مزید خبریں

جواد نگر پرائمری سکول گول مقفل

غلطی سے دونوں ٹیچروں کا نام ٹریننگ میں آیا تھا : زیڈ ای او گول

زاہد بشیر
گول//زون گول کے جواد نگر علاقہ میں پرائمری سکول کئی روز سے مقفل تھا اور اس سلسلے میںمقامی لوگوں نے ایس ڈی ایم گول سے شکایت کی تھی ۔نائب تحصیلدار وٹیم کے باقی  عملے نے سکول پر اچانک چھاپہ مارا جہاں پر کوئی بھی ٹیچر موجود نہیں تھا اور سکول کو مقفل پایا ۔ مقامی لوگ نے اس بات پر تشویش کا اظہار کیا اور اسکی تحقیق کا مطالبہ کیا ۔ اس سلسلے میں نائب تحصیلدار گول نے رپورٹ ایس ڈی ایم کو پیش کی ۔ اس سلسلے میں زیڈ ای او گول  نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ  آج کل اساتذہ کی ٹریننگ چل رہی ہیں اور غلطی سے دونوں ٹیچروں کا نام لسٹ میں آیا تھا جس وجہ سے سکول مقفل تھا اور جب ہمیں معلوم ہوا تو ایک ٹیچر کو واپس سکول بھیجا اور گیارہ بجے کے قریب سکول کو کھولا گیا ۔
 

مہور میں دیہی صحت و صفائی  پر بیداری پروگرام کا اہتمام 

ریاسی // ضلع کے مہور بلاک میں (ولئیج ہیلتھ سینیٹیشن اور نیوٹریشن دن) منانے کے لئے ایک بیداری پروگرام کا اہتما م کیا گیا ۔ VHSND  آئی سی ڈی ایس پروجیکٹ مہور  کے 5پنچایتوں کے35آنگن  واڑی مراکز پر منایا گیا ۔ اس موقعہ پر پروجکیٹ افسر انجم گنائی نے کہا کہ دیہی صحت و صفائی اور مقوعی پروگرام بلاک کے تمام آنگن واڑی مراکز میں محکمہ صحت ، صحت عامہ اور انجینئرنگ محکمہ کے اشتراک سے منعقد کیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کھانے کھانے سے قبل اور کھانے کھانے کے بعد اور  ٹوائلٹ کا استعمال کرنے کے بعد ہاتھ دھونے اور ذاتی صحت و صفائی کے متعلق بیداری پیدا کی گئی ہے۔اس پروگرام میں سکولی بچوں او آئی سی ڈی ایس کے اہلکاروں نے شرکت کی۔اس موقعہ پر گنائی نے لوگوں کو آئی سی ڈی ایس کے پروگراموں لاگو کرنے کے لئے آگے آنے کو کہا ہے، تاکہ سرکار کے پروگراموں کو زمینی سطح تک پہنچایا جا سکے۔
 

سی ای او کے ساتھ بدسلوکی  کے الزام میں استاد معطل 

طاہر ندیم خان 
ڈوڈہ //چیف ایجوکیشن افسر ڈوڈہ کے ساتھ مبینہ طور سے بدسلوکی کرنے پر جمعرات کو ایک استاد کو معطل کر دیا گیا ہے۔سی ای او ڈوڈہ کی جانب سے جاری ایک حُکم کے مطابق استاد خالد صوفی متعلقہ ڈی ڈی او سے پیشگی اجازت لینے کے بغیر ہی سی ای او ڈوڈہ کے دفتر میں داخل ہواجب سی ای او زیڈ ای او پئیز کے ساتھ ایک میٹنگ کر رہا تھااور زیڈ ای اوز کی موجودگی میں گندی اور ناشائستہ زبان کا استعمال کیا۔ استاد کو اپنا  رویہ سدھار نے کے لئے کہا گیا لیکن باوجود اسکے استاد نے اسے خطر ناک نتائج کی دھمکی دی۔دریں اثنا ،  ایچ ایس ایس جٹھیلی کے پرنسپل کو اس معاملہ کی تحقیقات کے لئے بطور انکوائری افسر مقرر کیا گیا ہے۔
 

ہائی سکول کندرہ کا درجہ بڑھانے کی مانگ مزید تیز

ریاسی//ہائی سکول کندرہ ریاسی کا درجہ بڑھانے کی مانگ کو لے کر غریب سکولی بچوں کی طرف سے خصوصی دعائوں کا اہتمام کر کے خاموش احتجاج کیاگیا ۔عوام کے ساتھ خواتین بھی پر زور احتجاج کیا اور اس مانگ کو آگے بڑھانے کیلئے اپنا تعاون دیا ۔عوام نے اس پچھڑے علاقہ کو فوری طور سے بیکورڈقرار دئے جانے کی مانگ کی ۔ انہوں نے کہا ’’جیسا کہ  گزشتہ 30برسوںسے عوام یہ مانگ کر رہی ہیکہ اس پچھڑے علاقہ کندرہ بھبھر کے ساتھ انصاف نہیں کیا گیا ۔عوام گذشتہ 30 برسوں سے زبانی و تحریری متعلقہ محکمہ جات مرکزی اور ریاستی سرکار وں کو خط لکھے ہیں۔ہڑتال چھٹے روز میں داخل ہو چکی ہے اور مظاہرین سرکار سے اپیل کرتے ہیں کہ  فوری طور سے گورنمنٹ ہائی سکول کندرہ کا درجہ بڑھایا جائے ورنہ احتجاج کو مزید تیز کیا جائے گا۔