مزید خبرں

 شالیمار ،عشائی باغ اور آبی کار پورہ میں متعدد ڈھانچے مسمار

سرینگر//کورونا اور لاک ڈاون کے دوران جھیل ڈل اور اس کے مضافات میں غیر قانونی طور تعمیر کئے گئے ڈھانچوں کو ہٹانے کی مہم جاری رکھتے ہوئے لیکس اینڈ واٹر ویز ڈیولپمنٹ اتھارٹی (لائوڈا ) نے شالیمار ،عشائی باغ سعدہ کدل اور آبی کار پورہ ڈل میں متعدد تعمیرات کو ہٹایا ۔لائوڈا کے بیان کے مطابق کچھ خود غرض عناصر موجودہ کورونا بحران اور لاک ڈائون کا ناجائز فایداٹھا کر غیر قانونی طور تعمیرات کھڑا کررہے ہیں ۔بیان کے مطابق غیر قانونی طور ڈھانچے تعمیر کرنے والوں کے خلاف سختی سے نمٹا جائے گا اور انہدامی کارروائیی جاری رہے گی ۔لاوڈا نے ٹپرمالکان اور تعمیراتی میٹریل لے جانے والی گاڑیوں کے مالکان کو متنبہ کیا ہے کہ وہڈل اور نگین جھیلوں اور اس کے مضافاتی علاقوں میں بغیر اجازت تعمیراتی میٹریل لے جانے سے باز آجائیں ۔  
 
 
 
 
 

درماند ہ مسافروں کیلئے فضائی سروس جاری | 16طیاروں میں 1469 سرینگر پہنچے

سرینگر////جموں وکشمیر یونین ٹریٹری میں گھریلو پروازوں کے دوبار ہ چالوہونے کے99واں دِن1469مسافروں کو لے کر16 پروازیں کل سری نگر کے ہوائی اَڈے پر اتریں۔ہوائی اڈے پر اُترتے ہی تمام مسافروں کا کووِڈ۔19ٹیسٹ کیا گیا اوردونوں ہوائی اڈوں سے اَپنے منازل کی طرف تما م احتیاطی تدابیر پر عمل پیر ا رہ کر روانہ کئے گئے۔حکومت کی طرف سے ہوائی پروازوں کے ذریعے یوٹی میں وارِد ہونے والے تمام مسافروں کی آمد سکریننگ نمونے لینے اور قرنطین مراکز کی طرف لے جانے کے لئے معقول ٹرانسپورٹ اِنتظامات کئے گئے ہیں اور اِس دوران مرکزی  شہری ہوا بازی اور صحت و خاندانی بہبود کی مرکزی وزارتوں کی جانب سے مقرر کئے گئے رہنما خطوط اور ایس او پیز کا خاص خیال رکھا جارہا ہے۔واضح رہے کہ25؍ مئی سے اب تک سری نگر ائیر پورٹ پر1,314گھریلو پروازیںاتریں ہیں جن میں 1,77,804مسافروں نے سفر کیا ہے۔نیز جموں وکشمیر حکومت نے عالمی وَبا کے پیش نظر اَب تک متعدد ممالک سے تقریباً3,676مسافروں کو خصوصی اِنخلأ پروازوں کے ذریعے جموںوکشمیر یوٹی میں واپس لایا ہے۔
 
 

طیبہ کالونی ہمہامہ کئی ہفتوں سے بجلی سے محروم 

سرینگر// طیبہ کالونی ہمہامہ کے رہائشیوں کا الزام ہے کہ علاقہ کئی ہفتوں سے بجلی سے محروم ہے ،جسکی وجہ علاقہ مکین کو مشکلات ومسائل کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔لوگوںنے بتایا کہ طیبہ کالونی ہمہامہ ایکسٹینشن ریلوے ٹریک ہمہامہ علاقہ گزشتہ کئی ہفتوں سے بجلی کی سپلائی سے محروم ہے ۔انہوں نے بجلی کی آنکھ مچولی نے یہاں مقیم رہائشیوں کی مشکلات ومسائل میں مزید اضافہ کردیا ہے ۔ انہوں نے کہا ’عید کے روز بھی علاقہ کی بجلی غائب تھی جبکہ بجلی کب آتی ہے اور کب جاتی ہے یہ بھی پتہ نہیں چلتا ہے ‘۔لوگوں کا کہنا ہے کہ علاقہ کو( پیر باغ فیڈر۔ون )سے بجلی سپلائی ہوتی ہے ،لیکن اس فیڈر میں آئے روز خرابی آتی ہے ،جس کا خمیازہ علاقہ مکین کو بھگتنا پڑ تا ہے ۔انہوں نے کہا بجلی کی عدم دستیابی کے سبب جہاں علاقہ مکین کو شدید ترین مشکلات کا سامنا ہے ،وہیں بچے نہ تو آن لائن کلاسز لے پاتے ہیں اور نہ ہی پڑھائی کر پاتے ہیں ۔مقامی لوگوں نے محکمہ بجلی کے اعلیٰ حکام اور انتظامیہ کے دیگر اعلیٰ افسران سے علاقے میں بجلی کی فراہمی کو جلد ازجلد یقینی بنانے کا مطالبہ کیا۔(کے این ایس)