مزید خبرں

کووڈ سے متاثر لاش چھیننے کا معاملہ 

منجا کوٹ پولیس سٹیشن میں کیس درج 

سمت بھارگو 
راجوری //جموں وکشمیر پولیس نے تحصیل منجا کو ٹ میں کووڈ سے متاثر ہ خاتون کی لاش چھیننے کی کوشش کرنے پر معاملہ درج کر کے مزید تحقیقات شروع کر دی ہیں ۔منجا کوٹ کے کلالی علاقہ میں گزشتہ دنوں ایک خاتون کی موت کووڈ کی وجہ سے ہو گئی تھی تاہم محکمہ صحت کی ایک ٹیم کو لاش کے ساتھ آخری رسومات کیلئے بھیجا گیا تاہم لواحقین نے مبینہ طورپر میڈیکل ٹیم سے لاش کو چھیننے کی کوشش کی ۔انتظامیہ نے بتایا کہ لواحقین لاش کو چھیننے کر خود آخری رسومات ادا کر نا چاہتے تھے تاہم معاملہ کی جانکاری موصول ہونے کے ساتھ ہی پولیس اور سیول انتظامیہ کے اعلیٰ آفیسران موقعہ پر پہنچے اور لاش کو اپنی تحویل میں لیا جس کے بعد انتظامیہ کی جانب سے خاتون کی آخری رسومات ادا کر دی گئیں ۔اس سلسلہ میں پولیس سٹیشن منجا کوٹ میں ایک کیس درج کرلیا گیا ہے ۔ایس ایس پی راجوری شیما قصاب نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ منجا کوٹ پولیس سٹیشن میں اس سلسلہ میں ایک کیس درج کرلیا گیا ہے جبکہ مزید تحقیقات شروع کر دی گئی ہیں ۔
 
 
 

کووڈ بندشوں کی خلاف ورزی 

پونچھ میں 38کیس درج کئے گئے 

جاوید اقبال +سمت بھارگو 
پونچھ //سرحدی ضلع پونچھ میں کووڈ لاک ڈائون کی خلاف ورزی کرنے والوں کیخلاف پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے مختلف پولیس سٹیشنوں میں 38کیس درج کئے ہیں جبکہ اس سلسلہ میں بھاری جرمانہ بھی عائد کیا گیا ہے ۔ایس ایس پی پونچھ ڈاکٹر ونود کمار نے بتایا کہ مختلف پولیس سٹیشنوں اور پولیس چوکیوں میں تعینات پولیس آفیسران و وہلکاروں کی خصوصی ٹیمیں تشکیل دی گئی تھی ۔انہوں نے بتایا کہ ایڈیشنل ایس پی کی زیر نگرانی قائم کر دہ ٹیموں نے مختلف علا قوں میں قاعدہ کیخلاف ورزی کرنے والوں کیخلاف کارروائی عمل میں لائی ۔آفیسر موصوف نے بتایا کہ پورے دن چلائی گئی مہم کے دوران کئی ڈرائیوں اور دکانداروں کیخلاف حکم نامے کیخلاف ورزی کرنے پر کارروائی عمل میں لائی گئی ۔انہوں نے بتایا کہ ضلع میں 218افراد کو بغیر ماسک کا استعمال کئے ہوئے پکڑا گیا جبکہ اس دوران مذکورہ افراد کو مجموعی طورپر 43ہزار 6سو روپے جرمانہ بھی کیا گیا ۔مینڈھر سب ڈویژن میں ایس ڈی پی او کی قیادت میں کئی گئی کارروائی کے دوران 23ہزار 2سو روپے جرمانہ جبکہ 11معاملات بھی درج کئے گئے ہیں ۔پولیس نے لوگوں کو ہدایت جاری کرتے ہوئے کہاکہ وہ بغیر ماسک کا استعمال کئے پُر ہجوم جگہوں پر نہ جائیں جبکہ قاعدہ کی خلاف ورزی کرنے والوں کیخلاف سخت کارروائی عمل میںلائی جائے گی ۔
 
 

منی آکسیجن پلانٹ نصب کرنے کا عمل شروع 

سمت بھارگو 
راجوری //گور نمنٹ میڈیکل کالج راجوری میں آکسیجن پلانٹ لگانے کا عمل شروع کر دیا گیا ہے تاکہ کووڈ مریضوں کو آکسیجن دستیاب ہو سکے ۔پلانٹ کو حال ہی میں گور نمنٹ میڈیکل کالج میں منتقل کیا گیا تھا تاکہ آکسیجن کی قلت کو پورا کیا جاسکے ۔حکومت ن متعلقہ ایجنسی کو حکم جاری کرتے ہوئے کہاکہ وہ پلانٹ کو نصب کرنے کا کام جلدازجلد پورا کرئے تاکہ کووڈ میں مبتلا شدید بیمار مریضوں کو جلداز جلد آکسیجن دستیاب ہو سکے ۔گور نمنٹ میڈیکل کالج راجوری کے سپر ناٹینڈنٹ ڈاکٹر محمود بجاڑ نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ مشینری کی پیکنگ کو کھولنے کا عمل شروع کر دیا گیا ہے تاکہ اس کو جلدازجلد نصب کیا جاسکے ۔انہوں نے امید ظاہر کرتے ہوئے کہاکہ حالیہ کچھ دنوں میں راجوری میں آکسیجن پلانٹ کام کرنا شروع کر دے گا ۔
 

راجوری میں 60کووڈ مریض زیر علاج 

سمت بھارگو 
راجوری //گور نمنٹ میڈیکل کالج راجوری میں اس وقت کووڈ سے متاثر کل 60مریض زیر علاج ہیں جبکہ ان میں سے کئی ایک کی حالت تشویش ناک بھی ہے ۔ہسپتال کے ذرائع کے مطابق اس وقت میڈیل کالج میں ہر عمر کے کووڈ مریض زیر علاج ہیں جبکہ ان میں سے کئی ایک کو آکسیجن کی سپورٹ بھی فراہم کی گئی ہے جبکہ کچھ ایک مریضوں کی حالت تشویش ناک بھی ہے ۔میڈیکل کالج راجوری کے سپرناٹینڈنٹ ڈاکٹر محمود بجاڑ نے اس بات کی تصدیق کرتے ہوئے کہاکہ کووڈ مریضوں کیلئے علیحدہ بنائی گئی وارڈمیں اس وقت 60مریض زیر علاج ہیں جبکہ ہسپتال انتظامیہ مریضوں کو معیاری سہولیات فراہم کرنے کیلئے لگاتار کوششیں کررہی ہے ۔انہوں نے بتایا کہ اتوار کی صبح تین مریض صحت یاب ہو گئے ہیں جبکہ اب ان کی ہسپتال سے چھٹی کر دی گئی ہے ۔
 
 

۔3کلو میٹر سڑک 11برسوں میں مکمل نہیں ہوسکی

۔1ہزار سے زائد آبادی متاثر ،سڑک کا حلیہ ہی تبدیل کردیاگیا 

جاوید اقبال 
مینڈھر //مینڈھر سب ڈویژن کی پنچایت کانگڑھ گلہوتہ میں محکمہ تعمیرات عامہ کی جانب سے 11برسوں میں محض 3کلو میٹر سڑک بھی مکمل نہیں کی جاسکی جس کی وجہ سے مذکورہ علاقہ کی 1ہزار سے زائد آبادی متاثر ہو رہی ہے ۔مکینوں نے محکمہ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہائے کہاکہ ہائی سکول کیری تا محلہ قریشیاں 3کلو میٹر سڑک کی تعمیر کا کام 2010میں شروع کیا گیا تھا لیکن صرف کٹائی کے بعد پروجیکٹ کو ہی چھوڑ دیا گیا ہے جس کی وجہ سے کٹائی والی جگہ اب ایک عام راستہ بن چکی ہے جبکہ مقامی لوگ پیدل سفر کرنے پر مجبور ہو چکے ہیں ۔مکینوں نے محکمہ تعمیرات عامہ پر الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ محکمہ نے فنڈز ہڑپنے کیلئے صرف زمینی کٹائی کی جس کے بعد پروجیکٹ کو پوری طرح سے چھوڑ ہی دیا گیا ہے ۔انہوں نے بتایا کہ اس جدید دور میں بھی وہ مریضوں کو کئی کلو میٹر تک چارپائیوں پر اٹھا کر سڑک تک منتقل کرتے ہیں جبکہ مقامی سطح پر شروع کر دہ پروجیکٹ 11برسوں بعد مکمل ہونے کے بجائے ٹھپ ہی پڑ گیا ہے جس کی وجہ سے اب و اپنی زمینوں میں ٹریکٹر بھی نہیں لے جاسکتے ۔مکینوں نے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ پروجیکٹ کو جلدازجلد مکمل کرنے کیساتھ ساتھ محکمہ تعمیرات عامہ کی جانب سے خرچ کئے گئے فنڈز کا معائینہ کیاجائے۔
 
 
 

دریالا گائوں کی 4کلو میٹر سڑک برسوں بعد تشنہ تکمیل 

رمیش کیسر 
نوشہرہ //سب ڈویژن نوشہرہ کے دریالا گائوں میں محکمہ تعمیرات عامہ کی جانب سے تعمیر کی جارہی ایک سڑک کو گزشتہ کئی برسوں سے مکمل ہی نہیں ہو سکی جس کی وجہ سے ہزاروں کی تعداد میں مکینوں کو دوران آمد ورفت شدید مشکلات کاسا منا کرناپڑرہا ہے ۔مکینوں نے الزام عائد کرتے ہوئے کہاکہ 4کلو میٹر سڑک کومکمل کرنے میں غیر سنجیدگی کا مظاہرہ کیا جارہا ہے ۔عام لوگوں نے بتایا کہ سڑک کی تعمیرا ت کو محکمہ نے غیر ضروری طور پر روک دیا جس کی وجہ سے علاقہ کی ایک بڑی آبادی متاثر ہو رہی ہے جبکہ اس کے ساتھ ساتھ سڑک کے کناروں پر نہ ہی نالیوں کا کوئی بندوبست کیا گیا ہے او ر نہ ہی حفاظتی باندھ تعمیر کئے گئے ہیں ۔انہوں نے بتایاکہ سڑک کہ نامکمل رہنے کی وجہ سے کم ازکم دو ہزار کی آبادی متاثر ہو رہی ہے جبکہ اس سلسلہ میںکئی مرتبہ متعلقہ محکمہ سے بھی رجوع کیا گیا لیکن ابھی تک عملی طورپر کوئی قدم نہیں اٹھایا گیا ہے ۔مکینوں نے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ سڑک کو جلدازجلد مکمل کیاجائے تاکہ ان کی مشکلات حل ہو سکیں ۔متعلقہ محکمہ کے ایگز یکٹو انجینئر نے بتایا کہ سڑ ک کو ڈسٹر کٹ پلان میں رکھا گیا ہے ۔انہوں نے بتایا کہ فنڈز کی قلت کی وجہ سے ابھی تک مذکورہ پروجیکٹ مکمل نہیں ہو سکا ۔