مزید خبریں

قانون سب کیلئے برابر ہوناچاہئے:مصباحی 

پونچھ //مرکزی جامع مسجد پونچھ کے امام و خطیب مولانا فاروق حسین مصباحی نے گزشتہ ماہ کٹھوعہ میں ایک درندہ صفت شخص کے ہاتھوں آٹھ سالہ مُسلم بچی کی عصمت دری اور قتل کئے جانے کے متعلق ممبر پارلیمنٹ جُگل کشور کے دیئے گئے بیان کی سخت الفاظ میں مذمت کی۔ اُنہوں نے کہا کہ کوئی وزیر ہو یا کہ فقیر، اعلیٰ ہو یا کہ ادنیٰ قانون کی نظر میں سب ایک جیسے ہونے چاہیے۔ مولانا موصوف نے کہا کہ ایسا غیر ذمہ دار بیان دے کر ممبر پارلیمنٹ نے اپنے عہدے کے نام پر بٹہ لگایا ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ اس عہدے پر ذہین افراد کو ہی بیٹھنے کا حق ہے نہ کہ ایسے بیمار ذہن افراد جو کہ معاشرے کوبانٹنے کا کام کرتے ہیں۔ مفتی موصوف نے کہا کہ پونچھ۔جموں پارلیمان حلقہ کے ممبر پارلیمنٹ کو اپنے دیئے گئے بیان سے رجوع کرنا ہوگا ورنہ قانون کو اس کے خلاف کاروائی کرنی چاہیے۔ اس موقعہ پراجوری سے تشریف لائے انجمن عُلمائے اہلسُنّت کے صدر مولانا محمدفاروق نقشبندی نے بھی آصفہ کے قاتل کو کیفرِ کردار تک پہنچانے کا مطالبہ کیا اور کہا کہ موجودہ مرکزی سرکار کے قائم ہونے سے انسانی سوچ و وچار میں اس قدر گراوٹ آئی ہے کہ اب مُجرمین کو بھی مذہب کی عینک سے دیکھا جانے لگا ہے جو قابلِ تشویش ہے۔
 
 

اقبال نگر ۔پوٹھہ بائی پاس سڑک کوڑے دان میں تبدیل 

بختیار حسین
سرنکوٹ// محکمہ گریف کی لاپرواہی کے باعث اقبال نگر سرنکوٹ سے پوٹھہ بائی پاس تک سڑک کا حصہ کیچڑ گاہ میں تبدیل ہوگیاہے ۔ گزشتہ روز کی بارش کے بعد اس سڑک پر پیدل چل پانا مشکل ہی نہیں بلکہ ناممکن بن گیاہے جبکہ گاڑیوں کے ٹائر بھی پھسل رہے ہیں جس سے حادثات کاخطرہ بناہواہے ۔بارش کا پانی نالیوں کے بجائے سڑک سے گزررہاہے اور کھڈوں میں جمع ہے جس سے یہ سڑک نہیں بلکہ کیچڑ گاہ نظر آتی ہے ۔ پیدل چلنے والوں کیلئے مشکل بات یہ بھی ہے کہ گاڑیوں کے ٹائروںسے نکلنے والی چھینٹیں ان کے کپڑے برباد کردیتی ہیں ۔طارق مغل نامی ایک نوجوان نے بتایاکہ قصبہ کی ترقی کا اندازہ سڑک کے اس حصے سے لگایاجاسکتاہے ۔انہوںنے کہا کہ کچھ ہی ماہ قبل گریف کی جانب سے سرنکوٹ بازار میں کنکریٹ بچھایاگیا لیکن اس حصہ کو چھوڑ دیاگیا جس بارے میں کئی مرتبہ گریف حکام اور ضلع و سب ڈیویژن انتظامیہ سے بھی بات کی گئی مگر کوئی کارروائی نہیں ہوئی اور آج انہیں پیدل چلنے میں بھی مشکل پیش آرہی ہے ۔مقامی لوگوں کاکہناہے کہ سڑک کے اس حصہ پر تارکول یا کنکریٹ بچھایاجائے اور اس کی مرمت کاکام فوری طور پر شروع کیاجائے ۔انہوںنے کہاکہ اگر ان کی گزارشات پر گریف کوکوئی اثر نہ ہوا تو وہ پھر احتجاج کی راہ اختیار کریںگے ۔
 
 

پی ڈی پی کا سندر بنی کے 6افراد سے لاتعلقی کا اظہار 

جموں //پی ڈی پی نے اسمبلی حلقہ نوشہرہ کے علاقے سندر بنی سے تعلق رکھنے والے چھ افراد سے لاتعلقی کا اظہار کیاہے ۔ یہاں جاری بیان کے مطابق یہ چھ افراد اپنی ذاتی مفادات کیلئے غیر ضروری طور پر افسران اور عوام کو ہراساں کررہے تھے ۔بیان کے مطابق موتی رام ولد بیلی رام ، مدن لعل ولد ایشر داس ، روہت شرما ولد مدن لعل ، ارون شرما ولد ایشر داس ، منوج کمار عرف گوگا اور اجے کمار ولد امرناتھ ساکنان سندر بنی سے پارٹی لاتعلقی کا اظہار کرتی ہے ۔ پارٹی کے ترجمان نے بتایاکہ ان تمام کی نہ ہی پارٹی میں کوئی ممبر شپ ہے اور نہ ہی وہ پارٹی سے جڑے تھے ۔ انہوںنے کہاکہ لہٰذا ان کی طرف سے کئے جانے والے کسی بھی غلط کام کے ذمہ دار وہ خود ہوںگے اور پارٹی کا اس سے کوئی تعلق نہ ہوگا۔
 
 

جنگلاتی اراضی پر تعمیر ڈھانچہ منہدم 

جا وید اقبال
مینڈھر//محکمہ جنگلات کی ایک ٹیم نے مینڈھر کے علا قہ کسبلا ڑی میں غیر قانونی طور پر جنگلات کی اراضی پر تعمیر کئے گئے ڈھانچے کو منہدم کردیا۔رینج افسر مینڈھر عظمت حسین شاہ اور ان کی ٹیم نے کمپا رٹمنٹ نمبر 187 میں محکمہ جنگلات کی زمین پر تعمیر کئے گئے ڈھانچے کو گر ادیا۔ ذرائع کے مطابق علا قہ میں جنگلات کی زمین پر کا لا ولد با غ حسین نے غیر قانی طور پر قبضہ کیا ہوا تھا اور اس پر ایک مکان بھی تعمیرکر لیا تھا ۔ جونہی محکمہ جنگلات کے افسر ان کو اس کی اطلا ع ملی توانہوں نے ٹیم بھیج کر کارروائی کی اور اس ڈھانچے کو منہدم کردیا ۔مقامی لو گو ں کا کہنا ہے کہ اس طر ح سے کئی جگہو ں پر کچھ لو گو ں نے قبضہ کررکھا ہے اور غیر قانو نی طو رڈھا نچے تعمیر کئے ہیں جن کے خلاف ایسی ہی کارروائی کی جانی چاہئے ۔
 
 

نوشہرہ میں 27زندہ شیل ناکارہ بنانے کادعویٰ 

رمیش کیسر
نوشہرہ //نوشہرہ سیکٹر میں فوج نے جمعرات کے روز ہونے والی گولہ باری کے دوران مختلف دیہاتوںسے 27زندہ مارٹر گولے برآمد کرتے ہوئے انہیں ناکارہ بنانے کادعویٰ کیاہے ۔ذرائع کے مطابق پاکستانی فوج کی طرف سے جمعرات کے روز نوشہرہ کے مختلف سرحدی دیہاتوں اور بھارتی چوکیوں کو نشانہ بنایاگیا اور اس دوران کئی مارٹر گولے رہائشی علاقوں میں بھی گرے جس سے لوگوں کو خطرہ لاحق ہوگیاتھا ۔ تاہم فوج نے 27زندہ مارٹر گولے برآمد کرکے انہیں ناکارہ بنادیا ۔واضح رہے کہ گزشتہ روز کی فائرنگ اور گولہ باری سے ایک عام شہری زخمی ہواجبکہ چوبیس سے زائد مویشی ہلاک ہوئے ۔اس دوران تین مکانات کو بھی نقصان پہنچاتھا۔فوج کی طرف سے بم ناکارہ بنانے کیلئے خصوصی ٹیم کی خدمات حاصل کی گئیں ۔ اس دوران ڈھینگ ، کلائی ، دبوڑا ، سیری ، گنہاہ ، مانپور ، ڈھینکہ سمیت سرحدی علاقوں کا معائنہ کرکے وہاں پڑے بم ناکارہ بنائے گئے ۔مقامی لوگوں کے مطابق ڈھینگ میں سرکاری سکول پر شیل گرنے سے اس کو نقصان پہنچاہے جبکہ بجلی کی ترسیلی لائنیں اور کھمبے بھی تباہ ہوئے ۔
 
 

پرانی پونچھ چوک میں سڑک اور نالیاں خستہ حالی کاشکار

حسین محتشم
 
پونچھ//قصبہ کے پرانی پونچھ محلہ میں سڑک اور نالیاں خستہ حالی کاشکار ہیں ۔یہیں سے ہوکر راولاکوٹ راہ ملن بس حدِ متارکہ کے آر پار آتی جاتی ہے اوریہ چوک ہوائی پٹی کے ساتھ ایک اہم مقام ہے جہاںسے ضلع ترقیاتی کمشنر پونچھ اور پونچھ برگیڈ کی جانب بھی راستہ جاتاہے ۔ مین چوک میں سڑک کے کنارے بنائی گئی پانی کی نکاسی نالیوں کی خستہ حالت ہے جبکہ کئی مقام پر سڑک میں بھی کھڈے بن گئے ہیں۔ نالیاں بارشوں کے دوران بند پڑ جاتی ہیں اور ان کا سارا کچرا لوگوں کے گھروں کے اندر داخل ہوجاتا ہے۔مقامی لوگوںنے حکام کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے تعمیرات عامہ اور میونسپل کونسل کے خلاف نعرے بازی کی ۔انہوںنے کہا کہ وہ لوگ کئی بار سڑک اور نالی کی خستہ حالی کے سلسلہ میں دونوں محکمہ جات کے افسران سے ملاقی ہو کر ان سے اپیل کر چکے ہیں کہ وہ وہاں مرمت کا کام شروع کروائیں لیکن کوئی شنوائی نہیں ہورہی ۔ان کا کہنا تھا کہ دونوں محکمہ جات کے افسران ایک دوسرے کے سر ذمہ داری عائد کر کے اپنا پلو جھاڑ دیتے ہیں۔ستیش کمار نامی ایک بزرگ شخص نے بتایا کہ پونچھ قصبہ کے سب سے اہم چوک کی اس طرح کی حالت قابل افسوس ہے ۔انہوں نے کہا کہ اسی راستے سے ضلع ترقیاتی کمشنر کے دفتر، گرلز ہائر سکنڈری سکول شیش محل،93انفینٹری برگیڈ، ایس ایس پی پونچھ،محکمہ تعمیرات عامہ، محکمہ پی ایچ ای، محکمہ بجلی،محکمہ فائر سروس کے صدر دفاتر اور اعلیٰ پیر کو جایا جاتا ہے لیکن کوئی بھی افسر اس نالی کی خستہ حالت کی طرف متوجہ نہیں ۔انہوں نے ضلع ترقیاتی کمشنر پونچھ طارق احمد زرگر سے اپیل کی کہ وہ اس سلسلہ میں ذاتی مداخلت کر کے اس سڑک کی مرمت کروائیں تاکہ ان لوگوں کو مزید پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑے۔رابطہ کرنے پر ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر پونچھ ڈاکٹر بشارت انقلابی نے کہاکہ وہ اس سلسلہ میں متعلقہ افسران کے ساتھ بات کر کے جلد کام شروع کروائیں گے۔ 
 
 

آن لائن شکایتی سیل قائم

راجوری انتظامیہ نے ’رابطہ ‘نامی پورٹل متعارف کی

نیوز ڈیسک
 
راجوری //عوام تک آسانی سے رسائی کے مقصدسے ضلع انتظامیہ راجوری نے ’رابطہ ‘نامی آن لائن پورٹل متعارف کروائی ہے جس کے ذریعہ لوگ آن لائن شکایات درج کرواسکتے ہیں ۔تفصیلات فراہم کرتے ہوئے ڈپٹی کمشنر راجوری ڈاکٹر شاہد اقبال چوہدری نے بتایاکہ *raabta.nic.net.in*یوآر ایل کا استعمال کرتے ہوئے ضلع کے کسی بھی حصہ کا کوئی بھی شہری اس پورٹل تک رسائی کرسکتاہے اور وہ اس کے ذریعہ اپنی شکایت درج کرواسکتاہے ۔انہوںنے بتایاکہ اندراج کے دوران نمبر جنریٹ ہوگا جس سے شکایت کی ٹریکنگ موثر ثابت ہوگی ۔ان کاکہناتھاکہ شکایت شکایت کنندہ کے موبائل نمبر کے ساتھ درج کی جائے گی تاکہ گمنام شکایات سے بچاجاسکے ۔ڈپٹی کمشنر نے مزید بتایاکہ رابطہ نامی ایپ گوگل پلے سٹور سے بھی ڈاﺅن لوڈ کی اجسکتی ہے جو انڈرائڈ فون پر استعمال کی جاسکتی ہے ۔ ان کاکہناتھاکہ اس ایپ کو لوکیشن شیئرنگ کے ساتھ عوام دوست بنایاگیاہے۔انہوںنے بتایاکہ اس کا کنٹرول سنٹر ڈپٹی کمشنر دفتر میں قائم کیاگیاہے تاکہ مقرر ہ مدت اور موثرطریقہ سے شکایات کا نمٹاراکیاجاسکے ۔ انہوںنے کہاکہ یہ سیل وزیر اعلیٰ شکایتی سیل کی طرز پر کام کرے گا اوراس سے محکمہ جات کو جوابدہ بنایاجاسکے گا۔
 
 
 

پونچھ میں سکھ طبقہ کی طرف سے نگر کیرتن کا اہتمام 

حسین محتشم
 
پونچھ//گرودوارہ پر بندھک کمیٹی کے زیر اہتمام حولہ محلہ پر نگرکیرتن کا اہتمام کیا گیا۔گردوارہ پربندھک کمیٹی کی جانب سے گردوارہ سنگھ سبھا پونچھ سے یہ نگر کیرتن نکالا گیا جو پونچھ قصبہ کے صدر بازار سے گزرتا ہوا قلعہ کے قریب پہنچا ۔اس موقعہ پر مقررین نے سکھ مذہب اور اس پروگرام کے بارے میں روشنی ڈالی ۔بعد از آں جلو س بس اڈہ سے گزرتا ہوا گورنمنٹ ڈگری کالج پونچھ میں وارد ہواجہاں مختلف سٹالوں پر کھانے پینے کا اہتمام رکھاگیاتھا۔یہ جلوس گراﺅنڈ سے نکل کر ہاتھی تھان بازار سے گزرتے ہوئے دوبارہ گرودوارہ سنگھ سبھا پونچھ میں اختتام پذیر ہوا۔اس دوران سکھ نوجوانوں اور بچوں نے ہاتھ میں نشان صاحب اٹھائے ہوئے تھے اور تلواروں کے کارنامے دکھا کر ہمت اور خوشی کا مظاہرہ کیا۔ جلوس کی قیادت پنج پیارے کر رہے تھے۔ گردوارہ پر بندھک کمیٹی کے سربراہ منجیت سنگھ نے کہا کہ گرو گوبند سنگھ سکھوں کے دسویں گرو تھے جنہوں نے خود اس میلے کی شروعات کی تھی۔اس دوران ضلع انتظامیہ کی جانب سے بھی تمام تر انتظامات کئے گئے تھے جبکہ پولیس کے افسران واہلکار بھی جلوس کے شانہ بشانہ رہے۔
 
 

علیحدہ ضلع کی حمایت 

پی ڈی پی لیڈر نے فاروق عبداللہ کے بیان کو موقعہ پرستی قرار دیا

منیر خان 
 
راجوری //کوٹرنکہ میں ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر کی تعیناتی کے بعد نوشہرہ ، سندر بنی اورکالاکوٹ کی عوام سراپا احتجاج ہے اوران کا مطالبہ ہے کہ ان علاقوں میں بھی اے ڈی سی تعینات کئے جائیں اور ان تینوں علاقوں پر مشتمل ایک علیحدہ ضلع تشکیل دیاجائے۔لوگوں کی اس مانگ کی حمایت نیشنل کانفرنس کے سرپرست اعلیٰ ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے بھی کی ہے جس پر پی ڈی پی لیڈر غلام حیدر آتش نے شدید برہمی کا اظہار کیاہے ۔زونل صدر غلام حےدر آتش نے اپنے بیان میں کہا کہ سابق وزیر اعلیٰ اور معروف سیاستدان کو کوٹرنکہ میں اے ڈی سی تعینات کئے جانے کی حماےت کرنی چاہئے تھی تاہم انہوں نے ایسا نہیں کیا بلکہ کوٹرنکہ کی مخالفت کی ۔انہوںنے کہاکہ ایسے سیاسی لیڈر سے عوام کو توقعات کچھ اور ہی تھی لیکن عوام کو ٹرنکہ کو آج اس کا بخوبی جواب مل گےا ہے کہ نیشنل کانفرنس مطلب پرست جماعت ہے جو مجموعی ترقی کی ہمیشہ سے مخالف رہی ہے ۔ انہوں نے ڈاکٹر فاروق کے بیان کو موقعہ پرستی سے تعبیر کرتے ہوئے کہا کہ ڈاکٹر فاروق عبداللہ کو ایک سیاسی لیڈر ہونے کی بنیاد پر تےنوں مقامات کی تائید کرنی چاہئے تھی لیکن وہ ایسا کرنے میں ناکام رہے ۔ انہوں نے کہاکہ پی ڈی پی مجموعی ترقی میں یقین رکھتی ہے اور وہ کوٹرنکہ کے طرز پر سندر بنی ،کالاکوٹ اور نوشہر میں بھی اے ڈی سی تعینات کرکے عوام کو راحت پہنچانے کا کام کریگی ۔ انہوں نے کہا کہ کوٹرنکہ ایک پسماندہ اور پچھڑا علاقہ ہے جہاں لوگوں کی فلاح وبہود سمیت تعمیروترقی کے لئے ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر کی تعیناتی وقت کی اشدضرورت تھی ۔
 
 

شوکت کاظمی نے محکمہ مال کی کارکردگی کاجائزہ لیا 

سرنکوٹ//ریجنل ڈائریکٹر سروے و لینڈ ریکارڈز شوکت حسین کاظمی نے سرنکوٹ تحصیل کے محکمہ مال کے افسران و ملازمین کی میٹنگ طلب کرکے ڈی آئی ایل آر ایم پی اور ریکارڈ کی اپ ڈیشن کا جائزہ لیا ۔اس موقعہ پر ایس ڈی ایم سرنکوٹ محمد رشید چوہدری ، تحصیلدار سرنکوٹ ڈاکٹر روہت شرما، نائب تحصیلدار ، گرداور ، پٹواری اور دیگر ملازمین بھی موجود تھے ۔اس دوران جمع بندی ، خسرہ گرداوری وغیرہ کی اپ ڈیشن کے بارے میں تفصیلات طلب کی گئیں ۔شوکت کاظمی کو بتایاگیاکہ 33میںسے 25جمع بندی کے کیس اگلے دو مہینوں میں مکمل کئے جائیںگے جبکہ آٹھ پہلے بھی مکمل کرلئے گئے ہیں ۔ انہیں افسران کی طرف سے یقین دلایاگیاکہ محکمہ کی طرف سے سارے ریکارڈ کو ڈیجیٹل بنایاجائے گا۔میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے شوکت کاظمی نے کہاکہ سرنکوٹ میں محکمہ کے افسران و ملازمین کی کارکردگی قابل سراہنا ہے ۔انہوںنے ان پر زور دیاکہ وہ اسی طرح سے کام کرتے رہیں ۔انہوںنے تحصیل سرنکوٹ کو ڈی آئی ایل آر ایم پی کے تحت ماڈل تحصیل بنانے کی سفارش کی اور افسران و ملازمین پر زور دیاکہ وہ اس مقصد کیلئے مزید محنت سے کام کریں ۔ انہوںنے کہاکہ زمینی ریکارڈ کو اپ ڈیٹ کرنے کے ساتھ ساتھ زمین و جائیداد پر چل رہے تنازعات حل کئے جائیں اور شفافیت کو یقینی بنایاجائے۔
 
 
 

ممبراسمبلی راجوری نے 20لاکھ کے چیک تقسیم کئے 

منیر خان 
 
راجوری //ایم ایل اے راجوری چودھری قمر حسین نے بلاک پلانگڑ میں 2سوافراد میں 20لاکھ روپے کے چیک تقسیم کئے ۔یہ امداد علاقے کے غریب و پسماندہ لوگوں کو دی گئی ۔انہوںنے فی کس دس ہزار روپے کی امداد فراہم کی ۔ مقامی لوگوں نے قمر چودھری کے اس اقدام کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ غریبوں کیلئے مالی تعاون راحت کا باعث بنے گا ۔اس موقعہ پر ایم ایل اے راجوری نے کہا کہ پیپلزڈیموکریٹک پارٹی مفاد عامہ میں یقین رکھتی ہے اوراس کے لئے اقدامات آگے بھی جاری رینگے ۔ انہوں نے کہا کہ پچھلے تےن سال میں علاقے میں تعمیروترقی کے نمایاں کام ہوئے ہیں جو پچھلے ستر برسوں میں نہیں کئے گئے تھے ۔انہوںنے کہاکہ وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کی قیادت میں مخلوط سرکار درست سمت میں آگے بڑھ رہی ہے اور انتظامیہ کو جوابدہ بنایاجارہاہے ۔دریں اثناءانہوںنے ڈاک بنگلہ راجوری میں محکمہ تعمیرات عامہ راجوری کے نئے ایگزیکٹوانجینئر کے ساتھ ایک میٹنگ کرکے انہیں راجوری تعینات ہونے پر مبارکباد پیش کی ۔ اس دوران انہوںنے تعمیراتی سرگرمیوں کا جائزہ لیا اورافسران کوہداےت جاری کی کہ تمام تعمیراتی پروجیکٹوں میں سرعت لاکر انہیں مقررہ مدت کے اندراندر مکمل کیاجائے ۔
 
 

 منجاکوٹ میںفٹ پاتھ تعمیر کرنے کی مانگ

پرویز خان
 
منجاکوٹ //تحصیل منجاکوٹ میں ٹریفک نظام دن بدن بگڑتا نظر آرہا ہے۔جموں پونچھ شاہراہ پر آباداس قصبہ سے گزرنے والی سڑک کے کنارے لوگ گاڑیاں کھڑی کر کے اِدھر اُدھر چلے جاتے ہیںجس کی وجہ سے راہگیروں کو پریشانی کا سامنا کرناپڑتاہے ۔منجاکوٹ بازار میں پیدل چلنے والوں کیلئے فٹ پاتھ کابھی کوئی انتظام نہیں اورانہیں بھی اسی سڑک سے چلناپڑتاہے تاہم سڑک کے دونوں جانب بے تکے طریقہ سے گاڑیاں کھڑی ہوتی ہیں ۔غلط پارکنگ کے سبب حادثات رونما ہونے کا احتمال بھی رہتاہے ۔ مقامی لوگوںنے ڈپٹی کمشنر راجوری سے اپیل کی کہ منجاکوٹ میں راہگیروں کیلئے فٹ پاتھ بنایاجائے اور گاڑیوں کی پارکنگ کا انتظام کیاجائے ۔