مزید خبرں

لوک ادب کسی بھی خطے کی ثقافتی جمالیات کا عکاس:منوج سنہا |  درخشاں اندرابی کا شعری مجموعہ’’ ا￿حساسن ہُن￿د شیشہِ خانہ ‘‘ کااجراء

سری نگر// لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے آج مرکزی وقف کونسل کی رکن ، چیئرپرسن وقف ڈیولپمنٹ کمیٹی وزارتِ برائے اقلیتی امور حکومتِ ہند ڈاکٹر درخشاں اندرابی کا ایک شعری مجموعہ’ ا￿حساسن ہُن￿د شیشہِ خانہ ‘ عنوان سے جاری کیا۔ لیفٹیننٹ گورنر نے ڈاکٹر اندرابی کو سرزمین جموںوکشمیر کے روحانی اور عالمانہ روایت کی عکاسی کرنے اور مختلف سماجی مسائل اَپنے کلام میں اُٹھانے کے لئے سراہا۔ اُنہوں نے کہا کہ لوک ادب کسی بھی خطے کی ثقافتی جمالیات کا عکاس ہوتا ہے جس کو ترقی اور تحفظ دینے کی ضرورت ہے۔اُنہوں نے ڈاکٹر اَندرابی کو اَپنی شاعری مجموعہ کا دوسری زبانوں میں ترجمہ کرنے کی صلا ح دی تاکہ ملک کے باقی لوگ بھی اس کو پڑھ سکیں۔اِس موقعہ پر بتایا گیا کہ یہ کتاب ڈاکٹر درخشاں اندرابی کے کشمیر ی شاعری کا تیسرا مجموعہ ہے اور اب تک اُن کی طبع شدہ دسویں کتاب ہے۔ انہوں نے یہ کتاب معروف کشمیری شاعرہ للیشوری جنہیں عرف عام میں لل دید بھی کہا جاتا ہے کے نام وقف کی ہے ۔ اس کتاب کا پیش لفظ معروف ادبی نقاد اور ادبی تاریخ دان اوتار کرشن رہبر نے لکھا ہے ۔ یہ کتاب غزلوں ، نظموں ، دُوہا، رباعیات اور شاعری کی تین لائن صنفیں پر مشتمل ہے۔ ڈاکٹر اندرابی کی جانب سے متعارف کی گئی شاعری کی نئی اصناف پر مشتمل ہے ۔ریشیوں کی سرزمین سے مایہ ناز ماضی سے منسلک اُن کی شاعری میں کشمیر کے للیشوری، نند ریش کی رمق بھی ملتی ہے۔ڈاکٹر اندرابی کے منتخبہ اشعار کا ترجمہ کئی زبانوں میںکیا گیا ہے۔سابق ایم ایل سی وبودھ گپتا کے علاوہ معروف دانشور اور علماء ڈاکٹر غلام نبی حلیم ،پرویز مانوس،غلام نبی کمار ،محمد عقیل اور ستیش وِمل بھی اس موقعہ پر موجو دتھے۔
 
 

انتظامیہ تمام طبقوں کی یکساں ترقی کیلئے وعدہ بند | سابق قانون ساز، مختلف عوامی وفود لیفٹیننٹ گورنر سے ملاقی

سرینگر// سابق قانون ساز اور مختلف عوامی وَفود نے یہاں راج بھون میں لیفٹیننٹ گورنر منوج سِنہاسے ملاقات کی اور ان کے معاملات اور شکایات کے جلد ازالہ کے لئے ان کی مداخلت طلب کی۔آل جموں و کشمیر موبائل سیزنل اَساتذہ فورم کے وَفد نے صدر شبیر چودھری کی قیادت میں لیفٹیننٹ گورنر کو موبائل سیزنل مراکز کے امور سے آگاہ کیا۔اُنہوں نے لیفٹیننٹ گورنر سے موبائل سیزنل مراکز کو مستقل موبائل پرائمری سکولوں میں تبدیل کرنے  بالخصوص گوجر اور یکروال طبقے کے لئے، سیزنل اِی وِی (اَساتذہ) کو باقاعدہ بنانا،موبائل مراکز میں مِڈ ڈے میل ، بیگ ، کتابیں اور دیگر سہولیات کی فراہمی، تنخواہوں میں اضافہ،سیزنل موبائل اساتذہ وغیرہ کوفسٹ ایڈ ٹریننگ کی درخواست کی۔ سابق ایم ایل اے عابد حسین اَنصاری نے لیفٹیننٹ گورنر کی توجہ زڈی بل حلقہ اِنتخاب کے مختلف ترقیاتی امور کی طرف مبذول کرائی۔ اُنہوں نے شیعہ برادری کے کئی فلاحی مسائل بھی پیش کئے۔فیکلٹی فورم سکمز میڈیکل کالج ہسپتال کے صدر پروفیسر نصیر اے میر کی قیادت میں ایک وفد لیفٹیننٹ گورنر سے ملاقی ہوا اور اُنہیں ایس کے آئی ایم ایس میڈیکل کالج کے اِنتظامی امور سے آگاہ کیا۔لیفٹیننٹ گورنر نے کووِڈ۔19 کیئرسہولیات بشمول بیڈوں کی گنجائش ،وینٹی لیٹر اور آکسیجن کی فراہمی کے علاوہ ہسپتال مین دیگر بنیادی طبی سہولیت کی دستیابی کے بارے میں جانکاری حاصل کی ۔ آل جے اینڈ کے پلس2 پی ایس سی لیکچررزایسوسی ایشن کے وفد نے بھی لیفٹیننٹ گورنر سے ملاقات کی اور ٹائم بائونڈ پروموشن اور یقین دہانی سے متعلق وابستہ امور پیش کئے۔ وفد کے ممبروں کے ساتھ بات چیت کرتے ہوئے لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ جموں و کشمیر حکومت جواب دہ انتظامیہ کے ساتھ لوگوں تک پہنچنے کے لئے پُرعزم ہے اور ان کی شکایات کو فوری ازالہ کرنے کے لئے جامع اِقدامات اُٹھارہی ہے۔ اُنہوں نے مزید کہا کہ یو ٹی انتظامیہ معاشرے کے تمام طبقوں کی یکساں ترقی اور فلاح و بہبود کے لئے وعدہ بندہے۔اُنہوں نے وَفود کے ممبروں کو یقین دِلایا کہ ان کے تمام جائز معاملات کے ازالے کے لئے غور کیا جائے گا۔ 
 
 

ہندوستان امن کا حامی کشیدگی کا نہیں:راجناتھ | مانٹیرنگ ڈیسک

سکم// مرکزی وزیر دفاع راجناتھ سنگھ نے کہا ہے کہ بھارت امن کا خواہاں ہے اور ہمسایوں کیساتھ پر امن بقائے باہمی کے اصول پر عمل پیرا ہے۔ مشرقی لداخ میں ہندوستان اور چین کے مابین کشیدگی کے درمیان وزیر دفاع راج ناتھ سنگھ نے اتوار کو  سکم اور ارونا چل پردیش کے دو روزہ دورہ کے دوران فوجی جوانوں سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ہندوستان امن چاہتا ہے، اسی کے ساتھ ہی وہ ملک کو یہ یقین دلانا چاہتے ہیں کہ فوج ایک انچ زمین بھی دوسرے کے ہاتھ میں نہیں جانے دے گی۔ 33 ویں کور ہیڈ کوارٹر میں فوجی تیاریوں کا جائزہ لینے کے بعد انہوں نے کہا کہ اس وقت ہندوستان اور چین کی سرحد پر جو کشیدگی ہے، ہندوستان چاہتا ہے کہ یہ ختم ہو ، امن قائم ہو ، یہ ہمارا مقصد ہے لیکن بعض اوقات ایسی ناپاک حرکتیں بھی ہوتی رہتی ہیں،مجھے پورا اعتماد ہے اور مجھے یقین ہے کہ کسی بھی حالت میں ہماری فوج ایک انچ زمین بھی دوسرے ہاتھ میں نہیں جانے دے گی۔
 
 

غیرمقامی حکمرانوں کاغلبہ ناقابل قبول:اکبر لون | امن کی بحالی جمہوری حقوق کی واپسی سے مشروط:کمال 

سرینگر// نیشنل کانفرنس نے جموں کشمیر کی قیادت پر انگشت نمائی کو جمہوریت پر کاری ضرب قرار دیتے کہا کہ جموں کشمیر میں غیر مقامی حکمرانوں کا غلبہ نا قابل قبول ہے۔پارٹی کے سینئر لیڈر اور ممبر پارلیمنٹ محمد اکبر لون نے کہا،’’ دہلی کی موجودہ سخت گیر جماعت کا دانستہ طور پر جموں کشمیر کے عوام کو جمہوری اور آئینی حقوق سے محروم رکھنا معمول بن گیا ہے اوروہ خطہ کو نو آبادیاتی کالونی سمجھ کر فوجی چھاونی میں تبدیل کرکے غیر مقامی حکام کو حکومت چلانے پر مامور کر رہی ہے‘‘۔ انہوں نے کہا کہ یہ غیر مقامی حکمران جموں کشمیر کی حساسیت اور جغرافیائی صورتحال و سیاسی پس منظر سے نابلد ہے۔محمد اکبر لون نے الزام کیا کہ طاقت کے بل بوتے پر جموں کشمیر کے عوام کے سروں پر ان حکمرانوں کو مسلط کیا گیا ہے،کیونکہ گورنر راج عوامی حکومت کا متبادل نہ ہوا ہے اور نا ہی ہوگا۔لون نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ موجودہ لیفٹنٹ گورنر اور وزیر اعظم کے دفتر میں وزیر مملکت کا بیان قابل مذمت ہے کہ بقول بھاجپا لیڈراں کے یہاں سیاسی لیڈر شپ کی ساکھ عوام میں نہیں ہے۔ انہوں نے بی جے پی کو نشانہ بناتے ہوئے کہا’’ یہ ان کا ذہنی اختراع ہے وگرنہ انہیں بھی علم ہے کہ یہاں ان کا نشان اور بنیاد ہی نہیں ہے،اور نا ہی ان کی کوئی ساکھ ہے۔اس دوران پارٹی کے معاون جنرل سیکریٹری ڈاکٹر  مصطفی کمال نے کہا ہے کہ جموں کشمیر کی انفرادیت،وحدت،پہچان اور شناخت بحال کرنے سے ہی امن لوٹ سکتا ہے۔انہوںنے کہا کہ نیشنل کانفرنس اس  اصول پر چٹان کی طرح قائم ہے۔ڈاکٹر کمال نے کہا کہ انکی جماعت سیاسی اور قانونی طور ہر محاذ پر اس کیلئے جنگ جاری رکھے ہوئی ہے اور پرامن جدوجہد اور سرگرم کوششوں پر گامزن ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ جب تک جموں کشمیر اور لداخ کے لوگوں کو جمہوری حقوق واپس نہیں کئے جاتے تب تک جموں کشمیر میں امن لوٹ نہیں سکتا،اور نا ہی تعمیر و ترقی ہوگی۔ڈاکٹر کمال نے الزام عائد کرتے ہوئے کہا’’ وزیر اعظم ہند نریندر مودی کی سرکار کی سخت گیر پالسیاں ملک کی سالمیت اور آزادی کیلئے خطرہ ثابت ہو سکتی ہے۔ان کا کہنا تھا کہ بھارت ایک تباہ کن فرقہ پرستی کے دور سے گزر رہا ہے اور اقلیتوں کو ہر محاذ پر نظر اندا ز کیا جاتا ہے۔
 
 

گپکار ٹیم بوکھلاہٹ کا شکار :اشوک کول | بھاجپا نے فاروق عبدللہ کاکیا بگاڑا ؟

سرینگر//بھارتیہ جنتاپارٹی کے سٹیٹ جنرل سیکریٹری اشوک کول نے سوال کیا ہے کہ بھاجپانے فاروق عبداللہ کاکیا بگاڑاہے جو وہ بھاجپا مخالف ہیں۔ کے این ایس  کے مطابق بھارتیہ جنتا پارٹی کے سٹیٹ جنرل سیکرٹری اشوک کول نے اتوار کے روز کہا کہ بھارتیہ جنتا رٹی کے صدر نے پہلے ہی بتایا ہے کہ یہ ایک گینگ ہے ۔انہوں نے کہا گپکار والے کنفیوژن کا شکار ہوئے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ آج فاروق عبد اللہ نے بیان دیا ہے کہ ہم قوم دشمن نہیں ہیں بلکہ بھاجپامخالف ہیں ۔اشول کول نے بتایا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی نے ان کا کیا بگاڑا ہے ۔انہوں نے کہا کہ یہ سب کنفیوژن کا شکار ہوئے ہیں ۔انہوں نے کہا کل شمالی کشمیر کے جاوید قریشی نے جو کر کے دکھایا ہے اس کو کل ساری دنیا نے دیکھا اور پسند کیا ہے ۔کول نے کہا وہ کشمیری  مسلمان ہے، جموں کا ڈوگرہ نہیں ہے۔ 
 
 

حکومت کی نئی تعلیمی پالیسی میں اقلیتوں کے ساتھ امتیازی سلوک روا | جمعیت علمائے ہند نے مدارس کے خلاف منفی تشہیر کی مذمت کی 

نئی دہلی//مدھیہ پردیشن کے وزیر کی طرف سے مدرسوں پر بنیاد پرستی اورانتہاپسندی کوپروان چڑھانے کاالزام لگانے کے بعد جمعیت علمائے ہند نے سنیچر وار کو اِن تمام تبصروں کو ردکیا اور کہا کہ ان اداروں میں انسانی محبت اور حب الوطنی کادرس دیاجاتا ہے۔جمعیت کے قومی ایگزیکیٹوکی میٹنگ میں پاس کئے گئے ایک قرار دادمیں الزام لگایا گیا کہ نئی تعلیمی پالیسی میں اقلیتوں کے ساتھ امتیازروارکھاگیا ہے ۔بیان کے مطابق نئی تعلیمی پالیسی،مدرسوں کے خلاف منفی تشہیر،مدرسوں میں جدیدتعلیم کے پریکٹیکل پروگرام اورسوشل میڈیا پرمذہبی منافرت کے پیغامات جیسے معاملوں پر میٹنگ میں بحث وتمحیص ہوئی۔جمعیت کے جنرل سیکریٹری مولانامحمودمدنی نے ملک کی موجودہ صورتحال خاص طور سے بھاجپا کے صدر جے پی نڈا کے شہری ترمیمی قانون پر عملدرآمداورآسام میں حکومت کی امداد سے چل رہے مدرسوں میںمذہبی تعلیمات پر پابندی کے بیان پر بات کی۔ قراردادمیں جمعیت نے کئی وزراء کی طرف سے منفی تشہیر اورمدرسوں کے خلاف بیانات پرکہاگیا کہ یہ بات کسی سے چھپی نہیں ہے کہ مدرسوں میں انسان دوستی اور حب الوطنی کی تعلیم دی جاتی ہے ۔جمعیت نے کہا کہ مدرسوں سے وابستہ لوگوں نے ملک کی آزادی کی تحریک میں نمایاں رول اداکیا ہے اورآج بھی مدرسوں کے لوگ ملک میں اہم خدمات انجام دے رہے ہیں۔جمعیت کایہ بیان مدھیہ پردیش کے وزیر برائے کلچر اوشاٹھاکور کے اس بیان کے بعد آیا ہے جس میں انہوں نے کہا تھا کہ مدرسوں کی مالی اعانت کو بند کیاجاناچاہیے اورالزام لگایا تھا کہ مدرسوں میں بنیادپرستی اور دہشت گردی کوپروان چڑھایا جاتا ہے ۔
 
 
 

کرشنا گھاٹی پونچھ سیکٹر میں گولہ باری

پونچھ//پونچھ کے کرشنا گھاٹی سیکٹر میں اتوار کے روز ہندوپاک افواج میں فائرنگ اور گولہ باری کا تبادلہ ہوا۔پولیس عہدیداروں نے بتایا کہ اتوار کی سہ پہر پاکستانی فوج نے چھوٹے ہتھیاروں سے فائرنگ کرکے فائر بندی کی خلاف ورزی کی اور مذکورہ سیکٹر میں ہندوستانی فوج کے مقامات کو نشانہ بنایا۔حکام کے مطابق’’پاکستان کی جانب سے فائرنگ تقریباًایک گھنٹہ جاری رہی‘‘۔ان کا مزید کہنا تھا کہ بھارتی فوج نے پاکستانی فوج کو موثر جواب دیا۔اس دوران کسی طرح کے جانی نقصان کی اطلاع نہیں ملی ۔
 
 

درماندہ 7,05,799 شہری واپس لوٹے 

جموں//حکومت جموں وکشمیر نے کووِڈلاک ڈاون کے سبب ملک کے مختلف حصوں میں درماندہ جموںوکشمیر کے7,05,799شہریوں کو براستہ لکھن پور اور کووِڈخصوصی ریل گاڑیوں اور بسوں کے ذریعے تمام رہنما خطوط اور ایس او پیز پر عمل پیرا  رہ کر یوٹی واپس لایا۔حکومت نے لکھن پور کے ذریعے اَب تک بیرون ملک سے 937 مسافرو ں کویوٹی واپس لایا ہے ۔اِس طرح جموںوکشمیر حکومت نے اَب تک 155کووِڈ خصوصی ریل گاڑیوں اور براستہ لکھن پور بسو ںکے کاروان میں اَب تک بیرون یوٹی درماندہ 7,05,799شہریو ں کو کووِڈ۔19 وَبا سے متعلق تمام اَحتیاطی تدابیر پرعمل کرے واپس لایا ۔ 24 اکتوبرسے25 اکتوبر 2020ء کی صبح تک لکھن پور کے راستے سے9,680درماندہ مسافریوٹی میں داخل ہوئے۔اَب تک 134ریل گاڑیوں میں یوٹی کے مختلف اَضلاع سے تعلق رکھنے والے 124,596درماندہ مسافر جموں پہنچے جبکہ 21خصوصی ریل گاڑیوں سے 15,696مسافر اُودھمپور ریلوے سٹیشن پر اُترے۔
 
 

جموں وکشمیر کے تاخیر سے الحاق کیلئے نہرو ذمہ دار: ڈاکٹر جتیندر

نئی دہلی// بھارت کے ساتھ جموں و کشمیر کے الحاق کوحتمی اور مکمل ہے قرار دیتے ہوئے مرکزی وزیر ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہا کہ یہ اس وقت کے وزیر اعظم جواہر لال نہرو تھے، نہ کہ مہاراجہ ہری سنگھ، جواس الحاق میں تاخیر کا ذمہ دار تھے۔ ایک قومی ٹی وی چینل کو انٹرویو دیتے ہوئے ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہاکہ اگر الحاق میں دو مہینوں سے زیادہ تاخیر ہوئی تو یہ مہاراجہ ہری سنگھ کی وجہ سے نہیں بلکہ اس وقت کے وزیر اعظم نہرو کی وجہ سے تھا جو اپنے نقطہ نظر سے آگے نہیں بڑھ رہے تھے اور اس کی بجائے شیخ محمد عبداللہ کے اشارے پر کام کررہے تھے ۔ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہا کہ اگر اس وقت کے وزیر داخلہ سردار پٹیل کو ریاست جموں و کشمیر کو سنبھالنے کے لئے آزادانہ طور پر ذمہ داری دی گئی ہوتی تونہ صرف برصغیر پاک و ہند کی تاریخ مختلف ہوتی بلکہ جموں و کشمیر کا الحاق بھی بہت پہلے ہو چکا ہوتا اور اس وقت جموں و کشمیر کا وہ حصہ جو پاکستان کے غیرقانونی قبضے میں ہے، بھی آزاد ہندوستان کا حصہ ہوتا۔ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہا کہ اصل میں تاریخ دانوں کو جس سوال کی طرف توجہ دینے کی ضرورت ہے وہ یہ ہے کہ وزیر اعظم نہرو نے اپنے ہی وزیر داخلہ سردار پٹیل کے ڈومین میں دخل اندازی کرکے جمہوری نظام کی خلاف ورزی کی۔ انہوں نے کہا کہ آخر میں سردار پٹیل کی مداخلت تھی جس نے سرینگر میں ہندوستانی افواج کے لینڈنگ میں مدد کی اور ریاست کے باقی حصوں کو بھی پاکستان کے قبضے سے بچایا۔ ڈاکٹر جتیندر سنگھ کاکہناتھاکہ مہاراجہ ہری سنگھ، جو اس وقت ریاست جموں و کشمیر کے جائز اور سرکاری سربراہ تھے، کے ساتھ براہ راست معاملات طے کرنے کے بجائے نہرو کی ترجیح شیخ عبداللہ تھے۔ انہوں نے کہا کہ یہ ایک بار پھر نہرو تھے جوسرینگر میں ہندوستانی فورسز کی لینڈنگ میں تاخیر کا باعث بنے ۔ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہاکہ مہاراجہ ہری سنگھ کے ذریعہ دستخط کئے جانے والے الحاق کا مسودہ وہی تھا جیسے دوسری ریاستوں کے سربراہوں نے بغیر کسی شرائط کے دستخط کئے تھے اور دفعہ 0 370 اور35-اے کا غیر معمولی اضافہ بعد میں کیاگیا۔مرکزی وزیر نے کہاکہ تاریخ مہاراجہ ہری سنگھ کے ساتھ غیر منصفانہ رہی ہے اور امید ہے کہ آج کے بدلے ہوئے دور میں ریکارڈ سیدھا کردیا جائے گا اور آنے والی نسلوں کے مفاد کے لئے تمام بدگمانیوں کو مٹا دیا جائے گا۔
 
 

کنٹرول لائن پر دراندازی کوئی نئی بات نہیں | فوج کسی بھی صورتحال کامقابلہ کیلئے تیار:جی اوسی وریندرواٹس 

سرینگر// کنٹرول لائن پر در اندازی کوئی نئی بات نہیں ہے اور فوج کسی بھی صورت حال کا مقابلہ کرنے کے لئے ہر وقت تیار رہتی ہے ۔ اس بات کااظہار فوج کی19انفینٹری ڈویژن کے سربراہ وریندرا واٹس نے کیا۔ کے این ایس کے مطابق 19انفنٹری کے جنرل آفسرکمانڈنگ( جی او سی) نے اتوار کو بتایا کہ کنٹرول لائن پر دراندازی کوئی نئی بات نہیں ہے ۔انہوں نے بتایا تاہم فوج کسی بھی صورت حال کا مقابلہ کرنے کے لئے تیار رہتی ہے۔انہوں نے کہا کہ اس سال شاید ہی کوئی دراندازی کی کوشش کامیاب ہوئی ہے ۔انہوں نے کہا فوج نے اکثر در اندزی کی کوششوں کو ناکام بنا دیا ہے ۔جی او سی نے بتایا کہ فوج کسی بھی صورت حال کا مقابلہ کرنے اور ملک کے عوام کی حفاظت کے لئے تیارہے ۔مذکورہ فوجی افسر نے بتایا پاکستان اپنے مشن’ جموں و کشمیر میں پر امن ماحول کو خراب کرنے میں مصروف ہے ،تاہم ان کے اس مشن کو فوج ہر سطح پر ناکام بنائے گی ۔جی او سی شمالی کشمیر میں فوج کی جانب سے منعقد ہونے والی ایک تقریب کے موقعے پر میڈیا سے بات کر رہے تھے۔
 
 
 
 

شوپیان میں چوروں نیسیب کی 180پیٹیاں اُڑا لیں

 
سرینگر//شوپیان میں چوری کی ایک واردات میں 180پیٹیاں سیب اڑا لی ہیں۔ ضلع کے پہنو نامی گائوں میں سنیچر اور اتوار کی درمیانی رات کو چوروں نے ایک میوہ باغ سے رئیس احمدڈار کی180 پیٹیاں سیب اڑا لیں۔رئیس احمدنے بتایاکہ انہوں نے ایک ہی جگہ180پیٹیاں سیب جمع کی تھیں تاکہ انہیں صبح گاڑی میں لوڈ کیاجائے ۔انہوں نے بتایا کہ جب وہ صبح یہاں پہنچے تو وہ ششدر رہ گئے کہ یہاں ایک بھی ڈبہ موجود نہیں تھا۔انہوں نے مزید بتایا کہ سال بھر کی کمائی چند لمحوں میں ختم ہوگئی۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ علاقے میں اس طرح کے کئی واقعات پیش آئے لیکن پولیس ایک بھی کیس حل کرنے میں ناکام رہی ۔انہوں نے پولیس سے اس سلسلے میں سخت کارروائی عمل میں لانے کامطالبہ کیا۔کے این ایس
 
 
 
 
 
 
 

ذہنی تنائو سے نجات  | آرینز نرسنگ انسٹچوٹ کی جانب سے ورکشاپ

سرینگر //آرینز انسٹی ٹیوٹ آف نرسنگ  چندھی گڑھ میں ذہنی تناؤ کو دور کرنے اور جسمانی صلاحیت کو بڑھانے کے سلسلے میں ایک ورکشاپ کا انعقاد ہوا۔ ڈاکٹر وشالی پنج اور ڈاکٹر سنی مدر ، یوتھ ٹرینر نے فیکلٹی ممبران اور انجینئرنگ ، لاء ، مینجمنٹ ، نرسنگ ، فارمیسی ، بی ایڈ اورایگریکلچر طلاب سے بات چیت کی۔ ورکشاپ کے دوران طلباء کو مراقبہ کی متعدد تکنیکیں سکھائی گئیں جو اس وبائی صورتحال میں صحت کے بحران کے خلاف لڑنے کے لئے اپنی داخلی طاقت کو مضبوط رکھ سکتی ہیں۔ ڈاکٹر پنج نے طلباء سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اس پروگرام سے تناؤ کے انتظام ، بہتر موڈ اور مثبت رویہ،یادداشت میں اضافہ ، بہتر صحت اور اچھے تعلقات میں مدد مل سکتی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ مراقبہ کے دوران آپ اپنی توجہ مرکوز کرتے ہیں اور خیالات کے دھارے کو ختم کرتے ہیں جو آپ کے دماغ میں ہجوم اور تناؤ کا سبب بن سکتا ہے۔ڈاکٹر مدار نے سانس لینے کی مختلف مشقوں کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ مراقبہ آپ کو پرسکون ، امن اور توازن کا احساس دلاتا ہے جو آپ کی جذباتی بہبود اور آپ کی مجموعی صحت دونوں کو فائدہ پہنچا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ طلبہ کی زندگی تناؤ کا شکار ہوسکتی ہے لیکن اس کا مطلب یہ نہیں ہے کہ طلبا کو اپنی زندگی کو دباؤ میں ڈالنے دینا پڑے۔ انہوں نے مشورہ کیا کہ مراقبہ کے ذریعے طلبا نہ صرف تناؤ کو دور کرسکتے ہیں بلکہ ان کی یادداشت کو بھی بہتر بناسکتے ہیں۔
 
 

لنگیٹ کا طالب علم آئی آئی ٹی رورکی میں داخلہ لینے میں کامیاب | JEEامتحان میں22پوائنٹ اسکور کرکے188ویں رینک حاصل کی

کپوارہ//اشرف چراغ //لنگیٹ ہندوارہ کے ایک مفلوک الحال گھرانے کے چشم وچراغ JEEامتحان میں کامیابی حاصل کرکے آئی آئی ٹی رورکی میں سول انجینئرنگ میں داخلہ لینے میں کامیاب ہوئے ہیں۔شعی پورہ لنگیٹ سے تعلق رکھنے والا19برس کے طالب علم انظرنذیر نے ایڈوانس انجینئرنگ کے جوائنٹ انٹرنس ایگزمنیشن میں شاندار کامیابی حاصل کی۔انظر نظیرضلع کپوارہ کاواحد طالب علم ہے جس نے اس امتحان میں22سے زیادہ پوائنٹ اسکور کئے اور188ویں رینک حاصل کی۔انظر کے بارے میں بتایا جاتا ہے کہ وہ واحد طالب علم ہے جس نے آئی آئی ٹی رورکی میں داخلہ لینے میں آسانی سے کامیابی حاصل کی ہے۔انظرکے بھائی نے کہا کہ گائوں کارہن سہن اور سہولیات کی عدم دستیابی الگ بات ہے تاہم اُس کابھائی موبائل اورانٹر نیٹ سے بالکل ناواقف ہے ۔مذکورہ طالب علم کے بارے میں بتایا جاتا ہے کہ وہ ایک غریب گھرانے سے تعلق رکھتا ہے ۔انظر نے بارہویں جماعت کا امتحان لنگیٹ ہائر سیکنڈری سکول سے پاس کیا اور سائنس مضامین میں ساٹھ فی صد نمبرات حاصل کئے ۔انظر کا کہنا ہے کہ میرے لئے ایک چیلنج تھا کہ جس کے دوران میں نے سخت محنت کی اور میرے گھر والوں نے میرا پورا ساتھ دیا جس کی وجہ سے میں  نے اس امتحان میں کامیابی حاصل کی جس کے لئے میں اپنے والدین کا بہت شکر گزار ہوں ۔انظر نے علاقہ کے طالب علمو ں سے کہا کہ وہ بھی محنت اور لگن سے پڑھائی کریں تاکہ وہ بھی اپنے علاقہ اور والدین کا نام روشن کریں ۔
 
 
 

این سی سی کشمیر کی تربیتی سرگرمیاں دوبارہ شروع |  اوڑی میں سالانہ تربیتی کیمپ کا انعقاد کیا

 بارہمولہ /فیاض بخاری // کشمیر میں موجودہ صورتحال کی وجہ سے نیشنل کیڈٹ کارپس کی تربیت بھی متاثر ہوچکی ہے۔این سی سی کے جموں و کشمیر3 بٹالین گروپ ہیڈکوارٹر سرینگر کے زیراہتمام 18 اکتوبر سے 26 اکتوبر 2020 تک اوڑی میں سالانہ تربیتی کیمپ کا انعقاد کررہی ہے۔ضلع بارہمولہ کے سرحدی قصبہ اوڑی میں تقریبا ایک دہائی کے بعد اس تربیتی کیمپ کا انعقاد کیا جارہا ہے جس میں سیکورٹی اور انتظامی تعاون فوج فراہم کررہی ہے۔  کیمپ میں 110 لڑکے (ایس ڈی / جے ڈی) این سی سی کیڈٹس کے لئے تیار کئے جارہے ہیں جن کا تعلق اوڑی  ،ٹنگمرگ  ، کپواڑہ ، بانڈی پورہ ، سوپور ، بارہمولہ اور پٹن کے مختلف اسکولوں اور کالجوں سے ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ اس کیمپ میں سول اسٹاف کے ساتھ پرسنل انسٹرکٹر اسٹاف بھی شرکت کررہے ہیں۔ کیمپ کی شروعات اوڑی کے بلاک میڈیکل آفیسراوڑی کی جانب سے ریپڈ کوویڈ ٹیسٹ کے انعقاد سے ہوئی۔اس  کیمپ کا بنیادی مقصد کشمیر میں این سی سی کے اعتماد کو بحال کرنا ہے۔اس کیمپ کے دوران کیڈٹوں کی تربیت میں جسمانی ورزش ، ڈرل ، ہتھیاروں کی تربیت ، میپ ریڈنگ ،اعتماد کی بحالی کیلیے تبادلہ خیال شامل ہے۔  کیمپ کے دوران ٹریکنگ اور کامان پوسٹ کے دورے جیسی ایڈونچر ٹریننگ کا بھی منصوبہ ہے۔کیمپ کمانڈنٹ نے تمام کیڈٹس اور انسٹرکشنل اسٹاف کا استقبال کرتے ہوئے کیمپ کا افتتاح کیا۔ انہوں نے جاری کوویڈ وبائی امراض کے پیش نظر معاشرتی فاصلے کو برقرار رکھنے ، ماسک پہننے ، باقاعدگی سے ہاتھ دھونے اور بیرونی صفائی ستھرائی سے متعلق اقدامات پر زور دیا۔
 
 

لولاب میںنوجوان بالن جمع کرنے کے دوران زخمی

 
کپوارہ/اشرف چراغ // شمالی ضلع کپوارہ کے لولاب علاقے میں ایک 28 سالہ نوجوان بالن جمع کرنے کے دوران شدید زخمی ہوگیاجسے نازک حالت میں اسپتال میں داخل کیا گیا۔معلوم ہوا ہے کہ رفاقت احمد وار ولد صادق وار اتوار کی صبح ناگبل جنگل میں بالن جمع کرنے کی غرض سے گیا اور جونہی وہ بالن جمع کرنے لگا تو اس دوران لکڑی کا ایک بڑا ٹکڑاان پر گرا اور وہ اسکے نیچے آکر شدید زخمی ہوا۔مقامی لوگوں نے رفاقت کو زخمی حالت میں نزدیکی اسپتال میں داخل کیا جہاں اس کا علاج و معالجہ جاری ہے۔
 

سوپور کے گورو خاندان کو صدمہ | سماجی اور صحافتی انجمنوں کا اظہار تعزیت

سوپور// سوپور کے مشہور تاجر حاجی عبدالرحیم گورو کی اہلیہ اور ڈاکٹر ابراہیم گورو کی والدہ مختصر علالت کے بعد سنیچر کو شام انتقال کر گئیں۔سوپور کی مختلف انجمنوں جن میں اکنامک الائنس سوپور کے صدر حاجی محمد اشرف گنائی، انجمن معین الاسلام کے صدر عزیز احمد بٹ، سول سوسائٹی کے صدر حاجی عبدالرشید چنگال، انڈسٹریل اسٹیٹ کے صدر جاوید احمد بٹ، ویلفیئر فورم چیرمین ظفر اقبال بٹ، بیوپار منڈل کے صدر حاجی عبدالرشید بدرو، کارڈی نیشن کمیٹی سوپور کے غلام نبی کابلی، فارما ایسوسیشن کے صدر ارشد احمد اور پریس کلب سوپور کے جملہ ارکان جن میں صدر غلام محمد بٹ، غلام حسن وانی، میر امتیاز، سید فیاض، فیروز اقبال اور مظفر احمد بٹ شامل ہیں، نے غمزدہ خاندان کے ساتھ تعزیت کا اظہار کیا اور مرحومہ کی مغفرت اور لواحقین کیلئے صبرکی دعا کی۔
 
 

ڈاکٹر فاروق عبداللہ کا اظہار تعزیت

سرینگر// نیشنل کانفرنس صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے جنوبی کشمیر کی معروف سیاسی شخصیت غلام محی الدین خان ساکن کولگام کی برسی پر انہیں خراج عقیدت ادا کیا ہے۔ پارٹی کی سینئر خاتون لیڈر سکینہ ایتو،عبدالمجید لارمی،ترجمان عمران نبی ڈار نے بھی مرحوم کو خراج عقیدت ادا کیا۔دریں اثناء ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے شوپیاں کے نائب صدر اور پارٹی کے دیرینہ کارکن غلام حسن خان کے انتقال پر بھی رنج و غم کا اظہار کیا۔انہوں نے سابق ممبر پارلیمنٹ غلام قادر بٹ کی برسی پر بھی خراج عقیدت ادا کرتے ہوئے اُن کی مغفرت کیلئے دعا کی ہے۔
 
 

پی ڈی پی اور حکیم یاسین کی مہانومی اور دسہرہ پرمبارکباد 

سرینگر// پی ڈی پی نے اتوار کو دشہرہ اور نوراترا پر لوگوں کو مبارکباد پیش کیا ہے۔ پارٹی ترجمان نے کہا ہے کہ جموں کشمیر کے لوگوں اور اہل ہنود کو اس مبارک موقعے پر وہ دل کی عمیق گہرایوں سے مبارکباد کرتے ہوئے امید کرتے ہے کہ یہ تہوار جموں کشمیر کے لوگوں میں خوشیوں کی نوید لیکر آئے گا۔ ترجمان  نے کہا یہ تہوار برائی پر اچھائی کی جیت کی ولامت ہے۔انہوں نے امید ظاہر کی ہے کہ دشہرہ اور نو راترا کا تہوار جموں کشمیر میں امن کی نوید لیکر آئے گا اورہمیں حق ،وفاداری اور سچائی پر چلنے کی توفیق عطا فرمائے گا۔ادھرپیپلز ڈیموکریٹک فرنٹ کے چیئرمین حکیم یاسین نے عوام بالخصوص ہندو برادری کو مہانومی اور دسہرہ کے تہواروں پر مبارکباد پیش کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مذہبی تہوار جموں وکشمیر کی سیکولر روایت اور مذہبی یگانگت کے آئینہ دار ہیں۔ انہوں نے دعا کی کہ یہ تہوار جموں وکشمیر میں امن اور خوشحالی کی نوید بن کر آئیں۔ 
 

ذہنی تنائو سے نجات | آرینز نرسنگ انسٹچوٹ کی جانب سے ورکشاپ

سرینگر //آرینز انسٹی ٹیوٹ آف نرسنگ  چندھی گڑھ میں ذہنی تناؤ کو دور کرنے اور جسمانی صلاحیت کو بڑھانے کے سلسلے میں ایک ورکشاپ کا انعقاد ہوا۔ ڈاکٹر وشالی پنج اور ڈاکٹر سنی مدر ، یوتھ ٹرینر نے فیکلٹی ممبران اور انجینئرنگ ، لاء ، مینجمنٹ ، نرسنگ ، فارمیسی ، بی ایڈ اورایگریکلچر طلاب سے بات چیت کی۔ ورکشاپ کے دوران طلباء کو مراقبہ کی متعدد تکنیکیں سکھائی گئیں جو اس وبائی صورتحال میں صحت کے بحران کے خلاف لڑنے کے لئے اپنی داخلی طاقت کو مضبوط رکھ سکتی ہیں۔ ڈاکٹر پنج نے طلباء سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اس پروگرام سے تناؤ کے انتظام ، بہتر موڈ اور مثبت رویہ،یادداشت میں اضافہ ، بہتر صحت اور اچھے تعلقات میں مدد مل سکتی ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ مراقبہ کے دوران آپ اپنی توجہ مرکوز کرتے ہیں اور خیالات کے دھارے کو ختم کرتے ہیں جو آپ کے دماغ میں ہجوم اور تناؤ کا سبب بن سکتا ہے۔ڈاکٹر مدار نے سانس لینے کی مختلف مشقوں کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ مراقبہ آپ کو پرسکون ، امن اور توازن کا احساس دلاتا ہے جو آپ کی جذباتی بہبود اور آپ کی مجموعی صحت دونوں کو فائدہ پہنچا سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ طلبہ کی زندگی تناؤ کا شکار ہوسکتی ہے لیکن اس کا مطلب یہ نہیں ہے کہ طلبا کو اپنی زندگی کو دباؤ میں ڈالنے دینا پڑے۔ انہوں نے مشورہ کیا کہ مراقبہ کے ذریعے طلبا نہ صرف تناؤ کو دور کرسکتے ہیں بلکہ ان کی یادداشت کو بھی بہتر بناسکتے ہیں۔
 
 

ویری ناگ حادثے پر اظہار افسوس | قصبے سے بڑی گاڑیوں کی نقل و حمل پر پابندی کا مطالبہ

سرینگر//ٹریفک جام کی وجہ سے ویری ناگ میں چار سالہ بچے کی حادثاتی موت پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے میونسپل کمیٹی ڈورو ویری ناگ کے صدرمحمد اقبال آہنگر نے کہا ہے کہ میونسپل کمیٹی ڈورو ویری ناگ قصبے میں صبح 8بجے سے شام 8بجے تک بڑی گاڑیوں کی نقل وحرکت پر روزانہ پابندی عائد رہے گی۔ انہوں نے علاقے میںرہائش پذیر آبادی سے تعاون کی اپیل کی ہے۔اس دوران شاہ آباد ڈیولپمنٹ فورم کے چیئرمین ظہور ملک نے چار سالہ بچے کی موت پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے انتظامیہ سے اپیل کی کہ قصبے سے ٹریفک کی نقل و حرکت پر پابندی لگائی جائے۔ 
 
 

پی ڈی پی کا عارف لائیگرو سے اظہار تعزیت

سرینگر//پی ڈی پی نے پارٹی کے یوتھ لیڈر عارف لائیگرو کے قریبی رشتہ دار غلام حسن چودھری ساکن باغات کے انتقال پر تعزیت کا اظہار کیا ہے۔پارٹی کے نائب صدر اے آر ویری، جنرل سیکریٹری غلام نبی لون ہانجورہ ،صدر ضلع سرینگر محمد خورشید عالم پارٹی سیکریٹری عبدالحمید کوشین پارٹی میڈیا سربراہ سہیل بخاری،یوتھ صدر وحید پرہ اور پارٹی لیڈر عبدالرئوف بٹ نے بھی تعزیت کا اظہار کیا ہے ۔