محکمہ آب رسانی کے عارضی ملازمین، 19جون کو ہڑتال کریں گے

 سرینگر//محکمہ آب رسانی(پی ایچ ای) میں19جون کو ہڑتال کرنے کا اعلان کرتے ہوئے محکمہ کے عارضی ملازمین نے17جون کو سیکریٹریٹ گھیرائو کی کال کو پھر دہرایا۔سرکار پر عارضی ملازمین کو ذہنی مرض میں مبتلا کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے  پی ایچ ای جوائنٹ ایمپلائز ایسو سی ایشن نے سیاسی جماعتوں سے اپیل کی کہ وہ انکی حمایت کریں۔ محکمہ پی ایچ ای میں کام کر رہے سینکڑوں کیجول لیبروں اور ڈیلی ویجروں کو مستقل کرنے میں موجودہ سرکار کی طرف سے رکاوٹیں کھڑی کرنے کا الزام عائد کرتے ہوئے  ایسو سی ایشن نے سوالیہ انداز میں پوچھا کہ اگر یہ ہیلنگ ٹچ ہے تو اس سے بہتر بجلی کا ٹچ ہے۔ ایسو سی ایشن کے صدر سجاد احمد نے نامہ نگاروں کو بتایاکہ ان سے متاتر حکومتوں نے جو وعدے کئے انہیں فراموش کیا گیا۔ محکمہ میں ہزاروں کی تعداد میں ملازمین 1994سے عارضی بنیادوں پر کام کررہے ہیں لیکن حکومت ان کی مستقلی کو لیکر لیت و لعل کا مظاہرہ کررہی ہے جس کے نتیجے میں ملازمین فاقہ کشی کا شکار ہورہے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ حکومت نے محکمہ کے عارضی ملازمین کی مستقلی کے کئی بار وعدے بھی کئے لیکن ان یقین دہانیوں کو عملی جامہ پہنانے کی طرف کوئی توجہ نہیں دی جارہی ہے۔ لیکن 1999سے جو بھی سرکار اقتدارمیں آئی ان کے ساتھ صرف استحصال کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت اب ملازمین کو ذہنی بیماریوں میں مبتلا کر رہی ہے اور اس کی تازہ مثال گزشتہ روز چرار شریف میں آزاد احمد متو کی موت کا واقعہ ہے،جو ڈیلی ویجر تھا اور تنائو کی وجہ سے اسکی حرکت قلب بند ہوئی۔