مزید خبرں

الیکشن کمیشن کا سیاسی جماعتوں کے ساتھ اجلاس

پنتھرس پارٹی کی ای وی ایم نظام ختم کرنے کی پرزور اپیل

جموں//الیکشن کمیشن آف انڈیا نے نئی دہلی میں تاریخی اجلاس منعقد کیا جس کی چیف الیکشن کمشنر اوم پرکاش راوت نے صدار ت کی اور اس میں 7قومی جماعتوں سمیت 51 علاقائی جماعتوں نے شرکت کی۔ اس  اجلاس میں انتخابی اصلاحات، انتخابات میں خواتین کی شرکت، انتخابی اخراجات، انتخابی تشہیر کی مدت ، انتخابی ضابطہ اخلاق ، ووٹ ڈالنے کے متبادل نظام، مائگرینٹ رائے دہندگان، اور الیکٹرانک ووٹنگ مشین(ای وی ایم) کے استعمال پر بات چیت ہوئی۔چیف الیکشن کمشنر نے اپنے افتتاحی خطاب میں سیاسی جماعتوں کی قیادت پر مکمل اعتماد اظہار کیا اور یقین دلایا کہ الیکشن کمیشن ان کی تمام مثبت شراکتوں کا احترام کرے گا۔اس اجلاس میں پنتھرس پارٹی کی نمائندگی پارٹی کے سرپرست اعلی پروفیسر بھیم سنگھ اور چیرمین ہرشدیو سنگھ نے کی ۔  پنتھرس پارٹی نے ووٹ دینے کے لئے موجودہ ای وی ایم نظام پر کئی اسباب سے اعتماد نہیں کیا جاسکتا اور رائے دہندگان کو اس نظام پر بھروسہ نہیں ہے۔  پروفیسر بھیم سنگھ نے پرزور طریقہ سے موجودہ ای وی ایم نظام کو ختم کرنے کی اپیل کی جس کی وجہ سے انتظامیہ حکومت میں دباومیں پولنگ میں دھاندلی کرتی ہیں تاکہ حکمراں جماعتوں کے حق میں نتائج آسکیں۔انہوں نے کہاکہ جموں وکشمیر ان ریاستوں میں سے ایک جہاں ای وی ایم میں جوڑ توڑ کی جاتی ہے۔  انہو ںنے پرزور طریقہ سے ای وی ایم نظام کو ختم کرنے کی اپیل کرتے ہوئے جمہوریت کے مفاد اور قانون کی حکمرانی کے لئے سابقہ پولنگ نظام کی حمایت کی۔ انہوں نے کہاکہ جموں وکشمیر کے 60فیصد لوگ ناخواندہ ہیں  جو ای وی ایم کو سمجھ نہیں پاتے۔ انہوں نے ہندستانی آئین میں دیئے تمام بنیادی حقوق جموں وکشمیر میں رہنے والے ہندستانی شہریوں کو بھی فراہم کرانے کا مطالبہ کیا جس سے انہیں بھی ہندستانی آئین میں دی گئی آزادی کا فائدہ مل سکے۔انہوں نے  کہا کہ صدر کے حکم سے، جس کا اختیار انہیں حاصل نہیں تھا، آرٹیکل 35میں Aجوڑے جانے کی وجہ سے جموں وکشنمیر میں رہنے والے ہندستانی شہری اپنے بنیادی حقوق سے محروم ہوگئے۔انہوں نے کہا کہ نہ تو حکمراں اور نہ ہی کسی قانون ساز کو اس بات کا اختیار حاصل ہے کہ جموں وکشمیر میں رہنے والے ہندستانی شہریوں کو ان کے بنیادی حقوق سے محروم کرسکیں جن کی ضمانت ہندستانی آئین میں دی گئی ہے۔
 

مولاناآزادنیشنل اُردویونیورسٹی کے طلباء کیلئے اطلاع 

مولانا ٓزاد نیشنل اردو  یونیورسٹی  اسٹڈی سنٹر جموں س ( سنٹڑ نمبر 043  )  کے طلبہ کو مطلع کیا جاتا ہے کہ  MANUUکے زیر اہتمام چل رہے بی۔اے اور ایم ۔اے کورسز کے کلاسز  بی۔این کالج  سنجواں جموں میں منعقد ہو رہے ہیں۔ لہذا طلباء سے پر زور اپیل ہے کہ اپنی شمولیت کو یقینی بنائیں۔ 
 
 
 

نوجوانوں کونئے ہندوستان کی تشکیل کیلئے سیاست میں حصہ لیناچاہیئے :جتندرسنگھ

بسوہلی میں یوتھ پارلیمنٹ کا اہتمام

سرینگر/ / شمال مشرقی خطے کی ترقیات کے وزیر مملکت (آزادانہ چارج) وزیر اعظم کے دفتر میں وزیر مملکت، عملہ، عوامی شکایات اور پنشن، خلائی امور اور ایٹمی توانائی ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہا ہے کہ حکومت نے جمہوری ضوابط اور اداروں کو تمام افراد کو مساوی مواقع فراہم کرانے کے ذریعے یقینی بنانے کا عہد کررکھا ہے۔ انھوں نے زور دے کر کہا کہ جمہوری نظام اور پارٹی سیاست کو کنبہ پروری اور کنبہ در کنبہ کی سیاست سے مبرا ہونا چاہیے تاکہ عوام انسان خصوصاً نوجوان تعمیر ملک کے کام میں حصہ لے سکیں۔ انھوں نے ان خیالات کا اظہار بھسولی، کٹھوعہ، جموں و کشمیر میں جواہر نوودے ودیالیہ میں منعقدہ یوتھ پارلیمنٹ  سے خطاب کے دوران کیا ہے۔ بانی کے ایم ایل اے جناب جیون لال للہل بھی اس موقع پر موجود تھے۔نوجوانوں سے خطاب کرتے ہوئے جناب سنگھ نے کہا کہ سیاست جمہوری بھارت کی روح اور اس کا جوش و جذبہ ہے اور ضرورت اس بات کی ہے کہ پابند عہد اور محنت کش نوجوان سیاست میں شریک ہوں۔  انھوں نے کہا کہ اس سے نوجوانوں کو ملک کا مستقبل تشکیل دینے میں مدد ملے گی۔ یوتھ پارلیمنٹ میں شرکت کیلئے آئے ہوئے طلبہ کے نظم و ضبط اور حفظ مراتب کے لحاظ کی ستائش کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ پارلیمانوں کو ان نوجوانوں سے ترغیب حاصل کرنی چاہئے۔ انھوں نے کہا کہ سیاست دانوں کی ذمے داری ہے، ساتھ ہی ساتھ پورا سماج بھی اس بات کا ذمے دار ہے کہ ملک کی پارلیمنٹ کے ذریعے طے شدہ معیارات کا لحاظ رکھا جائے اور پوری بردباری، سنجیدگی، جذبہ، ایثار سے کام لیا جائے، جو ہمارے آئین کی روح ہے اور اس ملک کی جمہوری روایات کی امین ہے۔انھوں نے پارلیمانوں سے کہا کہ وہ جاگیردارانہ اندازِ فکر سے باہر آئیں اور عوام الناس کے رابطے میں رہیں۔ انھوں نے کہا کہ آج ملک میں ایک عام انسان ملک کے اعلیٰ ترین سیاسی عہدے تک پہنچنے کا خواب دیکھ سکتا ہے اور یہ صرف جمہوریت کی طاقت ہے۔ انھوں نے کہا کہ یہ نئے بھارت کی صبح ہے، جہاں شہری اپنی صلاحیت کی بنیاد پر، اہلیت اور سخت محنت سے اونچے سے اونچے عہدے تک پہنچ سکتے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ صحیح جمہوریت کا جذبہ یہی ہے۔جواہر نووے ودیالیہ، بھسولی، کٹھوعہ میں منعقدہ یوتھ پارلیمنٹ میں جے این وی کارگل، جے این وی بارہمولہ اور اودھم پور سے آئی ہوئیں تین ٹیموں نے حصہ لیا، جس میں تقریباً 130 طلباء اشامل تھے۔ بائیسواں یوتھ پارلیمنٹ مقابلہ نووے ودیالیہ سمیتی، چنڈی گڑھ خطے میں پارلیمانی امور حکومت ہند کے تال میل سے منعقد ہورہی ہے، تاکہ نوجوانوں اور عوام الناس میں جمہوریت اور پارلیمانی ضوابط کے تئیں بہتر تفہیم پیدا کی جاسکے اور یہ نوجوان سیاسی عمل کا ایک حصہ بن سکیں۔
 
 

منجیت سنگھ پرکیلی فورنیامیں حملہ قابل مذمت :شرومنی اکالی دل 

 حکومت سے معاملہ یوایس اے حکومت کے ساتھ اٹھانے کامطالبہ 

جموں//شرومنی اکالی دل  (بادل ) کی ایک میٹنگ یہاں پارٹی دفترگورودوارہ گورونانک دیوجی چاندنگر جموں میں جتھیدار موہندر سنگھ پارٹی صدرکی قیادت میں منعقدہوئی جس میں صدرڈی ایس جی ایم سی منجیت سنگھ جی پرکیلی فورنیایوایس اے میں ہوئے حملے کی شدیالفاظ میں مذمت کی گئی۔ مقررین نے کہاکہ کیلی فورنیاکے دورے کے دوران کچھ شرپسندعناصرنے منجیت سنگھ پر مذہبی مقام کے احاطے میں تشددکیا۔انہوں نے کہاکہ کچھ سماج دشمن عناصر سکھوں کوتقسیم کرنے کیلئے سازشیں کررہے ہیں۔انہوں نے وزارت خارجہ امورپرزوردیاکہ وہ اس مسئلے کویوایس اے حکومت کے ساتھ زیربحث لاکر قصورواروں کے خلاف سخت سزاکویقینی بنائے۔ انہوں نے منجیت سنگھ کومعقول سیکورٹی فراہم کرنے کابھی مطالبہ کیا۔اس دوران میٹنگ میں ایس ۔سچونت سنگھ ۔ایڈوکیٹ سریندرسنگھ ، سریندرسنگھ وزیر ، ایچ ایس رینہ ،سکھ دیوسنگھ کامریڈ، ببوسنگھ ۔روشن سنگھ ودیگران بھی موجودتھے۔
 
 
 

ستواری میں اوٹی آرنامی ریسٹورنٹ کاافتتاح

جموں//اایئرپورٹ نہارسنگھ کمپلیکس رانی باغ ستواری کے نزدیک اوٹی آر ،ایک پرائیویٹ ریسٹورنٹ کاافتتاح سینئرکانگریس لیڈر رمن بھلہ نے کیا۔اس موقعہ رمن بھلہ نے ربن کاٹ کرریسٹورنٹ کے مالک کومبارکبادپیش کی ۔انہوں نے کہاکہ نوجوانوں کواپنے خودروزگاریونٹ قائم کرنے کی ضرورت ہے اوریہ بہت اچھی کوشش ہے کہ خودروزگارکے سلسلے میں یہ اچھی پیش رفت ہے۔انہوں نے شرماکے تئیں نیک توقعات پیش کیں۔انہوں نے کہاکہ ایسے یونٹوں سے نوجوانوں کوروزگارکے مواقعے ملتے ہیں۔یہاں جاری پریس ریلیزکے مطابق اوٹی آریسٹورنٹ سے ہندوستانی اورچائنیز ویجی ٹیرین اورنان ویجی ٹیرین 200اقسام کے کھانے دستیاب ہوں گے۔ساحل شرمانے کہاکہ یہاںپرکوئی بھی آکر ناشتہ ،دوپہراوررات کاکھاناکھاسکتاہے۔
 

جموں کشمیرنالج نیٹ ورک کے زیراہتمام طلباء کیلئے لیکچر

 سخت محنت ،لگن اوربہترحکمت کامیابی کیلئے لازمی :فضل حسیب

جموں//جموں کشمیربورڈ آف سکول ایجوکیشن ،جموں نے جموں کشمیرنالج نیٹ ورک کے زیراہتمام طلباء کیلئے لیکچرکااہتمام کیا۔اس دوران پروگرام کی نگرانی پروفیسروینا پنڈتا چیئرپرسن جے کے بورڈآف سکول ایجوکیشن ،طفیل متو سٹیٹ پراجیکٹ ڈائریکٹر سماگرا شکھشاابھیان جے اینڈکے اورڈاکٹرفاروق احمدپیرسیکریٹری جے کے بوس اورڈاکٹر یاسرحمید سروال اسسٹنٹ ڈائریکٹر جے کے بوس نے کی۔اس دوران جے کے کے این کی ٹیم نے تحریکی لیکچرکے دوران یوپی ایس سی امتحان میں کامیاب ہونے والے فضل حسیب کومدعوکیاتھا۔انہوں نے یوپی ایس سی امتحان میں 36واں مقام حاصل کیاتھا۔ اس دوران فضل حسیب نے 16 سکولوں کے طلباء کے ساتھ تبادلہ خیال کیا۔انہوں نے طلباء پرمحنت ،لگن کے ساتھ تعلیم حاصل کرنے پرزوردیا۔انہوں نے اپنے بارے میں بتایاکہ اس نے مائٹ جموں سے الیکٹرانکس اینڈکمیونی کیشن میں انجینئرنگ کی تھی اوراس کے بعدلگن کے ساتھ پڑھائی کی اوربالآخر یوپی ایس سی امتحان میں کامیابی حاصل کی۔انہوں نے کامیابی حاصل کرنے سے متعلق مختلف نکات بھی طلباء کے ساتھ مشترک کیے۔ انہوں نے کہاکہ سخت محنت اوربہترحکمت عملی ضروری ہے۔ 
 
 
 

غلام حسین ضیاء کے ایصال وثواب کیلئے دعائیہ مجلس آج

جموں// سماجی شخصیت اور سابقہ ڈائریکٹر ریڈیو کشمیرسرینگر چوہدری غلام حسین ضیا کے ایصال وثواب کیلئے ایک دعائیہ مجلس ان کی آبائی رہائش گاہ واقع رائے پورکھیری ،بن تالاب میں آج منعقدکی جارہی ہے۔واضح رہے کہ چوہدری غلام حسین ضیاء19 اگست کی شام کوسرینگرمیں دِل کادورہ پڑنے سے انتقال کرگئے تھے۔ خاندانی ذرائع نے بتایاکہ مرحوم کے ایصال وثواب کیلئے دسویں کے موقعہ پردعائیہ مجلس کااہتمام کیاجارہاہے ۔غلام حسین ستربرس کی عمرمیں انتقال کرگئیتھے اوروہ ریاست جموں کشمیر کی ان معروف شخصیات میں شمارہوتے تھے۔
 

عالم اسلام کے جذبات مجروح کرنے کی مذمت 

جموں// مسلم پرسنل لا بورڈ جموں کے صوبائی صدر و سرپرست اعلیٰ ادارہ اسلامیہ فاطمۃالزہراہ سدرہ جموں مولانا مفتی نذیر احمد قادری نے ہالینڈ کی طرف سے حضور ؐ کے خاکے شائع کرنے کی شدید مذمت کی ہے۔مفتی نذیراحمدقادری نے ایک پریس بیان میں کہا کہ اسلام۔ دشمن طاقتیں مسلمانوں کا امتحان نہ لیں ۔انہوں نے کہا کے مسلمانوں کو اتنا کمزور بھی نہ سمجھاجائے۔ مسلمان اپنے نبی ؐکی عزت کی خاطر جان دینے اور جان لینے سے بھی گہریز نہیں کریں گے۔انہوں نے کہاکہ اگر ہالینڈ کی حکومت نے  حضورؐ کے خاکے شائع کرنے والے  شیطان پر لگام نہیں لگائی تو اس کو اس صفہ ہستی سے مٹانے کے لیے کئی غازی پیدا ہوں گے جیسے پاکستان میں ایک شیطان گورنر نے ہمارے نبی حضور ؐ کی شان میں گستاخی کی تھی تو اس کو غازی ممتاز قادری نے نیست و نابود کردیا تھا۔ اسی طرح ہالہنڈ کے شیطان کو بھی مسلمانوں کے غازی تیار ہو چکے ہیں اگر اْس شیطان صفت شخص نے اپنے ناپاک عزائم ترک نہیں کیے تووہ  اپنا انجام بھگتنے کو تیار رہے۔ مفتی نذیرقادری نے ہندوستان کی حکومت سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے ملک کی حکومت بھی ہالینڈ کی حکومت کو اس بات پر مجبور کرے کے اس شخص پر پابنی عاید کرے نو نبیؐ کی شان میں گستاخی کررہا ہے۔
 
 

رفیوجیوں کاوفد صوبائی ری ہیبلی ٹیشن افسرسے ملاقی

جموں//آل جے اینڈکے پی اوجے کے 1947 شرنارتھی انٹلیکچول فورم کے ایک وفدنے ایڈوکیٹ امریک سنگھ کی قیادت میں صوبائی ری ہیبلی ٹیشن افسر(پی آراو)جموں سے ملاقات کی ۔اس دوران فورم نے رفیوجیوں کو ایکس گریشیا گرانٹ مبلغ 5.50لاکھ روپے جومرکزی حکومت سے پی اوجے کے 1947 شرنارتھیوں کے حق میں منظورہوئی ہے کوحاصل کرنے میں دستاویزات فراہم کرنے میں آرہی پریشانیوں کے بارے میں جانکاری دی۔اس دوران پی آراوجموں کے ساتھ تمام مسائل کوفرداً فرداً بتایاگیا۔ وفدنے کم ازکم دستاویزات رکھنے پرزوردیا۔ اس کے علاوہ لینڈمافیہ،بلیک میلروں اورایجنٹوں سے دوررہنے کیلئے کہاگیا۔ اس دوران پی آراو نے مسائل کواطمینان سے سنااوران کے ازالہ کی یقین دہانی کرائی۔اس دوران وفدمیں ایس رمنیک سنگھ ،ایس فتح سنگھ، ایس راجہ سنگھ آل ڈی جی پی سی ممبران ایس پرمجیت سنگھ ،سابق کارپوریٹر ،ایس جرنیل سنگھ خالصہ جنرل سیکریٹری ڈی جی پی سی سانبہ اورکلدیپ سنگھ ،ایس ۔بھوپندرسنگھ،ایس پرمجیت سنگھ شنگھاری ، ایس وریام سنگھ،ایس جگجیت سنگھ ودیگران شامل تھے۔
 
 

جموں یونیورسٹی آفیسرس ایسوسی ایشن کے انتخابات منعقد

ایس راجندرسنگھ صدراورڈاکٹرسمیتاشرما جنرل سیکریٹری نامزد

جموں//جموں یونیورسٹی آفیسرس ویلفیئر ایسوسی ایشن نے متفقہ طورپر ایس راجندرسنگھ اورڈاکٹر سمیتاشرما کوبالترتیب صدراورجنرل سیکریٹری نامزد کیاجبکہ اشونی کمار کونائب صدر، دھرتکاسنگھ کوخزانچی ،ڈاکٹر رینو بھائی ،ڈاکٹر بھارت بھوشن اورونود گپتاکوایگزیکٹیوممبران چناگیا۔نئی تشکیل دی گئی اکائی ایک سال کیلئے ہوگی ۔تنظیمی انتخابات پروفیسرکلونت سنگھ ،ہیڈڈیپارٹمنٹ آف لاء ،جموں یونیورسٹی کی جانب سے کروائے گئے۔
 
 

خانہ بدوش نوجوان کو اذیتیں دینے کا معاملہ 

کٹھوعہ پولیس نے مغوی نوجوان کوبازیاب کرلیا

نیوڈیسک 
جموں// سوشل میڈیاپر ایک نوجوان شوکت علی ساکن مرہین راج باغ کاویڈیووائرل ہونے کے بعد راج باغ پولیس سٹیشن نے اس پرکاروائی عمل میں لائی۔پولیس نے متعلقہ دفعات کے تحت ایک کیس درج کرنے کے بعد ایک خصوصی ٹیم دی جس نے مختلف مقامات پر متاثرہ نوجوان کوتلاش کرنے کیلئے چھاپے مارے اوربالآخرپولیس نے کوری پونو علاقہ سے متاثرہ نوجوان جسے تشددکاشکاربنانے والوں نے اغواکیاتھاکوبازیاب کرایا اوراسے نامعلوم افرادکے پاس رکھاگیا۔پولیس نے اس معاملے میں ملوث افرادکودبوچنے کیلئے کاروائی شروع کردی ہے۔تفصیلات کے مطابق ایک خانہ بدوش شخص کو اس خاتون کے اہل خانہ کی طرف سے زد و کوب کرنے کا ایک ویڈیو منظر عام پر آیا ہے جسے لے کر وہ فرار ہو گیا تھا۔ذرایع کے مطابق ضلع کٹھوعہ کے منیاری گائوں کا شوکت علی نامی شخص 16اگست کو جیلو نام کی ایک عورت کے ساتھ ریاستی ہائی کورٹ میں شادی کرنے کے بعد لاپتہ ہو گیا تھا۔ 33اور36سیکنڈ کے دو ویڈیو کلپ منظر عام پر آئے ہیں جن میں ایک شخص کی بری طرح سے مار پیٹ کی جا رہی ہے جب کہ وہ رحم کی بھیک مانگتا ہوا دکھائی دیتا ہے ۔ ایک ویڈیو میں اسے الٹا لٹکا کر کھلے عام تشدد کیا جا رہا ہے ۔ ایس ایس پی موصوف نے خبر رساں ایجنسی کو بتایا کہ پولیس نے اس ویڈیو کا سنجیدہ نوٹس لیا ہے کہ معتوب شخص کی بازیابی اور ملزمان کی گرفتاری کے لئے تین خصوصی دستے تشکیل دئیے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کچھ عرصہ قبل لڑکی کے اہل خانہ کی طرف سے معتوب شخص کے خلاف اغوا کی شکایت درج کروائی تھی تو پولیس نے لڑکی برآمد کر کے والدین کے سپرد کر دی تھی۔ اب ایک نئی ایف آئی آر درج کروائی گئی ہے جس میں لڑکی کے گھر والوں نے اس کے اغوااور حبس بے جا میں رکھنے کا الزام لگایا تھا۔ 24اگست کو جسٹس دھیرج سنگھ ٹھاکر نے ایس ایس پی کٹھوعہ کو ہدایت دی تھی کہ شوکت علی اور اس کی بیوی کو ہر ممکن تحفظ فراہم کیا جائے۔ یہ ہدایات لڑکے کے والد کی طرف سے ہائی کورٹ میں دائر عرضی کی سماعت کے دوران لڑکے اور لڑکی کے دفعہ 164کے تحت بیانات درج کرنے کے بعد دی گئی تھی۔ جسٹس ٹھاکور نے 14اگست کو عدالت میں حاضری کے بعد اغوا کئے جانے کا سنجیدہ نوٹس لیا تھا، اس روز لڑکی نے عدالت عالیہ کو بتایا تھا کہ اس نے اپنی مرضی سے شوکت علی کیساتھ شادی کی ہے ۔ ہائی کورٹ نے ایس ایس پی کو ایک ہفتہ کے اندر جواب دینے کی ہدایت دی ہے۔