مزید خبریں

روایتی صنعتوں کی بحالی کیلئے کلسٹروں کے قیام کا جائیزہ 

جموں//جے اینڈ کے کھادی اینڈ ولیج انڈسٹریز بورڈ( کے وی آئی بی) کی نائب چیئرپرسن ڈاکٹر حِنا شفیع بٹ نے یہاں ایک میٹنگ کے دوران جموں صوبے میں سکیم آف فنڈ فار رِی جنریشن آف ٹریڈیشنل انڈسٹریز( سفورتی) کے تحت قائم کئے جارہے کلسٹروں کی کارکردگی کا جائیزہ لیا۔میٹنگ میں ڈپٹی سی ای او ، کے وی آئی بھی تلک راج شرما کے علاوہ کئی دیگر افسران بھی موجود تھے۔میٹنگ میں وائس چیئرمین کو بتایا گیا کہ مرکزی سرکار کی ایم ایس ای ایم ای وزارت نے4 کلسٹر منظور کئے ہیں جن پر653.08 لاکھ روپے خرچ کئے جانے کا اندازہ ہے۔حنا بٹ نے کہا کہ مجوزہ کلسٹروں کے قیام سے کاریگروں کو کافی فائدہ حاصل ہوگا اور انہیں ایک ہی جگہ پر تمام تر سہولیات دستیاب ہوں گی۔ انہیں بتایا گیا کہ بڈگام میں کامن فسیلٹی سینٹر کا افتتاح کیا گیا ہے اور اس نے اپنا کام کاج شروع کر دیا ہے۔انہیں مزید باتیا گیا کہ کے وی آئی بی نے پی ایم ای جی پی کے تحت91 معاملات منظور کئے ہیں جن کی بدولت600 افراد کو روز گار مہیا ہورہا ہے۔چیئرپرسن نے بورڈ کی کارکردگی پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے افسروں کو ہدایت دی کہ وہ محکمہ کی سکیموں کے تعلق سے زیادہ سے زیادہ بیداری پیدا کریں تا کہ دیہی علاقوں میں روز گار کے وسائل میں اضافہ ہوسکے اور لوگوں کے معیار زندگی میں بھی بہتری آسکے۔
 
 
 
 

مشیرہ فاطمہ کو 'مسلم پرسنل لاء اور مسلم خواتین' موضوع پر پی ایچ ڈی کی ڈگری عطا

سری نگر//مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی کے البیرونی مرکز برائے مطالعہ سماجی اخراجیت و شمولیت پالیسی کی ریسرچ اسکالر مشیرا فاطمہ زوجہ بلال احمد ساکنہ گلشن آباد چرار شریف حال حیدرآباد کو پی ایچ ڈی کا اہل قرار دیا گیا ہے۔ انہوں نے پروفیسر پی ایچ محمد، شعبہ سوشولوجی کی نگرانی میں اپنا مقالہ 'مسلم پرسنل لاء کے تناظر میں مسلم خواتین کی حیثیت: قوانین و طرز عمل کا مطالعہ' تحریر کیا ہے۔ 
 
 
 

بانڈی پورہ میں عید تقریبات کیلئے انتظامات کاجائزہ

بانڈی پورہ//ترقیاتی کمشنر بانڈی پورہ شہباز احمدمرزا نے آفیسران کی ایک میٹنگ میں عید الاضحی کے سلسلے میں کئے جانے والے انتظاما ت کاجائزہ لیا۔میٹنگ میںسینئر سپر انٹنڈنٹ پولیس، اے ڈی سی ،چیف میڈیکل آفیسر ،ایگزیکٹیو آفیسر میونسپل کمیٹی اورٹریڈرس فیڈریشن بانڈی پورہ کے علاوہ دیگر متعلقہ آفیسران بھی موجود تھے۔میٹنگ کے دوران عید تقریب کے لئے عوام کو لازمی سہولیات دستیاب رکھنے کے لئے آفیسران کو متحرک ہونے کی ہدایت دی گئی۔اس موقعہ پر عید گاہوں،مساجد اور خانقاہوں میں فرزندانِ توحید کے لئے بہتر سہولیات فراہم کرنے کے سلسلے میں تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔جب کہ ضلع میں تمام متعلقہ محکموں کو تقریبات کے احسن انعقاد کے لئے افرادی قوت کو متحرک کرنے کے علاوہ دیگر لازمی اقدامات کرنے پر زوردیا گیا۔
 
 
 

اننت ناگ کیلئے جل شکتی ابھیان کیلئے ایکشن پلان

اننت ناگ//ترقیاتی کمشنر اننت ناگ خالد جہانگیر نے محکمہ دیہی ترقی اننت ناگ اورصحت عامہ وفلڈ کنٹرول کے انجینئروں کے ساتھ ایک میٹنگ کے دوران ضلع میں جل شکتی ابھیان کے لئے ایکشن پلان کا جائزہ لیا۔ابھیان کا مقصد وسیع رابطہ مہم کے دوران جن اندولن کے ذریعے پانی کے تحفظ کویقینی بنانا ہے، جس دوران زمینی پانی کے ماہرین،اوربھارت سرکار کے سائینسدان ریاستی اور ضلع آفیسران کے ساتھ اشتراک سے پانی کے تحفظ کے لئے اقدامات کی عمل آوری کو یقینی بنائیں گے۔اس موقعہ پر اے سی ڈی نے بتایا کہ جل شکتی ابھیان کے لئے محکمہ دیہی ترقی کے ایکشن پلان کے تحت 1336کام شروع کئے جائیں گے جن پر2661.50لاکھ روپے کی لاگت آئے گی۔اس دوران بیجبہاڑہ اورقاضی گنڈ کی صحت عامہ کے ڈویژنوں کے ایگزیکٹیو انجینئران نے میٹنگ کو بتایا کہ ضلع میں جے ایس اے کے تحت5پروجیکٹ شروع کئے جائیں گے جن میں 3پروجیکٹ بیجبہارہ کے لئے اور2قاضی گنڈ کے لئے ہوں گے۔ترقیاتی کمشنر نے متعلقہ بی ڈی اووز کو ایکشن ٹیکن رپورٹ روزانہ بنیادوں پراُن کے دفتر میں بھیجنے کی ہدایت دی۔
 
 

لانکریشی پورہ بانڈی پورہ بنیادی سہولیات سے محروم:ایڈوکیٹ ملک

سرینگر//نیشنل کانفرنس کے لیڈر اور نارتھ زونل سیکریٹری ایڈوکیٹ نظیر احمد ملک نے لانکریشی پورہ بانڈی پورہ میں ایک بہت بڑے عوامی اجتماع سے خطاب کیا ۔اس دوران ایڈوکیٹ نظیر احمد ملک نے اس بات پر زبردست غم و غصے کا اظہار کیا کہ بانڈی پورہ میں ماہی گیر طبقے سے تعلق رکھنے والے لوگوں کو درپیش مختلف قسم کی پریشانیوں کے حل کے لئے ابھی تک کوئی ٹھوس اقدام نہیں کئے گئے ہیں بلکہ ان سے ہر بار ووٹ حاصل کر کے انہیں سبز باغ دکھائے گئے ۔ایڈوکیٹ نظیر احمد ملک نے کہا کہ بانڈی پورہ ہیڈ کواٹرکے بغل میں واقع لانکریشی پورہ علاقے کی حالت دیکھ کر انداز ہ ہوتا ہے کہ جیسے کسی دور دراز گائوں دیہات میں آگئے ہیں کیونکہ یہاں لوگوں کوتمام بنیادی سہولیات سے محروم رکھا گیا ہے بجلی پانی اور رابطہ سڑک کا نام ونشان نہیں ہے ۔ملک نے کہا کہ ایسا ہی حال دیگر ان علاقوں کا ہے جہاں پر ہمارے ماہی گیر طبقے کے لوگ رہائش پزیر ہیں 
 
 

شاہ آباد ڈیولپمٹ فورم کے سربراہ کا کپرن علاقہ کا دورہ

اننت ناگ /عارف بلوچ/شاہ آباد ڈیولمپنٹ فورم کے سربراہ ظہور احمد ملک نے کپرن علاقہ کا دورہ کرکے لوگوں کو درپیش مسائیل سنیں ۔ظہور احمد ملک نے حالسی ڈار ،قمر و دودھ وگن علاقے کا دورہ کیا اور یہاں موجود سینکڑوں لوگوں سے تبادلہ خیال کیا ،اس موقع پر لوگوں نے چیرمین کے سامنے مختلف مسائیل جن میں سڑک،پانی،بجلی وغیرہ چیرمین کے سامنے رکھیں،چیرمین سے نوجوانوں کا وفد بھی ملاقی ہوا اور علاقہ میں اسٹیڈیم تعمیر کرنے کی مانگ کی ۔موصوف نے لوگوں کے مسائیل غور سے سنیئں اور یقین دلایا کہ انکے مسائیل ترجیحی بنیادوں پر حل کئے جائے گئے ،اُنہوں نے کہی معاملات موقع پر ہی ایڈمنسٹریشن کے نوٹس میں لائیں۔
 
 
 

معاشرے کو صحیح ڈگر پر لانے کیلئے موثر اقدامات کی ضرورت:تحریک حریت

سرینگر//تحریک حریت کے جنرل سیکریٹری امیر حمزہ شاہ نے جامع مسجد آری گام بڈگام اور شعبہ دعوت وتبلیغ کے سیکریٹری بشیر احمد قریشی نے جامع مسجد سانبورہ پلوامہ میں خطابات کئے۔ انہوں نے اپنے خطابات میں معاشرتی بگاڑ اور موجودہ صورتحال سے باخبر کرتے ہوئے کہا کہ ہمارا معاشرہ بڑی تیزی سے زوال کا شکار ہورہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ من حیث القوم ہمیں معاشرے کی اصلاح کے لیے اپنی ذمہ داریوں کا احساس ہونا چاہیے اور بحیثیت مسلمان ہمیں پورے معاشرے اور بالخصوص نوجوانوں کو اسلام کے حیات بخش اصولوں کے مطابق زندگی گزارنے کی تلقین کرنی چاہیے۔ موجودہ صورتحال پر تبصرہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ جموں کشمیر اس وقت ایک عذاب کے دور سے گزررہا ہے۔ بھارت نے لاکھوں فوجیوں کو عوام پر مسلط کرکے انسانی زندگیوں کو اجیرن بنادیا ہے۔ چھاپے، تلاشیاں، محاصرے اور گرفتاریاں تسلسل کے ساتھ جاری ہیں۔ جموں کشمیر فوجی چھاونی کا منظر پیش کررہی ہے۔ آئے روز فوجی طاقت کے ذریعے جموں کشمیر کی ہئیت اور حیثیت کو تبدیل کرنے کے منصوبے سامنے آرہے ہیں۔ انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ حق پرستوں کا ساتھ دیں اور کسی بھی صورت میں بھارت کے فریب میں نہیں آنا چاہیے۔ 
 
 
 

شیخ ابراہیم زکزاکی پر ظلم و ستم کی انتہا

بڈگام میں انجمن شرعی شیعان کی طرف سے احتجاجی جلوس برآمد

سرینگر/افریقی ملک نائجیریا کے اعلیٰ پایہ اسلامی اسکالر اور مبلغ آیت اللہ شیخ ابراہیم زکزاکی کی جیل میں تشویشناک حالت زار اور حالت اسیری میں موصوف کی زندگی کا خاتمہ کرنے کے حکومتی ارادوں کے خلاف وادی بھر میں احتجاجی جلوس برآمد کئے گئے۔ اس سلسلے کا سب سے بڑا جلوس انجمن شرعی شیعیان جموں و کشمیر کے اہتمام سے نماز جمعہ کی ادائیگی کے بعد قصبہ بڈگام میں تنظیم کے صدر آغا سید حسن الموسوی الصفوی کی قیادت میں برآمد کیا گیا جس میں ہزاروں کی تعداد میں لوگوں نے شرکت کی۔ اس موقعہ پر آغا حسن نے آیت اللہ شیخ ابراہیم زکزاکی کے عزم و استقامت کو سلام پیش کرتے ہوئے کہا کہ موصوف پر انتہائی من گھڑت اور بے بنیاد الزام لگاکر نائجیریا کی حکومت اس مایہ ناز عالم دین کی زندگی کے خاتمے کی کوششیں کررہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ شیخ زکزاکی کا شمار دنیا کے ان بلند پایہ مبلغین میں ہوتا ہے جنہوں نے عوام کے سامنے اسلام کی حقیقی فکر اور تصویرکو پیش کرنے میں اہم رول ادا کیا۔ شیخ زکزاکی نے نائجیریا میں دینی بیداری کی مہم چلائی، عوام کو قرآن و سنت اور عترت سے تمسک کی دعوت دی۔ یہی موصوف کا سب سے بڑا جرم ہے۔ آغا حسن نے کہا کہ نائجیریا کی مغرب نواز حکومت اور امریکہ و اسرائیل کو اس مرد صالح کی اسلام نواز روش گوارا نہیں ہوئی اور ان ہی قوتوں کے آشرواد پر حکومت نائجیریا نے شیخ زکزاکی اور ان کے اہل خانہ کے ساتھ سفاکانہ سلوک روا رکھا۔ موصوف کے کئی فرزند شہید کئے گئے یہاں تک کہ ان کی ناموش کو بھی پابند سلاسل بنایا گیا۔ لیکن موصوف کے عزم و ایمان میں کوئی لگزش پیدا نہیں ہوئی۔ آغا حسن نے کہا کہ شیخ زکزاکی کے حوالے سے نائجیریا کی عدلیہ کے واضح فیصلے کے باوجود موصوف کو رہا کرنے سے حکومت کا انکار اسلام اور انسانیت دشمنی کی بدترین مثال ہے۔ شیخ زکزاکی کی حالت زار پر انسانی حقوق کے عالمی دعویداروں کی مجرمانہ خاموشی پر افسوس ظاہر کرتے ہوئے آغا حسن نے کہا کہ ایک بلند پایہ اسلامی مبلغ پر جبر و ستم کی تنہا تمام مسلمانوں کیلئے ایک لمحہ فکریہ ہے۔ دریں اثنا آغا حسن نے تین کشمیری نوجوانوں کو23 سال بعد عدالت کی طرف سے بے گناہ قرار دئے جانے کے بعد رہائی کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ ان نوجوانوں کی جیل میں نصف عمر گزرنے کے بعد بے گناہ قرار دیکر رہائی انصاف سے بعید ہے۔ یہ انسانی حقوق کی پامالی کا بدترین واقعہ ہے
 
 

 زراعت اورباغبانی محکموں کے کام کاج کاجائزہ 

شوپیان//ضلع ترقیاتی کمشنرشوپیان ڈاکٹر اویس احمد نے آج ایک میٹنگ کے دوران ضلع میں ہارٹیکلچر ڈیولپمنٹ پلان اورایگریکلچر ڈیولپمنٹ پلان کاجائزہ لیا۔میٹنگ میں چیف پلاننگ آفیوسر ،چیف ایگریکلچر آفیسر ،چیف اینمل ہسبنڈری آفیسر اورہارٹیکلچر آفیسر کے علاوہ دیگر محکموںکے آفیسران بھی موجود تھے۔اس موقعہ پر مختلف مرکزی معاونت والی سکیموں کی ضلع میں عمل آوری پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا جب کہ اب تک حصولیابیوں اورایکشن پلان کو بھی زیر بحث لیا گیا۔میٹنگ کے دوران ضلع اور سیکٹورل آفیسران پر بہتر تال میل کے ساتھ کام کرنے پر زوردیا گیا تاکہ مثبت نتائج سامنے آسکیں اور ضلع میں روزگار کے مزید وسائل پیداہوسکیں۔ترقیاتی کمشنر نے کمیٹیوں کے ممبران پر معیاد بند مدت میں سکیموں کی عمل آوری کو یقینی بنانے کی ہدایت دی تاکہ کسان طبقے کو فوائد حاصل ہوسکیں اوراُن کی آمدنی میں اضافے کے ساتھ ساتھ ضلع اور ریاست میںترقی کے مزید امکانات روشن ہوسکیں۔
 
 
 
 
 
 
 
 

مرکزی گرانٹس کی جلد واگذاری 

 اخراجات کے مرکزی سیکرٹری کے ساتھ کے کے شرماکی ملاقات 

نئی دہلی//گورنر کے مشیر کے کے شرما نے نئی دہلی میں خزانہ کی مرکزی وزارت میں اخراجات کے سیکرٹری گریش چندر مرمو کے ساتھ ملاقات کی ۔ میٹنگ کے دوران مشیر نے ریاست کے فائنانسز بالخصوص مرکزی گرانٹ کی واگذاری کے تعلق سے امور پر تبادلہ خیال کیا ۔ اس موقعہ پر جی ایس ٹی معاوضے ، وزیر اعظم ترقیاتی پیکج کے تحت اخراجات کی واگذاری اور مقامی اداروں کیلئے گرانٹس کی واگذاری جیسے معاملات پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا ۔ مشیر موصوف نے پنچائتوں اور شہری بلدیاتی اداروں کی ترقیاتی ضروریات کو پورا کرنے کی خاطر رقومات کی جلد از جلد واگذاری پر بھی زور دیا ۔ انہوں نے ریاستی حکومت کی طرف سے بانڈس جاری کر کے بجلی کی خریداری میں ہونے والی واجبات کو کم کرنے کی خاطر اختراعی طریقہ کار اختیار کرنے کیلئے ریاست کو اجازت دینے کا معاملہ بھی اجاگر کیا ۔ کے کے شرما نے کہا کہ ان واجبات کی وجہ سے ریاست کے مالی وسائل ضایع ہو رہے ہیں اور اسے واجب الادا بقایا جات پر اضافی سود اور 18 فیصد سرچارج دینا پڑتا ہے ۔ سیکرٹری موصوف نے یقین دلایا کہ آنے والے دنوں میں ریاست کو رقومات واگذار کی جائیں گی۔
 
 
 

ہجومی تشددکے تعلق سے داخل کی گئی عرضی پرسماعت

مرکز اور 10 ریاستوں کوسپریم کورٹ کا نوٹس جاری

سرینگر//عدالت نے مرکز سمیت 8 ریاستوں کونوٹس جاری کیا ہے۔ کورٹ نے اترپردیش۔ بہار، مدھیہ پردیش، دہلی، راجستھان، جموں کشمیر اور آندھر پردیش کونوٹس جاری کیا ہے۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق ہجومی تشددکے تعلق سے داخل عرضی پر سپریم کورٹ میں سماعت ہوئی۔ عدالت نیمرکز سمیت 10 ریاستوں کونوٹس جاری کیا ہے۔ کورٹ نے اترپردیش، بہار، مدھیہ پردیش، دہلی، راجستھان، جموں کشمیر اور آندھر پردیش کو نوٹس جاری کیا ہے۔توہین عدالت کی عرضی میں کہاگیا ہے کہ 2008 میں تفصیلی گائڈلائن جاری کی گئی تھی۔ لیکن اس پر حکومتیں صحیح طریقے سے عمل نہیں کررہی ہیں۔یہی وجہ ہے کہ ہجومی تشددجیسیواقعات رونما ہورہیہیں۔ عرضی کے مطابق پولیس اورمقامی انتظامیہ نے بھی کارگرقدم نہیں اٹھایا ہے۔ یادرہے کہ عدالت میں مفاد عامہ عرضی داخل کر 2018 میں سپریم کورٹ کے ذریعہ اس معاملے میں دیے گئے ایک فیصلہ کو ٹھیک سے نافذ کرانے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ اسی عرضی پر سماعت کرتے ہوئے عدالت عظمیٰ نے آج مرکزی وزارت داخلہ کو نوٹس جاری کیا ہے۔ ( سی این آئی )
 
 
 
 

ریاست کو موزون اور محفوظ سیاحتی مقام بنانا

حکومت ایک وسیع مہم شروع کرے گی:نوین چودھری

سرینگر//سیاحت کے پرنسپل سیکرٹری نوین کمار چودھری نے یہاں محکمہ سیاحت سے جُڑے اَفراد اور مختلف سیاحتی انجمنوں کے نمائندوں کے ساتھ ایک اِستفساری سیشن کی صدارت کی۔ایڈیشنل سیکرٹری سیاحت پرسنا راما سوامی ، ناظم سیاحت کشمیر نثار احمد وانی، ناظم سیاحت جموں دیپکا کماری شرماکے علاوہ سیاحت سے جڑی کئی اہم شخصیات بھی اِس موقعہ پر موجود تھیں۔پرنسپل سیکرٹری نے اس موقعہ پر کہا کہ سیاحتی وسائل کو اُجاگر کرنے اور زیادہ سے زیادہ سیاحوں کو راغب کرنے کے لئے جدید مارکیٹنگ ٹیکنالوجی کو برولایا جانا چاہیئے ۔اُنہوں نے اس سیکٹر سے جُڑے متعلقین کے درمیان بہتر تال میل کی ضرورت پر زور دیا تاکہ ریاست کو ایک محفوظ اور موزون سیاحتی مقام کے طور پر سامنے لایا جاسکے۔اُنہوں نے کہا کہ ملک کے ہوائی اڈوں اور دیگر اہم مقامات پر بالبورڈ نصب کئے جانے چاہئیں ۔اُنہوں نے کہا کہ محکمہ نئی دلّی میں سفیروں کے ساتھ بھی ایک میٹنگ کا اِنعقاد کیاجائے گاتاکہ مختلف ممالک کی طرف سے کشمیر کے بارے میں منفی ایڈوائزری کو ہٹایا جاسکے ۔اُنہوں نے کہا کہ ریاست میں سیاحت کے کافی وسائل موجود ہے تاہم ان کو مکمل طور سے بروئے کار لانے اور ان کی صحیح تشہیر کرنے کی ضرورت ہے ۔ اُنہوں نے سیاحتی محکمہ کو ہدایت دی کہ وہ سیاحوں کی بُکنگ اور رجسٹریشن کے لئے ایک مناسب لائحہ عمل اختیار کریں۔ اِس موقعہ پر مختلف سیاحتی انجمنوں نے کئی معاملات کو اُجاگر کیا جن میں جہازوں کے کرایہ میںمعقولیات لانا ، ہاوس بوٹوں کی تجدید نو کے لئے اِجازت دینا ، جی ایس ٹی کی ادائیگی اور اہم جھیلوں کی بحالی کے معاملات شامل ہیں۔پرنسپل سیکرٹری نے انہیں یقین دِلایا کہ ان کی طرف سے اُجاگرکئے گئے تمام معاملات کو مرحلہ وار طریقے پر پورا کیا جائے گا۔
 
 
 
 
 

انجینئر رشید کا کپوارہ ضلع کا 2 روزہ دورہ

مالکان باغات اور کسانوں کیلئے فوری پیکیج کا مطالبہ 

کپوارہ//اے آئی پی سربراہ اور پف لیڈر انجینئر رشید نے کپوارہ ضلع کے دو روزہ دورے کے دوران لنگیٹ، کپوارہ ، ہندوارہ اور لولاب کے متعدد دیہات کا دورہ کیا اور اس دوران بہت سارے وفود کے ساتھ ملاقات کرکے لوگوں کے مسائل کی جانکاری لی۔ انجینئررشید نے دورے کے بعد اپنے ایک بیان میں سرکار سے مطالبہ کیا کہ وہ کپوارہ ضلع میں گذشتہ چند ہفتوں کے دوران سیلاب اور ژالہ باری کی وجہ سے میوہ باغات اور فصلوں کو پہنچے نقصان کی تلافی کیلئے بھر پور معاوضہ فراہم کرے۔ انہوں نے کہا ــ’’سرکار کو چاہئے کہ وہ یہ بات ہر گز نہ بھولے کہ کپوارہ نہ صرف دور دراز کا علاقہ کے بلکہ سرحدی ضلع ہونے کی وجہ سے اس پورے ضلع کے لوگوں کو گو نا گوں مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔ سرینگر سے کافی دور ہونے کی وجہ سے افسر صاحبان اکثر اوقات اپنے فرائض کی ادائیگی میں کوتاہی برتے ہیں جہاں اسکولوں اور اسپتالوں کی حالت قابل رحم ہے وہاں محکمہ دیہی ترقی ، پی ایچ ای اور پی ڈی ڈی کی کارکردگی انتہائی مایوس کن ہے ۔ سرکار کو چاہئے کہ وہ کپوارہ ضلع کی پسماندگی کو مد نظر رکھتے ہوئے اس ضلع میں درماندہ اور جاری تعمیراتی کاموں کیلئے باقی ماندہ درکار رقومات بغیر کسی تاخیر کے واگذار کریں ‘‘۔انجینئر رشید نے مطالبہ کیا کہ سرکار ہندوارہ لنگیٹ اور لولاب میں طالبات کیلئے ڈگری کالج اور ہریل لنگیٹ میں ایک نرسنگ کالج کا قیام عمل میں لائے۔ انجینئر رشید نے مزید کہا کہ اگر ریاست کے باقی خطوں میں ٍمخصوص جغرافیا کو جواز بنا کر نئے اضلاع کھولے گئے ہیں تو بھلا ہندوارہ کو ضلع کا درجہ کیوں نہیں دیا جا سکتا۔ انجینئر رشید نے گاگل، ہارڈن اور دردپورہ لولب جا کر ان تین خاندانوں سے تعزیت کی جن کے گھروں کے چشم و چراغ گذشتہ پندرہ دنوں کے دوران مختلف قدرتی آفات کا شکار ہو کر انتقال کر گئے ۔ انہوں نے سرکار سے مطالبہ کیا کہ ان تینوں متاثرہ خاندانوں کو بغیر کسی تاخیر کے ایکسگریشا فراہم کیا جائے ۔ 
 
 
 
 

بڑے خاندانوں کے خلاف کارروائی اہم

تب تک کرپشن کا خاتمہ ناممکن: سجاد لون

سری نگر//پیپلز کانفرنس کے چیئرمین سجاد لون نے کہا ہے کہ جب تک ہم بڑے خاندان جیلوں میں نہیں دیکھیں گے تب تک کرپشن کے خلاف کارروائیاں جھوٹ ہیں۔انہوں نے کہا کہ جب تک بڑی مچھلیوں، جو چالیس برسوں سے لوگوں کا خون چوس رہی ہیں، کو جیلوں میں نہیں ڈالا جائے گا تب تک کرپشن کے خلاف کارروائیاں کامیاب نہیں ہوسکتی۔لون نے ان باتوں کا اظہار جمعہ کے روز یہاں میڈیا کے ساتھ بات کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا: 'ہم کرپشن کے خلاف جاری کارروائیوں کی حمایت کرتے ہیں لیکن سارا کرپشن کشمیر میں ہی تو نہیں ہے بلکہ کشمیر کے باہر بھی کرپشن ہے، یہ بات غلط ہے کہ آپ کشمیری ہو اس لئے کرپٹ ہو'۔سجاد لون نے کہا کہ جموں کشمیر بنک کا ستر فیصد پیسہ جموں کشمیر کے باہر ہے۔انہوں نے کہا: 'جموں کشمیر بنک کا ستر فیصد پیسہ جموں کشمیر سے باہر، چھ کروڑ، سات کروڑ، آٹھ کروڑ لیکن ان پر کوئی انگلی نہیں اٹھاتا ہے'۔یو این آئی
 
 
 

 اکشردھام حملہ

ملزم اے ٹی ایس گجرات کے ہاتھوں کشمیر میں گرفتار

احمد آباد// گجرات کے دارالحکومت گاندھی نگر میں اکشر دھام مندر پر ستمبر 2002 میں ہوئے حملے کے ایک ملزم کو ریاستی پولیس کے انسداد دہشت گردی دستہ(اے ٹی ایس) نے کشمیر کے اننت ناگ سے گرفتار کیا۔ اے ٹی ایس کے ایس پی ہمانشو شکلا نے یو این آئی کو بتایا کہ اننت ناگ کے یاسین غلام محمد بھٹ کو خفیہ معلومات کی بنیاد پر مقامی پولیس کے ساتھ مل کر پکڑا گیا ہے۔اسے ہوائی جہاز سے یہاں لایا گیا ہے۔ پہلے بھی اسے پکڑنے کی کوشش کی گئی تھی لیکن  وہ پاکستان کے زیرانتظام کشمیر میں بھاگ جاتا تھا۔انہوں نے بتایا کہ اس سے پوچھ گچھ میں اس حملے جس میں دو حملہ آوروںسمیت 32 لوگوں کی موت ہوئی تھی اور 80 سے زائد افراد زخمی ہو گئے تھے، کی سازش کے بارے میں اہم معلومات حاصل ہوسکے گی۔ واضح رہے کہ اس سے پہلے یہاں ہوائی اڈے سے گزشتہ سال اور 2017 میں دو دیگر ملزمین کو گرفتار کیا گیا تھا۔ اب بھی اس معاملے کے 20 سے زائد ملزمین فرار ہیں۔دارالحکومت گاندھی نگر میں وزیر اعلی کی رہائش کے قریب واقع   اکثردھام مندر پر 24 ستمبر 2002 کی شام کو ہوئے اس حملے  میں ایک خصوصی پوٹا عدالت نے چھ ملزمین کو قصوروار قرار دیتے ہوئے ان میں سے تین کو پھانسی کی سزا سنائی تھی۔ ہائی کورٹ نے بھی سزا کو بحال رکھا تھا لیکن سال 2014 میں سپریم کورٹ نے ان سب کو بری کر دیا تھا۔یواین آئی
 
 
 

مرکز تمام فریقین کے ساتھ مذاکرات شروع کرے

چناب کی آبادی کو درپیش مشکلات پر ساگر کا اظہار برہمی

سرینگر//نیشنل کانفرنس کے جنرل سکریٹری علی محمد ساگر نے خطہ چناب کے 5روزہ دورے کے آخر پر پارٹی عہدیداروں اور کارکنوں کے ایک اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ خطہ چناب کی آبادی زبردست مسائل و مشکلات میں مبتلا ہیں، خطے کے تمام اضلاع میں بنیادی سہولیات کا فقدان ہے، سڑکوں کی حالت ناگفتہ بہہ ہے، ٹرانسپورٹ کا نظام بدترین ہے، بجلی اور پینے کے صاف پانی کی سپلائی پوزیشن ابتر ہے، تعمیر و ترقی کا فقدان ہے، ہسپتالوں کی حالت بھی غیر ہے، لگ بھگ ہر ایک ہسپتال میں عملے کی کمی اور ضروری ساز و سامان کے ساتھ ساتھ ادویات کی قلت سے بیماروں کو زبردست مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ خطے میں گذشتہ4سال میں کوئی بھی تعمیر و ترقی کا پروجیکٹ شروع نہیں کیا گیا ہے اور نہ ہی پہلے سے شروع کئے پروجیکٹوں کو مکمل کیا گیا ہے۔ ۔ انہوں نے کہا کہ پی ڈی پی نے 2014میں الیکشن مہم کے دوران لوگوں کو بہت سارے سبز باغ دکھائے لیکن جب حکومت ہاتھ لگی تو عوام کو یکسر نظر انداز کیا گیا۔ پی ڈی پی بھاجپا کی بدترین حکمرانی نے خطہ چناب کو مزید پیچھے دھکیل دیا گیا۔اس سے قبل نئی دلی کی جموں و کشمیر پالیسی کو ہدف تنقید بناتے ہوئے این سی جنرل سیکریٹری نے کہاکہ مرکز میں بیٹھے بڑے بڑے لیڈران کی طرف سے مسلسل ایسے بیانات دیئے جارہے ہیں جس سے لوگوں کے ذہنوں میں تشویش پیداہورہی ہے۔انہوں نے کہاکہ لوگوں کے جذبات کے ساتھ کھلواڑ نہ کیاجائے۔انہوں نے جموں کشمیر کے سیاسی مسئلے کے حل کیلئے مذاکرات کو اہم قرار دیتے ہوئے مرکزی حکومت پر زور دیاہے کہ تمام فریقین کے ساتھ مذاکرات کا سلسلہ شروع کیاجائے تاکہ مسئلہ کشمیر کے اندرونی اور بیرونی عوامل کا حل نکل سکے۔
 
 
 

مینڈھر میں دلدوز حادثہ | بیٹی کوبچاتے ہوئے ماں خودغرقآب 

جاوید اقبال 

مینڈھر//مینڈھر میں ایک دلدوز حادثے میں خاتون ٹیچرنالہ عبور کرتے ہوئے غرقآب ہوگئی تاہم اس نے ہمت کرکے اپنی 10سالہ بیٹی کو کنارے لگادیا۔45سالہ انصار فاطمہ زوجہ ماسٹر محمد فاروق ساکن سوئیاں مینڈھر جوکے جی بی وی سکول دھار گلون کی وارڈ ن تھی ،سکول سے چھٹی کرنے کے بعد واپس گھر جارہی تھی جس دوران اس کے ہمراہ اس کی10 بچی سعدیہ فاروق بھی تھی۔ اس دوران دونوں ماں بیٹی فسٹ موڑ سوئیاں نالہ کو عبور کررہی تھیں کہ اچانک طغیانی آگئی جس کو دیکھتے ہوئے ماں نے بچی کو دھکادے کر کنارے لگایالیکن وہ خود غرقآب ہوکر لقمہ اجل بن گئی ۔واقعہ کے فوری بعد مقامی لوگوں نے دوڑ کر بے ہوش پڑی دس سالہ بچی کو اٹھاکر ہسپتال منتقل کیاجبکہ اس کی والدہ کی نعش ایک کلو میٹر دور سے بازیاب کی گئی ۔اس واقعہ پر علاقے میں صف ماتم بچھی ہے ۔
 
 
 

گورنر راج کے دوران شکایات کا نمٹارہ

سری نگر//ریاست میں 20؍جون 2018 ء کو گورنر رول کے نفاذ سے لے کر26 ؍جولائی2019 ء تک گریوینس سیل کو80,635شکایات موصول ہوئیں جن میں سے80,235 ( بشمول گورنر رول سے قبل موصول ہوئی) شکایات کو نمٹارے کے لئے متعلقہ محکموں کو بھیجا گیا جبکہ 400شکایات کو نمٹانے کا عمل جاری ہے۔اسی طرح گورنر کی ہدایت کے مطابق تمام مشیر سری نگر اور جموں میں شیڈول کے مطابق وفود اور اَفراد کے ساتھ ملاقات کر کے اُن کے مسائل کے بارے میں جانکاری حاصل کرتے ہیں اور اِن شکایات کے ازالہ پر متعلقہ محکموں کے ساتھ نظر گذر رکھتے ہیں۔
 
 
 
 
 
 
 

طالبات کو دودھ لینے کیلئے بھیجنے پرسرکاری ٹیچر معطل 

سمت بھارگو

راجوری //راجوری میں ایک سرکاری سکول کی ٹیچر کو طالبات کو دودھ لینے کیلئے بھیجنے پر معطل کردیاگیاہے ۔محکمہ تعلیم کے ذرائع نے بتایاکہ ایک ویڈیو سوشل میڈیاپر وائرل ہوئی جس میں گورنمنٹ گرلز مڈل سکول راجوری سٹی کی طالبات کو مارکیٹ میں ایک دکان سے دودھ خریدتے ہوئے دیکھاجاسکتاہے اور وہ پوچھے جانے پر بتاتی ہیں کہ سکول کے ایک ٹیچر نے انہیں اس کیلئے بھیجاہے ۔اس پر کارروائی کرتے ہوئے چیف ایجوکیشن افسر راجوری محمد اشرف راتھر نے سکول ٹیچر ریتا رانی کو معطل کرنے کے احکامات صادر کئے ہیں اور اس معاملے پر تحقیقات شروع کردی گئی ہے ۔