مزید خبریں

حقیرمفادات کیلئے فرقہ وارانہ رنگ نہ دی جائے:حکیم یاسین 

 حکومت پرفرقہ پرست عناصرپرقابوپانے کیلئے زوردیا

جموں//پی ڈی ایف کے چیئرمین اورایم ایل اے خانصاحب حکیم یاسین نے ہیرانگرکٹھوعہ کی آصفہ عصمت دری وقتل کیس کوفرقہ وارانہ رنگت دینے کی کوششوں پرتشویش کااظہارکرتے ہوئے کہاہے کہ معاملے کوفرقہ ورانہ رنگت دینے کے بھیانک نتائج برآمدہوسکتے ہیں۔یہاں جاری پریس بیان میں پی ڈی پی کے چیئرمین اور ایم ایل اے خانصاحب حکیم نے کہاہے کہ کشمیراورجموں دونوں خطوں میں کچھ عناصراپنے حقیرمقاصد کے حصول کے لیے اس دلدوزاورشرمناک واقعے کومختلف فرقوں کے درمیان منافرت پھیلانے کیلئے اسکوفرقہ وارانہ رنگت دیناچاہتے ہیں ۔انہوں نے خبردارکیاکہ ان عناصرکواگرفوری لگام نہ دی گئی توجموں وکشمیرکے خرمن امن میں آگ لگ جائے گی جس کی ذمہ داری ریاستی حکومت پرعائدہوگی۔ انہوں نے وزیراعلیٰ پرزوردیاکہ وہ اس واقعے کی نسبت پوری ہوشیاری اورسنجیدگی سے کام لیں تاکہ اس کی آڑمیں مختلف فرقوں میں غلط فہمیاں پیدانہ کی جاسکیں۔ انہوں نے سیاسی جماعتوں سے کہاکہ وہ اس معاملے کی نسبت اپنے آپ کودوررکھیں اورقانون اورامن عامہ سے وابستہ اداروں کوآزادانہ طورتحقیقات  کرنے کابھرپورموقعہ دیں ۔انہوں نے کہاکہ مذکورہ واقعے کوفرقہ وارانہ یاسیاسی رنگ دینے سے ریاست کے امن عامہ میں رخنہ ڈالنے کے ساتھ ساتھ تحقیقاتی عمل پربھی بُرااثرپڑے گا۔
 

وزیراعلیٰ مداخلت کرکے بھاجپاکو حساس معاملے پرسیاست سے بازرکھیں:جان

جموں//ضلع کٹھوعہ کے علاقہ ہیرانگرمیں ایک معصوم بچی کے اغوا اورقتل کے معاملے کوفرقہ ورانہ رنگ دینے کی بھارتیہ جنتاپارٹی کے لیڈروں اوروزراء کی مذموم کوششوں پرسخت افسوس کااظہارکرتے ہوئے نیشنل کانفرنس نے ریاست کی وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی سے کہاہے کہ وہ اس معاملے میں ذاتی طورپر مداخلت کرے اوراس قابل مذمت معاملے کوسیاست سے دوررکھیں۔ اس سلسلے میں یوتھ نیشنل کانفرنس کے صوبائی صدر اعجازجان نے اپنے ایک بیان میں کہاہے کہ بی جے پی اپنے ووٹ بنک کے لیے اس معاملے کوفرقہ پرستی کارنگ دے رہی ہے ۔انہوں نے کہاکہ یہ معاملہ انسانیت سوز اور گھنائوناجرم ہے اس لیے اس میں ملوث ملزم کوکیفرکردارتک پہونچایاجاناچاہیئے۔اعجازجان نے وزیراعلیٰ سے کہاکہ وہ اس معاملے میں ذاتی طورپرمداخلت کرکے بی جے پی کواس حساس معاملے پرسیاست کرنے سے بازرکھے۔
 

گورنراین این ووہرہ کی صدارت میں ویشنو دیوی شرائین بورڈ کی جائزہ میٹنگ

۔2 لاکھ سے زائد مریضوں کو سُپر سپشلٹی ہسپتال ککریال میں طبی سہولیات فراہم کی گئیں

جموں//گورنر این این ووہرا جو شری ماتا ویشنو دیوی شرائین بورڈ کے چئیرمین بھی ہیں، کی صدارت میں ایک جائیزہ میٹنگ منعقد ہوئی جس میں بورڈ کے ممبراور شری ماتا ویشنو دیوی نارئینا سُپر سپشلٹی ہسپتال کی گورننگ باڈی کے چئیرمین ڈاکٹر ایس ایس بلوریہ، شرائین بورڈ کے ممبر اور ہسپتال کی فائنانس و آڈیٹ کمیٹی کے چئیرمین بی بی ویاس اور چیف ایڈمنسٹریٹو افسر ڈاکٹر ایم ایم ہرجائی بھی موجود تھے۔میٹنگ کے دوران بتایا گیا کہ اپریل 2016 میں ہسپتال کے قیام سے اب تک2 لاکھ سے زائد مریضوں کا علاج و معالجہ کیا گیا۔230 بستروں پر مشتمل اس ٹرشری کئیر ہسپتال میں105 ہارٹ جراحیاں،400 انجو پلاسٹیز عمل میں لائی گئیں ۔اس کے علاوہ150 مریضوں کو پیس میکر لگائے گئے۔علاوہ ازیں2740 کینسر مریضوں کا بھی علاج معالجہ کیا گیا۔ اس کے علاوہ دیگر اقسام کی830 جراحیاں بھی عمل میں لائی گئیں۔اس دوران بتایا گیا کہ ہسپتال میں9500 مریضوں کی ڈائلسز بھی کی گئی۔میٹنگ میں جانکاری دی گئی کہ اس مدت کے دوران ہسپتال میں مختلف زمروں کے مریضوں کو36.76 کروڑ روپے کی ادویات فراہم کی گئیں۔اس موقعہ پر بتایا گیا کہ بورڈ کے چئیرمین اور گورنر این این ووہرا کی ہدایات پر12593 مستحقین کو4.47 کروڑ روپے کی لاگت کا مفت علاج ومعالجہ کیا گیا۔اس موقعہ پر ڈاکٹرہرجائی نے تفصیلات دیتے ہوئے کہا کہ274 یاتریوں کو1.13 کروڑ روپے کا مفت علاج و معالجہ فراہم کیا گیا۔ اس کے علاوہ شرائین بورڈ کی آروگیہ یوجنا کے تحت135 غریب اور ضرورت مند مریضوں میں0.95 کروڑ روپے کی مالی امداد فراہم کی گئی۔انہوں نے مزید کہا کہ ہسپتال میںجن مستحقین کو مفت طبی سہولیات دی گئیں اُن میں شرائین بورڈ کے ملازمین، ان کے افراد خانہ اور گرو کُل و ایس ایم وی ڈی کالج آف نرسنگ کے طُلاب بھی شامل تھے۔اس موقعہ پر ہسپتال میں موجود جدید طرز کی طبی سہولیات اور مشینری کا تفصیلی خاکہ پیش کیا گیا۔
 
 

اجے سدھوترہ ،آر ایس چِب اورشام لال کی گورنر سے ملاقات

نیوز ڈیسک
 
جموں/سابق وزیر اجے سڈوترہ نے آج یہاں راج بھون میںگورنر این این ووہرا سے ملاقات کی۔ اس دوران انہوں نے سرحدوں پر پاکستان کی گولہ باری سے متاثرہ لوگوں کی مشکلات کے بارے میں گورنر کو جانکاری دی۔انہوں نے پانچ مرلہ پلاٹ الاٹ کرنے اور ایکس گریشیا ریلیف میں اضافہ کرنے کا بھی مطالبہ کیا۔گورنر نے انہیں یقین دلایا کہ یہ معاملات وزیر اعلیٰ کے ساتھ اُٹھائے جائیں گے۔گورنر نے اجے سڈوترہ سے تلقین کی کہ وہ مختلف سطحوں پر عوامی بہبود کے کام جاری رکھیں۔علاوہ ازیںسابق وزیرآر ایس چِب نے آج یہاں راج بھون میںگورنر این این ووہرا سے ملاقات کی۔ اس دوران انہوں نے آر ایس پورہ کے ترقیاتی منظر نامے سے جڑے معاملات اور سرحدوں کے نزدیک رہنے والے کسانوں کے مسائل سے گورنر کو آگاہ کیا۔انہوں نے علاقہ میںسرحدی سیاحت کو فروغ دینے کے لئے مختلف پروجیکٹوں کی عمل آوری پر بھی زور دیا۔گورنر نے آر ایس چِب سے تلقین کی کہ وہ ریاست کی ترقی کے لئے اپنی کوششیں جاری رکھیں۔دریں اثناسابق وزیرشام لال شرما نے یہاں راج بھون میںگورنر این این ووہرا سے ملاقات کی۔ اس دوران  انہوں نے ریاست میں امن و قانون اور معمول کے حالات کی بجالی اور ترقیاتی منظر نامے کو آگے بڑھانے کے حوالے سے اپنی تجاویز سے گورنر کو آگاہ کیا۔انہوں نے پنچائتوں اور میونسپلٹیوں کے انتخابات منعقد کرانے کی ضرورت پر بھی زور دیا۔گورنر نے شام لال شرما پر زور دیا کہ وہ جموں خطہ میں آپسی روا داری کے جذبے کو بڑھاوا دینے کے لئے اپنی کوششیں جاری رکھیں۔
 

گورنمنٹ پی۔جی۔ کالج راجوری میں انجمن زبان وادب کا قیام

راجوری//گورنمنٹ پی۔جی۔ کالج راجوری میں ایک ادبی انجمن ’’انجمن زبان و ادب‘‘کا قیام عمل میں لایاگیاجس کا مقصد طلباء کے لسانی و ادبی ذوق کا سامان مہیا کرانا ہے ۔یہاں جاری پریس ریلیز کے مطابق ا نجمن کے قیام کے سلسلے میں کالج ہذا کے کثیر المقاصد ہال میں ایک تقریب کا انعقادعمل میں آیا ۔ اس تقریب کی صدارت کالج کے پرنسپل ڈاکٹر جاوید احمد قاضی نے کی اوراپنے صدارتی خطبے میں فرمایا کے یہ انجمن یقینا طلباء کی علمی وادبی صلاحیتوں کو نکھارنے میں اہم ثابت ہوگی۔ اس تقریب میںپروفیسر ایم۔کے۔وقارمہمان خصوصی کی حیثیت سے موجود تھے پروگرام میںنظامت کے فرائض ڈاکٹر غلام عباس نے انجام دیے جبکہ صدر شعبہ اردو ڈاکٹر عبد الحق نعیمی نے خطبہ استقبالیہ پیش کیا،صدر شعبہ فارسی ڈاکٹر محمد ساجر نے اس انجمن کے اغراض و مقاصد پر روشنی ڈالتے ہوے کہا کہ انجمن ھذا کے تحت ہر بیس دن میںطلباء کے لیے ایک توسیعی خطبے کا اہتمام کیا جائے گا۔اس سلسلے میں انجمن کے بینر تلے پروفیسرمحمد جہانگیر اصغر نے ’’غزل کی تکنیک‘‘ پرپہلا توسیعی لکچر پیش کیا۔علاوہ ازیںصدر شعبہ تعلیم پروفیسر محمد فاروق، ڈاکٹر محمد سلیم وانی، ڈاکٹر ظہیر احمد،ڈاکٹر جاوید احمد،پروفیسر اسرار احمداور دیگر اراکین انجمن موجود تھے۔ آخر میں صدرشعبہ عربی ڈ اکٹر احسان رضوی نے تشکراتی کلمات سے نوازا۔