مدرسۃ خدیجۃ الکبرٰیؓ کے سالانہ جلسہ میں4حفاظ کی دستاربندی

سرینگر//مدرسۃ خدیجۃ الکبرٰیؓ زکورہ سرینگرکا سالانہ جلسہ منعقد ہوا جس میں4حفاظ کی دستار بندی کی گئی جبکہ کئی  فارغ طالبات کو سند عالمیت سے نوازا گیا۔منگلوار کو آرپی اسکول علمدار کالونی لال بازار کے آڈیٹوریم میں ایک تقریب منعقد منعقد ہوئی جس کی صدارت دارالعلوم بلالیہ کے مہتمم مولانا مفتی عبدالرشید مفتاحی نے کی ۔تقریب کے دوران مفتی عبدالرشید مفتاحی نے مدارس اور علماء کے کلیدی رول پر تفصیلی روشنی ڈالی جبکہ مولانا محمد عدنان ندوی نے ماضی میں مسلمانوں کے علمی کمالات، سائنسی علوم پرمسلم سائنس دانوں کی کامل دستگاہ اور اہل مغرب کا مسلمانوں کی انمول علمی خدمات میں خیانتوں کا ایک تاریخی جائزہ پیش کیا۔ا نہوں نے مدرسہ کی فارغات کو فہمائش کی کہ وہ عربی علوم کی شہرہ آفاق مستند کتابوں سے استفادہ کر تی رہیں۔ فاضل مقرر نے اُمید ظاہر کی کہ اسلام کا دنیا میں پھر سے بول بالا ہوگا۔ قبل ا زیں مدرسہ کے بانی مولانا عاشق حسین ندوی نے 5سال قبل مدرسہ کی تاسیس کی سرگزشت اور مدرسے میں رائج نظام تعلیم وتربیت کا مختصر تذکرہ کیا۔انہوں نے کہا کہ ’ہمیں اپنے بچوں اور بچیوں کو زمانے کی بد نگاہی سے بچانے کیلئے اُن کیلئے مروجہ تعلیم کے ساتھ ساتھ دینی تعلیم وتربیت کامعقول انتظام کرناچاہیے‘۔ تقریب میں آر پی اسکول کا میگزین’’ ریڈئنس ‘‘ کی رسم اجرائی عمل میں لائی گئی۔ تقریب کے آخر پر مدرسہ خدیجۃ الکبرٰی سے فارغ طالبات، جن میں لبنیٰ شکیل بنت شکیل احمد میر زکورہ، اُنیسہ ثانیہ بنت مولانا عاشق حسین ندوی زکورہ،مریم امین بنت محمد امین شاہ ملہ باغ،عرفانہ اسلم بنت محمد اسلم گاسو،زبیدہ خان بنت غلام محمد خان دراس کر گل،خورشیدہ شاہین بنت شمس الدین دراس کرگل،شافعیہ حسن بنت غلام حسن ڈانگرپورہ،اُم عمارہ بنت فرحت احمد بٹ ،اسلام آباد (اننت ناگ)شامل ہیں، کو سند عا  لمیت سے نوازا گیا۔ آرپی اسکول کے شعبہ حفظ ِقرآن سے فارغ 4 حفاظ کرنے والے عبد اللہ مسعود، ثاقب شمیم، منیزالمعراج اورنوید بصیم کی دستار بندی کی گئی۔تقریب میں مولانا محمد عدنان ندوی ، مولانا منیر احمداور مولانا بلال احمد بھی موجود تھے۔  کارروائی کا آغاز تلاوت قرآن کریم سے ہوا، بعدازاں مجلس نعت شریف اور ترانہ پیش کیا گیا ۔