مزید خبرں

مکان کی چھت سے گرنے والا شخص فوت

گاندربل//ارشاد احمد//قصبہ لار گاندربل میں چھت سے گرکر زخمی ہونے والا شخص 6 دن بعد زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسا۔لار گاندربل میں 25 ستمبر کو نذیر احمد میر کے مکان کی چھت کے کام کے دوران ریاض احمد وگے ولد محمد سلطان ساکنہ ریپورہ لار گرکر شدید زخمی ہوگیا تھا.۔6 دن میڈیکل انسٹیچوٹ صورہ میں زیر علاج رہنے کے بعد سوموار کی صبح زخموں کی تاب نہ لاتے دم توڑ بیٹھا۔مہلوک کی نعش گھر لائی گئی تو وہاں کہرام مچ گیا ۔
 

  درکارٹرانسپورٹ سہولیات کافقدان

 گورنرانتظامیہ فوری اقدامات کرے:ویری

سری نگر//پیپلزڈیموکریٹک پارٹی کے نائب صدرعبدالرحمان ویری نے کشمیر وادی سے میوہ جات کوبیرون ریاستوں کی منڈیوں اوربازاروں تک پہنچانے کیلئے درکارٹرانسپورٹ سہولیات کے فقدان پرتشویش ظاہرکرتے ہوئے خبردارکیاہے کہ اگرکشمیری میوہ جات کی برآمدگی کیلئے گاڑیوں کافوری اورمعقول انتظام نہ کروایاگیاتوکشمیرکی میوہ صنعت کوناقابل تلافی خسارے اورنقصانات سے دوچارہوناپڑے گا۔ پی ڈی پی کے نائب صدرنے کہاہے کہ لاکھوں کروڑوں روپے مالیت کی میوہ پیٹیاں اورڈبے باغات میں بنائے گئے شیڈوں میں پڑے ہیں کیونکہ ان سیب کی مختلف اقسام سے بھری پیٹیوں اورڈبوں کوبیرون منڈیوں تک پہنچانے کیلئے ٹرانسپورٹ سہولیات ہی دستیاب نہیں ہیں ۔انہوں نے کہاکہ میوہ جات کی برآمدگی کیلئے درکارٹرانسپورٹ سہولیات کافقدان ہونے کی وجہ سے میوہ بیوپاری اورمالکان باغات سخت تشویش میں مبتلاء ہیں کیونکہ وہ جانتے ہیں کہ اگروہ ڈبہ بندمیوہ جات کوجلدسے جلدبیرون میڈیوں تک نہ پہنچاسکے تواُنھیں بھاری خسارے اورنقصانات کاسامناکرناپڑسکتاہے۔عبدالرحمان ویری نے خبردارکیاکہ کشمیرکی میوہ صنعت کوبحرانی صورتحال کاسامناہے ،کیونکہ حکومتی اورانتظامیہ کی سطح پرمیوہ جات کوبیرون منڈیوں تک پہنچانے کیلئے ٹرانسپورٹ سہولیات کاکوئی انتظام نہیں کروایاجارہاہے ۔
 
 

پارکوں اور باغات کی ترقی کا جائزہ لیا

سرینگر//چیف سیکریٹری بی وی آر سبھرامنیم نے ریاستی سطح کی سٹیرنگ کمیٹی کی میٹنگ طلب کر کے جموں اور سرینگر شہروں میں پارکوں اور باغوں کو ترقی دینے کے اقدامات کا جائیزہ لیا ۔ یہ بات قابلِ ذکر ہے کہ سرینگر شہر میں 367  اور جموں شہر میں 282 پبلک پارکیں قائم ہیں ۔ سرینگر میں 117 پارکوں کا انتظام فلوریکلچر محکمہ چلاتا ہے جبکہ جموں میں یہ محکمہ 153 پارکوں کی دیکھ ریکھ کرتا ہے ۔ چیف سیکریٹری کی صدارت میں منعقدہ میٹنگ میں ریاست میں قایم پارکوں کے رکھ رکھاؤ کیلئے سٹینڈرڈ اوپریٹنگ پروسیجر کے مسودے پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔ فلوریکلچر محکمے کے حکام کو ایس او پی کا مسودہ تمام متعلقہ محکموں کو بھیجنے کی ہدایت دی گئی تا کہ وہ  8 اکتوبر 2018 تک اپنی تجاویز پیش کر سکیں ۔ ایس او پی میں پارکوں کی تجدید کاری کے رہنما خطوط وضع کئے گئے ہیں ۔ چیف سیکرٹری نے فلوریکلچر ، گارڈنز اور پارکس محکمہ کے حکام کو اس منصوبے پر کام شروع کرنے کی ہدایت دی تا کہ مناسب جگہوں کو پبلک پارکوں ، باغوں اور تفریحی پارکوں میں تبدیل کیا جا سکے ۔ 

 

امتحانات احسن طریقے سے منعقد کئے جائیں

صوبائی کمشنر کی ضلع ترقیاتی کمشنر وں کو ہدایت

سرینگر//صوبائی کمشنر کشمیر بصیر احمد خان نے ضلع ترقیاتی کمشنروں کوآنے والے 10ویں ،11ویں اور 12جماعت کے امتحانات احسن اورشفاف طریقے پر انعقاد کو یقینی بنانے کی ہدایت دی ہے۔صوبائی کمشنر نے ان باتوں کا اظہار وادی میں لئے جارہے امتحانات کے سلسلے میںمنعقدہ افسران کی ایک میٹنگ کے دوران کیا ۔میٹنگ میں بتایا گیا کہ 12جماعت کے امتحانات 22اکتوبرسے شروع ہوں گے جس میں 622مراکز میں69000امیدوار شرکت کریں گے ۔اسی طرح10ویں جماعت کے امتحانا ت آغاز 24اکتوبر سے ہوگا۔ان امتحانات میں 55000امیدوار541مراکز میں شامل ہوں گے جب کہ 26اکتوبر سے 11ویں جماعت کے امتحانات لئے جائیں گے ۔ان متحانات میں 65000امیدواروںکی شرکت ہوگی جن کے لئے 539مراکز کا قیام عمل میں لایاگیا ہے۔میٹنگ کے دوران امتحانات کو خوش اسلوبی اوراحسن طریقے سے انعقاد کرانے کے لئے تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔سوالات وجوابات کے پرچے محفوظ حالت میں رکھنے کے لئے صوبائی کمشنر نے وادی کے تمام ضلع ترقیاتی کمشنر وں اورضلع پولیس سربراہان کو متعلقہ پولیس اسٹیشنوں میں سٹرانگ رومز قائم کرنے کی ہدایت دی ۔صوبائی کمشنر نے ضلع ترقیاتی کمشنر وں کو اپنے متعلقہ اضلاع میں مشترکہ کنٹرول روم قائم کرنے کی بھی ہدایت دی تاکہ آفیسران اورامیدواروں کو امتحانات سے متعلق لازمی جانکاری دی جاسکے۔انہوںنے متعلقہ افسران کو ہدایات پر من وعن عملدر آمد کرنے کیلئے لازمی سہولیات کی دستیابی کویقینی بنایا جانا چاہیے تاکہ امتحانات شفاف اور بلاخلل طریقے سے منعقد ہوں۔ضلع ترقیاتی کمشنر سرینگر،ڈائریکٹر سکول ایجوکیشن کشمیر،سیکریٹری بورڈ آف سکول ایجوکیشن ،جی ایم جے کے ایس آر ٹی سی،اورسی ای او نیز پولیس آفیسران کے علاوہ دیگر آفیسران بھی میٹنگ میں موجود تھے۔جب کہ صوبہ کشمیر کے تمام ضلع ترقیاتی کمشنروں نے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے میٹنگ میں شرکت کی۔
 

تحریک حریت پارٹی کارکنوں کی نظربندی پر برہم

سرینگر//تحریک حریت نے عاشق حسین نارژور، سرتاج احمد اسلام آباد، بشیر احمد چھون بڈگام اور شبیر احمد میر براٹھ کلان سوپور کو مسلسل تھانوں اور انٹروگیشن سینٹروں میں بند رکھنے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ عاشق حسین اور سرتاج احمد کو ایک ہفتہ قبل فرضی الزامات کے تحت گرفتار کرکے تھانہ صدر اسلام آباد میں بند کیا گیا اور اب ان کی رہائی میں رُکاوٹیں ڈالی جارہی ہیں جبکہ شبیر احمد میر براٹھ گزشتہ 3برسوں سے وادی اور بیرون وادی کی مختلف جیلوں میں بند رہا اور اُن پر عائد پبلک سیفٹی ایکٹ عدالت کی طرف سے کالعدم قرار دئے جانے کے باوجود اُن کو رہا نہیں کیا گیا۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ ان کے بھائی معراج الدین میر بھی گزشتہ ایک سال سے کوٹ بلوال جیل میں بند ہیں، جبکہ دونوں بھائیوں کی اسیری کے دوران ہی اُن کے والد بھی انتقال کرگئے۔ تحریک حریت نے اُن کی رہائی پر زور دیا۔
 

 انتخابات کشمیریوں کے درد کا درماں نہیں: آغا حسن

سرینگر//انجمن شرعی شیعیان کے سربراہ اور سینئر حریت رہنما آغا سید حسن نے جموں و کشمیر میں بلدیاتی اور پنچایتی انتخابات کو ایک لاحاصل مشق سے تعبیر کرتے ہوئے کہا کہ انتہائی ناموزون حالات اور عوام کی حددرجہ عدم دلچسپی و ناراضگی سے صرف نظر ریاست میں بلدیاتی انتخابات منعقد کرانے کا فیصلہ عالمی برادری کو گمراہ کرنے کی ایک سعی لاحاصل ہے۔ انہوں نے کہا کہ ریاست کی سلگتی صورتحال کے تناظر میں یہاں کسی بھی قسم کے انتخابات بنیادی تنازعہ کے حل یا کشمیریوں پر جاری ظلم و زیادتیوں کے سدباب میں کوئی کردار ادا نہیں کر سکتے اور نہ ایسے انتخابات استصواب رائے کا نعم البدل ہوسکتے ہیں۔انہوںنے کہاکہ عوام اس عمل سے دور رکھ کر اپنی سیاسی بلوغیت کا بھرپور ثبوت پیش کریں۔ 
 
 

گنہ ون کنگن میں 11ویں جماعت کے طلاب کا دھرنا

 غلام نبی رینہ
کنگن// گورنمنٹ ہائر سکنڈری سکول گنہ ون کنگن میں زیر تعلیم گیارہویں جماعت کے طلاب نے سوموار کو اپنے کلاسوں کا بائیکاٹ کرکے سرینگر لیہ شاہراہ پر دھرنا دیکر گاڑیوں کی آمدو رفت کئی گھنٹوں تک مسدود کردی۔ احتجاجی طلاب مانگ کررہے تھے کہ ان کے امتحانات نومبر کے مہینے میں لئے جائیں تاکہ وہ اپنا نصاب مکمل کرسکیں۔ انہوں نے کہا کہ محکمہ تعلیم ان کے مستقبل کے ساتھ کھلواڑ کررہا ہے۔اس دوران  پولیس سٹیشن گنڈ کی ایک ٹیم جائے موقع پر پہنچی اور گاڑیوں کی آمد ورفت کو بحال کردیاگیا ۔