مزید خبریں

درہال میں سڑکوں کی حالت بہتر بنانے کی اپیل 

محمد بشارت 
 
درہال //ضلع راجوری کے درہال علاقہ میں سڑکوں کی خستہ حالی کو لے کر مقامی لوگوں نے ضلع انتظامیہ راجوری سے اپیل کی ہے کہ ان سڑکوں کی حالت بہتر بنائی جائے تاکہ عوام کو درپیش مسائل حل ہو سکیں ۔اس سلسلہ میں خطیب جامع مسجد درہال حافظ محمد سعید نے کہا کہ درہال میں تمام رابطہ سڑکیں خستہ حالی کا شکار ہو چکی ہیں جس کی وجہ سے دیہی علا قوں میں سڑک حادثات پیش آرہے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ ریاستی انتظامیہ کو چاہیے کہ وہ درہال میں آنے والے تمام رابطہ سڑکوں کو بہتر بنایا جائے تاکہ عوام کو سہولیات میسر ہو سکیں ۔انہوں نے کہاکہ اس کیساتھ ساتھ درہال کے سیاحتی مقامات کی تعمیر و ترقی عمل میں لائی جائے تاکہ سیاح مذکورہ علاقہ کے خوبصورت مقامات کی سیر کرسکیں ۔مقامی لوگوں نے کہاکہ درہال سے پیڑی جارہی سڑک خستہ حالی کا شکار ہو چکی ہے جبکہ اس کے علا وہ دیگر سڑکوں کی طرف بھی کوئی توجہ نہیں دی جارہی ہیں ۔
 

دھیری ارلیوٹ سے کوٹلی 8کلو میٹر سڑک 

۔10برسوں میں بھی تعمیر مکمل نہ کی جاسکی ،عوام کو پریشانی کا سامنا 

منجا کوٹ //تحصیل منجا کوٹ کے دھیری ارلیوٹ سے کوٹلی کالا بن تعمیر ہونے والی سڑک گزشتہ10برسوں سے زیر تعمیر ہے جس کی وجہ سے مقامی لوگوں کوشدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔مقامی لوگوں نے ضلع انتظامیہ پر الزام عائد کر تے ہوئے کہاکہ مذکورہ سڑک کی تعمیر کا کام2009میں شروع کیا گیا تھا جس کے بعد متعلقہ محکمہ کی جانب سے زمینی کٹائی کے بعد کچھ ایک حصے پر بجری بھی بچھائی لیکن اس کے بعد سڑک کی حالت کو مزید بہتر کرنے کی طرف کوئی توجہ نہیں دی گئی ۔لاکھوں روپے خرچنے کے بعدبھی 8کلو میٹر سڑک تعمیر نہیں کی جاسکی ۔مقامی لوگوں نے کہاکہ نبارڈ کے تحت نکالی جارہی سڑک متعلقہ محکمہ کی غفلت شعاری کا شکار ہو چکی ہے جس کی وجہ سے عوام کو سہولیات دستیاب نہیں کی جاسکیں ۔مقامی لوگوں نے ضلع انتظامیہ پر الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ ان کی زمینوں کا شدید نقصان کیاگیا ہے لیکن ابھی تک سڑک کے کی نالیوں ،تار کول اور حفاظتی بند بنانے کی جانب کوئی توجہ نہیں دی گئی ہے اور لوگوں کی زمین پسیوں کی وجہ سے تباہ ہوتی جارہی ہے ۔مقامی لوگوں نے ضلع انتظامیہ سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ مذکورہ سڑک کو جلداز جلد مکمل کیا جائے تاکہ عوام کو سہولیات میسر ہوسکیں۔
 

بانڈی پورہ میں کم سن بچی کیساتھ زیادتی کی مذمت

حسین محتشم
 
پونچھ//بانڈی پورہ میں تین سالہ کمسن بچی کے ساتھ ہوئی جنسی زیادتی کو لے کر ضلع پونچھ کے لوگوں میں شدید غم و غصہ پایا جارہا ہے۔لوگ اس سانحہ کی شدید مذمت کرتے ہوئے انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ ملوث شخص کو پھانسی کی سزا دی جائے تاکہ دوسروں کے لیے مثال قائم ہو سکے۔ اسی حوالے سے بات کرتے ہوئے احساس فائو نڈیشن پونچھ کی جانب سے ایک اجلاس کا انعقاد زیر صدارت چیرمین پرویز ملک آفریدی کیا گیا۔ جس میں بانڈی پورہ میں ہوئی تین سالہ بچی کے ساتھ جنسی زیادتی کی سخت الفاظ میںمذمت کی گئی۔ مقررین خطاب کرتے ہوئے کہا انتظامیہ کو چاہیے کہ وہ ملزم کو ایسی سزا سنائے کے آج کے بعد کوئی بھی اس طرح کی غلط حرکت نہ کرئے ۔انہوں نے کہا کہ تین سالہ بچی کے ساتھ ایسا حادثہ ہوا ہے جس سے پوری انسانیت شرمسار ہے۔انہوں نے گورنر انتظامیہ سے اپیل کی کہ اس حوالے سے سخت اقدامات اٹھا ئے جائیں۔
 

لوکل باڈیز کو دئیے گئے اضافی فنڈز کے تحت تعمیری کاموں کی اجرت بقایا 

ٹھیکیدار اور مزدور طبقہ شدید پریشان ،گورنر انتظامیہ سے فنڈز وگزار کرنے کی اپیل 

طارق شال
 
تھنہ منڈی // محکمہ لوکل باڈیز جموں کی جانب سے دئیے گئے ایڈ یشنل فنڈز کے تحت تعمیر ہوئے کاموں کے سلسلہ میں کروڑوں روپے کی رقم بقایا ہو نے کی وجہ سے ٹھیکیداروں اور مزدور طبقہ کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔ٹھیکیداروں کے مطابق مارچ ماہ میں لیپس کر دیا گیا جس کی وجہ سے ان کو دقتوں کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔ بلدیاتی انتخابات منعقد کرانے کے بعد صوبہ جموں کی تما م میو نسپل کمیٹیوں کو تعمیر و ترقی کے لئے ایڈیشنل فنڈز فراہم کئے تھے۔ جسکے بعد صوبہ جموں کی لوکل باڈیزڈویژن1 اور لوکل باڈیز ڈویژن 2 نے تمام ضروری کاغذات مکمل کرتے ہوئے Accord of Approval کرنے کے بعدمذکورہ تعمیر اتی کاموں کیلئے ٹینڈر کئے گئے تھے جبکہ اس کے بعد ٹھیکیداروں کے نام پر کاموں کی الا ٹمنٹ بھی دی گئی اور اسی کے تحت کروڑوں روپے کے تعمیر اتی کام بھی کئے گئے ۔کاموں کے مکمل ہو نے کے بعد مارچ ماہ کے آخر میں ہی تمام بلوں کو ٹریجری میں جمع کروا دیا گیا تاہم متعلقہ محکمہ کی جانب سے ان بلوں وگزار نہیں کیا گیا۔ٹھیکیداروں نے الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ ذاتی مفاد کیلئے فنڈز کو لیپس کروا دیا گیا ہے ۔جموں صوبہ کے ٹھیکیداروں نے فنانس محکمہ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ ان کی ملی بھگتی کی وجہ سے مذکورہ فنڈز لیپس کئے گئے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ محکمہ فنانس نے ایک سرکولر جاری کیا جس کے تحت 51فیصد رقم وگزار کر کے باقی فنڈز پر روک لگا دی گئی ۔ٹھیکیداروں نے کہا کہ اب وہ دفتروں کے چکر کاٹنے پر مجبور ہو چکے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ اگر معقول فنڈز دستیاب نہیں تھے تو گزشتہ بلدیاتی انتخابات میں کونسلر روں کو ترقی کے نام پر بیوقوف کیوں بنایا گیا ۔محمد امین نامی ایک ٹھیکیدار نے کہاکہ انہوں نے مذکورہ کاموں کے سلسلہ میں مزدوروں کی اجرت دینی ہے لیکن انتظامیہ کی جانب سے ان کو فنڈز فراہم ہی نہیں کئے گئے ۔ٹھیکیداروں نے ریاستی گورنر سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ بقایا جات جلداز جلد وگزار کی جائے تاکہ ان کو درپیش مسائل حل ہو سکیں ۔
 

انتظامیہ گندگی جمع کرنے کی جگہ کا تعین کرنے میں ناکام :وکلاء

بختیار حسین
 
سرنکوٹ// ضلع انتظامیہ پر پونچھ اور سرنکوٹ میں گندگی جمع کر نے کی جگہ کے تعین میں ناکامی کا الزام عائد کرتے ہوئے ایڈو کیٹ بانو پرتاپ، ایڈوکیٹ طاہر محمو د اور ایڈوکیٹ توصیف اکر م نے کہا ہے کہ ان دونوں قصبوں میں عوام کو گندگی کی وجہ سے شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وکلا ء نے کہاکہ دونوں قصبوں میں میونسپل کمیٹی گندگی کوٹھکانے لگانے میں پوری طرح سے ناکام ہو چکی ہے جبکہ گندگی کی وجہ سے بازار میں مختلف اقسام کی بیماریاں جنم لے رہی ہیں جبکہ انتظامیہ کی جانب سے اس طرف کوئی توجہ نہیں دی جارہی ہے ۔انہوں نے کہاکہ اس سلسلہ ضلع ترقیاتی کمشنر پونچھ اور ایس ڈی ایم سرنکوٹ میں یاداشت بھی پیش کی گئی ہیں لیکن ان کے باوجود بھی اس طرف کوئی توجہ نہیں دی گئی ہے ۔انہوں نے ضلع انتظامیہ سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ عوامی سہولیات کیلئے ان دونوں قصبوں میں گندگی کو جمع کرنے کیلئے معقول جگہوں کا تعین کیا جائے تاکہ عام لوگوں کو درپیش مسائل سے بچایا جائے ۔