مزید خبرں

ٹریفک پولیس کی خصوصی مہم

 4روزمیںساڑھے3ہزار گاڑیوں کے مالکان پر جرمانہ

سرینگر //محکمہ ٹریفک نے دعویٰ کیا ہے کہ پچھلے 4روز کے دوران ریاست میں ٹریفک قوانین کی خلاف ورزی کرنے والی3ہزار 4سو 56 گاڑیوں کے مالکان کے خلاف کاروائی عمل میں لاتے ہوئے جرمانہ عائد کیاگیا ۔آئی جی پی ٹریفک الوک کمار کی ہدایت پر محکمہ ٹریفک نے ریاست بھر میں بڑے پیمانے پر مہم چھڑتے ہوئے ٹریفک قانون کی خلاف ورزی کرنے والی گاڑیوں کے خلاف کارروائی شروع کر دی ہے ۔محکمہ ٹریفک کے مطابق ان چار روز کے دوران خصوصی مہم کے تحت 13سو67گاڑیوں کے ڈرائیوروں پر سیٹ بلٹ نہ پہننے کی پاداش میں چالان کئے گئے جبکہ 13سو18موٹر سائیکل اور سکوٹر بردار نوجوانوں پر ہلمٹ نہ پہننے کی پاداش میں جرمانہ عائد کیاگیا ۔محکمہ کے ترجمان کے مطابق  7سوڈرائیوروں پر اور لوڈنگ اور گاڑی غلط طریقے سے پارک کرنے پر جرمانہ عائد کیا گیا ۔اسی طرح 71 گاڑیوں کو دستاویزات نہ ہونے پاداش میں جرمانہ عائد کیا گیا ۔
 

جنرل راوت کا بیان جمہوریت کیلئے نقصان دہ:سوز

سرینگر//سابق مرکزی وزیر پروفیسر سیف الدین سوزؔ نے کہا ہے کہ جنرل راوت کا تازہ بیان شر انگیز بھی ہے اور رد کرنے کے لایق بھی۔ انہوںنے کہا کہ جنرل کے تازہ بیانات سے یہ بات اب یقینی طو ر پر سب کے سامنے ہے کہ جنرل کی فوج کشی کے باوجود کشمیر میں یہ حالت ہے کہ جب فورسز چارجنگجو ئوں کوہلاک کرتی ہے تو دوسرے روز پانچ نئے بندوق بردار پیدا ہوتے ہیں۔انہوں نے کہا’’ اسی لئے مجھ جیسے لوگوں نے مودی کو یہ مشورہ دیا تھا کہ فورس استعمال کرنے سے کچھ حاصل نہیں ہوگابلکہ بہترین راستہ یہ تھا کہ مودی انتظامیہ بات چیت کیلئے سامنے آئے۔‘‘
 

 عمران خان کی تجویز پر مودی توجہ دے : بھیم سنگھ

سرینگر// پنتھرس پارٹی کے سرپرست اعلی اور سینئر وکیل پروفیسر بھیم سنگھ نے پاکستانی وزیراعظم عمران خان کی جموں وکشمیر کے تعلق سے ہندستانی قیادت کے ساتھ  بات چیت کی تجویز کی تعریف کی ہے۔انہوں وزیراعظم نریندر مودی سے سابق کھلاڑی اور پاکستانی وزیراعظم کی اسپورٹس مین اسپرٹ کا جواب دیناچاہئے۔انہوںنے ہندستان اور پاکستان کے مابین 1947 سے زیرالتوا تمام معاملات کو بات چیت کے ذریعہ حل کرنے کے پاکستانی وزیراعظم کے جذبہ کی تعریف کی۔ انہوں نے سختی کے ساتھ کہا کہ جموں وکشمیر مسئلہ گلگت اور پاکستانی زیر انتظام کشمیر سے متعلق ہے، جہاں کے تقریبا ایک تہائی حصہ پر پاکستان نے غیرقانونی قبضہ کررکھا ہے۔