مزید خبریں

نیوز ڈیسک
ٹھیکیداری کارڈوں کی تجدید کاری کا معاملہ | ٹھیکیدار انتظامیہ سے ناراض ،حکم واپس لینے کی مانگ 

جاوید اقبال 

مینڈھر //ٹھیکیدار ایسوسی ایشن نے انتظامیہ کی جانب سے ٹھیکیداری کارڈوں کی تجدید کاری کے سلسلہ میں جاری کردہ حکم نامے کے مخالفت کرتے ہوئے مانگ کی کہ مذکورہ حکم نامے کو جلدازجلد واپس لیا جائے تاکہ تعمیر اتی عمل میں رکائوٹ نہ پیش آئے ۔مینڈھر میں ایسوسی ایشن اراکین نے انتظامیہ کے تئیں ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ ٹھیکیداری کارڈوں کی تجدید کاری کے سلسلہ میں جاری کردہ حکم نامے سے ٹھیکیداروں کو شدید مشکلات میں مبتلا کر دیا گیا ہے جبکہ مذکورہ طرز عمل سے کارڈوں کی تجدید کیلئے کم از کم چھ ماہ درکار ہیں جس کی وجہ سے جہاں تعمیراتی عمل شدید متاثر ہو نے کا خدشہ پیدا ہو گیا ہے وہائیں ایسے بے روز گار نوجوان جنہوں نے روز گار کی خاطر اپنے کارڈ بنائے ہوئے ہیں ،کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے ۔ٹھیکیدار محمد شوکت چوہدری ،نواز خان ،حاجی گلسید خان ،ستیش کمار شرما ویگران نے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ کارڈوں کی تجدید کاری کے سلسلہ میں جاری شدہ حکم نامے کو جلدازجلد واپس لیا جائے ۔ 

 

 

 

کوٹرنکہ میں ٹھیکیداروں کا اجلاس منعقد 

محمد بشارت

کوٹرنکہ //سب ڈویژن کوٹرنکہ میں ٹھیکیدار ایسوسی ایشن کے اراکین کا ایک اجلاس منعقد ہوا جس میں اراکین نے بڑی تعداد نے شرکت کی ۔اجلاس کے دوران اراکین نے کہاکہ ٹھیکیداری کارڈوں کی تجدید کاری کیلئے رکھی گئی شرائط نا منظور ہیں ۔انہوں نے کہاکہ ٹھیکیدار عوام اور تعمیرات عمل کے درمیان ایک پل کا کام کرتے ہیں لیکن انتظامیہ کی جانب سے ان کو غیر ضروری طورپر تنگ کیا جارہا ہے ۔ٹھیکیداروں نے کہاکہ حکومت تعمیراتی عمل پر لاکھوں روپے خرچ کرتی ہے تاہم اس میں ٹھیکیداروں کا رول بھی نہایت اہم ہے لیکن حالیہ دنوں میں کارڈوں کی تجدید کاری کیلئے نئی شرائط رکھی گئی ہیں جن سے تعمیر اتی عمل میں خلل پیدا ہو جائے گا ۔انہوں نے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ جلدازجلد مذکورہ شرائط کر منسوخ کر کے ٹھیکیداروں کو راحت پہنچائی جائے ۔اجلاس میں فضل ارحمان بٹ ،محمد کبیر راتھر ،عبدل قیوم بٹ ،منظور حسین سلیمان  چوہدری ،حکم دین چوہدری ،محمد فاروق ڈار ،محمد تاج لون ،محمد تاج راتھر وغیرہ موجود تھے۔

 

 

مشکوک آگ سے سبز سونے کو نقصان پہنچا 

سمت بھارگو

راجوری//راجوری ضلع میں آگ لگنے کی وجہ سے جنگلا ت کے ایک وسیع حصہ میں سبز سونے کو شدید نقصان پہنچا ہے ۔ضلع کے ترکنڈی اور نیاکا علاقوں میں سبز سونے کو بڑے پیمانے پر نقصان پہنچایا جس کے ساتھ فائر فائٹرز نے آگ پر قابو پانے کے لئے آپریشن شروع کیا۔اطلاعات کے مطابق راجوری کے ترکنڈی علاقے میں جنگل میں آگ بھڑک اٹھی اور آگ کے شعلوں نے پوری جنگل کی پٹی کو اپنی لپیٹ میں لے لیا جس کی وجہ سے سبز درختوں کی ایک بڑی تعداد کو شدید نقصان پہنچا ۔جس علاقے میں آگ لگی وہ لائن آف کنٹرول کے قریب واقع ہے۔حکام نے بتایا کہ آگ لگنے کے فوراً بعد آگ بجھانے کا آپریشن شروع کیا گیا ۔فائر اسٹیشن آفیسر راجوری مقبول حسین نے بتایا کہ ’’ہم نے آگ بجھانے کا آپریشن شروع کیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ سڑک کے ساتھ والے علاقوں میں آگ کے شعلوں پر قابو پانے کی کوششیں جاری ہیں لیکن سڑک سے دور علاقوں میں آگ پر قابو پانے میں پریشانی کا سامنا ہے۔

 

 

نوشہرہ میں والی بال مقابلوں کا انعقاد 

رمیش کیسر 

نوشہرہ //فوج کی جانب سے نوشہرہ سب ڈویژن میں فٹ انڈیا مہم کے تحت نوجوانوں کیلئے والی بال مقابلوں کا اہتمام کیا گیا ۔آپسی اشتراک و اتحاد کو مضبوط بنانے کیلئے منعقدہ اس ٹورنامنٹ کے دوران نوجوانوں کھلاڑی اپنی صلاحیتوں کا مظاہرہ کررہے ہیں ۔فوج کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہاگیا ہے کہ مذکورہ مقابلے کا اہتمام کرنے کا مقصد  نوجوانوں میں اسپورٹس مین شپ کی اقدار کو ابھارنا تھا ۔انہوں نے کہاکہ اس سے قبل بھی فوج کی جانب سے خطہ پیر پنچال کے مختلف علاقوں میں کھیلوں کا اہتمام کیا جاتا رہا ہے جبکہ اس عمل کو آئندہ بھی جاری رکھا جائے گا ۔انہوں نے عوام بالخصوص کھلاڑیوں کو یقین دلاتے ہوئے کہاکہ آئندہ بھی مذکورہ طرز کے مقابلوں و فلاحی سرگرمیوں کا اہتمام کیا جاتا رہے گا ۔

 

 

راجوری میں نوجوان کی پراسرار موت پر احتجاج

سمت بھارگو+رمیش کیسر 

راجوری//راجوری ضلع میں ایک نوجوان کی پراسرار حالات میں ہوئی موت کے بعد لواحقین نے احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے جموں پونچھ شاہراہ کو گاڑیوں کی آمد ورفت کیلئے ایک گھنٹے تک بند رکھا ۔مرنے والے کی شناخت رام کرشن (31) ولد بودا رام سکنہ چٹیاری گاؤںراجوری کے طور پر کی گئی ہے۔مذکورہ نوجوان اس وقت سندر بنی کے علاقے میں ایک خاندان کے ساتھ رہ رہا تھا اور اسے زخمی حالت میں نوشہرہ کے سول ہسپتال میں داخل کرایا گیا تھا جو پراسرار حالت میں آیا لیکن علاج کے دوران اس کی موت ہوگئی۔مقتول کے لواحقین نے احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے الزام لگایا کہ ان کے بیٹے کو قتل کیا گیا ہے۔ پولیس ملزمان کی نشاندہی کرکے انہیں جلدازجلد گرفتار کرئے ۔احتجاج کے دوران قومی شاہراہ کو بلاک کر دیا گیا اور گاڑیوں کی آمدورفت ٹھپ ہو کر رہ گئی۔اس کے بعد انچارج پولیس چوکی چٹیاڑ چنگس موقع پر پہنچے اور مظاہرین کو یقین دلاتے ہوئے احتجاج کو پُر امن کیا ۔انہوں نے کہاکہ معاملہ پہلے ہی زیر تفتیش ہے اور نوشہرہ میں پولیس ٹیم اس معاملے کی تحقیقات کر رہی ہے۔

 

دھرم راج کنسٹریکشن کمپنی کے خلاف لوگوں کا احتجاجی مظاہرہ 

عظمیٰ یاسمین

 تھنہ منڈی//تھنہ منڈی میں مقامی لوگوں کی جانب سے دھرم راج کنسٹر یکشن کمپنی کیخلاف احتجاج کیا گیا ۔مظاہرین نے الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ کمپنی سروے کے مطابق کام نہ کرنے کیساتھ ساتھ غیر ضروری طور پر لوگوں کو پریشان کررہی ہے ۔مقامی لوگوں نے الزام لگایا کہ انہوں نے کچھ لوگوں کو فائدہ پہنچانے کیلئے سروے کو تبدیل کیا ہے۔مظاہرین نے بتایا کہ کمپنی زمین کا کام صحیح طریقے سے نہیں کر رہی ہے ۔بیگوناڑہ کے مقام پر سڑک تین گھنٹے تک بند رہی کیونکہ مقامی لوگوں نے بتایا کہ پانی کا ایک قدرتی ذریعہ ہے جہاں سے لوگوں کو پانی ملتا ہے کیونکہ کمپنی نے اس مقام پر کلورٹ بند کر دیا ہے جس سے عوام کو شدید پریشانی کا سامنا ہے۔ مقامی لوگوں نے سڑک کو تین گھنٹے تک بند رکھا جبکہ تحصیلدار تھنہ منڈیموقع پر پہنچ گئے اور لوگوں کی بات سننے کے بعد عملدرآمد کرنے والی ایجنسی کو منصوبے کی تکمیل کے لئے طے شدہ سروے پر عمل کرنے کی ہدایات جاری کی گئیں۔انہوں نے عوام کو یقین دہانی کرائی کہ دو دن میں کلورٹ پر کام شروع کر دیا جائے گا۔ مقامی لوگوں نے گورنر انتظامیہ سے اپیل کی ہے کہ کمپنی کی جانب سے تعمیرات میں استعمال کئے جانے والے مٹریل کے بارے میں انکوائری کی جائے اور غیر ضروری طور پر عوام کو پریشان کیا جائے جیسا کہ ساج میں بھی ایسا معاملہ دیکھا گیا ہے۔ انہوں نے گورنر انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ گریف پورے کام کی کڑی نگرانی کرے اور کام کے معیار پر سمجھوتہ نہ کیا جائے۔

 

تھنہ منڈی کالج میں سمپوزیم کا انعقاد 

عظمیٰ یاسمین

 تھنہ منڈی // گورنمنٹ ڈگری کالج تھنہ منڈی کے این ایس ایس یونٹ نے آزادی کا امرت مہااتسو کے زیراہتمام ’ڈاکٹر بی آر امبیڈکر کی زندگی اور شراکت‘پر ایک سمپوزیم کا اہتمام کیا۔پروگرام کالج کے پرنسپل پروفیسر ڈاکٹر جاوید احمد قاضی کی سرپرستی میں منعقد ہوا۔ اس پروگرام میں تمام فیکلٹی ممبران کے علاوہ این ایس ایس رضاکاروں کی ایک بڑی تعداد نے شرکت کی۔ رسمی خطبہ استقبالیہ این ایس ایس پروگرام آفیسر پروفیسر محمد شوکت نے پیش کیا۔ اس موقع پر این ایس ایس کے متعدد رضاکاروں نے سمپوزیم میں حصہ لیا اور اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے بابائے آئین ڈاکٹر بی آر امبیڈکر کی تعلیمات پر مفصل روشنی ڈالی۔ مقررین نے کہا کہ یہ دن قوم کے شہریوں میں آئینی اقدار کو فروغ دینے کے لیے منایا جاتا ہے۔ اس پروگرام میں ڈاکٹر نہیم النساء ، پروفیسر مدثر مجید اور ڈاکٹر شوکت علی بھی موجود تھے ۔ کالج کے جن طلباء نے پروگرام میں شرکت کی ان میں سے سائنا جبین، صائبا خان اور حنا خان نے بتدریج پہلی دوسری اور تیسری پوزیشن حاصل کی۔ پروگرام میں نمایاں کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے طلبہ میں اسناد و انعامات تقسیم کئے گئے۔ 

 

 

نوین شرما کو پی ایچ ڈی کی ڈگری تفویض 

راجوری//نوین شرما ولد شردا شرما اور ستیش کمار سکنہ نیرو جال تھنہ منڈی کو بابا غلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی راجوری کی جانب سے شعبہ ریاضی میں ڈاکٹر آف فلاسفی (پی ایچ ڈی) کی ڈگری تفویض کی گئی ہے ۔نوین نے بی جی ایس بی یو کے اسکول آف ریاضی کے اسسٹنٹ پروفیسر ڈاکٹر رام سنگھ کی نگرانی میں’’زیکا وائرس اور ڈینگی بخار کی ٹرانسمیشن ڈائنامکس کی ریاضیاتی اور کمپیوٹیشنل ماڈلنگ‘‘کے موضوع پر تحقیق کی جبکہ انہوں نے مذکورہ عنوان کے زیر تحت بین الا قوامی شہرت یافتہ جریدوں میں بھی مقالے شائع کئے ہیں ۔

 

’پریشر ہارن ‘استعمال نہ کرنے کی تلقین 

حسین محتشم

پونچھ//سماجی و سیاسی کارکن ایڈوکیٹ محمد مشتاق خان نے پونچھ قصبہ میں بڑے پیمانے پر پریشر ہارن کے استعمال کئے جانے پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس کی وجہ سے عوام پریشان ہوجاتے ہیں۔کشمیر عظمی سے بات کرتے ہوئے انھوں نے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا نوجوان ٹریفک قوانین کی پابندی نہیں کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ نوجوان سڑک پر گولی کی طرح چلتے ہوئے دیکھائی دیتے ہیں، اوریہ بھی دیکھا گیا ہے کہ نوجوان نسل زیادہ تر پریشر ہارن کا استعمال کرتی ہے۔انھوں نے کہا کہ نوجوان پریشر ہارن کا استعمال شوق سے کرتے ہیں اور اس بات کا بالکل خیال نہیں رکھتے کہ اس سے دوسروں کو تکلیف یوتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ نوجوانوں سے درخواست کرتے ہیں کہ وہ اس ہارن کا استعمال ترک کردیں۔ انہوں نے ایس ایس پی ٹریفک سے بھی اپیل کرتے ہوئے کہاکہ وہ فوری ایکشن لیں کیونکہ نوجوانوں کے مذکورہ عمل سے عام زندگی متاثر ہو رہی ہے ۔انہوں نے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ پریشر ہارن کا استعمال کرنے والوں کیخلاف سخت سے سخت کارروائی عمل میں لائی جائے ۔

 

 

پونچھ میں گْڈ فرائی ڈے پر ریلی برآمد

حسین محتشم

پونچھ//دنیا بھر کی طرح پونچھ میں بھی مسیحی برادری نے گڈ فرائی ڈے کا تہوار مذہبی عقیدت و احترام سے منایا۔ اس سلسلے میں کامسر گرجا گھر میں خصوصی دعائیہ تقریبات کا اہتمام کیا گیا ہے اور ملک و قوم کی سلامتی اور استحکام کیلئے خصوصی دعائیں مانگی گئی جبکہ پولیس و انتظامیہ کی جانب سے سخت ترین حفاظتی اقدامات کئے تھے اور گرجاگھر کے باہر پولیس کی نفری تعینات ہے۔مسیحی عقائد کے مطابق یہ دن روزوں کے ایام کے آخری جمعہ کو حضرت عیسیٰ کو صلیب پر چڑھانے کی یاد میں منایا جاتا ہے۔مسیحی گْڈ فرائیڈے کو حضرت عیسیٰ کی لازوال قربانیوں سے تعبیر کرتے ہوئے ان کے ساتھ عقیدت و احترام کا اظہار کرتے ہیں۔ اسی سلسلہ میں پونچھ کے کامسر گرجا گھر سے گڈ فرائیڈے کی خصوصی ریلی برآمد کی گئی جس میں حضرت عیسی کی زندگی کے مختلف گوشوں۔ کو درشایا گیا۔اس ریلی میں عیسائیوں کے ساتھ ساتھ دیگر مذاہب کے پیروکاروں نے بھی شرکت کی اور دنیا میں امن کے لئے دعا کی۔ کرائسٹ ایسوسی ایشن پونچھ کے ضلع صدر نے کہا ان عباداتی اجتماعات کا مقصد دراصل کرائسٹ کے ان دکھوں کو یاد کرنا ہے، جو انہوں نے اپنی صلیب پر سہے۔انہوں نے کہا گڈ فرائیڈے کی عبادت کے دوران گرجا گھروں کے پادری امن اور بھائی چارے کا درس دیتے ہیں۔