مزید خبریں

گورنر کا زرعی یونیورسٹی کشمیر کا دورہ

زرعی تحقیق وتجربات کوکھیتوں تک پہنچانے پر زور

سرینگر//گورنر ستیہ پال ملک جو کہ شیر کشمیر زرعی یونیورسٹی کے چانسلر بھی ہیں، نے  یونیورسٹی کا دورہ کیا ۔ اُن کے مشیر فاروق احمد خان بھی دورے کے دوران گورنر کے ہمراہ تھے۔گورنر نے حبہ خاتون پی جی گرلز ہوسٹل اور ہارٹی کلچر شعبۂ کے لیبارٹری ولیکچر بلاک بی عمارتوں کا افتتاح کیا۔ گورنر نے ان عمارتوں میں دستیاب سہولیات کا بھی جائیزہ لیا۔گورنر نے یونیورسٹی کی کارکردگی پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے تدریسی حصولیابیوں پر یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر نذیر احمد، اُن کے رفقأ، طالب علموں اور یونیورسٹی کے عملے کی سراہنا کی۔یونیورسٹی عملے اور طالب علموں کے ساتھ تبادلہ خیال کے دوران گورنر نے زرعی شعبۂ میں تحقیق کی اہمیت کو اُجاگر کرتے ہوئے کہا کہ جدید ٹیکنالوجی اور سائنسی رجحان کی مدد سے فصلوں کی پیداوار اور پیداواریت میں اضافہ کر کے کسانوں کو فائدہ پہنچایا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ زرعی یونیورسٹی کی لیبارٹریوں میں جو تحقیق اور تجربات کئے جاتے ہیں اُن کو کھیتوں پر پہنچایا جانا چاہئے۔گورنر نے زرعی سائنسدانوں پر زور دیا کہ وہ ایگری کلچر کی پیداوار میں اضافہ کرنے کے لئے تحقیق پر توجہ مرکوز کریں۔ انہوں نے اس شعبۂ کے طالب علموں پر بھی باور کیا کہ وہ زراعت کو فروغ دینے کے لئے کام کریں۔گورنر نے یونیورسٹی کے اندر قائم کئے گئے سیب اور ناشپاتی کے ہائی ڈینسٹی باغات کا بھی معائنہ کیا۔ پروفیسر نذیر احمد نے گورنر کو ان باغات کی اہمیت اور ان سے حاصل کی جانے والی پیداوار کے بارے میں جانکاری دی۔اس سے قبل یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر نذیر احمد نے یونیورسٹی میںجاری تدریسی اور تحقیقی سرگرمیوں کے علاوہ مستقبل کے منصوبوں کے بارے میں بھی گورنر کو تفصیلات دیں۔
 
 
 

بابا غلام شاہ یونیورسٹی وائس چانسلراورسیکرٹری مال گورنرسے ملاقی

سرینگر//محکمہ مال کے سیکرٹری شاہد عنائت اللہ اوربابا غلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر جاوید مسرت نے یہاں راج بھون میںگورنر ستیہ پال ملک کے ساتھ ملاقات کی۔ شاہد عنائت اللہ نے محکمہ کی مجموعی کارکردگی اور ڈیجیٹل اِنڈیا لینڈ ریکارڈز مارڈنائزیشن پروگرام کی پیش رفت کے علاوہ سرکاری اراضٰ سے تجاوزات کو ہٹانے کے لئے کئے جارہے اقدامات کے بارے میں جانکاری دی۔گورنر نے لینڈ ریکارڈز کے رکھ رکھاؤ اور انہیں بروقت لوگوں کے لئے دستیاب رکھنے کی اہمیت پر زور دیا۔بابا غلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر جاوید مسرت نے یہاں راج بھون میںگورنر ستیہ پال ملک کے ساتھ ملاقات کی۔پروفیسر مسرت نے گورنر کو یونیورسٹی کی تدریسی سرگرمیوں اور طالب علموں کو معیاری تعلیم فراہم کرنے کے لئے قائم کی گئی سہولیات کے بارے میں جانکاری دی۔گورنر نے یونیورسٹی کو علم و ادب کا گہواہ بنانے اور تحقیق، تدریس اور کھیل کود کے علاوہ غیر نصابی سرگرمیوں پر توجہ مرکوز کرنے کی تلقین کی۔
 
 
 
 
 

انجینئررشید کاNHPCپر لوگوں کی جانوں کے ساتھ کھلواڑ کاالزام

اوڑی دورے کے دوران عوامی اتحادپارٹی سربراہ کئی عوامی وفود سے ملاقی

اوڑی //عوامی اتحاد پارٹی کے سربراہ انجینئررشیدنے نیشنل ہائیڈروالیکٹرک کارپوریشن (این ایچ پی سی) پر لاپرواہی کاالزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ انہیں انسانی جانوں کی کوئی پرواہ نہیں ہے اور اس کی غفلت شعاری کی وجہ سے متعددحادثات میں اب تک ایک درجن سے زیادہ افراد کی جانیں چلی گئی ہیں۔اوڑی دورے کے دوران انورشاہ جن کی جوان سال بیٹی روبینہ بانو این ایچ پی سی کی مبینہ لاپرواہی کی وجہ سے پانی کے ریلے میں بہہ کر جان بحق ہوگئی ،سے تعزیت پرسی کرتے ہوئے انجینئررشیدنے تعزیتی اجتماع میں کہا’’یہ بات باعث افسوس ہے کہ این ایچ پی سی کے حکام کو مقامی لوگوں کی زندگیوں سے کھلواڑ کرنے کی پوری چھوٹ دی گئی ہے ۔ اگر چہ حکام کو جب بھی سلام آباد کے سربند سے اضافی پانی دریا کی طرف چھوڑنا ہوتا تھا تو وہ سائرن بجا کر مقامی آبادی کو خبردار کرتے تھے لیکن چند مہینوں سے ایسا نہیں کیا جا رہا ہے جس کی وجہ سے دریا کے پانی کی مقدار میں اچانک کئی گنا اضافہ ہو جاتا ہے اور مقامی آبادی کی زندگی خطرے میں پڑ جاتی ہے ۔ ایسی ہی لاپرواہی کی وجہ سے روبینہ بانو پانی کے ریلے میں بہہ گئی کیونکہ اسے تب تک پتہ بھی نہیں چلا جب تک کہ پانی کے بہت بڑے ریلے نے اسے دبوچ لیا ‘‘۔ انجینئر رشید نے این ایچ پی سی حکام سے مطالبہ کیا کہ وہ بغیر کسی تاخیر کے تمام تفاصیل منظر عام پر لا کر بتا دیں کہ آخر مقامی آبادی کو این ایچ پی سی سے اب تک کون سے فوائد ملے ہیں ۔ انہوں نے افسوس کا اظہار کیا کہ CRSکے تحت بھی این ایچ پی سی مقامی آبادی کو کوئی راحت دینے میں بری طرح ناکام ہو چکی ہے۔اوڑی دورے کے دوران انجینئررشید نے دچھی ، بسگران، گینگل اور دیگر دیہات جا کر کئی وفود سے ملاقات کی اور لوگوں کی مشکلات کا جائزہ لیا۔ بعد ازاں انجینئر رشید نے سرینگر میں زبرون پارک میں نوجوانوں کے ایک دلکش پروگرام میں مہمان خصوصی کے طور شرکت کی جہاں بہت سارے نوجوانوں کو ان کی مختلف نمایاں کارکردگیوں کیلئے ایوارڈوں سے نوازا گیا۔ مونٹ ایورسٹ کو سر کرنے والی ریاست کی پہلی جواں سال طالبہ ناہدہ منظور کو ایوارڈ پیش کرتے ہوئے انجینئر رشید نے کہا کہ کشمیر کے نوجوانوں میں ٹیلنٹ کی کوئی کمی نہیں اور اگر انہیں مواقعے ملیں تو دنیا کے کسی بھی حصے میں اپنا لوہا منوا سکتے ہیں۔
 
 
 

آر ٹی آئی ایکٹ میں مجوزہ ترامیم 

 حق اطلاعات تحریک کیلئے مہلک دھچکا:نیشنل کانفرنس

سرینگر// نیشنل کانفرنس نے حق اطلاعات قانون میں مجوزہ ترامیم کو حق اطلاعات تحریک کیلئے مہلک دھچکا قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس سے انفارمیشن کمیشن کی خودمختاری اور غیر جانبداری ختم ہوجائے گی۔ پارٹی کے رکن پارلیمان جسٹس حسنین مسعودی نے لوک سبھا میں آر ٹی آئی ایکٹ میں مجوزہ ترمیمی بل پر بحث میں حصہ لیتے ہوئے جمہوری نظام میں حق اطلاعات قانون کی ا ہمیت اُجاگر کرتے ہوئے کہا کہ RTIایکٹ2005میں تاریخ میں آئین کے بعد دوسرا بڑا سنگ میل تھا، جس نے غریب سے غریب تر کو انتظامیہ میں ایک رول اور اطلاعات حاصل کرنے کا حق فراہم کیا تھا۔مسعودی نے قانونی طور پر سی آئی سی اور انفارمیشن کمشنروں کو دیئے گئے اختیارات سے کمیشن پر دبائو کی کوئی گنجائش نہیں اور جو ادارے کی خودمختاری کی ضمانت ہے۔ جب قواعد و ضوابط کے اختیارات حکومت پر چھوڑ دیئے جائیں گے تو حکومت بالواسطہ طور پر وہ سب کچھ انجام دینے کیلئے آزاد ہوگی جو وہ براہ راست نہیں کرسکتی۔ حسنین مسعودی نے مزید کہا کہ ایکٹ میں ترمیم کرنے کی کوئی وجوہات موجود نہیں اور یہ اقدام ادارے کی تنزلی کا سبب بنے گا۔انہوں نے ایوان کو مطلع کیا کہ نیشنل کانفرنس اس ترمیم کے خلاف ہے۔
 
 
 

شفافیت کی تحریک پر حملہ :تاریگامی

سرینگر//کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا(مارکسسٹ) کے رہنما محمدیوسف تاریگامی نے حق اطلاعات قانون میں ترمیم کی بل کو راجیہ سبھامیں آر ٹی آئی کارکنوں کی مخالفت کے باوجود پاس کرنے کو بھاجپا حکومت کی طرف سے شفافیت تحریک پر ایک حملہ سے تعبیر کیا۔ایک بیان میں تاریگامی نے کہا کہ یہ ترمیم اطلاعات کے جمہوری حق پر حملہ ہے اورمودی حکومت انفارمیشن کمیشن پر تسمہ باندھناچاہتی ہے تاکہ اس کی آزادی کوسلب کیاجائے ۔حق اطلاعات قانون(ترمیمی)بل 2019مرکزی حکومت کو مرکزی انفارمیشن کمیشن اورریاستی انفارمیشن کمیشنوں میں کمشنروں کی تعیناتی،معیاد ملازمت ،تنخواہ،الائونس اور دیگر سہولیات طے کرنے کااختیار دیتا ہے ۔تاریگامی نے کہا کہ یہ بنیادی طور انفارمیشن کمیشن ادارے کو کمزوربنادے گاکیونکہ اس سے یہ آزادانہ طور کام کرنے کے قابل نہیں ہوگا۔ انفارمیشن کمشنروں کی حکومت کے ناموافق اطلاعات کو ظاہرکرنے کی ہدایات سے ان کی معیاد  ملازمت ،تنخواہ ودیگر مراعات میں تخفیف ہوسکتی ہے ۔اس بل کا مقصد انفارمیشن کمیشن کے اختیارات کو کمزور کرنا ہے جنہوں نے ماضی میں حکومت کو بے چین کیاہے۔
 
 
 

شرما جی ایس ٹی کونسل کی 36 ویں میٹنگ میں شریک

سرینگر//گورنر کے مشیر کے۔ کے شرما نے  جی ایس ٹی کونسل کی 36 ویں میٹنگ میں ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے شرکت کی جو مرکزی وزیر خزانہ نرملا سیتا رمن کی صدارت میں منعقد ہوئی۔ میٹنگ کے دوران الیکٹرک گاڑیوں کے جی ایس ٹی کو12 فیصد سے کم کر کے5 فیصد کرنے اور الیکٹرک گاڑیوں کے چارجز کو18 فیصد سے کم کر کے5 فیصد کرنے کا فیصلہ لیا گیا۔مشیر موصوف نے کہا کہ الیکٹرک گاڑیوں پر جی ایس ٹی کی شرحوں کو کم کرنے سے ریاست میں ماحولیات کی آلودگی کو کم کرنے میں کافی مدد ملے گی۔میٹنگ میں کمشنر کمرشل ٹیکسز جے اینڈ کے پی کے بھٹ نے بھی شرکت کی۔
 
 
 

عمر عبداللہ اور محبوبہ مفتی وادی میں خوف پھیلارہے ہیں :رویندررینہ

سرینگر //  بی جے پی کے ریاستی صدر رویندر رینہ نے مرکزی سرکار کی طرف سے وادی میںاضافی فورسز کی تعیناتی کواسمبلی الیکشن عمل کیساتھ جوڑتے ہوئے سابق وزرائے اعلیٰ عمر عبداللہ اور محبوبہ مفتی پر الزام عائد کیا کہ دونوں لیڈران عوام میں کنفیوژن پیدا کرکے لوگوں کے قلب و ذہن میں خوف اور ڈر کا ماحول پیدا کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔  بی جے پی کے ریاستی صدر رویندر رینا نے مرکزی سرکار کی طرف سے وادی میں اضافی فورسز کی تعیناتی کو اسمبلی الیکشن کیساتھ جوڑدیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آنے والے دنوں میں ریاست جموں وکشمیر میں اسمبلی الیکشن منعقد کئے جارہے ہیں جن کے پرامن انعقاد کیلئے فورسز کی اضافی نفری مطلو ب ہے۔ انہوں نے سابق وزرائے اعلیٰ عمر عبداللہ اور محبوبہ مفتی پر الزام عائدکیاکہ دونوں لیڈران لوگوں کے دلوں میں خوف اور ڈر کا ماحول پیدا کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔انہوں نے دعویٰ کیا کہ کشمیرمیں بی جے پی کا کھاتہ کھلنے والا ہے اورجموں وکشمیر میں اگلی حکومت بی جے پی کی ہوگی۔ رویندر رینا کا کہنا تھا کہ ہم مضبوط اکثریت کیساتھ حکومت میں آئیں گے اور جموں وکشمیر میں اگلی حکومت بی جے پی کی ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ ترال علاقے میں سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ نے اس بات کا خلاصہ کیا تھا کہ اب کشمیر میں بی جے پی سرکار آئیگی۔ میں عمر عبداللہ سے کہنا چاہتا ہوں کہ آپ نے بالکل ٹھیک کہا ، بی جے پی کشمیر میں ضرور آئیگی کیوں کہ جموں وکشمیر میں اگلی حکومت بی جے پی کی ہی ہوگی اور وہ بھاری اکثریت کیساتھ ہوگی۔انہوں نے کہا کہ بی جے پی ’’سب کا ساتھ، سب کا وکاس اور سب کا وشواس‘‘ چاہتی ہے ۔
 
 
 

دہلی مہم جوئی کو ناقابل قبول حد تک طول دے رہی ہے :سجاد لون 

سرینگر//مرکزی حکومت کی طرف سے فورسز کی اضافی سو کمپنیوں کو ریاست میں تعینات کر نے کے فیصلہ پر رد عمل ظاہر کرتے ہوئے پیپلز کانفرنس کے چیر مین سجاد غنی لون نے کہاہے کہ اس خبر سے لوگوں میں زبر ست خوف و ہراس پھیل گیا ہے۔ ایک بیان میں سجاد غنی لون نے کہا ہے کہ کسی بھی شخص کو کوئی خفیف سے آئیڈیا نہیں ہے کہ ہو کیا رہا ہے اور شدید خدشات کے بیچ یہ افواہ گرم ہے کہ شاید ریاست کی خصوصی پوزیشن کو ختم کیا جا رہا ہے۔دفعہ35 Aکے ساتھ چھیڑ چھاڑ کی افواہیں تیزی سے پھیل رہی ہیں اور ریاستی و مرکزی حکو متوں کی جانب سے بھی ا س پرلب کشائی نہیں ہو رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ اگر وقت کی حکومت کے ارادے کچھ ایسے ہیں تو یہ مہم جوئی کو نا قابل قبول حد تک طول دینے کے مترادف ہو گا۔میں یہ سمجھنے سے قاصر ہو ں کہ کشمیری عوام کو کیوں مشتعل کیا جا رہا ہے ؟کشمیر ایک کو نے میں موجود ایک چھوٹا سا علاقہ ہے جو اپنے ہی مسائل میں گرا ہوا ہے پھر بھی آجکل قومیت کی تشریح کشمیریوں کیلئے شدید نفرت ،تحقیر اور توہین سے کی جارہی ہے۔بھارت جیسے بڑے ملک میں ٹیلی ویڑن چینلیں اپنے اشتہاری سر مایہ کیلئے کشمیریوں کے خلاف گالی گلوچ پر انحصار کرتی ہیں۔یہ واقعتا ایک افسوسناک صورتحال ہے اور حالات کو ’’دائمی اکثریتی بالادستی سینڈروم‘‘ کی طرف لے جارہی ہے۔سجاد غنی لون نے کہا کہ کشمیریوں کو ہر طرف سے نا قابل تصور زیادتیوں کا شکار بنایا گیا ہے اور جبکہ وہ اپنی زندگی کو آگے لے جانے کی تگ و دو میں ہیں نئی دلی انہیں جان بوجھ کر ستانے لگتی ہے۔یہ ایسا ہی ہے جیسے ایک بلین لوگ چند ملین کشمیریوں پر حملہ آور ہوکر اس بات پر تفاخر میں مبتلا ہوں کہ کشمیریوں کو سبق سکھائیں۔اس طرح کا رویہ ہر گز شجاعت کی عکاسی نہیں کر تا بلکہ اس سے بزدلی کی بو آتی ہے۔ستم ظریفی کی بات یہ ہے کہ یہ ایک بلین لوگ نہیں ہیں جو کشمیری عوام پر ہندوستانیت کی تعریف مسلط کر رہے ہوں بلکہ کچھ تجربیت پسند جو ہلاکت خیز تجربات کر تے کرتے ابھی تھک نہیں گئے ہیں۔ریاست کی خصوصی پوزیشن کے ساتھ ایک تاریخ وابستہ ہے۔اس میں اعتماد اور وقار پنہاں ہے اور ایسے وعدوں کے ساتھ بے وفائی کر نے سے دہلی کے تئیں عدم اعتمادی اور غم و غصہ میں اضافہ ہو گا۔پیپلز کانفرنس چیر مین نے مذید کہا کہ کشمیر پچھلی تین دہائیوں سے تشدد اور تنازعہ کا مر کز رہا ہے جس سے یہاں ہزاروں جا نوں کا اتلاف ہواہے اور وقت کا تقاضا ہے کہ اس جگہ کی تعمیر نو ہو اور غم وغصہ کو کم کر نے کیلئے یہاں کے عوام کے ساتھ بات چیت کی جائے۔کشمیر کے سیا سی پیش منظر کی صاف صاف حدود ہیں۔کچھ لوگ بھارتی آئین کو تسلیم کر تے ہیں کہ اور سمجھتے ہیں کہ ان کا مستقبل بھارت کے ساتھ محفوظ ہے اور دیگر ایسے ہیں جو بھارتی آئین کو قبول نہیں کر تے اور سمجھتے ہیں کہ ان کا مستقبل کسی دوسری جگہ سے وابستہ ہے۔کوئی مہم جو ئی ایسے لوگوں کی اعتباریت کو ختم کر دے گی جو بھارت کے تصور میں یقین رکھتے ہیں۔اس مہم جوئی کا مطلب ہندوستانیت کے تصور میں اعتماد رکھنے والے لوگوں کیلئے مستقبل کے دسیوں سال میں تشدد اور توہین میں سر مایہ کا ری ہوگا۔
 
 
 

۔608عازمین پر مشتمل ایک اورقافلہ سعودی عرب روانہ

بڈگام//سٹیٹ حج کمیٹی کے مطابق 608عازمین پر مشتمل ایک اورقافلہ سرینگر بین الاقوامی ہوائی اڈے سے چار سپائس جٹ اُڑانوںمیںسفر محمود پر روانہ ہوا۔ان میں345مرد اور263خواتین عازمین حج شامل ہیں۔ضلع انتظامیہ بڈگام کے علاوہ حج کمیٹی کے آفیسران اور دیگر سینئر آفیسران نے ہوائی اڈے پر عازمین کرام کو رخصت کیا۔
 
 
 

۔3142یاتریوں نے گپھا میں حاضری دی

سرینگر//شری امر ناتھ جی یاترا کے27 ویں روز 3142یاتریوں نے پوتر گپھا میں حاضری دی۔یاترا شروع ہونے سے اب تک317726 شردھالوؤں نے پوتر گپھا میں شو لنگ کے درشن کئے ہیں۔
 
 
 

سرینگر لہہ شاہراہ پر2 روزبعد ٹریفک بحال

کنگن//غلام نبی رینہ//سرینگر لہہ شاہراہ کو دوروزتک بند رہنے کے بعدسنیچر کی شام گاڑیوں کی آمدرفت کے لئے بحال کردیا گیا جس کے ساتھ ہی دراس اور سونہ مرگ سے سینکڑوں چھوٹی  گاڑیوںکو دونوں طرف سے روانہ کیا گیا ۔کشمیر عظمی کو ملی تفصیلات کے مطابق شدید بارشوں کی وجہ سے زوجیلا کے مندر موڈ پر دو روز قبل بادل پھٹنے کے نتیجے میں پسیاں گرآنے کی وجہ سے شاہراہ احتیاطی طور گاڑیوں کی آمد رفت کے لئے بند کی گئی تھی جس کی وجہ سے دراس اور سونہ مرگ میں سینکڑوں مسافر اور مال بردار گاڑیاں درماندہ ہوکررہ گئی تھیں۔
 
 
 

بیروہ میں بجلی کرنٹ لگنے سے نوجوان ہلاک 

بڈگام //سعدی پورہ بیروہ بڈگام میںایک30سالہ نوجوان بجلی کرنٹ لگنے سے بری طرح زخمی ہوا ،اگر چہ نوجوان کو شدیدزخمی حالت میں فوری طور اسپتال منتقل کرنے کوشش کی گئی تاہم وہ زخموں کی تاب نہ لا کر انتقال کرگیا ۔ اس دوران نوجوان کے موت کی خبر پھیلتے ہی علاقے میں کہرام مچ گیا ۔ پولیس نے واقع کے حوالے سے ایک کیس درج کر کے تحقیقات شروع کر دی ۔
 
 
 
 
 
 

رام بن میں وی ڈی سی اہلکار کی خودکشی کی ناکام کوشش

بانہال //محمد تسکین // رامبن کے کینٹھی علاقے میں دیہی دفاعی کمیٹی کے ایک رکن نے اپنی جان لینے کیلئے اپنی تھری ناٹ تھری سروس رائفل سے خود پر گولی چلائی جس کی وجہ وہ شدید زخمی ہوا ہے اور اسے شدید زخمی حالت میں رام بن ضلع ہسپتال سے میڈیکل کالج جموں منتقل کیا گیا ۔ رام بن کے کینٹھی علاقے میں یہ واقعہ سنیچر کی صبح ساڑھے نو بجے کے قریب اس وقت پیش آیا جب گولی چلنے کی آواز سے لوگ دیہی دفاعی کمیٹی ممبر کے گھر کی طرف متوجہ ہوئے۔ عینی شاہدین نے بتایا کہ پیٹ کے نچلے حصے میں تھری ناٹ تھری رائفل سے نزدیک سے چلائی گئی گولی سے ولیج ڈیفنس کمیٹی ممبر37 سالہ سرجیت سنگھ ولد دھرم سنگھ ساکنہ کینٹھی ضلع وتحصیل رام بن شدید زخمی ہواتھا اور اُسے قریبی رشتہ داروں اور مقامی لوگوں کی مدد سے ضلع ہسپتال رام بن پہنچایا گیا جہاں ابتدائی طبی امداد کے بعد اُسے انتہائی شدید زخمی حالت میں گورنمنٹ میڈیکل کالج جموں منتقل کیا گیا ۔ پولیس نے اس انتہائی اقدام کی وجوہات جاننے کیلئے تحقیقات شروع کی ہے۔ اس سلسلے میں اس کہانی نے اسوقت ایک نیا موڑ لیا جب زخمی دفاعی کمیٹی اہلکار کی اہلیہ نے پولیس پر الزام لگایا کہ پولیس سرجیت سنگھ کو پچھلے کئی روز سے کسی کیس میں بیان دینے کیلئے تھانے آنے کیلئے دباو ڈال رہی تھی اور بظاہر اسی دباو کے سامنے اپنی جان دینے کے انتہائی اقدام پر مجبور ہوا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ علاقے میں پچھلے دنوں ایک شخص مبینہ طور پر گرجانے کی وجہ سے ہلاک ہوا تھا اور اس سلسلے میں پولیس پوچھ تاچھ کر رہی ہے اور سرجیت سنگھ کو بھی اسی سلسلے میں تھانے آنے کیلئے کہا جارہا تھا ۔ 
 
 

ڈوڈہ میں مکان ڈھہ جانے سے خاتون ہلاک ، بیٹا زخمی

جموں// ضلع ڈوڈہ میں ہفتے کی صبح ایک رہائشی مکان بھاری بھرکم چٹان کی زد میں آنے سے ایک عمر رسیدہ خاتون ہلاک جبکہ اس کا بیٹا زخمی ہوا۔چٹان کی زد میں آنے سے قریب پچیس بھیڑ بکریاں بھی ہلاک ہوئیں۔ذرائع نے بتایا کہ ڈوڈہ کے بگار علاقے میں ہفتے کی صبح رات بھر کی بارشوں کے باعث ایک رہائشی مکان بھاری بھر کم چٹان کی زد میں آگیا جس کے نتیجے میں ایک عمر رسیدہ خاتون اور اس کا بیٹا ملبے کے نیچے دفن ہوگئے۔انہوں نے بتایا کہ مقامی لوگ فوری طور پر جائے واردات پر جمع ہوئے اور بچاؤ کارروائیاں شروع کرکے ماں بیٹے کو ملبے سے نکال کر نزدیکی پرائمری ہیلتھ سینٹر پہنچایا جہاں سے انہیں گورنمنٹ میڈیکل کالج و ہسپتال ڈوڈہ ریفر کیا گیا۔تاہم ہسپتال میں اچھری دیوی نامی زخمی خاتون زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ بیٹھی جبکہ مشر داس نامی اس کا بیٹا زیر علاج ہے۔دریں اثنا جنوبی کشمیر کے ضلع شوپیان کے ترال کے بالائی علاقے میں بادل پھٹنے سے قریب ایک سو بھیڑ بکریاں ہلاک ہوئیں۔پولیس ذرائع نے بتایا کہ ترال کے برادی آنگن میں گذشتہ شب بادل پھٹنے سے قریب ایک سو بھیڑ بکریاں ہلاک ہوئیں۔انہوں نے بتایا تاہم اس آفت سے کسی انسانی جان کا زیاں نہیں ہوا۔یو این آئی
 
 
 
 

کشمیر پر ٹرمپ کا اظہار اور مودی کی پیش کش

 راج ناتھ سنگھ کابیان حقیقت سے بعید:سوز

سرینگر//پردیش کانگریس رہنمااور سابق مرکزی وزیر پروفیسر سیف الدین سوزنے مرکزی وزیردفاع راج ناتھ سنگھ کے اس بیان کہ وزیراعظم نریندر مودی نے امریکی در ڈونالڈ ٹرمپ کو مسئلہ کشمیر پر ثالثی کو کوئی پیش کش نہیں کی تھی ،کوحقیقت سے بعید قرار دیتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم نریندرمودی نے امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کو اوساکاجاپان میںجی20ملاقات کے دوران ثالثی کی تجویزرکھی تھی۔سوزنے ایک بیان میں کہا کہ اس حوالے سے پریس ٹرسٹ آف انڈیا واشنگٹن نے 23جولائی 2019کواس بات کی تصدیق کی کہ ڈونالڈ ٹرمپ نے دعویٰ کیا کہ وزیراعظم مودی نے اُنہیں مسئلہ کشمیرکے حوالے سے اُنہیں ثالثی کرنے کی پیش کش کی ہے۔ اس سلسلے میں 22/23 جولائی 2019 کووائٹ ہاوس میں امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی پاکستانی وزیر اعظم عمران خان کے ساتھ ہوئی ملاقات کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئی ہے جس میں ٹرمپ نے خود اس بات کی تصدیق کی ہے کہ مودی نے انہیں کشمیر کے بارے میں ثالثی کرنے کے لئے کہاتھا۔ اُن کا یہ بھی کہا تھا کہ انہوںنے اُس موقع پر زور دیا تھا کہ اگر دونوں ممالک مسئلہ کشمیر پر ثالثی چاہتے ہیں تو وہ یہ کام کرنا پسند کریں گے۔
 
 
 

اساتذہ کی تبدیلیوں پر2 ماہ تک پابندی عائد

سرینگر//گور نرکے مشیر فاروق خان نے اساتذہ بشمول ماسٹر اور لیکچراروں کی تبدیلی عمل میں لانے پر2 ماہ کی پابندی عائد کرنے کے احکامات دیئے ہیں۔یہ احکامات انہوں نے یہاں سول سیکرٹریٹ میں ایک میٹنگ کے دوران دیئے جو سکولی تعلیم محکمہ کی کارکردگی کا جائیزہ لینے کے لئے طلب کی گئی تھی۔فاروق خان نے میٹنگ میں موجود افسروں کو ہدایت دی کہ تدریسی عملے کی تبدیلی یا تقرری کے لئے کوئی بھی درخواست مناسب چینل کے ذریعے وصول کی جانی چاہئے۔انہوں نے کہا کہ کسی خاص معاملے میں اس طرح کا رویہ اپنایا جاسکتا ہے البتہ پراپر چینل کے بغیر کوئی بھی ایسی درخواست قبول نہیں کی جائے گی۔انہوں نے اسکولوں میں غیر تدریسی سرگرمیوں کے لئے تعینات کئے گئے اساتذہ ، ماسٹروں اور لیکچراروں کے اعداد وشمار سے متعلق تفصیلات اور وجوہات طلب کیں۔ انہوں نے کہا کہ جو بھی تدریسی عملہ چیف ایجوکیشن افسروں یا زونل ایجوکیشن افسروں کے دفاتر کے ساتھ منسلک کیا گیا ہے اُس کو اپنی تقرری کی اصل جگہ تعینات کیا جانا چاہئے۔انہوں نے کہا کہ ایسے عملے کو ضرورت کی جگہوں پر تعینات کیا جانا چاہئے۔انہوں نے محکمہ تعلیم کی صوبائی ناظمین کو ہدایت دی کہ وہ متعلقہ چیف ایجوکیشن افسروں اور زونل ایجوکیشن افسروں کے ساتھ ماہانہ بنیادوں پر میٹنگیں منعقد کر کے سکولوں کی کارکردگی کا جائیزہ لیا کریں۔مشیر موصوف نے افسروں سے کہا کہ وہ تعلیمی نظام کے فروغ میں پائی جانے والی خامیوں کی نشاندہی کر کے انہیں دُور کرنے کے اقدامات کریں۔فاروق خان کو سکولی تعلیم کے فروغ اور بچوں کے سکول چھوڑنے کے رجحان پر قابو پانے کے لئے اُٹھائے جارہے اقدامات کے بارے میں تفصیلی جانکاری دی گئی۔میٹنگ میں مختلف مرکزی معاونت والی سکیموں کی عمل آوری کا بھی جائیزہ لیا گیا۔مشیر نے تعلیمی سیکٹر میں انسانی وسائل کے انتظام کی سیل قائم کرنے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ اس سیل میں تدریسی عملہ اپنی شکایات درج کراسکتا ہے تا کہ اُن کا بروقت ازالہ کیا جاسکے۔انہوں نے ریاست میں ماڈل سکول شروع کرنے کے لئے طریقہ کار طے کرنے پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ان سکولوں میں بچوں کو بہترین سہولیات فراہم کی جاسکتی ہیں۔میٹنگ میں کمشنر سیکرٹری سکولی تعلیم سریتا چوہان، چیئرپرسن بورڈ آف سکول ایجوکیشن وینا پنڈتا اور ناظم تعلیم کشمیر محمد یونس ملک کے علاوہ دیگر افسران بھی موجود تھے۔
 
 
 
 
 

نرسنگ کالج بارہمولہ میں ہر سال60 طلاب کیلئے گنجائش ہوگی

وجے کمارنے سوپور اوردلنہ میں زیر تعمیر کالجوں کا جائزہ لیا

بارہ مولہ//گورنر کے مشیر کے وجے کمار نے بارہمولہ کے دورے کے دوران ضلع کے سوپور اور دلنہ علاقوں میں زیر تعمیر گورنمنٹ نرسنگ کالجوں کے کام کی پیش رفت کا جائیزہ لیا۔پرنسپل سیکریٹری صحت و طبی تعلیم اتل ڈُلو اور ڈپٹی کمشنر بارہ مولہ ڈاکٹر جی این ایتو مشیر کے ہمراہ تھے۔سوپور میں نرسنگ کالج کی تعمیر کا جائیزہ لینے کے دوران مشیر کو بتایا گیا کہ کالج کی تعمیر پر5.50 کروڑ روپے کی لاگت آنے کا اندازہ ہے۔ مشیر کو بتایا گیا کہ کالج میں داخلہ لینے والے طالب علموں کو پیرا میڈیکل تربیت فراہم کی جائے گی اور اس کالج میں ہر سال60 طالب علموں کے داخلے کی گنجائش ہوگی۔اس موقعہ پر مشیر نے عمل آوری ایجنسی کو مزید افراد قوت اور مشینیں کام پر لگانے کی ہدایت دیتے ہوئے اس پروجیکٹ کے کام میں سرعت لانے کے لئے کہا۔ انہوں نے متعلقہ افسروں کو یہ پروجیکٹ مقررہ مدت کے اندر مکمل کرنے کی ہدایت دی تا کہ کالج عمارت اگلے سیشن تک مکمل طور تیار ہوسکے۔دلنہ میں مشیر کو گورنمنٹ نرسنگ کالج کی تعمیر کے بارے میں مکمل جانکاری دی گئی جس پر4.50 کروڑ روپے لاگت آنے کا اندازہ ہے۔ اس موقعہ پر بتایا گیا کہ کالج پر تعمیر کا کام جون2018 میں شروع کیا گیا او ر اس کو مارچ2020 میں مکمل کئے جانے کی توقع ہے۔مشیر نے افسروں سے تلقین کی کہ وہ لگن اور تندہی کے ساتھ کام کر کے اس پروجیکٹ کو مقررہ مدت کے اندر مکمل کریں۔دریں اثنا کے۔ وجے کمار نے کئی عوامی وفود کے ساتھ ملاقات کی جنہوں نے اپنی ترقیاتی ضروریات اُن کی نوٹس میں لائی۔ وفو دنے تعلیم یافتہ بے روز گار نوجوانوں کے لئے روز گار کے مواقعے فراہم کرنے کا مطالبہ کیا۔مشیر موصوف نے انہیں یقین دلایا کہ اُن کے جائیز مطالبات پر ہمدردانہ غور کے بعد مناسب کاروائی کی جائے گی۔بعد میں کے۔ وجے کمار نے گورنمنٹ میڈیکل کالج بارہ مولہ پر جاری کام کا بھی جائزہ لیا جہاں انہیں متعلقہ افسرو ں نے پروجیکٹ کے بارے میں تفصیلار دیں۔ مشیر نے اس پروجیکٹ پر ڈبل شفٹ میں کام کرنے کی تلقین کی تا کہ اسے جلد از جلد مکمل کیا جاسکے۔
 
 

گورنر کا صحافی راہل جلالی کو خراج عقیدت 

محکمہ اطلاعات کا سوگوار کنبے سے اظہار یکجہتی

سرینگر//گورنر ستیہ پال ملک نے معروف صحافی راہل جلالی کے فوت ہونے پر تعزیت کا اظہار کیا ہے۔ایک تعزیتی پیغام میں گورنر نے سوگوار کنبہ کے ساتھ ہمدردی ظاہر کرتے ہوئے آنجہانی کی روح کے سکون کے لئے دعاکی ہے۔محکمہ اطلاعات و رابطہ عامہ کے افسروں اور ملازمین کا ایک تعزیتی اجلاس منعقد ہوا جس میں معروف صحافی اور قلمکار راہل جلالی کوخراج عقیدت پیش کیا گیا۔جلالی آج صبح نئی دہلی میں انتقال کر گئے۔یہ افسوسناک خبر سنتے ہی نظامت اطلاعات کے دفتر میں ناظم اطلاعات گلزار احمد شبنم کی صدارت میں ایک تعزیتی اجلاس منعقد ہوا جس میں مقررین نے صحافت کے تئیں آنجہانی کی خدمات کو یاد کیا۔مقررین نے کہا کہ آنجہانی نے صحافت کے شعبۂ میں اپنا ایک منفرد مقام پیدا کیا ہے جس کو آنے والے وقت میں بھی یاد رکھا جائے گا۔انہوں نے پریس کلب آف انڈیا نئی دہلی کے صدر کی حیثیت سے بھی اپنی خدمات انجام دی ہیں۔ نیشنل پنتھرس پارٹی کے سربراہ پروفیسر بھیم سنگھ نے سینئر صحافی راہل جلالی کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ اُن کے والد پی این جلالی ترقی پسند نظریات رکھنے والے چوٹی کے صحافی تھے۔ بھیم سنگھ نے غمزدہ کنبہ کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ جموں وکشمیر کو ایسے انقلابی صحافیوں کی ضرورت ہے تاکہ ریاست میں امن بحال ہوسکے۔
 
 

میر واعظ مولانا عتیق اللہ شاہ ؒکا یوم وصال  کی مجلس

راجوری کدل میں تقریب منعقد،اورینٹل کالج میں قرآن خوانی 

سرینگر//خطہ کشمیر کے ایک بلند پایہ عالم دین ، روحانی پیشوا اور ہر دلعزیز  عوامی شخصیت انجمن نصرۃ الاسلام کے سابق صدر میر واعظ کشمیر مولانا عتیق اللہ شاہ  ؒ کے 56 واں یوم وصال کل نہایت عقیدت و احترام کے ساتھ منایا گیا ۔ اس سلسلے میں انجمن کے مرکزی Auditoriumراجوری کدل پر ایک تقریب منعقد ہوئی جس میں انجمن کے عہدیداران اور ذمہ داران نے اساتذہ اور طلباء کے اجتماع میں تقریر کرتے ہوئے مرحوم میرواعظ عتیق اللہ شاہ کو انجمن کے تئیں  ان کی گراں قدر تعلیمی خدمات اور انجمن کے حوالے سے بیش بہا اصلاحات کو شاندار الفا ظ میں خراج عقیدت ادا کرتے ہوئے آپ کے دور صدارت کو انجمن کے لئے ہر لحاظ سے ناقابل فراموش اور زریں دورGolden period قرار دیااور آپ کے روشن کار ناموں کی سراہنا کی ۔مقررین نے یہ بات یاد دلائی کہ 1955ء سے لیکر 1962 تک انجمن نصرۃ الاسلام کے تحت چلنے والے ادارے شدید مالی بحران کا شکار رہے تاہم میرواعظ مرحوم کی مخلصانہ کوششوں کے نتیجے میں یہ ملی ادارہ ملت کشمیر کی بھر پور معاونت سے اپنی تعلیمی سرگرمیوں کی حصولیابی میں برابر آگے بڑھتا رہا ۔انہوں نے کہا کہ اسی دوران مرحوم میرواعظ کے ہی ہاتھوں اور ان کی کوششوں کے نتیجے میں ہی اسلامیہ کالج سائنس اینڈ کامرس کی داغ بیل ڈالی گئی جو حول میں منتقل ہونے سے قبل دو سال تک انجمن کے احاطے میں ہی  اپنی تعلیمی سرگرمیاں چلاتارہا اور مرحوم میرواعظ کالج کے بھی تاحیات صدر محترم رہے۔اس سے قبل مرحوم میرواعظ عتیق اللہ شاہ اور انجمن کے دیگر سابق صدور، عہدیداراں اور معاونین کے ایصال ثواب اور درجات کی بلندی کیلئے اسلامیہ اورینٹل کالج میں قرآن خوانی کے روح پرور مجلس آراستہ کی گئی اور مرحومین کو ایصال ثواب کیا گیا۔
 
 
 

بادل پھٹنے سے نقصان

بانڈی پورہ کے متاثرین کی امداد کی جائے:نعیم اختر

سرینگر//پیپلزڈیموکریٹک پارٹی کے سینئررہنمانعیم اخترنے انتظامیہ سے اپیل کی ہے کہ بانڈی پورہ میں بادل پھٹنے سے متاثرہوئے لوگوں کی فوری امداد کیلئے اقدامات کریں۔اہم اشریف اور ارن میں سنیچر کوتین بجے دن بادل پھٹنے سے رہائشی مکانوں اور فصلوں کو نقصان پہنچاتاہم کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔اختر نے متاثرین کے ساتھ یکجہتی کااظہار کرتے ہوئے انتظامیہ سے اپیل کی کہ انتظامیہ کو اُن لوگوں کی امدادکرنی چاہیے جن کے فصلوں اور مکانوں کو نقصان پہنچا ہے ۔
 
 
 
 

اننت ناگ میں عید الاضحی کیلئے انتظامات کاجائزہ لیا گیا 

اننت ناگ//اننت ناگ میںعید الاضحی کی تقریب کے احسن انعقاد کے لئے ترقیاتی کمشنر خالد جہانگیر نے آج افسران کی ایک میٹنگ میں انتطامات کاجائزہ لیا۔میٹنگ کے دوران ضلع میں لازمی اشیأ بشمول چاول،کھانڈ،ایل پی جی اورمٹی کے تیل کی دستیابی کو یقینی بنانے کے لئے تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا ۔اس موقعہ پر عیدگاہوں اورزیارت گاہوں کی صفائی ستھرائی کی طرف ٹھوس توجہ مبذول کرنے کی ہدایت دی گئی۔جب کہ بجلی اور پانی کی بلا خلل سپلائی کو بھی یقینی بنانے پر زوردیا گیا۔میٹنگ میں بتایا گیا کہ ہدف شدہ62000کوئنٹل چاول میں سے95فیصد سٹاک اُٹھاکر صارفین میں تقسیم کیا گیا ہے۔جب کہ ضلع میں7800رسوئی گیس کے بھرے ہوئے سیلنڈر موجود ہیں اور مانگ 5000سیلنڈروں کی ہے۔میٹنگ میں گوشت اورپولٹری کی دستیابی کا بھی جائزہ لیا گیا تاکہ عوام کو متبرک دن کے موقعہ پر کسی بھی دقت کا سامنا نہ کرنا پڑے۔اس دوران ناجائز منافع خوری ذخیرہ اندوزی اور ملاوٹی اشیأ کی خریدوفروخت پر روک تھام کے لئے متعلقہ محکمے کو متحرک ہونے کی ہدایت دی گئی۔میٹنگ میں اے ڈی سی ،ایس ڈی ایمز ڈورو،کوکرناگ،سی ایم او اورتحصیلداروں کے علاوہ دیگر متعلقہ آفیسران بھی موجود تھے۔
 
 

بانڈی پورہ میںپولیس نے بھنگ کی فصل تباہ کی 

سرینگر//منشیات کے خلاف اپنی جنگ جاری رکھتے ہوئے بانڈی  پورہ پولیس نے محکمہ مال کے افسران کے ہمراہ ملک پورہ ترہگام علاقے میں بھنگ کی کاشت کو تباہ کیا۔ ایس ڈی پی او سمبل اور ایس ایچ او سمبل کی نگرانی میں پولیس ٹیم اور محکمہ مال کے افسران نے ملک پورہ ترہگام علاقے میں وسیع اراضی پر پھیلی بھنگ کی فصل کو ضائع کیا ۔ عوامی حلقوں نے پولیس کی اس کارروائی پر اطمینان کا اظہارکیا ہے۔
 
 

بڈگام میں ضلع انتظامیہ کی منشیات مخالف مہم 

بڈگام// منشیات کی بڑھتی ہوئی وبا پر روکتھام کے لئے ضلع انتظامیہ بڈگام نے ایک وسیع مہم شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔اے ڈی سی بڈگام نے کہا کہ وادی بھر میں منشیات کا استعمال شدید فکرو تشویش کا باعث بن گیا ہے اوراس وبا پر قابو پانے کے لئے تمام متعلقین بشمول دینی مبلغین ،مقامی مساجد،مندر اور گردووارہ کمیٹیوں،غیر سرکاری رضاکار تنظیموں اور تعلیمی اداروں کو اجتماعی طور اقدامات کرنا ہوں گے تاکہ سماج میں منشیات کے استعمال کو مکمل طور پر قلع قمع کیا جاسکے۔اے ڈی سی نے کہا کہ کسی بھی طرح کی نشیلی ادویات کے استعمال کو روکنے کے لئے تمام تحصیلداروں کو اپنے متعلقہ علاقوں میں جانکاری کیمپوں کا انعقاد کرنے کا ہدایت دی گئی ہے تاکہ متعلقین بشمول دینی شخصیات اورکیمونٹی کے ممبران اس بدعت کے خاتمے کے لئے اپنا بھرپور تعائون دیں۔
 
 

کشمیری نظربندوں کو رہاکیا جائے:حریت ع

۔23سال بعد چار شہریوں کی رہائی خوش آئند

سرینگر//حریت (ع) نے 23سال بعد مرزا نثار، علی محمد بٹ اور لطیف احمد وازہ اور بھدرواہ کے عبدالغنی گونی کی رہائی کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے اس امید کا اظہار کیا ہے کہ بھارت کی مختلف ریاستوں کی جیلوں میں سالہا سال سے مقید انصاف کو ترس رہے سینکڑوں کشمیری نظر بندوں کی رہائی کے حوالے سے بھی اقدامات کئے جائیں گے۔بیان میں کہا گیا کہ یہ ثابت ہو گیا کہ ان لوگوں سے کوئی جرم سرزد نہیں ہوا تھا۔بیان میں کہا گیا کہ بھارتی تحقیقاتی ایجنسی این آئی اے کی جانب سے گرفتار کئے گئے کشمیری سیاسی نظر بندوں محمد یاسین ملک، شبیر احمد شاہ، شاہد الاسلام، الطاف احمد شاہ، نعیم احمد خان، ایاز اکبر، پیر سیف اللہ، راجہ معراج الدین کلوال، فاروق احمد ڈار، ظہور احمدوٹالی، سید شاہد یوسف، سید شکیل احمد، آسیہ اندرابی، فہمیدہ صوفی، ناہیدہ نصرین کو گزشتہ دو سال سے تہاڑ جیل میں محبوس رکھا گیا ہے جبکہ ان کے خلاف اب تک کوئی جرم ثابت نہیں کیا جاسکا اور اس طرح کشمیر اور بھارت کی مختلف ریاستوں کی جیلوں میں طویل مدت سے مقید کشمیری سیاسی نظربندوں کے تئیں روا رکھاجا رہا سلوک نہ صرف غیر انسانی ہے بلکہ عدالتی عدل و انصاف کے تقاضوں کے منافی بھی ہے۔
 
 
 

رہائی پانے والے کا بھدرواہ میں استقبال

 سرینگر/ /بھدرواہ سے تعلق رکھنے والے عبدالغنی 23سال بعد اپنے آ بائی علاقہ پہنچنے کے موقعہ پر نہ صرف جشن منایا گیا بلکہ اس کا پرتپاک استقبال کیا گیا ۔عبدالغنی گونی ساکن پاتھر ی بس اسٹینڈ بھدرواہ کی عمر گرفتاری کے وقت محض 23 برس تھی اورایک نجی سکول چلا رہا تھا۔موصوف تبلیغ جماعت کے ساتھ وابستہ تھا اور 1994 میں گجرات میں ایک چائے کی دکان سے گرفتارکیا گیا تھا۔موصوف جونہی ہفتہ کو بھدرواہ پہنچے تو ہزاروں لوگوں نے اسلام کے نعروں کے بیچ ان کا استقبال کیا اور وہ جلوس کی صورت میں جامع مسجد بھدرواہ گئے جہاں انہوںنے دو رکعت نماز ادا کی۔انہوں نے دوران اسیری والدین بھی کھودئے۔