالی کی ضرورت کو اجاگر کیا جا سکے تاکہ اس کے پاس اور نہ ہونے کے درمیان فرق کو ختم کیا جا سکے ۔ 

 

 

مویشی سمگلنگ کی کوشش ناکام، 250 مویشی بازیاب

ایم ایم پرویز

رام بن// جموں و کشمیر پولیس نے بٹوت، چندر کوٹ اور رامسو میں اتوار کے روز گیارہ گاڑیوں کو روکا اور جموں سری نگر نیشنل کے ذریعے غیر قانونی طور پر کشمیر کی طرف لے جانے والے 250 مویشیوں کو برآمد کیا۔پولیس نے کہا کہ ایک مخصوص اطلاع پر کارروائی کی گئی جس دوران مویشیوںکی غیر قانونی نقل و حمل کے سلسلے میں پولیس اسٹیشن بٹوت، چندر کوٹ اور رامسو نے گیارہ گاڑیوں کو روکا اور 250 مویشیوں کو بچایا جو غیر قانونی طور پر کشمیر کی طرف لے جا رہے تھے۔پولیس نے کہا کہ ان مویشیوں کو انتہائی بیدردی کے ساتھ اور کھانے اور پانی کا کوئی انتظام کیے بغیر لادا گیا تھا۔ان کا مزید کہنا تھا کہ ان مویشیوں کو کسی مجاز اتھارٹی کی اجازت کے بغیر وادی میں منتقل کیا جا رہا تھا۔

 

 

  

بٹوت میں بی جے پی کارکنان کی دو روزہ ورکشاپ و کانفرنس اختتام پذیر

ایم ایم پرویز

رام بن// بھارتیہ جنتا یوا مورچہ کے صوبائی انچارجوںکے علاوہ تمام اضلاع کے صدور  اور نائب صدورکی دو روزہ “یووا اْدگوش” ورکشاپ کم کانفرنس کا اتوار کو بٹوت میں اختتام ہوا۔ بھارتیہ جنتا یوا مورچہ کی اس یوٹی سطح کی سہ ماہی کانفرنس ، جس کی صدارت بھارتیہ جنتا یوا مورچہ BJYM کے یوٹی صدر ارون پربھات جموال نے کی، میں تمام شریک نوجوان لیڈروں کی سہ ماہی کارکردگی یا کامیابیوں کا جائزہ لیا گیا، نوجوانوں کو متحد کرنے اور پھیلانے کے طریقوں کے علاوہ مختلف پارٹی اور سماجی مسائل پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ حکومت کی سماجی بہبود کی اسکیموں سے آگاہی پر بھی بات ہوئی۔دونوں دنوں ورکشاپ کا آغاز روایتی چراغوں کو روشن کرنے اور ممتاز لیڈروں کی طرف سے بھارت ماتا، پنڈت دین دیال اپادھیائے اور شیاما پرساد مکھرجی کو پھولوں کے نذرانے پیش کرنے کے ساتھ ہوا۔آخری دن نائب صدر، بی جے پی، پون کھجوریا جو رام بن ضلع کے انچارج بھی ہیں، صدر میونسپل کمیٹی بٹوٹ، رویندر سنگھ اور سابق ایم ایل اے، رامبن، نیلم لنگیہ بھی بطور خاص موجود تھے۔

 

 

 

 

جموں صوبہ میں حالات 90کی دہائی سے مختلف نہیں

حکومت پر نارملسی کی غلط معلوم فراہم کرنے کیخلاف اک جٹ جموں کااحتجاج

نیوزڈیسک

جموں// اک جٹ جموں نے توی پل پر مہاراجہ ہری سنگھ جی کے مجسمے کے نیچے حامیوں کے ساتھ عبادت گاہوں کے تئیںحکومت کے غیرسنجیدہ رویہ کے خلاف دھرنا دیا۔مظاہرین ایڈوکیٹ انکور شرما کی قیادت میں جمع ہوئے جنہوں نے حکومت کے ڈھانچے کو ضبط، ڈرایا، من مانی کے ذریعے جموں کے خلاف سازش قرار دیا۔انہوں نے افسوس کا اظہار کیا کہ “جموں کی صورتحال 1989 کے کشمیر اور ڈوڈہ، کشتواڑ، رام بن اور پونچھ سے 90 کی دہائی کے آخر اور 2000 کے اوائل سے مختلف نہیں ہے۔”انہوں نے کہا کہ جموں میں ٹارگٹ کلنگ، دہشت گردانہ حملے، جموں کے علاقوں میں دستی بموں اور آئی ای ڈیز/ دیگر حملہ آور ہتھیاروں کی دریافت جموں صوبے کی قوم پرست آبادی کے خلاف مزید نسل کشی کا پیش خیمہ ہے۔انکور شرما نے کہا کہ “ایک جٹ جموں پارٹی کے بیان کردہ مسائل کو درست کرنے اور ان کو حل کرنے میں ناکامی کی صورت میں، کیڈر نے جموں صوبے کے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ کھڑے ہو جائیں اور تمام تخریبی طاقتوں کے خلاف ایک بڑی جنگ کے لیے خود کو تیار کریں۔ ”

 

 

 

سول سیکرٹریٹ میں محکمہ قانون کے کلریکل ہال میں اچانک آگ بھڑک اٹھی

جموں// جموں کے سول سیکرٹریٹ میں محکمہ قانون کے کلریکل ہال میں اتفاقیہ طور پر آگ لگ گئی۔ایک عہدیدار نے بتایا کہ آگ لگنے کی وجہ ابھی تک معلوم نہیں ہوسکی ہے لیکن جب علمی ہال میں آگ پھیل گئی تو فائر اینڈ ایمرجنسی ڈیپارٹمنٹ نے اطلاع ملتے ہی اپنی ٹیم کو موقع پر پہنچا دیا۔فائر ٹینڈرز کو کام میں لایا گیا اور انہوں نے جدوجہد کے بعد آگ پر قابو پالیا اور ریکارڈ کی اکثریت کو بچا لیا حالانکہ حادثاتی طور پر آگ لگنے سے کچھ ریکارڈ جل جانے کا خدشہ تھا اور خیال کیا جاتا ہے کہ چار کمپیوٹرز کو بھی نقصان پہنچا ہے۔عہدیدار نے بتایا”ہال آگ سے لپٹا ہوا تھا۔ اب ایف ایس ایل کی ٹیم آگئی ہے اور وہ آگ لگنے کی اصل وجہ معلوم کرنے کے لیے نمونے لے رہے ہیں‘‘۔انہوںنے بتایا کہ واقعے کی پولیس کی تحقیقات سے آگ لگنے کی وجہ سامنے آئے گی۔

 

 

 

ملک نے 200 خاندانوں میں کھانے کے پیکٹ تقسیم کئے

جموں//رمضان کے مہینے میں ضرورت مند خاندانوں کو راحت فراہم کرنے کے لیے لوک جن شکتی رام ولاس نے اتوار کو یہاں 200 سے زیادہ خاندانوں میں گیہوں اور اولی سمیت راشن پیک تقسیم کیا۔ان غریب اور نادار خاندانوں کا تعلق ضلع کے پسماندہ اور دور دراز علاقوں سے ہے۔ان کے پاس آمدنی کا کوئی باقاعدہ ذریعہ نہیں ہے، وہ اپنی زندگی عطیات، زکوٰۃ اور عشر کی رقم پر گزارتے ہیں۔رمضان کے مہینے میں، لوک جن شکتی رام ولاس نے اپنے فوڈ سپورٹ پہل کے تحت 600 سے زیادہ خاندانوں کو راشن پیک فراہم کیے ہیں۔اس موقع پر رفیق ملک صدر لوک جن شکتی رام ولاس سید نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کھانے کی اضافی اشیاء جیسے کھجور، جوس، چنے کا آٹا، روح افزا وغیرہ تقسیم کیں۔انہوں نے کہا کہ پارٹی ہمیشہ غریبوں اور ناداروں کا خیال رکھتی ہے اور حکومت سے غریبوں کی ہر ممکن مدد کرنے کی بھی اپیل کی ہے۔انہوں نے تمام یومیہ درجہ بندی والے کارکنوں کے لیے زیر التواء اجرت جاری کرنے کی بھی اپیل کی۔

 

 

 

درجنوں نوجوانوں کی شیو سینا میں شمولیت 

اسمبلی انتخابات سے پہلے ریاست کا درجہ بحال کریں: ساہنی

ادھم پور//شیوسینا جموں و کشمیر یونٹ نے ڈھائی سال سے زیادہ گزر جانے کے باوجود جموں و کشمیر کو ریاست کا درجہ بحال کرنے میں ناکامی پر مرکز میں بی جے پی کی قیادت والی حکومت کے خلاف سخت مایوسی کا اظہار کیا۔یہ بات منیش ساہنی، صدر جموں و کشمیر شیوسینا نے ادھم پور میں منعقدہ شمولیتی پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ادھم پور میں منعقدہ ایک پروگرام کے دوران منیش ساہنی کی موجودگی میں  درجنوں سے زیادہ لوگوں نے پارٹی میں شمولیت اختیار کی جس میں ساہنی نے جموں و کشمیر میں اسمبلی انتخابات کے انعقاد سے قبل ریاست کی بحالی کا مطالبہ کیا۔ ساہنی نے کہا کہ ریاست کی حیثیت کی بحالی کے انتظار میں ڈھائی سال سے زیادہ کا عرصہ گزر چکا ہے۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے اگست 2019 کو ایوان کے فلور پر جموں و کشمیر کے لوگوں کو جلد ہی ریاست کا درجہ واپس کرنے کا وعدہ کیا تھا لیکن آج تک اس سلسلے میں کچھ نہیں کیا گیا۔ساہنی نے کہا کہ مرکزی حکومت جموں و کشمیر کے لوگوں کے ساتھ کئے گئے اپنے تمام وعدوں سے پیچھے ہٹ رہی ہے۔ وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ جموں و کشمیر کی تنظیم نو پر ترقی، روزگار اور امن کی بحالی کے لیے دکھائے گئے تمام خواب اور وعدے چکنا چور ہوتے جا رہے ہیں۔ساہنی نے کہا کہ بی جے پی صرف یہ دعوی کر کے لوگوں کو بے وقوف بنانے کی کوشش کر رہی ہے کہ 370 کی منسوخی ایک بہت بڑا قدم ہے جس نے تمام رکاوٹوں کو دور کرتے ہوئے ترقی اور روزگار کی راہ ہموار کی ہے۔ انہوں نے بی جے پی پر تمام اہم مسائل پر عوام کو گمراہ کرنے کا الزام لگایا۔ساہنی نے کہا’’مرکز کے براہ راست ماتحت ہونے کے باوجود ریاست میں نچلی سطح پر ترقی، روزگار اور خوشحالی کہیں نظر نہیں آتی۔ عوام کو ٹول پلازوں، شراب کی دکانوں، مہنگائی اور بے روزگاری کے سوا کچھ نہیں ملا‘‘ ۔انہوں نے مزید کہا کہ مذہب اور ذات پرستی کی نفرت انگیز سیاست عوام کے عام مسائل پر حاوی ہے۔ساہنی نے کہا کہ شیو سینا جموں و کشمیر کے لوگوں کے حقوق کے حصول کے لیے اپنی آواز بلند کرے گی اور عوام کو ان کے ساتھ ہونے والی دھوکہ دہی کو بھی یاد رکھنا چاہیے اور وقت آنے پر اس کا منہ توڑ جواب دینا چاہیے۔

 

 

 

 عید الفطر سے قبل کشتواڑ قصبے میں مارکیٹ چیکنگ

کشتواڑ//فوڈ سیفٹی، ڈی ایف سی او کشتواڑ کی ایک ٹیم نے کشتواڑ قصبے میں عید الفطر سے قبل وسیع پیمانے پر مارکیٹ چیکنگ مہم انعقاد کیا تاکہ صارفین کو محفوظ، معیاری، حفظان صحت اور خالص اور تازہ ضروری اشیاء کی فراہمی کو یقینی بنایا جا سکے ۔مہم کے دوران، ٹیم نے ایف ایس ایس ایکٹ کے تحت معائنہ کیا، ٹیم نے کاروباری آپریٹرز کو جان بوجھ کر خلاف ورزیوں کے خلاف خبردار کیا جب کہ عید الفطر کی خریداری کے لیے مارکیٹ میں ہجوم رہا۔لائسنس/رجسٹریشن کے بغیر کام کرنے والے دکانداروں اور غیر صحت مند حالات میں کام کرنے والوں کو مزید خلاف ورزیوں سے روک دیا گیا تھا۔مارکیٹ چیکنگ کے دوران 8 خاطی دکانداروں کے خلاف ایف ایس ایس ایکٹ کی دفعہ 8، 56 اور 58 کے تحت مقدمہ درج کیا گیا۔ٹیم نے 55 کلو گرام سے زائد بوسیدہ، گلے سڑے پھل، کھلے اور بے نقاب کٹے ہوئے پھلوں کو بھی موقع پر ہی تلف کر دیا جو انسانی استعمال کے لیے نا مناسب تھے۔

 

 

 

فوج نے چھاترو میں افطار ملن کا اہتمام کیا

کشتواڑ //خطے میں امن اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی کے جذبے کو فروغ دینے اور تقویت دینے کے مقصد کے ساتھ فوج نے دوسرے دن ضلع کشتواڑ کے گاؤں چھاترو میں افطار ملن کا اہتمام کیا۔اس تقریب نے تمام مذاہب اور زندگی کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے مقامی لوگوں کو مشترکہ مسائل پر ایک دوسرے کے ساتھ بات چیت کرنے اور عوام اور جوان کے درمیان تعلقات کو مضبوط کرنے کے عظیم مقصد کے ساتھ رمضان کے بابرکت مہینے کو منانے کے لیے ایک پلیٹ فارم فراہم کیا۔ افطار ملن میں کل 287 مقامی لوگوں نے شرکت کی، دعائیں مانگیں، افطار کا لطف اٹھایا اور خیالات کا اظہار کیا۔مقامی لوگوں اور کمیونٹی رہنماؤں نے امید ظاہر کی کہ اس طرح کی تقریبات سے خطے میں فرقہ وارانہ ہم آہنگی کو تقویت ملے گی اور عوام کے ساتھ مل کر معاشرے اور علاقے کی بہتری کے لیے آگے بڑھیں گے۔

 

 

 

 

 

 ENBA کے سالانہ ایوارڈ میں نیوز 18 اردو مسلسل دوسری بار بہترین نیوز چینل قرار

محمد تسکین

جموں // ایکسچینج فار میڈیا نیوز براڈ کاسٹنگ یا ENBA کا چودھواں ایڈیشن سنیچر کو دہلی میں منعقد کیا گیا جس میں NEWS 18 اردو نے لگاتار دوسری مرتبہ ای این بی اے ایوارڈ میں اپنی بادشاہت کو برقرار رکھتے ہوئے سال کے بہترین نیوز چینل کا ایوارڈ اپنے نام کیا ہے۔ ای این بی اے نے لگاتار دوسری مرتبہ نیوز ایٹین اردو کی جرات مندانہ صحافت کو سراہتے ہوئے اسے سال کا بہترین اردو نیوز چینل قرار دیا۔ اس ایوارڈ کو حاصل کرتے ہوئے نیوز 18 اردو کے سینئیر ایڈیٹر تحسین منور نے کہا کہ اصل میں اس اعزاز کا سہرا نیٹ ورک 18 کی پوری ٹیم کو جاتا یے اور یہ پوری ٹیم کی پر عزم کوشیشوں اور محنت کا نتیجہ ہے کہ ملک کا نامور اردو نیوز چینل نیوز 18 بے باک صحافت کے ساتھ مسلسل دوسری بار بہترین نیوز چینل کے زمرے میں پہلے نمبر پر براجمان رہا ہے۔ انہوں نے گروپ ایڈیٹر راجیش رینہ اور دیگر زمہ داروں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ نیوز 18 اْردو کیلئے ایڈیٹوریل پالیسی کو آزاد اور ایماندارانہ صحافت کیلئے چھوٹ دینے پر میں راجیش رینہ اور ٹیم کا ذاتی کا شکریہ گذار ہوں۔ قومی میڈیا کی سبھی اہم شخصیت کی موجودگی میں تحسین منور نے اردو کے حوالے سے کہا کہ یہ زبان لوگوں اور علاقوں کو جوڑنے کا کام کرتی ہے توڑنے کا نہیں۔ انہوں نے کہا کہ اردو محبت کی زبان ہے۔ انہوں نے ای این بی اے کا انگریزی ، ہندی اور دیگر زبانوں کے ساتھ ساتھ اردو صحافت کی بھی سراہنے کے لئے شکریہ ادا کیا۔ تحسین منور نے کہا کہ اردو کی شیرین ذبانی اور قومی یکجہتی ہی نیوز ایٹین کے مشن کا وہ راز ہے جس کی وجہ سے نیوز 18 اردو نمبر ون ہے اور ناظرین کی پہلی پسند بنا ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ ایوارڈ اس بات کا گواہ بنا کہ نیوز ایٹین اردو نے اردو کی شیرینی اور غیر جانبدارانہ صحافت سے کبھی سمجھوتہ نہیں کیا ہے۔ لگاتار دوری مرتبہ ملے اس ایوارڈ سے بھی یہ ثابت ہوگیا کہ جموں کشمیر میں نیوز ایٹین اردو کے سامنے آج تک کوئی ٹھہر نہیں سکا ہے اور نیوز 18 کی غیر جانبداری کا سلسلہ اگے بھی جاری رکھے گا اور ملک کے گاوں گاؤں اور شہر شہر عوام کی اواز بنتا رہے گا۔ انہوں نے کہا کہ جموں کشمیر کے عوام کے دلوں میں نیوز ایٹین اردو نے جو مقام بنایا ہے اسے کوئی بدل نہیں سکتا ہے اور بہترین چینل کا یہ اعزاز اردو کے ناظرین کی والہانہ محبت کو بھی اجاگر کرتا ہے۔ نیوز 18 اردو کی اس کامیابی کیلئے نیوز 18 اردو کے جموں و کشمیر چیپٹر میں کام کرنے والے جموں اور سرینگر بیورو کے اعلی عہدیداروں اور تمام ضلع اور سب ضلع نامہ نگاروں مسرور اور شادماں ہیں۔ انہوں ںے نے نیوز 18 کے گروپ ایڈیٹر راجیش رینہ اور نیوز 18 کی حیدرآباد ڈیسک ٹیم کو مبارکبادی پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملک کے ساتھ ساتھ ریاست جموں و کشمیر کے عوامی مسائل اور مشکلات کو جو کوریج نیوز 18 اْردو سے مل رہی ہے، وہ اس چینل کو بہترین نیوز چینل کا دوسری بار ایوارڈ کیلئے بنیادی اہمیت کا حامل ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریاست جموں و کشمیر کے بیورو ہیڈ ، ایسوسیٹ ایڈیٹرز اور تمام نامہ نگار نیوز 18 اْردو کے ساتھ عوامی توقعات پر کھرا اور پورا اترنے کی کوشش کرتے رہیںگے اور عوامی اور حاکموں کے درمیان ایک پل کے طور کام کرتے رہیںگے۔

 

 

 

چیئرمین کے وِی آئی سی کا نگروٹہ سلائی سینٹر کا دورہ

جموں//چیئرمین کھادی ولیج انڈسٹریز کمیشن ( کے وِی آئی سی ) ونائی کمار سکسینہ نے نگروٹہ سلائی سینٹر کا دورہ کیا اور وہاں پر اَگربتی بنانے کی تربیت حاصل کرنے والے ہنر مندوںسے بات چیت کی۔دورے کے دوران چیئرمین کے وِی آئی سی کے ہمراہ سی اِی او ( این زیڈ) کے وِی آئی سی جے کے گپتا اور سٹیٹ ڈائریکٹر جموں کے وِی آئی سی ایس پی کھنڈ یلوال بھی تھے۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ یہ سینٹر جموںوکشمیر کی ملی ٹینسی سے متاثرہ خواتین کی طرف سے یہاں’ کھادی رومال‘سلائی جانے کے لئے جانا جاتا ہے ۔ ملی ٹینسی سے متاثر کنبوں کی تقریباً 300 خواتین کاریگر ان کھادی رومالوںکو سینٹرمیں سلائی کرتی ہے۔ کووِڈ وَبائی بیماری کے دوران اِس سینٹرنے کھادی ماسک تیار کئے جو پورے ملک میں فروخت کئے گئے ۔ فی الحال اس کے وی آئی سی سینٹر میں ہنر مند اگربتی بنانے کی تربیت حاصل کر رہے ہیںتاکہ وہ خود نربھر بننے کے لئے اپنا کاروبار شروع کرسکیں۔کے وِی آئی سی ، پی ایم اِی جی پی اور حکومت کی دیگر سکیموں کے بارے میں لوگوں کو ہر طرح کی مدد فراہم کرتا ہے تاکہ مقامی آبادی کو خو د انحصاری اور کامیاب کاروباری بنانے میں مدد کی جاسکے۔اِس موقعہ پر سکسینہ نے سینٹرکی اِنتظامیہ اوراس کی ٹیم کی تعریف کی کہ وہ گائوں کی خواتین کو کمانے اور اَپنے کنبوں کی کفالت کے لئے ایسا پلیٹ فارہم مہیا کر رہی ہے۔ اُنہوں نے تربیت حاصل کرنے والوں پر زور دیا کہ وہ اگربتی بناتے وقت معیار اور دیگر ضروری پیرامیٹروں کو برقرار رکھنے پر توجہ دیں تاکہ وہ اپنی پیداوار کے لئے ایک اچھی مارکیٹ قائم کر سکیں۔سکسینہ نے کہا کہ کے وی آئی سی نے سینٹر کو اگربتی بنانے کی 40 مشینیں فراہم کی ہیں تاکہ زیادہ سے زیادہ استفادہ کرنے والوں کا احاطہ کیا جا سکے۔ انہوں نے کہا کہ کے وی آئی سی کا مقصد دیہاتیوں کو ان کی دہلیز پر روزگار فراہم کرنا ہے تاکہ وہ اپنے فارغ وقت کو روزی روٹی کمانے کے لئے استعمال کر سکیں۔

 

 

 

جموں و کشمیر بینک ایمپلائز فیڈریشن کی عوام کو عید کی تہنیت

 جموں//آل انڈیا جموں و کشمیر بینک ایمپلائز فیڈریشن (AIJKBEF) نے عید الفطر کے پرمسرت موقع پر بینک کے چیئرمین، تمام افسران اور ملازمین اور مرکز کے زیر انتظام علاقے کے لوگوں کو مبارکباد دی ہے۔اپنے پیغام میں اے آئی جے کے بی ای ایف کے صدر حاجی فاروق احمدبٹ، سینئر نائب صدر محمد شفیع مندو اور جنرل سکریٹری آل انڈیا جموں و کشمیر بینک ایمپلائز فیڈریشن چا

ند جے آئی کھیر نے تمام منیجنگ ڈائریکٹر اور سی ای او، جے اینڈ کے بینک، کارپوریٹ ہیڈ کوارٹر، بلدیو  پرکاش، بینک کے تمام افسران اور ملازمین کو عید کی مبارکباد دی ہے۔اے آئی جے کے بی ای ایف نے امید ظاہر کی کہ عید کا تہوار امن، خوشحالی اور معاشرے میں بھائی چارے کو فروغ دے گا جہاں مختلف مذاہب کے لوگ ایک دوسرے کے ساتھ اتحاد اور امن کے ساتھ رہتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ یہ ایک جمہوری ملک کی خوبصورتی ہے کہ وہ تمام مذاہب کے لوگوں کی قدر کرتا ہے اور ان کے ساتھ یکساں سلوک کرتا ہے اور ایسے تہوار ہمیں ایک دوسرے کو سمجھنے کا موقع فراہم کرتے ہیں۔