مزید خبریں

 کلسٹر یونیورسٹی آف جموں کا ’’لوگو‘‘ جاری 

جموں// گورنر ستیہ پال ملک نے کلسٹر یونیورسٹی آف جموں کے وائس چانسلر پروفیسر انجو بھسین کی موجودگی میں یہاں راج بھون میں یونیورسٹی کا لوگو جاری کیا ۔ گورنر نے یونیورسٹی کی طرف سے تیار کئے گئے لوگو کی تعریف کی اور کہا کہ کلسٹر یونیورسٹی آف جموں جو موجودہ اعلیٰ تعلیم سہولیات میں مزید بہتری لانے کیلئے قایم کی گئی ہے کو چاہئیے کہ وہ تدریسی اور تحقیقی میدانوں میں ایک اعلیٰ مرکز ثابت ہو ۔ 
 
 
 
 
 

الیکشن کمیشن بھید بھائو والا برتائو نہ کرے

ضابطہ اخلاق کی عدولی پر یکساں کاروائی کی جائے:سوز

سرینگر//سینئر کانگریس لیڈر اور سابق مرکزی وزیر پروفیسر سیف الدین سوز نے کہاہے کہ الیکشن کمیشن آف انڈیا کو انتخابی ضابطہ اخلاق کی عدولی کے مرتکبین کیخلاف یکساں کاروائی عمل میں لانی چاہئے اور اس عمل مین کسی قسم کا بھید بھائو نہیں کرنا چاہئے ۔سوز نے اپنے ایک بیان میں کہاکہ’’پورے ہندوستان میں یہ احساس ہے کہ الیکشن کمیشن آف انڈیا نے بی جے پی لیڈروں کی طرف سے الیکشن قواعد کی کھلم کھلا خلاف ورزیوں کے خلاف نہ کوئی کاروائی کی اور ناہی زبانی طور اپنی ناراضگی کا اظہار کیا۔ ابھی کل تک الیکشن کمیشن آف انڈیا کا یہی رویہ رہا ۔پھر جب سپریم کورٹ الیکشن کمیشن کی مسلسل چشم پوشی سے مجبور ہو گئی تو الیکشن کمیشن آف انڈیا کو ہدایت کی کہ وہ حرکت میں آئے، اُس سے پہلے کسی بھی خلاف ورزی کے معاملے میں الیکشن کمیشن آف انڈیا نے کوئی دلچسپی نہیں دکھائی۔ اُس لحاظ سے 2019ء؁ کا الیکشن یاد گار رہے گا! یہ سوال عام لوگ پوچھتے ہیں کہ کیا یو پی کا مہنت یوگی ادتیہ ناتھ مسلسل طور الیکشن کے دوران فرقہ پرستی کو کھلم کھلا ہوا نہیں دیتا رہا ہے؟اگر کمیشن کو کوئی دلچسپی ہوتی تو وہ ادتیہ ناتھ کی ساری تقریروں کو سامنے رکھکر اپنی رائے ظاہر کر سکتا تھا۔ ابھی کمیشن نے کل تامل ناڈو میں اپنا کمال دکھایا کہ چُن کر ڈی ایم کے ، کے لیڈر اور ایم پی کانی موزی کے گھر پر جو مرکزی سرکار اور ریاستی سرکار کی ہدایت پر چھاپہ مارا ، تو الیکشن کمیشن آ ف انڈیا اُس کاروائی میں شانہ بشانہ شریک تھا۔ کیا بی جے پی کے ساتھی ،تامل ناڈو کی موجودہ گورنمنٹ میں شامل انا ڈی ایم کے ، کے سبھی لوگ دودھ کے دھلے ہیں؟کیا وزیر اعظم مودی مسلسل فوج اور بالا کوٹ کا ذکرنہیں کرتے ہیں اور اپنی بڑے پن کا راگ نہیں الاپتے رہتے ہیں؟افسوس تو یہ ہے کہ الیکشن کمیشن آف انڈیا اُس کتاب پر ایک نظر بھی نہیں ڈالتا جس میں اُن کے فرائض کی تفصیل ہے ۔جس میں یہ بات بھی درج ہے کہ قانون سے بڑھ کر کوئی شخصیت نہیں ہو سکتی بشمول وزیر اعظم !!جہاں تک جموںوکشمیر کا تعلق ہے ، یہاں لوگوں الیکشن کمیشن آف انڈیا سے کوئی توقع نہیں رکھنی چائے کیونکہ ہم نے دیکھاکہ الیکشن کمیشن آف انڈیا این آئی اے (NIA)کی طرف سے ساری کاروائیوں اور ذیادتیوں کو خاموش تماشائی بن کر دیکھتا رہا۔!!‘‘
 
 
 
 
 
 
 

کولگام 38: پولنگ عملے کو تربیت آج دی جائے گی

کولگام// کولگام 38کے لئے پولنگ عملے کی تربیت کا پروگرام آج یعنی 18اپریل کو منعقد ہوگا۔پولنگ عملے کو گورنمنٹ ڈگری کالج کولگام میں دو شفٹوں میں تربیت فراہم کی جائے گی ۔اس مناسبت سے پہلا تربیتی پروگرام صبح 10بجے سے دوپہر 1بجے تک جاری رہے گا۔جب کہ دوسرا پروگرام دن کے2بجے سے شروع ہوگا۔
 
 

 انتخابات رائے شماری کا متبادل نہیں:بار

سرینگر//جموں کشمیرہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن نے اپنے اس موقف کودہرایا ہے کہ جموں کشمیر میں انتخابات کا انعقاد ایک بے معنی عمل ہے اور اس سے صرف اُن ہی لوگوں کو فائدہ پہنچتا ہے جو مسئلہ کشمیر کے حتمی اور پائیدار حل کوطول دینے میں دلچسپی رکھتے ہیں اور جب تک نہ مسئلہ کشمیر کافیصلہ یہاں کے لوگوں کی خواہشات کے عین مطابق ہوجاتا،اُس وقت تک برصغیر میںامن قائم نہیں ہوگا اور خطے میں بھارت پاک جنگ کے خطرات منڈلاتے رہیں گے۔ بار نے کہا کہ اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق جموں کشمیر تنازعہ کاحتمی حل اقوام متحدہ کی نگرانی میں غیرجانبدار اور شفاف طور عوام کی رائے کے مطابق جمہوری طور رائے شماری کے ذریعے نکالاجائے گااورکوئی بھی چنائوعمل رائے شماری کامتبادل نہیں ہوگا۔بار نے ہندپاک پرزوردیا کہ وہ جموں کشمیر سے فوجی انخلا عمل میں لاکر رائے شماری کرائیں تاکہ لوگ اپنے مستقبل کا فیصلہ آزادانہ طور رسکیں ۔بار نے کہا کہ آئین ہند کے دفعہ253کی شقوں کے مطابق حکو مت ہندنے ریاست جموں کشمیرمیں رائے شماری کرانے کاخود کوپابند بنایا ہے اوراس طرح اسے اپنے آئین کی پاسداری کرنی چاہیے۔ اس دوران بار کی ایگزیکیٹوکمیٹی کے ممبران نے سینٹرل جیل سرینگر میں محبوسین کی حالت زار پر تشویش کااظہار کیا ہے ۔
 
 
 

حضرت میر سید حسین سمنانیؒ کا سالانہ عرس

 ڈاکٹر فاروق عبداللہ کا پیغام تہنیت 

سرینگر //نیشنل کانفرنس کے صدرداکٹر فاروق عبداللہ نے بلندپایہ ولی کامل حضرت میرسیدحسین سمنانی ؒکے سالانہ عرس کے موقعہ پرعوام کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ اِن بزرگان دین اوراللہ کے عظیم المراتب اولیاء کرام کے پاک مشن اور اسلامی خدمات کی بدولت کشمیرکاچپہ چپہ اسلام سے سرسبزوشاداب ہوااور ہم دین اسلام کی عظیم نعمت سے سرفراز ہوئے ۔ڈاکٹر فاروق نے کہا کہ ان بزرگان دین کی درگاہیں اسلامی تہذیب وتمدن کے گہوارے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ ان درگاہوں پر اللہ تعالی نیک دعائیں قبول کرتا ہیں۔ پارٹی کی سٹیٹ سکریٹری سکینہ ایتو، ضلع صدر و سابق ایم ایل اے ہوم شالی بگ ایڈوکیٹ عبدالمجید لارمی اور صوبائی ترجمان عمران نبی ڈار نے بھی عرس پرعوام کو مبارکباد پیش کی ہے۔ انہوں نے انتظامیہ سے زائرین کیلئے معقول اور مناسب سہولیات میسر رکھنے کی بھی اپیل کی۔
 
 
 
 
 

ضلع چنائوافسرکی نگرانی میں

بڈگام میں چناؤ مواد تقسیم 

بڈگام// ضلع چنائو افسر بڈگام ڈاکٹر سید سحرش اصغر نے ضلع کے تمام پولنگ مراکز کے لئے چنائو مواد کی تقسیم اورعملے کی تعیناتی کے عمل کی نگرانی کی۔ڈی ای او نے نوڈل حکام انتخابات کے ہمراہ چرار شریف،چاڈورہ،بیروہ اور بڈگام میں تمام پولنگ مراکز کے لئے انتخابی مواد اورچنائو عملے کی تعیناتی کا جائزہ لیا۔اس دوران ڈی ای او نے اے آر اووز اورایس ڈی ایمز کے علاوہ دیگر متعلقہ آفیسران کے ساتھ چنائو عمل کے بارے میں تبادلہ خیال کیا ۔ڈی ای او نے کہا کہ چنائو مواد کی تقسیم اورپولنگ مراکز میں عملے کی تعیناتی کا عمل اطمینان بخش طریقے سے انجام دیا گیا۔
 
 
 

۔neetمراکز بیرونی ریاستوں میں قائم 

متعدد غریب بچوں کی امتحانات میں شرکت نا ممکن

سرینگر//NEET امتحانات میں شرکت کرنے کے خواہشمند جموں کشمیر کے بچوں کیلئے ملک کی مختلف ریاستوں میں امتحانی مراکز قائم کئے گئے ہیں جس کے نتیجے میں وادی سے تعلق رکھنے والے غریب بچوں کی ساتھ ساتھ طالبات کی ایک بڑی تعدادکی شرکت نا ممکن ہے بن گئی ہے اس دوران وادی سے تعلق رکھنے والے متعدد غریب گھرانوں سے تعلق رکھنے والے طلبا اور طالبات نے اس حوالے سے گورنر ستیہ پال ملک سے فوری  مداخلت کی اپیل کی ہے ۔ وادی کے مختلف علاقوں سے تعلق رکھنے والے امیدواروں نے بتایا کہ انہوں نے سخت محنت کر کے امتحان کے لئے تیاری کی ہے تاہم جموں کشمیر کے باہر ان کے مراکز قائم کرنے سے وہ اس اہم امتحان میں شریک نہیں ہو سکیں گے۔شبانہ  نامی ایک طالبہ نے بتایا ہم آج تک سرینگر سے باہر کبھی گئے نہیں ہمیں معلوم نہیں ہے کہ کہاں جانا ہے جبکہ ہوٹل یا دیگر رہائش کے لئے ہم اتنی رقم خرچ کرنے کی حالت میں نہیں ہے ۔ انہوں نے بتایا اگر یہاں مرکز قائم نہیں ہوا تو ہم شریک رہنے کی حالت میں نہیں ہے اسی طرح ایک طالب علم جس نے 490نمبرات بارہویں جماعت میں حاصل کئے ہیں نے بتایا مجھے ایک رضا کار تنظیم مدد کر کے پڑھاتی ہے تاہم دلی میں میرا مرکز قائم ہے جہاں دلی جانے والا خرچہ میرے پاس موجود نہیں ہے جس کے نتیجے میں میری امتحان میں شرکت نا مکن بن گئی ہے۔ انہوں ریاستی گورنر ستیہ پال ملک اور خورشید احمد گنائی سے اس سلسلے میں فوری مداخلت کی اپیل کی ہے تاکہ ان کا مستقبل تاریک نہ بن جائے ۔
 
 
 

علیحدہ وزیراعظم ناقابل قبول: امت شاہ

سرینگر//بھاجپا صدر امت شاہ نے سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ کی طرف سے علیحدہ وزیراعظم کے مطالبے کو یکسر مسترد کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر بھارت کا اٹوٹ انگ ہے۔بھاجپا صدر امت شاہ نے ریاست کے لیے علیحدہ وزیر اعظم کے مطالبے کو یکسر مسترد کرتے ہوئے بتایا کہ کشمیر بھارت کا اٹوٹ انگ ہے اور اسے دنیا کی کوئی بھی طاقت بھارت سے الگ نہیں کرسکتی۔ امت شاہ نے بتایا کہ جب تک بھاجپا کا وجود برقرار ہے تب تک کشمیر کو کوئی بھی طاقت ہم سے چھین نہیں سکتی۔انہوں نے کہا کہ کئی بھی طاقت کشمیر کو ہم سے الگ نہیں کرسکتی، جب تک بی جے پی زندہ ہے تب تک کشمیر کی طرف کوئی بھی میلی آنکھ سے دیکھنے کی ہمت نہیں کریگا۔کشمیر بھارت کا اٹوٹ انگ تھا، ہے اور رہے گا۔نیشنل کانفرنس کے نائب صدر اور سابق وزیراعلیٰ عمر عبداللہ کی طرف سے حال ہی میں ریاست کے لیے علیحدہ وزیراعظم کے مطالبے کو مسترد کرتے ہوئے بھاجپا صدرنے بتایا کہ بی جے پی ملک میں دو وزرائے اعظم کی کبھی بھی اجازت نہیں دے گی۔ انہوں نے کانگریس پارٹی کو تنقیدکا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ کانگریس کشمیرکو بھارت سے الگ کرنا چاہتی ہے۔امت شاہ نے بتایا کہ بھارت شیوا جی مہاراج کی زمین ہے اوراس کی حفاظت کرنا ہر ایک بھارتی پر فرض ہے۔سرحد پر پاک بھارت کشیدگی سے متعلق بولتے ہوئے بھاجپا صدر نے بتایا کہ اگر سرحد کے اُس پار سے گولی آجاتی ہے تو ہماری طرف سے اس کے بدلے گولا(دھماکہ) بھیجا جائیگا۔انہوں نے بتایا کہ سرحد پر سے بھیجے جارہے دہشت گردوں کو چن چن کر تلاش کرنے کے بعد موت کے گھاٹ اتار دیا جائیگا۔امت شاہ نے بتایا کہ ملک کے موجودہ وزیراعظم نریندر مودی بھارت کو محفوظ بنانا چاہتے ہیں۔ بھارت نے بالاکوٹ سٹرائیک کے ذریعے اپنے اُن اہلکاروں کو بدلہ لیا جنہیں جنگجوئوں نے کشمیر میں ہلاک کیا۔اس موقعے پر انہوں نے کانگریس پارٹی کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ آزادی کے مابعد کانگریس کی 5پشتوں نے حکومت کی تاہم اس سے بھارت کو کچھ بھی فائدہ حاصل نہیں ہوا۔
 
 
 

ماموسہ پٹن کے نوجوان ڈرائیور کا پُراسرار قتل

بارہمولہ پولیس نے خصوصی تحقیقاتی ٹیم تشکیل دی

فیاض بخاری

 بارہمولہ//بارہمولہ پولیس نے ماموسہ پٹن کے30  سالہ نوجوان ڈرائیور کی پُراسرار قتل کی تحقیقات کیلئے ایک خصوصی تحقیقاتی ٹیم تشکیل دی ہے۔ایس ایس پی بارہمولہ عبدالقیوم نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ پولیس نے اپنی تحقیقات میں سرعت لاتے ہوئے واقعے کی اصل حقائق جاننے کیلئے ایک تحقیقاتی ٹیم تشکیل دی ہے جسکی قیادت ڈی ایس پی مشکور کرینگے جبکہ ٹیم میں انسپکٹر سید غضنفر، ایس آئی سید اطہر پرویز اور ہیڈ کانسٹیبل شکیل احمد کو بھی شامل کیا گیا ہے جو اس معاملے کو پوری طرح سے چھان بین کریں گے ۔انہوں نے کہا کہ اگر کسی کو اس واقعے سے متعلق کوئی جانکاری ہو تو وہ مذکورہ ٹیم کے ساتھ تعاون کریں ، جبکہ تحقیقاتی ٹیم کو ہدایت دی گئی ہے مکہ وہ مختصر مدت کے اندر اپنی رپورٹ پیش کریں تاکہ مجرموں کو بے نقاب کیا جائے اور متاثرین کو انصاف دیا جائے ۔ یاد رہے کہ  30سالہ جان محمد بٹ ولد اسد اللہ بٹ ساکن ماموسہ پٹن 22مارچ کو گھر سے نکلا تھا تاہم وہ واپس نہیں لوٹا۔جس کے بعد مذ کورہ نوجوان کی لاش کو4 اپریل کو پٹن میں ایک نالہ سے برآ مد کیا گیا تھا۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ اس موقع پر مذکورہ ڈرئیور کے لواحقین اور رشتہ داروں کے ساتھ ساتھ مقامی لوگوں نے منگل کو سرینگر مظفرآباد شاہراہ پر زبردست احتجاج کیا تھا جس کے نتیجے میں کئی گھنٹوں تک ٹریفک کی آمد رفت بند ہوئی۔
 
 

امن و انصاف کیلئے 

پنتھرس پارٹی کو ووٹ دو: بھیم سنگھ

سرینگر// پنتھرس پارٹی کے سرپرست اعلی پروفیسر بھیم سنگھ نے ادھمپور پارلیمانی حلقہ کے رائے دہندگان سے 18اپریل کو ’سائیکل’ کے نشان والابٹن دباکر پارٹی کو ووٹ دینے کی اپیل کی ہے۔انہوں نے لوگوں کو یاد دلایا کہ انہوں نے اس وقت جموں وکشمیر اسمبلی سے کانگریس کے رکن اسمبلی کے عہدہ اور کانگریس سے استعفی دے دیا تھا جو شیخ محمد عبداللہ کی حکومت میں چوکیدار کے طورپر کام کررہی تھی۔ انہوں نے تمام لوگوں سے فرقہ پرست ، بدعنوان اور موقع پرست لوگوں کو شکست دینے اور تمام سیکولر اور قوم پرست جماعتوں سے موقع پرست، فرقہ پرست اور اقتدار کے بھوکے عناصر کو شکست دینے کے لئے متحد ہونے کی اپیل کی۔
 
 
 

 رنگ روڑ اور ٹرانسمیشن لائن کی تعمیر 

متاثرہ کسانوں کو معاوضہ فراہم کیا جائے:شاہ فیصل

سرینگر // جموں وکشمیر پیپلز مومٹ کے صدر ڈاکٹر شاہ فیصل نے حکومت سے مانگ کی ہے کہ رنگ روڑ اور ٹرانسمیشن لائن کی تعمیر کے تحت آنے والی اراضی کیلئے متاثرہ زمینداروں کو معقول معاوضہ فراہم کیا جانا چاہئے ۔اپنے ایک بیان میں ڈاکٹر شاہ فیصل نے کہا ہے کہ سیلولر روڑ اور 440کے وی سانبہ امرگڑھ ٹرانسمیشن لائن کی تعمیر سے متاثر ہوئے زمینداروں کی باز آبادکاری کیلئے ٹھوس اقدامات کی ضرورت ہے اور متاثرہ کسانوں کو اس طرز پر زمین کا معاوضہ فراہم کیا جانا چاہئے ،جس طرح بھارت کی دیگر ریاستوں میں زمین کے حصول اور بازآباد کاری کیلئے معاوضہ فراہم کیا جاتا ہے ۔شاہ فیصل نے کہا کہ جموں سرینگر سرکیولر روڑ کیلئے تقریباٌٌ 8000کنال زرعی اراضی حاصل کی جا رہی ہے جس کے عوض متاثرہ زمینداروں کو صرف مروجہ سٹیمپ ڈیوٹی شرح کے حساب سے معاوضہ فراہم کیا جاتا ہے جو اصل مارکیٹ قیمت سے 5گناہ کم اور قلیل ہے ۔ انہوں کہا کہ متاثرہ زمینداروں نے یہ بھی الزام عائد کیا ہے کہ متعلقہ محکموں کے چند اہلکار دلالوں کے ساتھ مل کر اپسے افراد کے حق میں معاوضہ دلواتے ہیں جن کی اراضی سرے سے ہی متاثر نہیں ہوگئی ہے ۔شاہ فیصل نے ان شکایت کے بارے میں پوری تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔ 
 
 

مہا ویر جینتی پر خورشید گنائی کی مبارکباد 

جموں// گورنر کے مشیر خورشید احمد گنائی نے  ریاست کے لوگوں کو مہا ویر جینتی کے موقعہ پر مبارکباد دی ہے ۔اپنے ایک پیغام میں مشیر موصوف نے بھگوان مہا ویر کی تعلیمات پر عمل کرنے کی تاکید کی ۔ انہوں نے کہا کہ بھگوان مہا ویر نے لوگوں کو محبت ، شفقت اور قربانی دیتے ہوئے انسانیت کو زندہ رکھنے کی تلقین کی ۔ مشیر موصوف نے اس موقعہ پر ریاست کے امن ، ترقی اور خوشحالی کی دعا کی ۔ 
 
 

 باغبانی اور اقتصادیات سے جڑے اہم سیکٹروں کی توسیع کاری 

غیرریاستی صنعت کاروںکاگروپ وادی کے دورے پر 

سرینگر //غیرریاستی صنعت کاروں کے ایک اعلیٰ سطحی گروپ نے وادی کادورہ کرکے یہاں پبلک ،پرائیویٹ اشتراک عمل کے ممکنات کاجائزہ لیا۔ ٹاٹاسنزکے زیراہتمام اس دورے میں شامل ماہرین اورصنعت کاروں نے وادی میں باغبانی کوفروغ دینے کے امکانات کاخاص طورپرجائزہ لیاجبکہ انہوں نے ریاست کی اقتصادیات سے جڑے اہم سیکٹروں کی توسیع کاری کابھی جائزہ لیا۔گروپ میں گریش کرشنا مورتی۔ وینو گواسوامی، شنکررنگاناتھن،اوردیگرکئی شخصیات شامل تھیں۔ڈائریکٹرہارٹی کلچر کشمیر اعجاز احمد بٹ ،ناظم زراعت اعجازالطاف اندرابی، منیجنگ ڈائریکٹر شفاعت سلطان اور دیگر متعلقہ افسروں نے غیرریاستی ماہرین اورصنعت کاروں کیساتھ تبادلہ خیال کرنے کیساتھ ساتھ اُنھیں کئی مقامات کادورہ بھی کروایا۔ریاستی حکام نے اُنھیں بتایاکہ جموں وکشمیرمیں زراعت اورباغبانی سیکٹروں کوتوسیع دیکراقتصادی صورتحال کوبہتربنانے کیساتھ ساتھ لوگوں کی معاشی اورمالی حالت میں بھی کافی سدھارلایاجاسکتاہے۔ ڈائریکٹرہارٹی کلچرکشمیراعجازاحمدبٹ نے غیرریاستی ماہرین اورذمہ داروں کوبتایاکہ ریاست میں باغبانی کی صنعت ریاستی اقتصادیات کاایک اہم جزہے اوراگراس صنعت کوجدیدخطوط پراستوارکیاجاتاہے تولاکھوں لوگوں کیلئے روزگارکے ذرائع پیداہوسکتے ہیں ۔انہوں نے بتایاکہ ریاست بالخصوص کشمیروادی میں میوہ باغات کوجدیدخطوط پراستوارکرنے کیساتھ ساتھ زمینداروں ،مالکان باغات اورمیوہ بیوپاریوں کوجدیدٹیکنالوجی اپنانے کی جانب راغب کرنے کی ضرورت ہے اوراس مقصدکیلئے ایک خاص حکمت عملی مرتب کرنے کیساتھ ساتھ جانکاری مہم کوصحیح ڈھنگ سے جاری رکھنابھی ضروری ہے۔
 
 

چیمبروفدکی ٹاٹاگروپ کے گلوبل ہیڈ سے ملاقات

سرینگر//کشمیرچیمبرآف کامرس اینڈانڈسٹری کے وفدنے یہاں ٹاٹاکنلسٹنسی سروسزکے گلوبل ہیڈونائب صدروی راماسوامی کے ساتھ تبادلہ خیال کیا۔ اس ملاقات کااہتمام محکمہ صنعت وکامرس کشمیر کے ڈائریکٹرمحمودشاہ نے کیاتھا۔اس دوران صحت ،تعلیم ،باغبانی،دستکاری،نادرپتھروزیوارت،فوڈ پروسیسنگ اور سیاحت شعبوں میں تجارتی اشتراک،تربیت وترقیاتی پروگراموں پر سیرحاصل گفتگوکی گئی۔وی راماسوامی نے کشمیرچیمبرآف کامرس اینڈاندسٹری وفد کوجموں کشمیر کے بارے میں ٹاٹاگروپ کے زیرغورمنصوبوں کی تفصیلی جانکاری دی۔چیمبروفد سے تفصیلی معلوماتی تجاویزحاصل کرنے کے بعدوی راماسوامی نے ممبران کو بتایاکہ ٹاٹاگروپ اُن کی تجاویزکو عملی جامہ پہنانے کیلئے ٹھوس اسکیموں وتجاویزکے ساتھ واپس آئیں گے۔
 
 
 

’طبی لاپرواہی وقانونی لوازمات‘

 آرینز لاء کالج اورآرینزنرسنگ انسٹی چیوٹ کا مشترکہ سمینار

سرینگر//’طبی لاپرواہی وقانونی لوازمات‘موضوع پر آرینزکالج آف لاء اورآرینزانسٹی چیوٹ آف نرسنگ نے مشترکہ طور سمینار کااہتمام کیا۔اس موقعہ پرڈاکٹر(پروفیسر)پرمجیت سنگھ پنجاب اسکول آف لاپنجابی یونیورسٹی اورڈاکٹر چرن کمل راجندراسپتال پٹیالہ مہمان خصوصی تھے ۔سمینار میں آرینزکے ایل ایل بی،بی اے ایل ایل بی،بی کام ایل ایل بی، جی این ایم ،اے این ایم طلباء نے شرکت کی۔آرینزلا کالج کے پرنسپل ڈاکٹر ہنس راج اروڑااور نائب پرنسپل ایس پی ورما بھی اس موقعہ پر موجود تھے۔ ڈاکٹر(پروفیسر)پرم جیت سنگھ نے کہاکہ لاپرواہی کی مکمل تشریح مشکل ہے کیونکہ اس پر اتفاق رائے نہیں ہے ۔لاپرواہی کامطلب طبی پیشہ ورکاوقت پر معیارکے مطابق کرنے میں ناکامی ہے۔ہوسکتاہے کہ معیار کے مطابق کرنے کے ایک یازیادہ پیمانے ہواور اگر اُس نے ایک پیمانے کے مطابق صحیح طور کیا تواِسے لاپرواہی نہیں کہاجاسکتا۔ڈاکٹر چرن کمل نے طلباء کو لاپرواہی اور طبی لاپرواہی کے اقسام کے متعلق جانکاری دی۔
 
 
 

ہندوارہ میں عوامی دربار

ترقیاتی کمشنر نے لوگو ں کے مسائل سنے 

اشرف چراغ 

کپوارہ//عوامی رابطہ مہم کے تحت ضلع ترقیاتی کمشنر کپوارہ انشل گرگ نے ہندوارہ میں ایک عوامی دربار کا انعقاد کیا اور وہاں لوگو ں کے مسائل سے متعلق مکمل جانکاری حاصل کی ۔بدھ کو انورنمنٹ ہال ہندوارہ میں دور دراز علاقوں کے لوگو ں نے بھاری تعداد میں شرکت کی اور اپنے اپنے علاقوں کے مسائل اور بنیادی سہولیات کا فقدان کی نسبت ضلع ترقیاتی کمشنر کپوارہ کو جانکاری دی ۔ضلع ترقیاتی کمشنر نے آفیسران کو ہدایت دی کہ وہ اپنے اپنے علاقوں میں لوگو ں کے مسائل کی طرف اپنی پوری توجہ مرکوز کریں تاکہ لوگو ں کو بنیادی سہولیات کے حوالے سے مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے ۔انہو ں نے متعلقہ محکمو ں سے کہا کہ بجلی ،پانی ،تعلیم اور یگر بنیادی مسائل حل کر نے کے لئے لوگو ں سے تال میل بنائے رکھیں ۔انہو ں نے کہا کہ کام چور ملازمین کے خلاف سخت کاروائی عمل میں لائی جائے گی ۔انہو ں نے اری گیشن اور فلڈ کنٹرول محکمہ کے ذمہ داران کو بھی ہدایت دی کہ وہ آ بپاشی نہرو ں کی مرمت کر نے کے لئے فوری طور کام شروع کریں تاکہ آنے والے وقت میں لوگو ں کو کسی بھی مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے ۔
 
 
 

پسیوں اور پتھروں کے باوجود شاہراہ پر ٹریفک جاری

 بدھ کوکانوائے کے بجائے عام ٹریفک کو چلنے کی اجازت ملی

محمد تسکین 

بانہال // بدھ کے روز بھی وقفے وقفے سے بارشوں کا سلسلہ جاری رہا اور شاہراہ بھی ٹریفک کیلئے انوکھی فال ، رامبن اور پنتھیال میں پسیوں اور پتھروں کے گرنے کے باوجود شاہراہ پر گاڑیوں کی آمدورفت بغیر کسی خلل کے جاری رہی۔ اتوار اور بدھ کیلئے شاہراہ فورسز کی کانوائے کیلئے مخصوص رکھی گئی ہے لیکن اس بدھ کو فورسز کی کانوائے کیلئے مخصوص دن کے اعلان کو واپس لیکر عام ٹریفک کو بھی چلنے کی اجازت دی گئی اور اس کے بعد جموں اور ادہمپور میں روکی گئی مسافر بردار گاڑیوں نے وادی کشمیر کا سفر کیا۔ ٹریفک زرائع نے بتایا کہ منگل اور بدھ کی رات ہوئی بارشوں کے نتیجے میں بدھ کی صبح ساڑھے چھ بجے انوکھی فال ، رامبن کے مقام شاہراہ پر ایک پسی گر آئی جس کی وجہ سے شاہراہ ٹریفک کیلئے بند کردی گئی اور دس بجے کے آس پاس اسے بحال کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ تعمیراتی کمپنی کی مشینری اور افرادی قوت کی مدد سے شاہراہ کو دوبارہ قابل آمدورفت بنایا گیا اور اس دوران پنتھیال اور ڈگڈول وغیرہ کے علاقوں میں پتھروں کا سلسلہ وقفے وقفے سے جاری رہا۔ انہوں نے کہا کہ اس دوران بدھ کی صبح نو بجے شاہراہ پر کانوائے کو نہ چلنے کی سوشل میڈیا پر آئی اطلاع کے بعد جموں سے وادی کشمیر کی طرف ٹریفک کو چلنے کی اجازت دی گئی اور اس دوران ریلوے سٹیشن بانہال، بانہال ، کھڑی ، اکڑال پوگل پرستان، رامبن ، گول اور چناب ویلی کیلئے بھی ٹریفک چلتا رہا۔ انہوں نے کہا کہ پنتھیال کے مقام بدھ کی شام تک وقفے کے بعد پتھر گر رہے ہیں اور گاڑیوں کو بڑی احتیاط کے ساتھ ایک ایک کرکے پنتھیال کی پسی کے متاثرہ سیکٹر کو پار کیا جاتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ شاہراہ ہر سویلین ٹریفک کی بحالی کے اعلان کے بعد معمول کے مقابلے کم ٹریفک نکلا جو بدھ کی شام تک اپنی اپنی منزلوں کی طرف بڑھ رہا تھا۔
 
 

مٹن میں پولیس اور عوام کے مابین گفت و شنید 

سرینگر// مٹن پولیس تھانہ میںکل پولیس پبلک میٹنگ کا انعقاد عمل میں لایا گیا۔ ڈی ایس پی ہیڈ کواٹر اننت ناگ کی سربراہی میں منعقدہ اس میٹنگ میں ایس ایچ او مٹن بھی موجود رہے جس دوران مٹن ، سیر ہمدان ، متی پورہ ، ونتراگ ، کہری بل ، رامپورہ ، دیوی پورہ اور گوپال پورہ سے تعلق رکھنے والے ذی عزت شہریوں نے شرکت کی۔ میٹنگ کے دوران شرکاء نے عوامی اہمیت کے مسائل اُبھارے۔ پولیس آفیسران نے میٹنگ میں موجود لوگوں کو یقین دلایا کہ اُن کے جائز مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کرنے کی سعی کی جائے گی۔شرکاء نے پولیس آفیسران کو یقین دلایا کہ وہ جرائم اور سماج میں پنپ رہی بُرائیوں کا قلع قمع کرنے کی خاطر ہر سطح پر اُنہیں اپنا دستِ تعاون بہم رکھیں گے۔
 
 
 

سوشل میڈیا کے حوالے سے جانکاری

بارہ مولہ پولیس کی نوجوانوں کیلئے تربیتی مہم 

سرینگر//نوجوانوں خصوصاً کم عمر لڑکوں اور سیول سوسائٹی ممبران کو سوشل میڈیا کی مثبت جانکاری کے حوالے سے بارہ مولہ پولیس نے شیر وانی ہال بارہ مولہ میں ایک بیداری کیمپ کا انعقاد عمل میں لایا جس میں ڈی آئی جی شمالی کشمیر محمد سلیمان چودھری ، ایس ایس پی بارہ مولہ اور ڈپٹی کمشنر بارہ مولہ موجود رہے ۔ تقریب میں سیول سوسائٹی ممبران ، ذرائع ابلاغ سے وابستہ نمائندوں، مختلف اسکولوں میں زیر تعلیم طلبہ وطالبات اور سٹاف ممبران نے بھی شرکت کی۔ سوشل میڈیا کے منفی اور مثبت پہلوئوں کے حوالے سے شرکاء میں کتابچہ بھی تقسیم کیا گیا۔ ڈی آئی جی شمالی کشمیر نے اپنے خطاب میں کہا کہ سیول سوسائٹی ممبران اور اساتذہ پر ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ اپنے مثبت رول سے نوجوانوں خصوصاً کم عمر طلبہ وطالبات میں اس چیز کو اُجاگر کرئے کہ سوشل میڈیا سے اُنہیں کس طرح صحیح رہنمائی حاصل ہو پائے گی۔ انہوںنے کہاکہ اس طرح کے پروگرام منعقد کرنے کیلئے جموںوکشمیر پولیس ہر سطح پر اپنا دستِ تعاون دستیاب رکھے گی تاکہ نوجوانوں کو نہ صرف اپنے جواہر دکھانے کے مواقعے فراہم ہونگے بلکہ اُن کامستقبل بھی تابناک بن سکے۔ تقریب پر موجود دیگر آفیسران نے خصوصاً والدین سے اپیل کی کہ وہ انٹرنیٹ استعمال کرتے وقت اپنے بچوں پر عقابی نگاہ رکھیںتاکہ وہ سوشل میڈیا پرعلم و فنون کے حوالے سے استفادہ حاصل کرسکیں۔ تقریب کے آخر پر اسکولی بچوں میں مختلف اقسام کی اشیاء تقسیم کی گئیں۔