مزید خبرں

خطہ پیر پنچال کے بیشتر حصوں میں آندھی و تیز بارشیں 

فصلوں کیساتھ ساتھ کئی رہائشی مکانات کو بھی جزوی نقصان پہنچا

عظمیٰ یاسمین +بختیار حسین 
تھنہ منڈی +سرنکوٹ // خطہ پیر پنچال کے اکثر علاقوں میں ہوئی شدید بارشوں کیساتھ ساتھ چلی آندھی کی وجہ سے فصلیں ،پنیری اور میوہ جات کے ساتھ ساتھ کئی ایک رہائشی مکانات کو بھی نقصان پہنچا ہے ۔11 جون کے بعد ایک مرتبہ پھر خطہ پیر پنچال کے بیشتر علاقوں میں وقفے وقفے سے موسلا دھار بارشوں اور تیز رفتار ہواؤں نے تباہی مچا کر رکھ دی ہے۔ اس موسمی صورتحال کے باعث کئی مکانات کی چھتیں اور دیواریں گر گئیں جبکہ کئی درختوں کو بھی تیز ہواؤں نے جڑوں سے اکھاڑ پھینکا ہے۔ قصبہ تھنہ منڈی کے کئی دیہات میں بارشوں اور تیز ہواؤں کا سلسلہ جاری ہے جس سے عام زندگی متاثر ہو کر رہ گئی ہے۔تھنہ منڈ ی کے الال ،درہ ،برہرن، کھنیال کوٹ ، ڈھوک اور منگوٹہ وغیرہ میں شدید بارش اور تیز ہوائوں نے کئی مکانات کی دیواریں اور چھتیں گرادی ہیں جبکہ کئی درختوں کو بھی شدید نقصان پہنچا ہے۔ اس دوران کسی جانی نقصان کی کوئی خبر نہیں ہے ۔موسم کی خرابی کی وجہ سے کئی علاقوں میں بجلی سپلائی متاثر ہوئی ہے جبکہ کچھ علاقوں میں بجلی کی مشینری کو بھی نقصان پہنچا ہے ۔ سرپنچ پنچایت درہ برہون عقیل احمد نے کہا کہ خطہ پیر پنچال کے بیشتر علاقوں میں شدید طوفان، بارش اور ژالہ باری سے تباہی مچ گئی۔انہوں نے بتایا کہ تازہ بوائی کی گئی فصلوں کیساتھ ساتھ دھان ودیگر فصلوں کی پنیری کو بھی نقصان پہنچا ہے ۔پنچایتی اراکین و معززین نے ضلع انتظامیہ سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ فصلوں ودیگر نقصان کا تخمینہ لگا کر ان کو معاوضہ دیا جائے ۔اسی طرح سرنکوٹ کے متعدد علاقوں میں ہوئی تیز بارش کے علاوہ آندھی کی وجہ سے کئی ایک رہائشی مکانات کو جزوی نقصان پہنچا ہے ۔کئی علاقوں میں بجلی کی تاریں ٹوٹنے کیساتھ ساتھ کھمبے بھی گرگئے ہیں ۔ روایت حسین نامی شخص نے بتایا کہ طوفانی بارش اور آندھی نے غریب لوگوں کا شدید نقصان کیا ہے ۔سرنکوٹ کے سنئی علاقہ میں ایک درخت رہائشی مکان پر گر گیا تاہم اس سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ۔مکینوں نے متاثرین کو معاوضہ دینے کا مطالبہ کیا ۔
 
 
 

ہسپلوٹ علاقہ میں تیندوے کا خوف 

عظمیٰ یاسمین
 تھنہ منڈی //تحصیل تھنہ منڈی کے ہسپلوٹ علاقے میں تیندویکی موجودگی کی وجہ سے عام لوگوں میں خوف و ہراس پیدا ہو گیا ہے جبکہ اس دوران جنگلی جانوار نے علاقہ میں دو بھیڑیں بھی ہلاک کر دی ہیں ۔مکینوں نے بتایا کہ علاقے میں اتوار اور پیر کی درمیانی شب ایک تیندوا تھنہ منڈی کے ڈھکیاں علاقے میں داخل ہو گیا جس نے وہاں کم سے کم دو بھیڑوں کو ہلاک کر دیا۔ مویشیوں کی آواز سن کر مقامی لوگ موقعہ واردات پر پہنچ گئے لیکن تب تک تیندوا ان کی دو بھیڑوں کو ہلاک کر چکا تھا۔مکینوں نے بتایا کہ پچھلے کئی دنوں سے دن رات تیندوا اس علاقے میں موجود ہے جس کی موجودگی سے لوگوں میں خوف و ہراس پایا جارہا ہے۔انہوں نے محکمہ وائلڈ لائف سے اپیل کی ہے کہ اس تیندوے کو جلد ازجلدقابو کیا جائے تاکہ کوئی بڑا نقصان ہونے سے بچا جا سکے۔
 

کونسل چیئر مین راجوری اور ڈی سی کا اجلاس منعقد 

عوامی فلاح و بہبود کیلئے آپسی اشترا ک سے کام کرنے پر اتفاق 

سمت بھارگو 
راجوری //ضلع ترقیاتی کونسل چیئر مین راجوری اور ضلع ترقیاتی کمشنر کے مابین ایک اجلاس منعقد ہوا جس میں دونوں نے عوامی فلاح و بہبود کیلئے آپسی اشتراک سے کام کر نے پر اتفاق کیا ۔غور طلب ہے کہ دونوں کے مابین حالیہ دنوں میں نوک جھوک اس وقت سامنے آئی تھی جبکہ ضلع ترقیاتی کونسل چیئر مین نسیم لیاقت کے نیشنل کانفرنس کے کچھ لیڈران کے ہمراہ راجوری میں ایک پریس کانفرنس کر کے لیفٹیننٹ گورنر انتظامیہ سے مانگ کی تھی کہ ضلع ترقیاتی کمشنرر اجوری کو جلدازجلد ضلع سے تبدیل کیا جائے تاہم پیر کے روز ضلع ترقیاتی کونسل چیئر مین و دیگر اراکین اور ضلع ترقیاتی کمشنر راجوری کے مابین ایک اجلاس منعقد ہوا جس میں تمام مسائل کو حل کر دیا گیا ۔اجلاس کے دوران ضلع ترقیاتی کمشنر نے کونسل کو یقین دلاتے ہوئے کہاکہ تمام مسائل کو حل کرنے کیلئے آپسی اشتراک کیساتھ کام کیا جائے گا ۔بعد میں ضلع ترقیاتی کونسل چیئر مین نے کہاکہ سیول انتظامیہ اور ضلع ترقیاتی کونسل عوامی مسائل کو حل کرنے کیلئے یکساں پلیٹ فارم پر یکجا ہو کر کام کرئے گی ۔
 

منجا کو ٹ کے سرحدی علاقوں میں بنکروں کی تعمیر کئی ماہ سے بند 

پرویز خان
منجا کوٹ //تحصیل منجا کوٹ کے سرحدی علا قوں میں بنکروں کی تعمیر گزشتہ کئی ماہ سے بند ہو گئی ہے جس کی وجہ سے ٹھیکیداروں ،مزدوروں اور عام لوگوں کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔مکینوں نے بتایا کہ حد متارکہ کے قریب آباد لوگوں کی حفاظت کیلئے انتظامیہ کی جانب سے بنکروں کی تعمیر کا عمل شروع کیا گیا تھا لیکن گزشتہ ایک برس سے مذکورہ عمل بند ہو گیا ہے ۔انہوں نے کہاکہ حالانکہ دونوں ممالک کے مابین اس وقت حالات خوشگوار ہیں تاہم سرحدوں پر دونوں ممالک کی افواج کے مابین فائرنگ شروع ہونے کا کوئی وقت نہیں ہے تاہم انتظامیہ کو چاہئے کہ وہ اس وقت کو استعمال کر کے بنکروں کو جلدازجلد مکمل کرئے ۔انہوں نے بتایا کہ سرحدی علاقوں میں بنکروں کی تعمیر انتظامیہ کی جانب سے سریا اور سیمنٹ نہ فراہم کرنے کی وجہ سے ایک برس سے بند پڑا ہوا ہے جبکہ تعمیرات کو دوبارہ سے شروع کرنے کیلئے کئی مرتبہ انتظامیہ سے رجوع کیا گیا لیکن محض یقین دہانیوں کے کوئی عملی اقدامات نہیں اٹھائے گئے ۔غور طلب ہے کہ مذکورہ بنکروں کی تعمیر مکمل نہ ہونے کی وجہ سے ٹھیکیدار کی ادائیگیاں بھی نہیں ہو سکی ہیں جبکہ ادائیگیاں نہ ہونے کی وجہ سے مزدوروں بھی پریشان ہیں ۔مزدور طبقہ نے انتظامیہ سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ تعمیرات کو جلد مکمل کرنے کیلئے اقداما ت اٹھائے جائیں تاکہ ان کو ادائیگیاں ہو سکیں ۔مکینوں نے جموں وکشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر سے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ وہ مذکورہ معاملہ میں مداخلت کریں تاکہ ان کی دقتیں کم ہو سکیں ۔
 
 

خطہ پیر پنچال کو صوبے کا درجہ دینے کی مانگ 

جاوید اقبال 
مینڈھر //خطہ پیرپنچال بالخصوص مینڈھر کے معززین نے مرکزی حکومت سے مطالبہ کرتے ہوئے کہاکہ خطہ پیرپنچال کو صوبے کا درجہ دیا جائے تاکہ عوامی مشکلات کو حل کرنے میں مدد مل سکے ۔انہوں نے کہاکہ رواں دنوں میں جموں وکشمیر کو دوبارہ سے تقسیم کرنے کی افوائیں سوشل میڈیا پر گردش کررہی ہیں تاہم اگر مذکورہ افوائیوں میں کوئی سچائی ہے تو اس سے قبل خطہ پیر پنچال کو صوبے کا درجہ دیا جائے ۔انہوں نے کہاکہ حالیہ کئی عرصہ سے خطہ کی عوام صوبے کے درجے کی مانگ کررہی ہے تاہم انتظامیہ کی جانب سے کوئی دھیان ہی نہیں دیاجارہا ہے ۔مقامی معززین نے کہاکہ پیر پنچال خطہ کا ایک وسیع علاقہ سرحدی ہونے کی وجہ سے عوامی مشکلات میں اضافہ ہوجاتا ہے تاہم انتظامیہ کی جانب سے بھی مذکورہ مشکل کو حل کرنے میں سنجیدگی کا مظاہرہ نہیں کیا گیا ہے ۔انہوں نے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ خطہ کو صوبہ کا درجہ دیا جائے تاکہ پسماندہ خطہ کی عوام کی فلاح و بہبود مکمل ہو سکے ۔