مزید خبریں

گورنر کی لوہڑی اور مکر سنکرانتی پر لوگوں کو مبارکباد 

 تہوار ریاست میں دائمی امن ، ترقی اور خوشحالی کی نوید لے کر آئے

جموں//گورنر ستیہ پال ملک نے لوہڑی اور مکرسنکرانتی کے موقعہ پر لوگوں کو مبارکباد دی ہے۔اپنے پیغام میں گورنر نے کہا کہ اُمید ہے کہ یہ تہوار ریاست میں دائمی امن ، ترقی اور خوشحالی کی ایک نوید لے کر آئیںگے۔
 
 
 
 

خان سوپوری جیل میں علالت کے بعد رہا

سرینگر// پیپلز لیگ کے علیل چیئرمین غلام محمد خان سوپوری کو انتہائی بیماری کی حالت میں ججرجیل ہریانہ سے جمعہ کو رات 10 بجے رہا کیا گیا۔ رہائی کے بعد بزرگ رہنما کو دلی کے مقامی اسپتال میں داخل کیا گیا،جہاں ان کا علاج معالجہ جاری ہے۔موصولہ بیان میں لیگ نے خان سوپوری کی دوسالہ نظربندی کے بعدججرجیل ہریانہ سے رہائی کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ دیگر سبھی نظربندں کو بھی رہا کیا جائے۔خان سوپوری کو 15فروری 2017 کو سوپور میں اس وقت گرفتار کیا تھا جب وہ غلام محمد بلہ کی یاد میں منعقدہ ایک مجلس میں شریک تھے۔
 
 

پاکستانی قیدیوں کی حالت ناگفتہ بہ

 پاکستانی سفیر سے مداخلت کی اپیل 

سرینگر//مسلم لیگ نے ادھمپور ، کورٹ بلوال، کٹھوعہ اور بیرون ریاست جیلوں ٍمیں بند پاکستانی قیدیوں کے ساتھ روا رکھے جارہے سلوک  کے سلسلے میںدلی میں مقیم پاکستانی سفیر اور بشری حقوق سے وابستہ تنظیموں سے مداخلت کی اپیل کی ہے۔انہوں نے کہا کہ وہ ان قیدیوں کی حالت زار کا از خود مشاہدہ کریں کہ کس طرح انہیں جسمانی اور روحانی اذیتوں سے دوچارکیا جارہا ہے ۔لیگ بیان کے مطابق جیلوں سے خصوصاََ پاکستانی اسیروں کے بارے میںجو خبریں موصول ہورہی ہیں وہ نہایت ہی دلخراش ہیں ۔ترجمان نے کہا کہ ان پاکستانی اسیروں کو جو پچھلے تقریباََ دس پندرہ برسوں سے مقید ہیں اورجنہیںکچھ مہینے قبل سینٹرل جیل سرینگر سے اُدھمپور، کورٹ بلوال، کٹھوعہ اور دوسرے جیلوں میں منتقل کیا گیا ، کو  پہلے ہی دن سے تنگ و تاریک سیلوں میں بند رکھا گیا ہے بلکہ جیل مینول کے مطابق جو چیزیں یہ اپنے ساتھ رکھ سکتے ہیں مثلاََ کپڑے،کتابیں،کھانے پینے کی اشیاوغیرہ ان سب چیزوں سے انہیںمحروم رکھا گیا ہے۔
 
 
 

 آتشزدگی پرآزادکااِظہارِ افسوس

نئی دہلی/جموں//ریاست کے سابق وزیراعلیٰ اورراجیہ سبھامیں اپوزیشن لیڈرغلام نبی آزادنے کاہراہ میں پیش آئے آتشزدگی واقع پرافسوس کااِظہارکرتے ہوئے متاثرین کیساتھ ہمدردی اوریکجہتی کااظہار کیا۔انہوںنے انتظامیہ پرزوردیاکہ وہ متاثرین کوفوری مددفراہم کریں۔آزادنے علاقے میں آگ کی واداتوں پرروک لگانے کیلئے فائر فائٹنگ سازوسامان مہیاکرانے کی مانگ کی۔اُنہوں نے کہاکہ کاہراہ ، گواڑی، باتھری، ملکپورہ، گندو اوربٹیاس جیسے علاقوں میں اس طرح کی سہولیات دستیاب رکھی جانی چاہئے ۔نائب صدر جموں وکشمیر پردیش کانگریس کمیٹی غلام محمد سروڑی ، سابق رکن اسمبلی بھدرواہ محمد شریف نیاز، سابق رکن اسمبلی ڈوڈہ عبدالمجیدوانی،رکن ایوانِ بالا نریش کمار گپتا، صدر ڈی سی سی شیخ مجیب، سینئر کانگریس لیڈر محمد اسلم وانی، شارق سروڑی ودیگران نے بھی اس حادثے پرافسوس کااِظہارکرتے ہوئے متاثرین کوہرممکن مددکی فراہم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔واضح رہے کہ ہفتہ کی صبح آگ کی ایک بھیانک واردات میں 2 رہائشی مکانات اور4 دکانات خاکستر ہوئے۔بتایاجاتاہے کہ صبح 4 بجکر 30  منٹ پر آگ نمودار ہوئی جس نے چشم زدن میں 2رہائشی مکانوں اور 4 دکانوں کو اپنی لپیٹ میں لیکر خاکستر کیا۔ محکمہ فائر اینڈ ایمر جنسی کے عملے ، پولیس اور گنڈوہ اور ٹھاٹری کے مقامی لوگوں نے جانفشانی سے کام کرکے آگ پر قابو پالیا۔ اس سلسلے میں اے ایس پی بھدرواہ راجندر سنگھ نے کا کہنا ہے کہ خاکستر تعمیرات گنجان مارکیٹ میں واقع ہیں اور ان کے متصل تعمیرات لکڑی کے بنے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آگ پر مکمل طور پر قابو پالیا گیا ہے اور نقصان کا تخمینہ لگایا جارہا ہے۔ اطلاعات کے مطابق تباہ شدہ عمارات عبدالاقیوم بٹ ور شوکت احمد خان کی ہیں اور یہ دونوں کہارا کے باشندے ہیں۔ دریں اثنا مقامی لوگوں نے ا حتجاج کرتے ہوئے گنڈوہ۔ ٹھاٹری سڑک کو بند کیا۔ احتجاجی لوگ مطالبہ کررہے کہ کہارا میں مستقل طور فائر اینڈ ایمرجنسی محکمہ کی شاخ قائم کی جائے۔
 
 
 

 کشمیری خواتین کی آواز کو دبایا نہیں جا سکتا:زمرودہ حبیب

آسیہ سمیت دیگر محبوسین کی رہائی کا مطالبہ

سرینگر// کشمیر تحریک خواتین نے آسیہ اندرابی،ناہیدہ نسرین، فہمیدہ صوفی ،پلوامہ کی سید سکیہ امین اور کشتواڑکے ماسٹر جاوید کی دخترکی جلد رہائی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان آمرانہ پالسیوں سے خواتین کشمیر کی حق وصداقت کی آواز کو دبایا نہیں جا سکتاہے۔ موصو لہ بیان میںکشمیر تحریک خواتین کی سر براہ انجم زمردہ حبیب نے مزاحمتی خواتین لیڈران کی مسلسل نظربندی کو انتقام گیری سے تعبیر کرتے ہوئے رہائی کا مطالبہ کیا۔انہوں نے دختران ملت کی سربراہ آسیہ اندرابی کی بگڑتی صحت پر تشویش کا اظہار کیا اورانہیں جنیوا کنونشن کے تحت تحفظ اور طبی سہولیات فراہم کرنے پر زور دیا۔انہوں نے بین الاقوامی ریڈکراس تنظیم سے مختلف جیلوں میں مقید خواتین کے حالات زار کا سنجیدہ نوٹس لینے کی اپیل کی ۔