مزید خبریں

۔ 52 نئے ڈگری کالجوں کا قیام | سکولوں اور کالجوں میں کمپیوٹر کے ذریعہ ’مصنوعی ذہانت‘ کا مضمون  پڑھانے پر زور

سرینگر//گورنر کے مشیر خورشید احمد گنائی نے دو اعلیحدہ اعلیٰ سطحی میٹنگوں کے دوران 52 نئے منظور شدہ ڈگری کالجوں کو چالو کرنے اور ریاست کے تعلیمی اداروں میں ’’ آرٹیفشل انٹیلی جنس ‘‘ پڑھانے کے عمل کو متعارف کرنے کے سلسلے میں کئے جا رہے اقدامات کا جائیزہ لیا ۔ مشیر موصوف نے تمام شراکت داروں سے کہا کہ وہ اگلے تدریسی سیشن سے ان کالجوں کو چالو کرنے کو یقینی بنائیں ۔ ان میٹنگوں میں یونیورسٹی آف کشمیر کے وائس چانسلر پروفیسر طلعت احمد ، وائس چانسلر جموں یونیورسٹی پروفیسر منوج کے دھر ، شری ماتا ویشنو دیوی یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈی مکھ اُپدھیائے ، کلسٹر یونیورسٹی سرینگر کے وائس چانسلر پروفیسر شیخ جاوید احمد ، کلسٹر یونیورسٹی جموں کے وائس چانسلر پروفیسر انجو بھسین ، اسلامک یونیورسٹی آف سائینس اینڈ ٹیکنالوجی کے وائس چانسلر پروفیسر مشتاق احمد صدیقی ، صوبائی کمشنر کشمیر بصیر احمد خان ، اعلیٰ تعلیم کے سیکرٹری طلعت پرویز روہیلہ ، ڈائریکٹر کالجز یاسین احمد شاہ ، ڈائریکٹر سکول ایجوکیشن کشمیر محمد یونس ملک ، ڈائریکٹر سکول ایجوکیشن جموں انورادھا گپتا ، محکمہ تعمیراتِ عامہ کشمیر کے چیف انجینئر سامی عارف ، تمام نئے قایم شدہ کالجوں کے نوڈل پرنسپل صاحبان کے علاوہ محکمہ اعلیٰ تعلیم کے اعلیٰ افسران موجود تھے ۔ اعلیٰ تعلیم کے سیکرٹری نے میٹنگ میں بتایا کہ اگلے تدریسی سیشن سے ان تمام کالجوں میں تدریسی کام شروع کرنے کیلئے عارضی انتظامات کئے گئے ہیں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ ان کالجوں کو چالو کرنے کیلئے تین لاکھ روپے فی کالج منظور کئے گئے ہیں ۔ صوبائی کمشنر کشمیر نے میٹنگ میں بتایا کہ صوبہ کشمیر کے 26 ڈگری کالجوں میں سے 23 کالجوں کیلئے پہلے ہی اعاضی کی نشاندہی کی گئی ہے اور باقی ماندہ کالجوں کیلئے اراضی کی نشاندہی کا عمل جاری ہے ۔ خورشید گنائی نے افسران کو ہدایت دی کہ ہر ایک کالج کو چالو کرنے کیلئے مناسب انتظامات کئے جائیں ۔ انہوں نے اساتذہ و دیگر منسلک عملے پر زور دیا کہ ان کالجوں کو چالو کرنے میں کسی بھی قسم کی کوتاہی عمل میں نہ لائی جائے تا کہ طلبا متاثر نہ ہوں ۔ مشیر موصوف نے دوسری میٹنگ کے دوران ریاست کی تمام یونیورسٹیوں کے وائس چانسلروں اور ڈائریکٹر کالجز سے ریاست میں تعلیمی سیکٹر میں ’’ آرٹیفشل انٹیلی جنس ‘‘ کو متعارف کرنے کی ہدایت دی ۔ 
 
 

آرایس ایس کاکشمیراورجنوبی ریاستوں میں شاخائیں قائم کرنے کا اعلان

سرینگر//راشٹریہ سویم سیوک نے وادی کشمیر سمیت ملک کی سبھی ریاستوں میں اپنی شاخائیں قائم کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔جھانسی میں جاری اجلاس کے دوران آر ایس ایس نے فیصلہ لیا ہے کہ وہ ان علاقوں میں اپنی موجودگی بنائیں گے جہاں وہ ابھی تک پہنچ نہیں سکے ہیں ۔بظاہر مجوزہ اسمبلی انتخابات اور2024لوک سبھا انتخابات کی تیاریوں کے سلسلے میں آر ایس ایس نے جنوبی ریاستوں بشمول کرناٹکا ،تمل نادو اور حتی کہ کیرلہ میں اپنی سرگرمیاں بڑھائے گی ۔آر ایس ایس کے ایک سینئر عہدیدار نے بتایا کہ ہم ملک بھر میں اپنی افرادی قوت بڑھانے کیلئے اپنی سرگرمیوں کا دائرہ بڑھا رہے ہی ں ۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ کشمیر آر ایس ایس کے خصوصی نشانے پر ہے حالانکہ وہاں ہندو آبادی بہت ہی کم ہے ۔انہوں نے کہاکہ یہ ہندو کے بارے میں نہیں بلکہ قومیت کا مسئلہ ہے ۔ہم کشمیر کی مقامی آبادی تک پہنچنا چاہتے ہیں اور انہیں بتانا چاہتے ہیں کہ وہ ہمارے ہیں ۔قومیت کسی بھی مذہب سے بڑا ہے اور ہم خصوصا نوجوانوں کے ساتھ جڑنا چاہتے ہیں 
 
 

عشمقام میں محاصرہ اورتلاشی کاروائی

اننت ناگ//عارف بلوچ//فورسز نے جنوبی کشمیر کے عشمقام علاقے کو محاصرہ میں لے کر تلاشی کاروائی عمل میں لائی ۔ ۳آر آر،ایس اوجی و سی آر پی اہلکاروں نے گنیش پورہ عشمقام علاقہ کو محاصرہ میں لے کر تلاشی کاروائی عمل میں لائی ۔فورسز اہلکاروں کو علاقہ میں جنگجوئوں کے چھپے ہونے کا اندیشہ تھا ،تاہم تلاشی کاروائی کے دوران کوئی بھی مشتبہ شخص گرفتار نہیں ہوا ۔
 
 
 

نالہ مدھومتی میں شہری غرقآب 

عازم جان 

بانڈی پورہ//بانڈی پورہ کے مضافاتی علاقے ویون میںایک شہری کی لاش نالہ مدھو متی سے برآمد کی گئی ہے ۔ محمد اسلم خان ساکن پانار دشوار گزار بہک ترسنگم مویشیوں کی دیکھ ریکھ کیلئے گیا تھا کہ اس دوران  نالہ مدمتی میں پانی کے تیز بہاو کی زد میں آکر ڈوب گیا ۔ اگرچہ مقامی لوگوں نے اسے بچانے کی کوشش کی تاہم وہ کامیاب نہ ہوسکے بالآخر مذکورہ شہرہ کی لاش ویون کے مقام پر نالہ مدمتی سے برآمد کی گئی ۔جموں وکشمیر پیوپلز مومنٹ کے لیڈر ڈاکٹر غلام مصطفی خان نے صدمے کا اظہار کیا ہے ۔
 
 
 

نوجوان بجلی پروجیکٹ ڈیم میں ڈوب کرفوت

عشرت حسین بٹ

منڈی//منڈی کے کلانی علاقہ میں گگرکوٹ بجلی پروجیکٹ ڈیم میں ڈوب کر ایک 22 سالہ نوجوان لقمہ اجل بن گیا۔ پولیس ذرائع کے مطابق اسی پروجیکٹ میں کام کرنے والافیض خان ولد شفاعت اللہ خان ساکن کلانی منڈی منگل کی دیر شام گئے گگرکوٹ ڈیم میں نہا رہا تھا جس دوران وہ ڈوب کر لقمہ اجل بن گیا۔اطلاع ملنے پر پولیس ٹیم موقعہ پر پہنچی اور لگ بھگ تین گھنٹوں کی تلاش کے بعد نوجوان کی نعش پانی سے باہر نکالنے میں کامیابی حاصل کی گئی ۔اسٹیشن ہاؤس آفیسر منڈی روندر رکوال نے بتایا کہ شام کوانہیں فیض خان نامی نوجوان کے ڈوبنے کی اطلاع موصول ہوئی جس کے بعد انہوں نے موقعہ پر پہنچ کر مقامی لوگوں کے ساتھ اس کی نعش کیلئے آپریشن شروع کیا اور تین گھنٹوں کے بعد نعش بازیاب کرلی گئی ۔
 
 
 

 سوپور کے 4لاپتہ  نوعمر طالب علم

بانہال ریلوے اسٹیشن سے گرفتار

سرینگر //اتوارکی صبح سوپورکے مضافاتی علاقہ دوابگاہ سے پُراسرارطورپرلاپتہ ہوئے 4نوعمرطالب علموں کوپولیس نے منگل کی صبح بانہال ریلوے اسٹیشن سے گرفتارکرلیا۔ معلوم ہواکہ اتوارکی صبح گھروں سے نکلنے کے بعددوابگاہ سوپورکے رہنے والے چارنوعمرطالب علم ،15سالہ فہیم فاروق ولدفاروق احمدپارمو،16سالہ فرقان طارق ولدطارق احمدپارمو،16سالہ اطہراحمدولدعبدالاحدڈار اور18سالہ ایان امین ولدمحمدامین پارموپُراسرارطورپرلاپتہ ہوئے تھے ،،اورجب یہ چاروں طالب علم شام تک واپس اپنے گھروں کونہیں لوٹے تواُن کے اہل خانہ نے انکی گمشدگی سے متعلق رپورٹ سوپورپولیس کے پاس درج کرادی۔سوپورپولیس نے دوابگاہ کے چارطالب علموں کی گمشدگی سے متعلق رپورٹ یااطلاع درج کئے جانے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایاکہ 10ویں،11ویں اور12ویں جماعت میں زیرتعلیم چارنوعمر طالب علموں کے ایک ساتھ لاپتہ ہونے کی اطلاع یارپورٹ موصول ہونے کے بعدفوری کارروائی کے بطورچاروں لاپتہ طالب علموں کے فوٹوتمام پولیس تھانوں کوبھیج دئیے گئے تاکہ جہاں کہیں بھی یہ طالب علم نظروں میں آجائیں توانکی بازیابی میں آسانی ہو۔پولیس ذرائع نے بتایاکہ ا س فوری اقدام کاجلدنتیجہ برآمدہوا،اورجب یہ چاروں نوعمر طالب علم ممکنہ طوربیرون ریاست جانے کی کوشش کرتے ہوئے بارہمولہ سے بانہال تک چلنے والی ایک ریل گاڑی میں سوارہوکر منگل کی صبح بانہال ریلوے اسٹیشن پہنچے تویہاں پولیس کی ٹیم نے انکوپہچان لیا،اورفوری طورپران چاروں طالب علموں کوحراست میں لیاگیا۔انہوں نے کہاکہ دوابگاہ سوپورکے رہنے والے ان چاروں نوعمر طلاب کواب بانہال سے سوپورپہنچایاجائیگا،اوریہاں ضروری پوچھ تاچھ اورلازمی قانونی کارروائی عمل میں لانے کے بعداُنھیں والدین کے سپردکیاجائیگا۔
 
 
 

شاہراہ پرنقل وحرکت پر پابندی

 کشمیریوں کو سزا دینے کے مترادف:ساگر

سرینگر// نیشنل کانفرنس نے سرینگر جموں وشاہراہ پر قاضی گنڈ سے ناشری تک عام ٹریفک پر 5گھنٹوں کی پابندی پر زبردست برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہاہے کہ اس قسم کے غیر دانشمندانہ اور عوام کش اقدامات سے لوگوں کو زبردست مشکلات کا سامنا کرنا پڑے گا۔ پارٹی کے جنرل سکریٹری علی محمد ساگر نے اپنے ایک بیان میں انتظامیہ کی طرف سے لئے گئے فیصلے کو آمرانہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ موجوہ گورنر انتظامیہ کو اس قسم کے غیر دانشمندانہ فیصلے لینے کیلئے جانا جاتا ہے۔ اس فیصلے سے سرینگر جموں شاہراہ پر عام ٹریفک کی نقل و حمل بہت زیادہ متاثر ہوگی۔ کشمیر کو ملک سے جوڑنے والی واحد شاہراہ پہلے ہی موسم کی خرابی اور دیگر وجوہات کی وجہ سے بند رہنے سے لوگوں کیلئے وبال جان بن کر رہ گئی ہے کہ اب 5گھنٹوں کی پابندی عائد کرکے لوگوں کے مسائل اور مشکلات میں مزید اضافہ کیا گیاہے۔ انہوں نے کہا کہ اس غیر دانشمندانہ حکمنامے سے نہ صرف مقامی لوگوں کی نقل و حمل بری طرح متاثر ہوگی بلکہ سیاحوں آمد و رفت بھی متاثر ہوئے بنا نہیں رہے گی۔علی محمد ساگر نے کہا کہ شاہراہ پر ٹریفک کی پابندی سے یہاں کا تاجر طبقے کو بھی اپنا شکار بنائے گا جو پہلے ہی مختلف وجوہات کی بنا پر اقتصادی بدحالی کے شکارہیں۔ این سی جنرل سکریٹری نے کشمیریوں نے ہر وقت اور ہر حال میں یاترا کو کامیاب بنانے کیلئے اپنا رول نبھایا ہے ۔ ایک روز پہلے گورنر صاحب کشمیریوں کے رول کی سراہناکرتے ہیں اور دوسرے روز کشمیریوں پر تغلقی فرمان جاری کرکے کشمیریوں کو سزا دینے کے مرتکب ہورہے ہیں۔ انہوں نے اس غیر دانشمندانہ فیصلے کی فوری منسوخی کا مطالبہ کیا۔ 
 
 
 

ریاست میں 13 ڈسٹرکٹ ڈائیلسز مراکز فعال:محکمہ صحت

 سر ی نگر//صحت و طبی تعلیم محکمہ نے کہا ہے کہ ریاست بھر میںپردھان منتری نیشنل ڈائلسز(پی ایم این ڈی) پروگرام کے تحت13 ڈسٹرکٹ ڈائیلسز مراکز پوری طرح سے کام کر رہے ہیں۔اس پروگرام کی شروعات ریاست کے15 ضلع ہسپتالوں میں سال2017-18  میں شروع کی گئی۔ ان ہسپتالوں میںگورنمنٹ ہسپتال گاندھی نگر جموں، ڈی ایچ ڈوڈہ، ڈی ایچ کٹھوعہ، ڈی ایچ پونچھ، ڈی ایچ راجوری، ڈی ایچ کشتواڑ، ڈی ایچ اودہمپور، ڈی ایچ اننت ناگ، ڈی ایچ بارہ مولہ، ڈی ایچ کرگل، ڈی ایچ لیہہ، ڈی ایچ پلوامہ، ڈی ایچ کولگام، ڈی ایچ کپواڑہ اور جے ایل این ایم ہسپتال سرینگر شامل ہیں۔محکمہ کی طرف سے جاری کئے گئے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ یہ سہولت جلد ہی مرکزی سرکار کے پروگرام کے تحت کشتواڑ اور کپواڑہ کے ضلع ہسپتالوں میں بھی شروع کی جائے گی جس کے تحت اے پی ایل مریضوں کو950 روپے کی ادائیگی پر ایک ڈائلسز کی جائے گی جبکہ بی پی ایل مریضوں کے لئے یہ سہولت مفت دستیاب ہوگی جس کے لئے خرچہ سٹیٹ نیشنل ہیلتھ مشن برداشت کرے گا۔ریاست کو70 ڈائلسز مشینیں مفت الاٹ کی گئیں جن میں سے اب تک64 مشینیں حاصل کی گئی ہیں اور انہیں نصب بھی کیا گیا ہے۔بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ سال2018-19 کے دوران ان مراکز میں203 مریضوں کے8329 ڈائلسز سیشن عمل میں لائے گئے جبکہ اس سال مئی ماہ کے آخر تک2375 ڈائلسزانجام دیئے گئے۔مرکز کے اس ڈائلسز پروگرام کا بنیادی مقصد یہ ہے کہ ضلع ہیڈ کوارٹروں پر ہی ڈائلسز کی بہتر سہولیات دستیاب ہوسکیں اور مریضوں کو اس علاج کے لئے زیادہ خرچہ نہ اُٹھانا پڑے اور ان کی راحت رسانی کی جاسکے۔
 
 
 

قصوروار دکانداروں اور نانوائیوں کے خلاف کارروائی

سرینگر//اے ڈی سی بڈگام مشتا ق احمد سمنانی نے ضلع میں فوڈ سٹنڈارڈ ایکٹ کی خلاف ورزیوں کی پاداش میں کئی ہول سیلروں اوردکاندارونپر 40000روپے کا جرمانہ عائد کیا ۔انہوںنے اس سلسلے میں معاملات کی شنوائی کے دوران یہ کارروائی عمل میںلائی جس دوران وہ خلاف ورزیوںمیںملوث پائے گئے۔اُدھر لیگل میٹرالوجی محکمے کے ایک چیکنگ سکارڈ نے ڈلگیٹ ،گگری بل ،بچھوارہ اور اشبر برین کے بازاروں کا اچانک معائنہ کیا ۔محکمہ کو یہ اطلاعات موصول ہوئی تھیںکہ وہ بعض نانوائی5روپے کی روٹی 10روپے میں فروخت کرتے ہیں چنانچہ اُن کے خلاف موقعہ پر ہی کارروائی عمل میں لائی گئی۔اس کے علاوہ ریٹ لسٹ آویزان نہ رکھنے پر بھی کئی دکانداروں کے خلاف قانونی کارروائی کی گئی۔اس طرح قصورواردکانداروں سے مجموعی طور پر6600روپے کا جرمانہ عائد کیا گیا۔
 
 
 

کشتواڑ سڑک حادثے پر اظہارِ رنج

سرینگر//جمعیت اہلحدیث نے اپنے ایک بیان میں دلدوز کشتواڑ سانحہ پر گہرے رنج و قلق اور فکر و اضطراب کا اظہار کرتے ہو ئے کہا ہے کہ اس حا د ثے نے ہلا کے رکھ دیا ہے۔ بیان میں چناب خطے میں مسلسل ہو نے والے حادثات پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا گیا کہ اس حوالے سے ٹریفک نظام کے ذمہ داروں کی خا مو شی اور راست کاروائی نہ کر نا انتہائی پر یشان کن امر ہے ۔جمعیت ہمدانیہ کے سربراہ مولانا ریاض احمد ہمدانی نے کشتواڑسڑک حادثے پر گہرے دُکھ کا اظہار کیا ہے۔ اپنے تعزیتی بیان میں انہوں نے انتظامیہ کو ہدف تنقید بناتے ہوئے کہا کہ آئے روز سڑک حادثات میں قیمتی جانیں تلف ہوتی جارہی ہیں لیکن انتظامیہ حرکت میں نہیں آرہی ہے اور سڑک حادثات میں کوئی کمی دیکھنے کو نہیں مل رہی ہے۔محاذآزادی کے صدر محمد اقبال میر نے حادثے پرگہرے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے سوگوار کنبوں کے ساتھ تعزیت کا اظہارکیا ہے اورزخمیوں کی جلد صحتیابی کے لئے دعا کی۔ 
 
 
 

عبدالمجید بٹ نے محکمہ قبائلی امور کے کام کاج کا جائزہ لیا

سر ی نگر//سیکریٹری قبائلی امور محکمہ عبدالمجید بٹ نے ایک میٹنگ کے دوران محکمہ کے کام کاج کا جائیزہ لیا۔ڈائریکٹر قبائلی امور، سپیشل سیکرٹری قبائلی امور کے علاوہ کئی دیگر افسران بھی اس موقعہ پر موجود تھے۔محکمہ کے کام کاج کا جائیزہ لینے کے ساتھ ساتھ انہوں نے قبائلی طلاب کے لئے پوسٹ میٹرک وظائف کو بھی زیر بحث لایا۔سیکریٹری نے افسروں کو ہدایت دی کہ وہ طلاب کو سکالر شِپ سکیم کے بارے میں جانکاری فراہم کریں جس کے لئے درخواست نیشنل سکالر شِپ پورٹل پر اپ لوڈ کی جاسکتی ہے۔انہوں نے کہا کہ گوجر وبکروال ہوسٹلوں کے ساتھ ساتھ تعلیمی اداروں میں بھی بیداری کیمپوں کا انعقاد کیا جانا چاہئے تا کہ زیادہ سے زیادہ طلاب ڈی بی ٹی موڈ کے تحت سکالر شِپ حاصل کرسکیں۔سیکرٹری موصوف نے پچھلے تین برسوں کے دوران محکمہ کی طرف سے عملائی جارہی سکالر شِپ سکیم سے متعلق تفاصیل طلب کیں۔
 
 
 

یاتریوں کی سہولیات کیلئے بھاجپا نے رضاکاروں کی ٹیم تشکیل دی 

سرینگر// بی جے پی نے سالانہ امرناتھ یاترا پر آنے والے یاتریوں کو تعائون دینے کیلئے پارٹی کے رضاکاروں کی ٹیم کو تشکیل دی۔ یاتریوں کی احسن طریقے سے آواجاہی کیلئے بی جے پی کی ریاستی شاخ نے پارٹی کے ریاستی صدر رویندر رینہ اور ریاستی جنرل سیکریٹری(جماعت) اشوک کول کے ساتھ مشاورت کے بعد یہ ٹیم تشکل دی تاکہ وادی وارد ہونے کے ساتھ ہی گپھا تک پہنچنے والے دونوں راستوں پہلگام اور بالہ تل سونہ مرگ سے جانے والے یاتریوں کی یہ سہولیات فرہم کی جاسکیں۔ پارٹی کا کہنا ہے کہ اس کام پر جن رضاکاروں کو تعینات کیا گیا وہ2جولائی سے چوبیسوں گھنٹے یاتریوں کی خدمات میں دستیاب رہیں گے۔ پارٹی میڈیا انچارج کشمیر نے کہا’’ یہ پارٹی کارکن یاترا کے دوران یاتریوں کو ہر ممکن سہولیات فرہم کرنے اور انکی معاونت کیلئے کام کریں گے اور یاترا سے منسلک لوگ ان ممبران سے رابطہ قائم کر سکتے ہیں۔‘‘انہوں نے کہا’’ ان کارکنوں نے رضاکارانہ طور پر یاتریوں کی خدمات اور انہیں معاونت فرہم کرنے کیلئے خود کو رجسٹر کیا ہے۔‘‘
 
 
 

کرناہ میںتعمیراتی پروجیکٹوں کی اصلیت 

 انجینئر رشید کا کمیشن قائم کرنے کا مطالبہ 

کرناہ//اے آئی پی سربراہ انجینئر رشید نے کرناہ میں تعمیراتی کاموں کی اصلیت جاننے کیلئے کیشن قائم کرنے کا مطالبہ کیا۔ انجینئر رشید نے اپنے تین روزہ دورئہ کرناہ کے دوران ابکوٹ ، بہادرکوٹ، مچھانہ ، ہریڈل ، پنجتارا، دھنی ، امروہی ، سعدپورہ، پراڈا، ٹاڈ اور دیگر مقامات پر لوگوں سے تبادلہ خیال کیا۔انہوںنے الزام لگایا کہ ریاستی سرکار اہل کرناہ کے تئیں اپنی ذمہ داریوں کو نبھانے میں بری طرح ناکام ہو چکی ہے۔انہوں نے کہا ’’جہاں سرکار کا دعویٰ ہے کہ دور دراز سرحدی علاقوں میں تعمیراتی منصوبوں کے لئے رقومات کی کوئی کمی نہیں وہاں حقیقت میں کرناہ ، کیرن اور اوڑی جیسے علاقوں کا کوئی پرسان حال نہیں۔‘‘ انجینئر رشید نے نیشنل میڈیا سے سوال کیا کہ جب جنگ کا زمانہ ہوتا ہے تو کرناہ ، کیرن ، گریز اور اوڑی جیسے علاقہ جات قومی میڈیا کی شہہ سرخیوں میں چھائے رہتے ہیں لیکن امن کے دنوں میںان سرحدی علاقوں کی کسی کو فکر نہیں۔
 
 
 

اسمبلی انتخابات فوری طور منعقد کئے جائیں:حکیم یاسین

سرینگر// پی ڈی ایف نے ریاست میں اسمبلی انتخابات منعقد کرنے کی مانگ کرتے ہوئے کہا ہے کہ عوامی مسائل و معاملات مدنظر رکھتے ہوئے اب مزید تاخیر کی کوئی گنجائش نہیں ہے ۔پارٹی کے ایک بیان کے مطابق تنظیم کی جانب سے چرارشریف میں کور گروپ کاایک اجلاس چیئرمین حکیم یاسین کی صدارت میں منعقد ہوا جس میں ریاست کی تازہ سیاسی صورتحال اور ترقیاتی منظر نامے پر غوروخوض کیا گیا۔ اجلاس میں کہا گیا کہ لوگوں کو روزمرہ کے مسائل کو عوامی نمائندوں کی وساطت سے حل کرنے کا جمہوری حق فراہم کیا جائے۔ میٹنگ میں کہا گیا کہ ریاست میں فوری طورلوگوں کو اپنے جمہوری حقوق فراہم کرنے کیلئے اسمبلی الیکشن انتہائی ضروری ہے۔ میٹنگ میں پارٹی کے اس موقف کو بھی دہرایا گیا کہ دفعہ 370 کے ساتھ کسی طرح کی چھیڑ چھاڑ کی کسی بھی صورت میں اجازت نہیں دی جا ئے گی۔
 
 
 
 

خاتون کی پراسرار موت |  کمل کوٹ اوڑی میں احتجاج

اوڑی//ظفر اقبال//کالگی جولا اوڑی میں چند روز قبل شاہدہ نامی ایک خاتون کی پُراسرار ہلاکت کے بعد منگل کو کمل کوٹ اوڑی میںاُس کے لواحقین نے احتجاج کیا۔مظاہرین مطالبہ کر رہے تھے کہ اس واقعہ کی تحقیقات کی جائے ۔مظاہرین نے ہاتھوں میں بینر اٹھا رکھے تھے جن پر ’’شاہدہ کو کس نے مارا،شاہدہ کو انصاف دو، شاہدہ کے قاتلوں کو پھانسی دو‘‘ جیسے نعرے درج تھے۔مظاہرین میں شامل مذخورہ خاتون کے والد محمد صابر ٹھکری نے بتایا کہ اْن کی بیٹی کا قتل ہوا ہے ۔انہوں نے کہا’’ہماری ایک مانگ ہے کہ اس واقعہ کی تحقیقات کی جائے اور میری بیٹی کو انصاف فراہم کیا جائے‘‘۔
 
 
 

اننت ناگ میں تعلیمی نظام درہم برہم | پانچ زونل ایجوکیشن افسروں کی کرسیاں خالی 

 سرینگر//اننت ناگ ضلع میں گزشتہ ایک سال سے پانچ تعلیمی زونوں میں زونل ایجوکیشن افسروںکی کرسیاں خالی ہیں جس کے نتیجے میں ضلع کے ان علاقوں میں جو ابدہی کا عنصر متاثر ہوا ہے جس کا براہ راست اثرطالب علموں پر پڑتا ہے۔سی این ایس کے مطابق ضلع کے سر ی گفوارہ، اچھ بل، وائلو کوکر ناگ، شانگس اور قاضی گنڈ میںزونل ایجوکیشن افسروں کی کرسیاں ایک سال سے خالی ہیں۔ وائلو کو کر ناگ زون کاچارج ڈسٹر کٹ ایجوکیشن پلانگ افسر اننت ناگ کو سونپا گیا ہے۔ ڈائر یکٹر اسکول ایجوکیشن محمد یونس نے اس ضمن میں بتایا کہ ان کے تبا دلے سے متعلق فائل منظور ی کیلئے حکام بالاکے پاس ہے اور چند روزکے اندر یہ مسئلہ حل ہو جائے گا۔