مزید خبریں

یونیورسٹی پالی ٹیکنک راجوری میں پروگرام کا اہتمام 

عظمیٰ نیوز 
 
راجوری //بابا غلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی راجوری میں آئی سی ٹی بیسڈ پروگرام گزشتہ دنوں اختتام پذیر ہوا۔ 24ستمبر کو شروع ہوئے اس پروگرام میں ملک کے مختلف گوشوں سے آئے ہوئے مندو بین نے شرکت کی۔ ماہرین جن میں ڈاکٹر آر کے وڈیرہ، پروفیسر پی کے سنگلا، ڈاکٹر مونیکا، ڈاکٹر سمیت دت، مسز منجولا وغیرہ شامل تھیں، نے شرکاءکو موضوع کے بارے میں جانکاری فراہم کی۔ انہوں نے تکنیکی اداروں کی اہمیت و افادیت پر روشنی ڈالتے ہوئے اختراعی قسم کی تعلیم پر زور دیا تا کہ طلاب کو بہترین ٹیکنوکریٹس کے طور پر ابھارا جا سکے ۔ یہ پروگرام وائس چانسلر پروفیسر جاوید مسرت کی رہنمائی میں ڈاکٹر اشفاق زری رجسٹرار، ڈین اکیڈمک پروفیسر اقبال پرویز اور پرنسپل یونیورسٹی پالی ٹیکنک ملک مبشر حسن کی نظامت میں منعقد کیا گیا تھا۔ انجینئر شوکت مقبول نے NITTTRچندی گڑھ کے اشتراک نے کارڈی نیشن کی۔
 

۔50لاکھ روپے مالیت کے راشن کی ہیرا پھیری

راجوری کے ٹی ایس او اور سٹور کیپر کے خلاف معاملہ درج

سمت بھارگو
 
راجوری // گزشتہ روزویجی لینس آرگنائزیشن نے پچاس لاکھ سے زائد مالیت کے سرکاری راشن میں ہیرا پھیری کرنے پر ٹی ایس او اور ایک سٹور کیپر کے خلاف کیس درج کیاہے ۔ویجی لینس کے مطابق ٹی ایس او عبدالمجید اور سٹور کیپر محمد اسلم مین سٹور راجوری کے خلاف ایف آئی آر زیر نمبر 32/2018کا کیس متعلقہ دفعات کے ساتھ درج کیاگیا۔ویجی لینس کے مطابق مذکورہ ملزمان نے دیگر ڈیلروں اور ٹرانسپورٹروں کے ساتھ مل کر نہ صرف لاکھوں روپے کے راشن میں ہیرا پھیری کی بلکہ کیریج کے نام پر بھی خزانہ عامرہ کو لوٹا۔دوران تحقیقات راشن سٹوروں کی جانچ کی گئی اور یہ بات عیاں ہوئی کہ ٹی ایس او عبدالمجیدو سٹور کیپر محمدا سلم نے اپنے سرکاری عہدے کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے راشن ڈیلروں کے ساتھ ایک سازش کے تحت 50,13,752.31روپے کے راشن میں ہیرا پھیری جو سماج کے غریب عوام میں تقسیم کیاجاناتھا۔ویجی لینس تحقیقات میں یہ ثابت ہواکہ مذکورہ ملزمان نے کیریج کے نام پر 3,31,558.83روپے جعلسازی سے نکال لئے اور اس طرح سے مجموعی طور پر 53,45,311.14روپے کے خزانہ عامرہ کو نقصان پہنچایا۔ ویجی لینس کی ٹیم نے کیس درج ہونے کے بعدپولیس ومجسٹریٹ کی مدد سے راجوری، کنڈی اور راجوری کے سٹور میں چھاپے مارے جس دوران سٹور کیپر کے گھر سے 5,82,000روپے برآمد ہوئے جبکہ ٹی ایس او راجوری کی رہائش سے کچھ سرکاری ریکارڈ برامد کیاگیا۔
 

بالاکوٹ میں ایمرجنسی ہسپتال کے قیام کی مانگ 

جاوید اقبال
 
مینڈھر//سرحدی علاقہ بالاکوٹ کے لوگوںنے ایک بار پھر مانگ کی ہے کہ یہاں کی عوامی مشکلات کودیکھتے ہوئے ایک بڑا ہسپتال کھولاجائے ۔اس حوالے سے بات کرتے ہوئے سابق سرپنچ ماسٹر عنایت اللہ خان،سابق سرپنچ شادم خان، سابق سرپنچ محمد عارف خان اور یوتھ لیڈر ظہیر خان نے ریاستی گورنر سے اپیل کی کہ بالاکوٹ تحصیل میں زیادہ تر علاقہ سرحدی پٹی پر آتا ہے جہاں پر آئے دن فائرنگ کا سلسلہ رک رک کر جاری رہتا ہے جس کو دیکھتے ہوئے یہاں کوئی بڑا ہسپتال کھولاجائے ۔ انہوں نے کہاکہ سرحدی کشیدگی کے باعث بڑی تعداد میں لوگ زخمی ہوجاتے ہیں یا مارے جاتے ہیں اور زخمیوں کو وقت پر علاج کی سہولت بھی نہیں ملتی ۔ان کاکہناہے کہ ہر ایک حکومت نے اس علاقے کو نظرانداز رکھااور انہیں زخمیوں یا مریضوں کو علاج کیلئے منتقل کرنے میں سخت دشواری کا سامناکرناپڑتاہے ۔ان کے مطابق بالاکوٹ میں دو پرائمری ہیلتھ سنٹر ہیں لیکن ان میں کوئی بھی سپیشلسٹ ڈاکٹر تعینات نہیں اور بیشتر موقعوں پر زخمی اسی وجہ سے دم تو ڑبیٹھتے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ بارہا ریاستی حکومت سے یہ مانگ کی گئی کہ بالاکوٹ میں ایک ایمرجنسی ہسپتال کھولاجائے لیکن کوئی توجہ نہیں دی جارہی اور انہیں مرنے پر چھوڑ دیاگیاہے ۔ان کاکہناہے کہ یہ علاقے تمام طرح کی سہولیات سے محروم ہے لیکن طبی سہولیات کا نہ ہونا بڑی پریشانی کا باعث ہے ۔مقامی لوگوں نے گورنر سے مانگ کی کہ فوری طور پر یہاں ایمرجنسی ہسپتال کھولاجائے تاکہ لوگوں کو علاج کی بروقت سہولت مل سکے ۔
 

 مدرسے کے لاپتہ طلاب بازیاب

سمت بھارگو
 
راجوری //موہڑہ بچھائی سرنکوٹ کے ایک دینی مدرسے سے لاپتہ ہونے والے تین طلباءکو پولیس نے پونچھ سے بازیاب کرلیاہے ۔واضح رہے کہ چودہ سالہ ثاقب علی ولد لیاقت احمد، پندرہ سالہ ابرار حسین ولد محمد افضل اور سولہ سالہ پرواز احمد ولد محمد اکرم ساکنان موہڑہ بچھائی گزشتہ صبح مدرسے سے غائب ہوگئے جس پر مدرسے کی انتظامیہ نے پولیس کے پاس گمشدگی کی رپورٹ درج کروائی ۔اس دوران پولیس نے تحقیقات شروع کی اور بچوں کی تلاش شروع کی گئی جنہیں ان کے ایک رشتہ دار کے گھر سے بازیاب کرلیاگیا۔ بعد ازآں بچوں کو ان کے والدین کے حوالے کیاگیا۔
 

مہینے میں دو بار پانی کی سپلائی 

دبڑ پوٹھہ کے لوگوں کا احتجاج 

رمیش کیسر
 
نوشہرہ//نوشہرہ کے دبڑ پوٹھہ گاﺅں کے لوگوں نے محکمہ پی ایچ ای کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے اس بات کا الزام عائد کیاکہ انہیں مہینے میں صرف دو مرتبہ پانی سپلائی کیاجاتاہے ۔انہوں نے محکمہ کے خلاف عدالت جانے کا انتباہ دیا۔ مظاہرین کاکہناتھاکہ انہیں مہینے میں ایک یا دو مرتبہ پانی سپلائی کیاجاتاہے جس وجہ سے پوری آبادی پریشان حال ہے ۔مقامی شہریوں اوم پرکاش، تلک راج، محمد مجید، سرجیت کمار، جوگندر لعل ، راجیش کمار وغیرہ نے بتایاکہ محکمہ پی ایچ ای نوشہرہ کی طرف سے انتہائی درجہ کی لاپرواہی برتی جارہی ہے اور محکمہ پانی سپلائی کرنے میں ناکام ثابت ہواہے ۔ انہوں نے کہاکہ محکمہ کے ایکسن، اے ای ای ، جے ای و دیگر ملازمین بھی ان کی اس مشکل سے آگاہ ہیں مگر کام کرنے کو کوئی راضی نہیں ۔ انہوں نے کہاکہ اگر پانی کی سپلائی میں سدھار نہ لایاگیاتو ہو اب سیدھے عدالت کا رخ کریں گے ۔
 
 

ژالہ باری سے فصلوں کو نقصان

کوٹرنکہ //کوٹرنکہ ،کنڈی،جگلانو و دیگر علاقوں میں ژالہ باری سے پکی ہوئی دھان کی فصلوں کو نقصان پہنچاہے ۔ نیشنل کانفرنس کے بلاک صدرمحمد ایوب پہلوان نے دھان کی فصل کی تباہی پر گہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ کسانوں کی سال بھر کی کمائی پر پانی پھر گیاہے ۔انہوں نے کہا کہ کنڈی علاقہ جات میں پانی نہ ہونے کی وجہ سے گزشتہ ماہ ہی پنیری لگائی گئی تھی اور دھان کی فصل کو تیار ہونے میں کچھ ہی وقت باقی رہ گیاتھا جو ژالہ باری سے تباہ ہوئی ہے ۔انہوں نے بتایاکہ ژالہ باری سے میوہ جات اور سبزیوں کو بھی نقصان پہنچاہے ۔ محمد ایوب نے کہا کہ اس پہاڑی علاقہ میں سال میں ایک ہی فصل تیارہوتی ہے جو کبھی قسمت کی وجہ سے بچ جائے تو ٹھیک نہیں تو ہر سال کسانوں کو اس صورتحال سے دوچار ہوناپڑتاہے اور کبھی ژالہ باری تو کبھی خراب موسم فصل تباہ کردیتاہے ۔انہوں نے انتظامیہ سے اپیل کی کہ فصل کے نقصان پر کسانوں کو معاوضہ دیاجائے ۔
 

بھاجپا لیڈر تھنہ منڈی انتظامیہ پر برہم 

طارق شال
 
 
تھنہ منڈی// بھاجپا بلاک صدر تھنہ منڈی نے سب ڈیویژن انتظامیہ پربرہمی کا اظہار کرتے ہوئے چیف الیکٹورل آفیسر سے ووٹوں کے اندراج کے معاملے میںتحقیقات کا مطالبہ کیاہے۔ بھارتیہ جنتا پارٹی کے بلاک صدر ماسٹر عبدالغنی شال نے کہا کہ انتظامیہ نے بلدیاتی انتخابات کے دوران چند وارڈوں میں نئے ووٹوں کا اندراج کیا ہے جس میں کوئی بھی معتبر کاغذات شامل نہیں کئے گئے۔انہوں نے انتظامیہ پر الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ یہاں افسران بعض سیاسی جماعتوں کے تئیں نرم رویہ رکھتے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ میونسپل کمیٹی تھنہ منڈی میں مہم چلانے والوں میں کئی ملازم شامل ہیں جن کے خلاف کارروائی کی جانی چاہئے ۔انہوں نے کہاکہ ایسے عناصر پر نظر رکھی جائے جو الیکشن پر متاثر ہونے کی کوشش کررہے ہیں۔