مریضوں کیلئے طبی سہولیات دستیاب نہیں نیو ٹائپ پی ایچ سی ککروسہ سرکارکی نظرو ں سے اوجھل

 اشرف چراغ

کپوارہ//رامحال کے ککروسہ ویلگام میں نیو ٹائپ پرائمری ہیلتھ سنٹر سرکاری نظرو ں سے اوجھل ہے جس کی وجہ سے اس ہسپتال میں مریضوں کے لئے کوئی طبی سہولیات مسیر نہیں ہے ۔مقامی لوگو ں کاکہنا ہے کہ ککروسہ میںاس سپتال کا ہونا یا نہ ہونا کوئی معنی نہیں رکھتا ہے ۔علاقہ کے لوگو ں کا کہنا ہے کہ اس ہسپتال کو دو دہائی قبل یہا ں قائم کیا گیا اورہسپتال میں دو ڈاکٹرو ں اور ایک میڈیکل اسسٹنٹ کی اسامی ہے ۔ہسپتال میں ایمبولنس بھی ہے ۔لوگو ں کا کہنا ہے ڈاکٹر تو آتے ہیں لیکن ہسپتال میں بہتر طبی سہولیات نہ ہونے کی وجہ سے علاقہ کے مریض اس ہسپتال کے بجائے ضلع کے دیگرہسپتالو ں کا رخ کرنے پر مجبور ہیں ۔ہسپتال میں کئی سال قبل لیبارٹری ٹیکنیکشن تبدیل ہوا لیکن آج تک کسی دوسرے کو تعینات نہیں کیا گیا جس کے نتیجے میں تشخیصی لبارٹری بے کار ہے ۔لوگو ں کا یہ بھی کہنا ہے کہ مریضوں کو اس لبارٹری سے کبھی کوئی فائدہ نہیں پہنچ پایا ہے جبکہ ہسپتال میں ایکسرے کرنے کے لئے کوئی ابھی انتظام نہیں ہے ۔

 

لوگو ں کا یہ بھی کہنا ہے کہ ہسپتال میں ڈینٹل کر سی تو ہے لیکن کوئی ڈینٹل ڈاکٹر تعینات نہیں کیا گیا ۔لوگو ں نے سوال کیا کہ جب مشینری کو چلانے کے لئے طبی عملہ موجود ہی نہیں تو پھر کیونکر کرسی ہسپتال میں رکھی گئی ہے ۔ان کا کہنا ہے کہ اس ہسپتال سے علاقہ کے قریب ایک درجن دیہات کے لوگو ں کی امیدیں وابستہ ہیں لیکن ہسپتال میں طبی اور نیم طبی عملہ کی قلت اور طبی سہولیات کی عدم دستیابی کی وجہ سے مریض دوسرے ہسپتالو ں میں علاج و معالجہ کرنے کو ترجیح دیتے ہیں ۔لوگو ں کا کہنا ہے کہ ہر ماہ محض 30سے 40مریض اپنا علاج کرنے کے لئے نیو ٹائپ پرائمری ہسپتال ککروسہ علاج کے لئے آتے ہیں ۔ہسپتال میں ایک ایمبولنس گاڑی بھی دستیاب ہے لیکن آج تک اس ایمبو لنس سے کسی مریض کو کسی دوسرے ہسپتال منتقل کرنے کی نوبت ہی نہیں پہنچ گئی ہے ۔مقامی لوگو ں نے انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ وہ نیو ٹائپ پرائمری ہسپتال ککروسہ کی طرف اپنی توجہ دیں اور اس میں پڑی مشینری کو از سر نو استعمال میں لانے کے لئے اقدامات کریں اور جو اس علاقہ میں اس ہسپتال کو قائم کرنے کا مقصد ہے اس مقصد کو کو پانے کے لئے محکمہ صحت ککروسہ اسپتال میں تمام طبی سہولیات دستیاب رکھیں تاکہ اس علاقہ کے لوگو ں کو اس ہسپتال کے زریعے علاج کرنے کے لئے کسی بھی مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑے ۔