مختصر خبریں

 کوکر ناگ میں فارسٹ گارڈ سڑک حادثے میں جاں بحق 

 
عارف بلوچ
ڈورو//کوکر ناگ میں جمعہ شام کو محکمہ جنگلات سے وابستہ ملازم سڑک کے دلدوذ حادثہ میں جاں بحق ہوا ہے ،محمد امین وانی ولد غلام محمد وانی ساکنہ بڈر کوکر ناگ نامی فارسٹ گارڈ اپنی زاتی بائیک زیر نمبرJK03E 8589پر سوار ہو کر ڈیوٹی سے گھر کی طرف آرہا تھا کہ اس بیچ بندو کے نزدیک بائیک کا ٹائر پھٹ گیا اور بائیک زمین پر لڑھک جانے سے مذکورہ شخص شدید زخمی ہوا اور بعد میں زخموں کی تاب نہ لاکر دم توڈ بیٹھا ،جوہنی نعش آبائی گاﺅں پہنچائی گئی تو وہاں کہرام مچ گیا ۔
 

چکنداباغ ۔راولا کوٹ تعطل برقرار

پونچھ میں درماندہ 116مہمان اوڑی سے سفر کریں گے
پونچھ//ضلع انتظامیہ پونچھ نے مظفرآباد سے تعلق رکھنے والے 116 مسافروں کو ، جو جموں وکشمیر میں زائد ایام کے لئے ٹھہرے ہوئے ہیں کو 20 اگست کو سپورٹس سٹیڈیم پونچھ میں رِپورٹ کرنے کے لئے کہا ہے تاکہ وہ 21 اگست کو اوڑی بارہمولہ میں قائم کمان پوسٹ کے ذریعہ اپنی منزل کی طرف روانہ ہوں ۔ضلع انتظامیہ کے ترجمان نے کہا کہ چونکہ پونچھ ضلع میں ایل او سی پر پچھلے 2 مہینوں کے دوران چکاں دا باغ راولاکوٹ کے ذریعے سفر کرنا معطل کیا گیاتھا اسلئے حکومت نے فیصلہ کیا کہ وہاں کے مسافروں کو کمان پوسٹ کے ذریعہ واپس بھیجا جائے گا۔
 

سی آر پی ایف اہلکار حرکت قلب بند ہونے سے فوت

ٹنگمرگ // مشتاق الحسن //بابا ریشی ٹنگمرگ میں سی آر پی ایف سے وابستہ اسٹنٹ سب انسپکٹر دل کا دورہ پڑنے سے فوت ہوا۔تفصیلات کے مطابق زیارت بابا ریشی ٹنگمرگ کی حفاظت پر مامور سی آر پی ایف 176 بٹالین A کمپنی سے واسبط اسٹنٹ سب انسپکٹر ٹھاکر داس شرما ساکنہ جموں بلٹ نمبر 86035017 کو 18 اگست کی شام دیر گئے سینے میں شدید درد کے بعد فوری طور سب ڈسٹرک اسپتال ٹنگمرگ منتقل کیا گیا جہاں ڈاکٹروں نے اسے صورہ انسچوٹ ریفر کیا تاھم وہ راستے میں ہی دم توڑ بیٹھا ۔
 

پلوامہ میں معمولات زند گی 

۔2روز بعد بحال

 دکانیں دفاتر کھل گئے ،ٹرانسپورٹ بھی چلا

 سرینگر//پلوامہ میں معمولات زندگی مسلسل دو دنوں تک معطل رہنے کے بعد بحال ہوگئے جس کے دوران دکانیں، کاروباری ادارے، بنک، پیٹرول پمپ اور دفاتر وغیرہ کھل گئے جبکہ ٹرانسپورٹ بھی رواں دواں رہا۔ سی اےن اےس کے مطابق ضلع کے مختلف حصوں خاص کر نےوہ ،کاکہ پورہ ، للہار، مےن باز پلوامہ اور دےگر علاقوںمیں گذشتہ دو دنوں کے دوران لشکر طیبہ کے اعلیٰ کمانڈر محمد ایوب لون عرف ایوب للہاری کی ہلاکت کے خلاف مکمل ہڑتال رہی۔تاہم ہفتہ کی صبح دکانیں اور تجارتی مراکز کھل گئے جبکہ سڑکوں پر گاڑیوں کی آواجاہی بحال ہوئی ۔ان علاقوں میں دکانیں، کاروباری ادارے، بنک، پیٹرول پمپ اور دفاتر وغیرہ کھل گئے جبکہ ٹرانسپورٹ کی نقل و حرکت بھی بحال ہوگئی ۔اس دوران بازاروں میں غیر معمولی چہل پہل دیکھنے کو ملی اور لوگوں نے اشیائے ضروریہ کی جم کر خریداری کی۔
 

زاہد علی کی ضمانتی درخواست کولگام کورٹ کی طرف سے خارج

سرینگر// ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج کولگام نے جماعت اسلامی کے ترجمان اعلیٰ ایڈوکیٹ زاہد علی اور امیر تحصیل کولگام فاروق احمد شیخ کی ضمانتی عرضی خارج کردی۔ دونوں رہنما پچھلے پندرہ روز سے پولیس تھانہ دمحال ہانجی پورہ میں قید ہیں۔ دونوں رہنمائوں کو کولگام پولیس نے اُس وقت گرفتار کرلیا تھا جب دونوں گوپال پورہ کولگام میں ایک تعزیتی مجلس سے واپس آرہے تھے۔جماعت اسلامی نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ پولیس نے دونوں رہنمائوں کومتعلقہ ضلع کے ایس ایس پی شری دھر پاٹل کی ہدایت پر بے بنیاد الزامات کے تحت سیکشن ۱۵۳؍آر پی سی اور ۱۳؍(غیر قانونی سرگرمیوں) ایکٹ کے تحت حراست میں لیا تھا۔جماعت اسلامینے  ایڈوکیٹ زاہد علی اور فاروق احمد شیخ پر لگائے گئے غلط اور بے بنیاد الزامات کو رد کرتے ہوئے متعلقہ کیس کی آزادانہ اور غیرجانبدارانہ تحقیقات کا مطالبہ کیا
 

سوپور میں طبی سہولیات کے فقدان پر سیول سوسائٹی برہم  

سوپور //غلام محمد//سوپور کے زچہ بچہ اسپتال اور ضلع اسپتال میں ناقص طبی سہولیات کے خلاف سنیچر کو سوپور سول سوسائٹی نے اسپتال احاطے کے قریب زبردست احتجاج کیا۔ احتجاجی مظاہرین کی قیادت سول سو سائٹی سوپور کے صدر محمد اکبر گنائی کررہے تھے۔ انہوں نے ضلع میں انسانی جانوں کے زیاں کیلئے زچہ بچہ اسپتال اور ضلع اسپتال میں بنیادی ڈھانچے کی کمی اورناقص طبی سہولیات کو ذمہ دارٹھرایا۔ انہوں نے کہا کہ اسپتال    پرانی عمارت سے نئی عمارت میں منتقل کئے ہوئے 9سال کا عرصہ ہوگیالیکن اس کے باوجود بھی اسپتال بنیادی ضروریات سے محروم ہے۔  انہوں نے مزید کہا کہ لیبر روم اور ایم سی ایچ کو ضلع اسپتال کو منتقل کیا گیا ہے اور اب زچہ بچہ اسپتال میں بھی حاملہ خواتین کے علاج و معالجہ میں بھی کوئی دلچسپی دکھائی نہیں دے رہی ہے۔ سوسائٹی نے کہا کہ ماہر عملہ ،طبی آلات اور صحیح علاج و معالجہ کی کمی کی وجہ سے کئی نوزائد بچوں کی موت واقع ہوگئی ہے۔ واضح رہے کہ چند دن قبل مظاہرین نے الزام عائد کیا تھا کہ انکے بچوں کی موت صحیح علاج و معالجہ نہ ملنے کی وجہ سے ہوگئی ہے۔ ڈائریکٹر سلیم الرحمن نے ضلع کے لوگوں کو بہترین طبی سہولیات فراہم کرنے اور انکی شکایات کا ازالہ کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے۔