محرم الحرام1439

 سرینگر//تحریک حریت کی طرف سے حیدرپورہ میں امام حسینؓ کی شہادت کی مناسبت سے ایک سمینار منعقد ہوا۔سمینار کی صدارت حریت (گ)چیئرمین سید علی گیلانی نے کی جبکہ نظامت کے فرائض محمد رفیق اویسی نے انجام دئے۔ سید علی گیلانی نے اپنے خطاب میں کہا کہ امام حسینؓ نے دنیا بھر کے مظلومین کے لیے اپنے خون کا نذرانہ پیش کرکے یہ پیغام دیا ہے کہ اللہ کے بندوں کو انسانوں کی غلامی سے نجات دینے کے لیے جان کی قربانی پیش کرنے سے بھی گریز نہیں کرنا چاہئے۔ بزرگ رہنما نے اُمّت مسلمہ کے نوجوانوں سے دردمندانہ اپیل کی کہ وہ قرآن اور حدیث کی اصل روح کو سمجھ لیں۔ ریاست جموں کشمیر میں مسلم نوجوانوں سے بالخصوص مخاطب ہوکرگیلانی نے اُنہیں اُردو زبان سے پوری واقفیت رکھنے کی تلقین کرتے ہوئے کہا کہ برصغیر میں اسلامی لٹریچر کا ایک بڑا ذخیرہ اسی زبان میں موجود ہے۔نوجوانوں کو اپنی تہذیب، ثقافت اور تاریخ سے باخبر رہتے ہوئے دیگر زبانوں اور علوم سے بھی پوری طرح مستفید ہونے کیلئے اعلیٰ تعلیم حاصل کرلینی چاہئے۔گیلانی نے موضوع کی مناسبت سے کہا کہ امام حسینؓ نے ملوکیت کے خلاف مزاحمت اور خلافت کے قیام کیلئے کربلا کے تپتے ہوئے ریگستان میں اپنے گرم گرم لہو سے دین کی روح کو زندہ رکھنے کا عنوان رقم کرلیا ہے۔ امام حسینؓ نے غلامانہ زندگی کو قبول نہیں کیا ہے، وہ حق اور باطل سے بخوبی آشنا تھے۔ وہ برسرِ جنگ نہ تھے، البتہ اُن پر ایک جنگ مسلط کی گئی جس میں وہ اپنی شہادت سے سروخرو نکلے اور رہتی دنیا تک تمام مظلومین کے لیے ایک نمونہ صبروثبات اور طریقہ مزاحمت کو قائم کرنے کا نمونہ بن گئے ، جس میں کسی فاجر، ظالم اور جابر حکمرانوں کے سامنے زندگی کی بھیک مانگنے سے اجتناب اور جامِ شہادت نوش کرنا مردانِ حُر کا شیوہ قرار دیا۔میر واعظ عمر فاروق خانہ نظربندی کی وجہ سے سمینارمیں شرکت نہ کرسکے ،اسلئے اُن کا تحریری پیغام پڑھ کر سُنایا گیا۔ اسی طرح مشترکہ مزاحمتی قیادت کے ایک اور رہنما محمد یٰسین ملک کو بھی شرکت کرنے روکا گیا، جبکہ تحریک حریت جنرل سیکریٹری محمد اشرف صحرائی ناسازصحت کی بناءپر شرکت نہیں کرسکے۔ سمینار سے غازی معین الاسلام ندوی اور مولانا محمد الطاف حسین ندوی سمیت کئی مقررین نے بھی خطاب کیا۔سمینار میں حریت کانفرنس کی مجلس شوریٰ کے ارکان محمد یوسف میر، محمد یوسف نقاش، مولوی بشیر عرفانی، حکیم عبدالرشید، محمد یٰسین عطائی، سید امتیاز شاہ، سید محمد شفیع اور غلام احمد گلزار بھی موجود رہے۔ 
 

کربلا تاریخ اسلام کا زریں باب

یاسین ملک کی حسن آباد میں منعقد حسینی مجلس میں شرکت

سرینگر//لبریشن فرنٹ چیئرمین محمد یاسین ملک نے کہا ہے کہ حضرت امام حسینؑ اور انکے خانوادے کی لازوال قربانیاں تاریخ ِ اسلام کا وہ زریں باب ہے جس کی روشنی عالم انسانیت کو ظلم اور ظالم کے مقابلے میں ڈٹ جانے کا پیغام دیتی رہیں گی۔ محمد یاسین ملک نے حسن آباد رعناواری میں ایک مجلس حسینیؓ سے خطاب کررہے تھے۔ اس سے قبل یاسین ملک حسن آباد پہنچے جہاں انہوں نے حسینی مجلس میں شرکت کی جس میں ان کے ساتھ ساتھ ہزاروں عزادار بھی شریک تھے۔ اپنے خطاب میں یوم عاشورہ کو تاریخ عالم میں ایک اہم باب قرار د یتے ہوئے کہا کہ یہ دن ہمیں ازل سے تاابد جاری حق و باطل کے درمیان ستیزہ کاری کی یاد دلاتا ہے جس میں حتمی جیت بالآخر حق کی ہی ہوا کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ امام حسین رضی اللہ عنہ اور ان کے خانوادے نے میدان کربلا میں ظلم ، بھوک پیاس اور تھکان کی انتہا کے باوجود ظلم کے سامنے سرنگوں ہونے سے انکار کرکے جو تاریخ رقم کی ہے وہ تاروز قیامت انسانوں کےلئے مشعل راہ بنی رہے گی۔یاسین ملک نے کہا کہ خانوادہ¿ رسول کے سامنے دو راستے تھے جن میں سے ایک ظالم و جابر کی بالادستی قبول کرکے جان بچانے کا راستہ تھا اور دوسرا جان کی بازی لگاکر ظالم وجابر کے سامنے ڈٹ کر عالم انسانیت کو سرخرو کرنے کا تھا ۔ امام رضی اللہ عنہ نے جان کی بازی لگادینے کے راستے کا انتخاب کرلیا اور یوں اپنے سر دھڑ کی بازی لگاکر ایک ایسی لازوال تاریخ رقم کردی جس کی روشنی قیامت کے دن تک مظلوموں کی راہوں کو منور کرتی رہے گی۔انہوں نے کہا کہ کشمیرو فلسطین، برما اور دوسرے کئی مقامات پر رونماہورہے انسانی المیے بھی داستان کربلا کا ہی تسلسل ہیں جہاں ظالم طاقت کے نشے میں چور ہوکر مظلوموں اور مقہوروں پر چڑھائی کررہے ہیں اور انکی آزادی ،انکی زندگیوں اور املاک کو سلب کرنے میں منہمک ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آج بھی شمر اور ابن زیاد جیسے لوگ موجود ہیں جن کے سامنے مظلوموں کی آہیں کوئی معنی نہیں رکھتیں۔انہوں نے کہا کہ کربلا ہمیں بتاتا ہے کہ حق و ناحق کے اس معرکے میں حق ظاہری ہار کے بعد بھی فاتح ہوتا ہے اور ظلم و ظالم دنیوی فتح کے باوجود شکست پذیر ہوتے ہیں۔
 

قمرواری میں جلوسِ عزا

عمران انصاری کا کربلا کے شہداءکو خراجِ عقیدت

 سرینگر// وزیر برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی، تکنیکی تعلیم، امور نوجوان و کھیل کود مولوی عمران رضا انصاری نے قمر واری میں جلسے کے دوران شہداءکربلاؑ کو خراجِ عقیدت پیش کیا۔محرم الحرام کے ساتویں روز منعقدہ مجلس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر موصوف نے سانحہ کربلا کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ واقعہ کربلا نے انسانیت کو حق کے لئے کھڑا ہونے اور اپنی جان تک قربان کرنے کا درس دیا ہے کیونکہ حق کے لئے موت کو گلے لگانا باطل کے آگے جھکنے سے ہزار گنا بہتر ہے۔اس موقعہ پر وزیر نے کہا کہ ہمیں امام حُسین ؑ کی پُر وقار حیات اور تعلیمات پر عمل پیرا ہونا چاہئے جنہوں نے حق کی راہ میں اپنی جان تک قربان کی اور اپنے اقوال وعمال سے ایک مثال قائم کی۔مجلس تلاوت قران پاک سے شروع ہوئی جس کے بعد معروف ذاکرین نے مرثیہ پڑھے۔
 

نماز جمعہ امام باڑہ

 یاگی پورہ میں ادا کی جائے گی

سرینگر //انجمن شرعی شیعیان یونٹ ماگام کی طرف سے یہ اطلاع دی گئی ہے کہ حسب دستور انجمن کے زیر اہتمام نماز جمعہ امام باڑہ یاگی پورہ ماگام میں ادا کی جائے گی ۔اس حوالے سے کسی بھی تبدیلی کے متعلق فیصلہ انجمن شرعی شیعیان کے صدر آغا سید حسن کریںگے اور اس پر عوام کو پیشگی مطلع کیاجائے گا۔