محکمہ بلدیہ کے ملازمین کی سہ روزہ احتجاجی ہڑتال شروع

 سرینگر//محکمہ بلدیہ ملازمین نے 3روزہ کام چھوڑ ہڑتال شروع کرتے ہوئے وادی بھر میں اپنے مطالبات کو لیکر احتجاجی مظاہرے کئے اور ضلع تر قیاتی کمشنروں اور ایڈ یشنل ڈپٹی کمشنروں کو میمور نڈم پیش کئے ۔اربن لوکل باڈئیز ایمپلائز یو نائٹیڈ فورم کے صدر منظور احمد پانپوری نے کہا کہ حکومت نے بلدیہ ملازمین کے جائز اور تسلیم شدہ مطالبات کو سرد خانے میں ڈال دیا ہے جس کے خلاف ملازمین آواز بلند کررہے ہیں ۔انہوں نے دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ اگر فوری طور پر ملازمین کے جائز مطالبات کو پورا نہیں کیا گیا ،تو احتجاجی مظاہروں میں مزید شدت لائی جائیگی ۔ محکمہ کے صدر دفتر سمیت وادی بھر کی میونسپل کمیٹیوں اور کونسلوں میں پیر کے روز ملازمین نے اپنے مطالبات کو لیکر کام چھوڑ ہڑتال کی جسکی وجہ سے محکمہ بلدیہ کا کام کاج بُری طرح سے متاثر ہوا ۔ احتجاجی کی کال محکمہ بلدیہ کے ملازمین اتحاد اربن لوکل باڈیز ایمپلائز یونائیٹیڈ فورم نے دی ۔فورم صدر نے بتایا کہ سوموار کو وادی بھر کی میونسپل کمیٹیوں اور کونسلوں میں ملازمین نے اپنے مطالبات کو لیکر احتجاجی مظاہرے کئے اور مارچ نکالے ۔انہوں نے کہا کہ اپنا احتجاج درج کرنے کے بعد ہر ایک ضلعے میں ضلع ترقیاتی کمشنروں یا ایڈیشنل ضلع ترقیاتی کمشنروں کو میمو رنڈم پیش کئے گئے ۔انہوں نے کہا کہ میمور نڈم پیش کرنے کا مقصد سر کار تک ملازمین کی آواز پہنچایا ہے ۔انہوں نے الزام عائد کیا کہ حکومت نے ملازمین کے مطالبات کو پسِ پشت ڈالا ۔انہوں نے کہا کہ ملازمین کے مطالبات کو پورے کرنے کے حوالے سے ریاستی سرکار غیر سنجیدگی کا مظاہرہ کررہی ہے جبکہ محکمہ میں سیاسی عنصر نے بقول اُنکے نظام کو درہم برہم کرکے رکھا ہے ۔ پانپوری نے کہا کہ15نکاتی مطالبات کے حوالے سے ایک میمو رنڈم پہلے ہی سر کار کو پیش کیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ آئندہ دو روز تک احتجاجی مظاہروں کا سلسلہ جاری رہے گا اور15نومبر کو آئندہ کا لائحہ عمل مرتب کیا جائیگا ۔دریں اثناء اوڑی سے کشمیر عظمیٰ کے نمائندے ظفر اقبال نے اطلاع دی ہے کہ اربن لوکل باڈیز فورم کے احتجاجی پروگرام پر اوڑی میں پیر کو میونسپل ملازمین نے دفترتالہ بند کرکے سرکار کے خلاف احتجاج کیا۔انہوں نے اس موقع پر الزام عائد کیا کہ محکمہ کے ڈائریکٹوریٹ میں ایک اکائونٹس افسر ملازمین کو بے وجہ تنگ کرتا ہے ،جس کا تبادلہ عمل میں لایا جائے۔