مزید خبرں

منشیات فروش گرفتار

شراب کی 30بوتلیں ضبط 

نوشہرہ//سرعام شراب فروخت کرنے کی پاداش میں پولیس نے ایک شخص کوگرفتارکرکے اس کی تحویل سے 30 بوتلیں انگریزی شراب کی ضبط کرلیں۔اس سلسلے میں پولیس ذرائع نے بتایاکہ پرشوتم راج ولد جگدیش راج سکنہ ناریاں گزشتہ شام کوٹھالکہ قومی شاہراہ پرسرعام انگریزی شراب فروخت کرتے ہوئے دبوچ لیاگیا ۔پولیس نے اسے گرفتارکرکے اس کے قبضے سے 30 بوتلیں انگریزی شرا ب کی ضبط کریں۔اس سلسلے میں پولیس نے ایف آئی آرنمبر 5زیردفعہ 48 ایف کے تحت معاملہ درج کرکے تحقیقات شروع کردی ہے۔
 

’شاہ فیصل کااستعفیٰ ظلم کیخلاف احتجاج ‘

حسین محتشم 
 
پونچھ// سرحدی ضلع پونچھ کی تحصیل مینڈر کے سلواہ علاقے کے سماجی کارکن پیر مظہر علی شاہ نے شاہ فیصل کے فیصلے کوسراہتے ہوئے ان کے مستقبل کے تئیں نیک خواہشات اوران کے فیصلے کاخیرمقدم کیاہے۔ انہوں نے کہا کہ شاہ فیصل نے کشمیر میں کم نہ ہونے والی ہلاکتوں اور ہندوستانی مسلمانوں کو نظرانداز کئے جانے کے خلاف احتجاجاً انڈین ایڈمنسٹریٹیو سروس سے مستعفی ہونے کا فیصلہ کر کے یہ ثابت کیا ہے کہ وہ ایک قابل شخصیت کے مالک ہونے کے ساتھ ساتھ اپنی قوم کے لیے درد دل بھی رکھتے ہیں ۔انہوں نے کہا کشمیر میں کم نہ ہونے والی ہلاکتوں اور اس سلسلہ میں مرکزی حکومت میں سنجیدگی کے فقدان اور تقریباً 200 ملین ہندوستانی مسلمانوں کو نظرانداز کرنے نیز انہیں دوسرے درجہ کے شہری بنانے، ریاست جموں و کشمیر کی خصوصی شناخت پر حملوں اور عدم رواداری اور منافرت کے بڑھتے کلچر کے خلاف احتجاج کرنے کیلئے آئی اے ایس سروس سے استعفیٰ دینے کا فیصلہ کرنا ہر کسی کے بس میں نہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ بہت بڑا فیصلہ ہے جس کی جتنی سراہنا کی جائے وہ کم ہے۔ انہوں نے کہاکہ شاہ  فیصل کا یہ فیصلہ ظلم کے خلاف احتجاج کا اعلان ہے جس سے ہرذی شعور انسان کو خوشی ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ دعا گو ہیں کہ اللہ شاہ فیصل کو طول عمر عطا کرے اور انھیں مزید توفیق عطا کرے کہ وہ اپنی قوم کی خدمت کر سکیں۔ سید نازک حسین شاہ نے بھی شاہ فیصل کے فیصلے کو سراہتے ہوئے کہا ہے کہ ظلم کے خلاف آواز بلند کرنا سب کے بس کی بات نہیں۔
 

ریاست میں فی الفور اسمبلی انتخابات کروائے جائیں: تانترے

حسین محتشم
 
پونچھ//سابق ممبر قانون ساز اسمبلی پونچھ شاہ محمد تانترے نے مرکزی سرکار اورریاستی گورنر سے ریاست میں فوری طورپراسمبلی انتخابات کروانے کی مانگ کرتے ہوئے کہاکہ اس سے ریاست میں جمہوریت اقدارمضبوط ہوں گی۔یہاں جاری پریس بیان میں سابق ایم ایل اے پونچھ شاہ محمدتانترے نے کہاکہ موجودہ صورتحال سے اندازہ لگایا جارہا ہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی کو ریاست کے استحکام کی نہیں بلکہ اپنی جماعت کو مضبوط کرنے کی زیادہ فکر لاحق ہے جو کہ ملک و ریاست کے لئے انتہائی خطرناک بات ہے۔تانترے نے  کہا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی کے لیڈران کو کانگریس سے سبق لینا چاہیے جنہوں نے ریاست کی بقا کیلئے ۱۹۷۵؁ ء میں اسمبلی جس میں مکمل اکثریت کے باوجود اپنی حکومت کو قُربان کر دیا تھا۔تانترے نے کہا کہ گورنر راج کسی بھی صورت عوامی حکومت کا مُتبادل نہیں ہو سکتا۔تانترے نے مزید کہا کہ اگر چہ گورنر ریاست کی ترقی اور امن کے لئے سنجیدہ ہیں ،لیکن زمینی سطح تک ایسا ممکن نہیں ہو رہا ہے۔تانترے نے کہا کہ مسئلہ کشمیر کے لئے سنجیدہ کوشش ہونی چاہیے اور نوجوانوں کو اعتماد میں لینے کے لئے عملی اقدامات کی ضرورت ہے۔اُنہوں نے اُمید ظاہر کی کہ فی الفور اسمبلی انتخابات کرانے سے عوامی اُمنگوں کے مطابق حکومت معرضِ وجود میں آئے گی۔
 

کرشی وگیان کیندرکے زیراہتمام 

نوجوانوں کیلئے سکل ڈیولپمنٹ پروگرام

راجوری//کرشی وگیان کیندرراجوری نے ڈائریکٹوریٹ آف ایکسٹنشن ،سکاسٹ جموں کے زیراہتمام ورمی کمپوسٹ پروڈیوسروں کیلئے اگریکلچر کونسل آف سکول انڈیاکی طرف سے سپانسرکردہ اورسکل ڈیولپمنٹ پروگرام کے تحت 200گھنٹوں کاسکل ڈیولپمنٹ پروگرام منعقدکیا۔اس دوران  پروگرام کے دوران ڈاکٹروشال شرمانے اپنے خطاب میں کہاکہ پروگرام کے انعقادکامقصد نوجوانوں کوہنرکی طرف مائل کرنااورورمی کمپوسٹ کی تربیت دیناہے۔انہوں نے کہاکہ اس پروگرام کیلئے ضلع کے 20 نوجوانوں کومنتخب کیاگیاہے۔پروگرام کے آغازمیں انچارج کرشی وگیان کیندرراجوری ڈاکٹراروندکے ایشرنے شرکاکااستقبال کیااورپروگرام کے اغراض ومقاصدبیان کئے۔اگرونومی سائنٹسٹ ،ڈاکٹروشال شرمانے 200 گھنٹوں کے سکل ڈیولپمنٹ پروگرام کی وضاحت کی اورورمی کمپوسٹ پروڈیوسروں کوورمی کمپوسٹ کی جانکاری دی۔اس موقعہ پرڈاکٹرسورج پرکاش نے نوجوانوں کوسکل ڈیولپمنٹ کورس کے فوائدکے بارے میں بتایا۔
 

اڑی کاوفدایس ڈی ایم مینڈھرسے ملاقی 

 پی ایچ ای ملازمین پر غفلت شعاری کا الزام لگایا

جاوید اقبال
 
مینڈھر//مینڈھر کے اڑی علاقہ سے تعلق رکھنے والے متعددشہریوں کا ایک وفد لیبر یونین کے جنر ل سکریٹری چوہدری مشتاق احمد فانی اور لیبر یونین کے سکریٹری سفیر خان کی قیادت میں ایس ڈی ایم مینڈھر افضل مرزا سے ملاقی ہوا۔ اس دوران وفد نے ضلع انتظامیہ کے ساتھ ساتھ محکمہ صحت عامہ کے  اعلی عہدیداران کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ متعلقہ محکمہ لوگوں کو پینے کا صاف پانی مہیا نہیں کر رہا ہے جس کی وجہ سے لوگ پانی کی بوند بوند کیلئے ترس رہے ہیں۔ انھوں نے کہاکہ ان دنوں لوگ چندہ جمع کرکے ہینڈ پمپ پرائیویٹ گاڑیوں سے لگوا رہے ہیں جس پر متعلقہ محکمہ کے ملازمین نے گاڑیوں کے مالکان کو منع کر دیا ہے کہ جب تک متعلقہ محکمہ سے اجازت نہیں لی جائے گی تب تک کوئی ایک بھی پمپ علاقے میں نہیں نکالے گا ۔ ان کا کہنا تھا کہ متعلقہ محکمہ کے ملازمین لوگوں کو سہولت دینے کے بجائے پریشان کر رہے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ ملازمین لوگوں کو پینے کا صاف پانی مہیا نہیں کر رہے ہیں اورساتھ ہی لوگوں کو اپنے رقومات سے ذاتی ہینڈ پمپ بھی نکالنے نہیں دے رہے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ لوگوں کے ساتھ نا انصافی ہورہی ہے ۔وفدکا کہنا تھا کہ کچھ لوگ جو سیاسی اثر رسوخ رکھنے والے تھے ان کے گھروں میں پمپ نکل گئے اور اب کیوں پابندی لگائی جا رہی ہے اس کی جانچ ہونی چاہیئے اور لوگوں کو اپنی ذاتی رقم سے اپنے گھروں کے پاس ہینڈ پمپ پینے کے صاف پانی کیلئے لگانے کی اجازت دی جانی چاہیے تاکہ لوگوں کو کسی بھی پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑے۔اس موقعہ پر ایس ڈی ایم مینڈھر نے لوگوں کے مطالبات سننے کے بعد وفد کو یقین دلایا کہ میں آپ کا یاداشت نامہ اعلی احکام تک پہنچائوں گا لیکن آپ خود ضلع ترقیاتی کمشنر پونچھ سے بھی رابطہ کریں اور اگر مجھے اجازت ملتی ہے تو میں موقعہ پر جا کر نشان دہی کروائوں گا جس کے بعد آپ لوگ پمپ نکلوا سکتے ہو۔اس موقعہ پر وفد میں محمد مشتاق فانی،مولوی محمد رفیق،ظفر اقبال،بشیر احمد،واجد علی شاہ،ایڈوکیٹ افتاب احمد شاہ،نائب سرپنچ محمد اسلم کے علاوہ کئی لوگ وفد میں موجود تھے۔
 

 سرنکوٹ میں آئی ایم سی سٹور کاافتتاح 

حسین محتشم 
 
پونچھ //صارفین کو ہر طرح کے معیاری آیور ویدک ادویات کی فراہمی کے سلسلے میں انٹرنیشنل مارکیٹنگ کارپوریشن پرائیوٹ لمیٹڈ نے سرنکوٹ کے صدر مقام پر نیا سٹور کھولا ہے۔اس سلسلے میں ایک افتتاحی تقریب کا انعقاد عمل میں لایا گیا جس میں مہمان خصوصی کی حیثیت سے میونسپل کمیٹی سرنکوٹ کے نومنتخب چیئرمین تاج بجاڑ نے شرکت کی جبکہ اس موقع پر سرنکوٹ کے معزز شہریوں کی بڑی تعداد موجود تھی۔اس دوران شرکاء کو جانکاری فراہم کرتے ہوئے ماجد میر جو کہ اس اسٹور کو چلائیں گے نے کہا کہ آئی ایم سی ایک آئورویدکمپنی ہے جو گھر کی دیکھ بھال کی خوبصورتی کے ساتھ ہربل میڈیسن زرعی اور ویٹینری ادویات فراہم کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ سرنکوٹ جیسے قصبہ میں اسے ان اشیا کی شدت سے ضرورت محسوس کی جارہی تھی جس کو مدنظر رکھتے ہوئے انہوں نے یہاں پر سٹور قائم کرنے کا فیصلہ کیا انہوں نے کہا کہ وہ عوام کو یقین دلاتے ہیں کہ وہ اپنے سٹور سے انہیں ہر طرح کا تعاون اور معیاری سامان فراہم کریں گے۔اس دوران دیگر مقررین نے بھی کمپنی کا والہانہ استقبال کرتے ہوئے کہا کہ اس دکان کے سرنکوٹ میں اشد ضرورت تھی انہوں نے کہا کہ وہ امید کرتے ہیں کہ دوکان سے صارفین کو اچھا اور معیاری سامان فراہم کیا جائے گا۔ اپنے خطاب میٹاج بجاڑ چیرمین میوبسپل کمیٹی سرمکوٹ نے ماجد میر کو مبارک باد پیش کرتے ہوئے ہر طرح کے تعاون کی امید دلائی۔ اد موقع پر اکیلم میر، مہدی جعفر بٹ، منظور شیخ، شبیر ظفر، نعیم شال، مدثر خان، عاشق ملک اور دیگران موجود تھے۔
 

جنرل لائن اساتذہ اورلیکچراروں کی بھرتی پرقدغن کامعاملہ 

این ایس یوآئی کا گورنرانتظامیہ سے نوجوان کش فیصلہ واپس لینے کامطالبہ 

جاوید اقبال
 
مینڈھر // این ایس یو آئی نے ریاستی سٹیٹ ایڈمنسٹریٹیو کونسل نے 28000جنرل لائین اساتذہ اور 10+2لکچرار کی اسامیوں پرروک لگانے کے ریاستی انتظامیہ کی شدیدالفاظ میں مذمت کی ہے۔یہاں جاری ایک پریس کانفرنس میںاین ایس یوآئی کے ریاستی صدر رقیق خان نے مانگ کی کہ سٹیٹ ایڈمنسٹریٹیوکونسل کے فیصلے کوریاستی گورنرفوری طورپرواپس لیں ۔انہوں نے کہاکہ اس فیصلہ سے ریاست کے 150000نوجوانوں کی حق تلفی کی گئی ہے ۔انہوں نے کہاکہ اگر فیصلے کوواپس نہ لیا گیا تو این ایس وائی ریاست بھر میں احتجاج کرے گی جس کی تمام تر ذمہ داری گورنر انتظامیہ پر عائد ہو گی ۔انہوں نے کہاکہ نوجوانوں کے مخالف فیصلے کوہم قطعًا برداشت نہیں کریں گے۔انھوں نے کہا کہ مینڈھر میں کئی محکمہ جات میں کچھ آسامیاں خالی پڑی ہوئی ہیں، انھیں جلد زا جلد پر کیا جائے اس موقعہ پر یوتھ لیڈر نے سابقہ ایم ایل اے مینڈھر کو تنقید کا نشانہ بنایا۔انھوں نے نے الزام لگایا کہ سب ڈسٹرکٹ ہسپتال مینڈھر اور دیگر محکمہ جات میں خالی اسامیاں پڑی ہیں انھیں جلد از جلد پر کیا جائے ۔انھوں نے گورنر انتظامیہ کو متنبہ کیا کہ یاست بھر کے تمام تر خالی آسامیوں کو جلد از جلد پر کیا جائے جسے گورنر کے قول و فعل میں تضاد نہ ہو ۔اور تمام محکمہ جات میں کئی سالوں سے کام کر رہے ملازمین کو مستقل کیا جائے اور نئی اسامیاں نکال کر نوجوانوںکو روزگار دیا جائے تاکہ نوجوان مصروف رہیں ۔ اور ریاست میں امن امان قائم رہے ۔