مزید خبرں

سرنکوٹ میں این سی یوتھ کی میٹنگ منعقد

بختیا رحسین 
 
سرنکوٹ //سرنکوٹ میں نیشنل کانفرنس یوتھ کی ایک میٹنگ منعقد ہوئی جس کی صدارت یوتھ کے صوبائی سیکریٹری اویس بخاری نے کی ۔ میٹنگ میں طاہر مرزا،شیراز ملک ،سکندر نورانی ،طاہر مغل ، فردوس خواجہ ، مختار زرگر، یاسر خان،ہارون خان، عاسر منہاس ، سٹوڈنٹ یونین صدر مجتبیٰ خان ،ایڈووکیٹ رومن منہاس وغیرہ بھی موجو دتھے ۔اس موقعہ پرتنظیمی امور پر تبادلہ خیال کیاگیااور ساتھ ہی 35اے پر معاملے پر بھی بات چیت ہوئی ۔کارکنان نے اس بات پر زور دیاکہ دفعہ 35اے پر جدوجہد کی جائے گی اور اس کے تحفظ کو یقینی بنایاجائے گا۔ انہوں نے کہاکہ اگر اس دفعہ کو ہٹانے کی غلطی کی گئی تو ریاست کے حالات ابتر ہوجائیں گے اور خطرناک نتائج کا سامناکرناپڑے گا۔انہوں نے کہاکہ نیشنل کانفرنس کو مزید مضبوط بنانے کی کوشش کی جائے اور ایسا نوجوان ہی کرسکتے ہیں ۔کارکنا ن نے گورنر انتظامیہ پر زور دیاکہ پہاڑی طبقہ کے مسائل حل کرنے کیلئے سنجیدگی سے اقدامات کئے جائیں اور دیرینہ مطالبے کو پورا کرتے ہوئے شیڈیول ٹرائب کادرجہ دیاجائے ۔
 

’تصّوف:معنی اور معنویت“ 

راجوری یونیورسٹی میںپروفیسر اختر الواسع کا لیکچرآج 

راجوری //باباغلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی راجوی لیکچر سیریز کے تحت آج صبح دس بجے ”تصّوف:معنی اور معنویت“کے موضوع پر ایک لیکچر کا اہتمام کررہی ہے جس میں پدم شری پروفیسر اختر الواسع لیکچر دیں گے جبکہ وائس چانسلر پروفیسر جاوید مسرت مہمان خصوصی ہوں گے۔یہاں جاری بیان کے مطابق پروفیسر اختر الواسع جامعہ ملیہ اسلامیہ نئی دہلی میں شعبہ اسلامک اسٹڈیز میں پروفیسر، صدر شعبہ اور ڈین رہ چکے ہیں اوروہ قومی کونسل برائے فروغ اردو زبان نئی دہلی کے نائب صدراور اقلیتی لسانی امور کے کمشنر کے علاوہ کئی اونچے سرکاری عہدوں پر کام کرچکے ہیں ۔اس وقت وہ جودھپور یونیورسٹی میں وائس چانسلر ہیں ۔بابا غلام شاہ بادشاہ یونیورسٹی میں ان کی آمد اور ایک اہم موضوع پہ ان کا لیکچر باعث مسرت ہے۔یہ پروگرام یونیورسٹی کے آڈیٹوریم میں ہوگا جس میں یونیورسٹی کے ڈین،پروفیسرز،ایسو سی ایٹ پروفیسرز اور اسسٹنٹ پروفیسرز کے علاوہ طلبا بھی شریک ہوں گے ۔
 

ڈپٹی کمشنر کا خواس میں عوامی دربار

خواس//ڈپٹی کمشنر راجوری محمد اعجاز اسد نے دور افتادہ خواس میں عوامی دربار لگاکر لوگوں کے مسائل سنے ۔ اس دوران خواس و دیگر علاقوں کے لوگوں نے موصوف اپنے مسائل سے آگاہی دلائی اور شکایت کی کہ خواس سڑک کاکام سست روی سے ہورہاہے جس کی وجہ سے مشکلات درپیش ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ خواس کوٹرنکہ سڑک گاڑیوں کے چلنے کے قابل بھی نہیں اس لئے اس کی مرمت کی جائے ۔ ان کاکہناتھاکہ سڑک کی خراب حالت کی وجہ سے مریضوں کو ہسپتال منتقل کرنے میں مشکلات کاسامناکرناپڑتاہے ۔ انہوں نے کہاکہ سکولوں میں تدریسی عملے کی قلت پائی جارہی ہے جبکہ دیگر کئی مسائل بھی حل طلب ہیں ۔ ڈپٹی کمشنر نے اپنے خطاب میں کہاکہ یہاں اجاگر ہوئے مسائل کو حل کیاجائے گا ۔
 
 
 

بیرون ریاست کے گورنر کی تعیناتی پر پینتھرز پارٹی کو اعتراض

عظمیٰ نیوز 
 
پونچھ//جموں و کشمیر نیشنل پنتھرز پارٹی کے ریاستی سکریٹری زورآور سنگھ شہباز نے اس بات پر شدید اعتراض کیاہے کہ ریاستی گورنر کے عہدے پر بیرون ریاست کے شخص کو کیوں تعینات کیاجاتاہے ۔اپنے ایک بیان میں شہباز نے کہاکہ ریاست میں انتظامی امور چلانے اور ایماندارانہ طور پر فرائض انجام دینے والی کئی شخصیات ہیں جن کو اس عہدے پر تعینات کیاجاناچاہئے تھا۔ان کاکہناتھاکہ ڈاکٹر کرن سنگھ ایک ایماندار شخص ہیں جو 1964تک ریاست کے صدر رہے اوربعد میں مرکزی حکومت میں وزارت کے عہدے پر فائز رہے ۔ان کاکہناتھاکہ کیا وہ اس قابل نہیں تھے کہ انہیں ریاست کا گورنر بنایاجاتا۔انہوں نے کہاکہ اسی طرح سے سابق وزیر اعلیٰ ڈاکٹر فاروق عبداللہ بھی اس عہدے کے اہل تھے جو تین بار وزیرِ اعلیٰ رہ چکے ہیں اور مرکز میں وزارت کی ذمہ داری بھی انجام دے چکے ہیں۔ان کاکہناتھاکہ آخر کیا وجہ ہے کہ ریاستی شخصیات کو گورنر نہیں بنایاجاسکتا اور اوراب بیرونِ ریاست بہار کے ایک لیڈر کو ریاست کا گورنر بنایا گیاہے۔ زور آور سنگھ شہباز نے کہا کہ مرکزی سرکار نے اپنے نجی فائدے کے لئے اپنی پارٹی کو بچانے اور 2019کے الیکشن کو مدِ نظر رکھتے ہوئے یہ فیصلہ لیا ہے جو ہرگزریاست کے مفاد میں نہیں۔
 

خاتون پہاڑی سے گر کر لقمہ اجل 

عشرت حسین بٹ
 
منڈی// منڈی سے پانچ کلو میٹر دوری پر واقع بیدار گاﺅں میں ایک خاتون پہاڑ سے گر کر لقمہ اجل بن گئی ۔بدھ کے روز بیدار میں ارشا بیگم زوجہ علی محمد سکنہ بیدار اپنے مال مویشیوں کو پہاڑی پر چرا رہی تھی کہ اچانک اس کا پاﺅں پھسل گیا اور وہ ایک گہری کھائی میں جا گری۔ اسے مقامی لوگوں کی مدد سے فوری طور پر زخمی حالت میں سب ضلع اسپتال منڈی لایاگیاجہاں ڈاکٹروں نے مردہ قرار دیا۔ بعد ازآں نعش کو قانونی لوازمات پورا کرکے آخری رسومات کی ادائیگی کیلئے لواحقین کے سپرد کیاگیا۔اس سلسلہ میں پولیس تھانہ منڈی میں ایک کیس بھی درج ہواہے۔
 

ووٹر فہرستیں من مرضی سے مرتب کرنیکاالزام 

بدھل//پنچایتی چناﺅ کروانے کا اعلان ہوتے ہی نئی ووٹر فہرستوں میں فاش غلطیاں سامنے آرہی ہیں ۔ بدھل کی پنچایت دراج کے لوگوں نے محکمہ دیہی ترقی کے ملازمین کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ انہوں نے مفاد خصوصی رکھتے ہوئے من مرضی سے ووٹر فہرستیں مرتب کی ہیں جو انہیں ہر گز قابل قبول نہیں ۔ طالب حسین شاہ نے بتایاکہ اس سے پہلے بھی انہیں دو دو سوروپے خرچ کرکے وارڈ بندی میں ناموں کی درستگی کرواناپڑی تھی اور اب پھر سے محکمہ کے ملازمین کی غلطی کی سزا بھگتناپڑرہی ہے ۔انہوں نے بتایاکہ ووٹر فہرستوں میں کسی کو ایک وارڈ تو کسی کو دوسرے وارڈ میں رکھاگیاہے ۔ایک اور شہری رنجیت ٹھاکر نے کہاکہ یہ فہرستیں سیاسی دباﺅ تلے مرتب ہوئی ہیں اوراگر انہیں ٹھیک نہ کیاگیاتو وہ احتجاج کریں گے ۔ انہوں نے کہاکہ ملازمین نے عوام کو بیوقوف سمجھ رکھاہے اور افسوسناک بات یہ ہے کہ بارہا شکایات کرنے کے باوجود حکام نے کوئی اقدام نہیں کیا جس سے یہ ظاہر ہوتاہے کہ ان ملازمین کی سیاسی لیڈران پشت پناہی کررہے ہیں ۔ انہوں نے گورنر سے اپیل کی کہ پنچایتی چناﺅ کروانے سے قبل فہرستوں کو درست کیاجائے اور من مرضی سے رائے دہندگان کو اِدھر اُدھر نہ پھینکا جائے ۔
 

تھنہ منڈی کی قاضی برادری کو صدمہ 

تھنہ منڈی//تھنہ منڈی کی قاضی برادری کو صدمہ پہنچاہے ۔ برادری سے تعلق رکھنے والی ٹیچر معمونہ خانم اچانک انتقال کرگئی ہیں جن کی عمر59سال تھی ۔ مرحومہ گزشتہ ایک سال سے بیمار تھیں اور پیر اور منگل کی درمیانی شب وہ اس دار فانی سے کوچ کرگئیں ۔ انہیں اپنے آبائی علاقے تھنہ منڈی میں ہی سپرد خاک کیاگیا جن کی نماز جنازہ میں بڑی تعداد میں لوگوں نے شرکت کرکے غمزدہ خاندان کے ساتھ تعزیت پرسی کی ۔
 

پولیس کی عوام کے ساتھ میٹنگیں 

راجوری //راجوری پولیس نے جواہر نگر وارڈ پانچ اور ڈھانگری علاقوں میں عوام کے ساتھ میٹنگیں منعقد کرکے ان کے مسائل سنے ۔راجوری کی میٹنگ کی صدارت ڈی وائی ایس پی ہیڈ کوارٹر گووند رتن نے کی جس دوران ایس ایچ او طاہر خان بھی موجو دتھے ۔اس موقعہ پر مقامی لوگوں کی طرف سے ان کو درپیش مسائل اجاگر کئے گئے ۔اسی طرح کی میٹنگ گووند رتن کی قیادت میں ڈھانگری میں بھی ہوئی جس میں متعلقہ ایس ایچ او بھی موجود تھے ۔پولیس افسران نے میٹنگوں سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ان کے مسائل کو حل کیاجائے گا۔ انہوں نے کہاکہ پولیس کو جرائم کے خلاف کاروائی میں تعاون دیاجائے ۔
 

کیکی چیلنج کا ڈانس 

راجوری میں دو نوجوان گرفتار

سمت بھارگو
 
راجوری //انٹرنیٹ پر مقبول ہوئے ڈانس کیکی چیلنج کی نقل کرنے والے دو نوجوانوں کو پولیس نے اپنی جان خطرہ میں ڈالنے پر گرفتار کرلیاہے ۔ایس ایس پی راجوری یوگل منہاس نے بتایاکہ پولیس کو اطلاع ملی تھی کہ دو لڑکے سڑک پر چلتی گاڑیوں کے ساتھ ڈانس کررہے ہیں اور اس پورے واقعہ کی فلم بھی بناکر فیس بک پر شیئر کررہے ہیں۔اس ویڈیو میں ایک لڑکے کو کار سے اتر کر ڈانس کرتے دیکھاجاسکتاہے جبکہ ڈرائیور مسلسل گاڑی چلارہاہے ۔ایس ایس پی کے مطابق تحقیقات کے بعد یہ معلوم ہواکہ ونیش چبر ولد وکی کمار ساکن نوشہرہ تحصیل دفتر کے نزدیک کار زیر نمبرJK11B- 8255کو بڑی لاپرواہی سے چلارہاہے جبکہ دوسرانوجوان چیتن بالی ولد منجیت ساکن قصبہ محلہ نوشہرہ کار کی اگلی سیٹ پر بیٹھاہواہے جس نے کھڑکی کھول رکھی ہے اور وہ چلتی کار میں ڈانس کررہاہے ۔یہ ویڈیو ہانجانہ ۔راجل سڑک پر بنائی گئی ہے ۔ایس ایس پی نے بتایاکہ اپنی زندگیوں اور ساتھ میں دیگر لوگوں کی زندگی کو بھی خطرے میں ڈالنے پر ان نوجوانوں کے خلاف ایف آئی آر زیر نمبر177/2018زیر دفعات 279, 336آر پی سی کا کیس درج کیاگیاہے اور دونوں کو ایس ای او نوشہرہ رومل سنگھ کی قیادت اور ایس ڈی پی او نوہرہ خالق چوہدری کی سربراہی والی ٹیم نے گرفتار کرلیا۔پولیس نے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ ایسا کوئی اقدام نہ کریں جس سے اپنی یا دوسروں کی زندگی کو خطرہ ہو ۔
 

 پولیس اہلکار کی بندوق غائب 

پونچھ میں سیکورٹی الرٹ جاری 

سمت بھارگو
 
راجوری //ضلع پولیس لائنز پونچھ میں ایک اہلکار کی بندوق غائب ہوگئی ہے جس پر حکام کی طرف سے سیکورٹی الرٹ جاری کیاگیاہے ۔ذرائع کے مطابق جس پولیس اہلکار کا ہتھیار غائب ہواہے وہ ضلع میں تعینات ایک ڈی وائی ایس پی کے ساتھ بطور ذاتی محافظ کے طور پر خدمات انجام دے رہاہے اور ضلع کا ہی رہنے والاہے۔ذرائع نے بتایاکہ پچیس اور چھبیس اگست کی درمیانی شب اہلکار کا خود کار ہتھیار جس میں میگزین بھی لگی ہوئی تھیں ، پولیس لائنز سے غائب ہوگیا جس کے بعد تلاشی کارروائی شروع کی گئی تاہم ابھی تک ہتھیار برآمد نہیں ہوا۔ذرائع نے بتایاکہ حکام کی طرف سے ضلع بھر میں الرٹ جاری کیاگیاہے ۔ایس ایس پی پونچھ راجیو پانڈے نے کشمیر عظمیٰ سے بات کرتے ہوئے بتایاکہ اس واقعہ کے حوالے سے تحقیقات شروع کردی گئی ہیں اور پولیس اہلکار کو معطل کیاگیاہے ۔ان کاکہناتھاکہ اس سلسلے میں مزید پیشرفت ہونے پر اطلاع فراہم کی جائے گی ۔
 

وکلاءکا بند کال کی حمایت کا اعلان 

راجوری //راجوری کے وکلاءنے آل پارٹی کوآرڈی نیشن کمیٹی کی طرف سے 35اے کے معاملے پر دی گئی آج بند کال کی حمایت کا اعلان کیاہے ۔راجوری پریس کلب میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے شوکت علی اور دیگر وکلا نے کہاکہ دفعہ 35اے کا معاملہ عدالت میں زیر سماعت ہے اور وہ امید کرتے ہیں کہ عدالت عظمیٰ ریاست کے لوگوں کے جذبات کا احترام کرے گی اور اس دفعہ کو ہٹانے کی کوشش نہیں کی جائے گی ۔انہوں نے کہاکہ دفعہ 35اے اور 370ریاست کیلئے ریڑھ کی ہڈی کی مانند ہیں جن کی وجہ سے ہی ریاست کو خصوصی تشخص حاصل ہے جن کے ہٹائے جانے سے حالات پر خطرناک اثرات مرتب ہوں گے ۔ انہوں نے راجوری بند کی کال کی حمایت کرتے ہوئے کہاکہ وہ پرامن طور پر احتجاج کریں گے ۔ پریس کانفرنس میں فاروق چوہدری ، ظہیر عباس، غزالہ سعید ، ظفر اقبال و غیرہ بھی موجو دتھے ۔