محرم الحرام1439: حق پسندوں کیلئے ایک درخشندہ مثال

سرینگر// حریت (ع)،لبریشن فرنٹ، محازآزادی ،لبریشن فرنٹ ( آر ) اور تحریک کشمیر نے شہداءکربلا کو خراج عقیدت ادا کرتے ہوئے کہا کہ حضرت امام حسین ؓ نے باطل قوتوں کے سامنے جھکنے سے انکار کرکے تا قیام قیامت حق و صداقت کے علم کو بلند رکھ کر حق پسندوں کیلئے ایک درخشندہ مثال قائم فرما دی۔حریت (ع) چیئرمین اور متحدہ مجلس علماءکے امیر میرواعظ محمد عمر فاروق نے شہداءکر بلاخاص طور پر سیدنا امام حسین ؓ کی عظیم اور تاریخ ساز قربانیوں کوخراج عقیدت ادا کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسلامی عقائد ، تعلیمات اور بنیادی نظریات کے تحفظ کیلئے ۱۶ ہجری میں حضرت امام عالی مقامؓ نے اپنے جانثار رفقاءکے ہمراہ انتہائی مظلومیت اور بے کسی کی حالت میں جس سرفروشی اور قربانی کا مظاہرہ کیا وہ رہتی دنیا تک انسانیت کیلئے رہنمائی فراہم کرتی رہی گی۔ایک بیان میں میرواعظ نے کہا کہ حضرت امام حسین ؓ نے باطل قوتوں کے سامنے جھکنے سے انکار کرکے تا قیام قیامت حق و صداقت کے علم کو بلند رکھ کر حق پسندوں کیلئے ایک درخشندہ مثال قائم فرما دی۔انہوں نے کہاکہ شہداءکربلا کی بے مثال قربانیاں پوری ملت کیلئے نقش راہ کی حیثیت رکھتی ہیں کیونکہ حضرت امام عالی مقامؓ نے کربلا کے تپتے ریگستان میں شہادت پیش کرکے اسلام اور انسانیت کی نجات کا ایک روشن عنوان رقم کیا۔ میرواعظ نے کہا کہ حضرت امام عالی مقامؓ اور شہدائے کرب و بلا کو خراج عقیدت ادا کرنے کا بہترین طریقہ یہی ہے کہ ہم باطل افکار و نظریات اور وطن عزیز جموںوکشمیر میں سرکاری دہشت گردی، قتل وغارت اور ظلم و جبر کے سامنے جھکنے کے بجائے حق و صداقت کے پرچم کو ہر حال میں بلند رکھنے کیلئے اپنی مقدور بھر کوششوں میں تیزی لائیں اور جب بھی اور جہاں بھی باطل قوتیں سر اٹھائیں تو حق و صداقت کی سربلندی کیلئے حسینی پیروکار بن کر ان کے خلاف صف آرا ہو جائیں۔انہوں نے کہا کہ انسانیت سوز مظالم اور جبر و قہر کے استبدادی حربوں کے سامنے جھکنا ہرگز حسینیت نہیں ہے ۔ لہٰذا ہمیں اس مرحلے پر اپنی مبنی برحق جدوجہد حق خودارادیت کے نصب العین کو حاصل کرنے کیلئے اجتماعی طور پر آگے بڑھنے کی خاطر بھر پور استقامت اور یکسوئی کا مظاہرہ کرنے کی اشد ضرورت ہے اور تبھی جاکر ہم اپنی منزل کو حاصل کرسکتے ہیں۔ میرواعظ نے محرم الحرام کے مقدس ایام میں شہر سرینگر کے بیشتر علاقوں میں کرفیو، بندشوں اور قدغنوں کیخلاف شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ۸ محرم الحرام کے روایتی جلوسوں پر سرکاری سطح پر طاقت اور تشدد کے استعمال، عزاداروں کی مار پیٹ ، درجنوں افراد کو شدید زخمی کر دینے، سینکڑوں افراد کو گرفتار کرنے اور خانہ و تھانہ نظر بندی کی کارروائیوں کی پُر زور مذمت کرتے ہوئے کہا کہ کشمیرکو عملاً ایک پولیس سٹیٹ میں تبدیل کردیا گیا ہے اور پر امن دینی و مذہبی سرگرمیوں پر بھی پہرے بٹھا دیئے گئے ہیں جو حد درجہ افسوسناک ہے۔لبریشن فرنٹ نے کہا ہے کہ واقعہ کربلا ہمیں آزادی ،انسانیت،جرا¿ت وشجاعت کا درس دیتا ہے۔ فرنٹ قائدےن بسنت باغ گاﺅکدل میں ایک مجلس سے خطاب کرررہے تھے۔ موصولہ بیان کے مطابق فرنٹ چیئرمین محمد یاسین ملک بھی اس مجلس میںشرکت کرنے والے تھے لیکن انہیں گزشتہ روز ہی پولیس نے گرفتار کرکے سینٹرل جیل میں مقید کردیا ۔ابیان کے مطابق فرنٹ قائدین شےخ عبدلرشےد ، محمد جمال ،شیخ محمد افضل ، محمد حنیف،غلام محمد ڈار اور امتےاز احمد نے سنیچر کو بسنت باغ پہنچ کرمجلس حسینی ؓ میں شرکت کی۔ اس موقع پر اپنے خطاب میں فرنٹ قائدین نے کہا کہ مسلمانوںکے درمیان اتحاد واتفاق اور اخوت کو فروغ دینے کےلئے ہم نے ہمیشہ اپنی ذمہ داریاں نبھائی ہیں اور ہرحال میں نبھاتے رہےں گے۔ قائدےن نے کہا کہ جموں کشمیر میں جاری تحریک آزادی بھی کربلا کی جد وجہد کا تسلّسل ہے۔یہاں بھی مظلوم اور ظالم کے مابین ستیزہ کاری جاری ہے ۔فرنٹ قائدین نے کشمیری مسلمانوں پراپنی صفوں کو درست رکھنے پر زور دیا۔لبریشن فرنٹ ( آر ) کے محبوس چیئرمین فاروق احمد ڈار نے یوم شہادت امام حسین ؓ کی مناسبت سے تہاڑ جیل سے اپنے ایک پیغام میں شہداءکربلا کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے اسے تاریخ اسلام کا ایک روشن لیکن غمگین باب قرار دیتے ہوئے کہاکہ کربلا پوری مسلم دنیا کے لئے ایک نکتہ اتحاد ہے اوراُمت مسلمہ کو انتشار کے حوالے کرنے کے بجائے اسے ایک مقصد کو لے کر آگے بڑھنا ہوگا ۔ محازآزادی کے صدر سید الطاف اندرابی نے تنظیم کے ایک اجلاس میںعزاداروں کے ماتمی جلوس پر طاقت کا استعمال کرنے کی مذمت کی۔ اجلاس میں سرپرست تنظیم محمد اعظم انقلابی کی اس بات کو دہرایا کہ طاغوتی طاقتوں کو سرنگوں کرنے اور تکبر سے سے اکڑی گردنوں اور بگڑے ہوئے دماغوں کو درست کرنے کے لئے آج بھی مرد حر حسینی لشکر کی طرح قلیل تعداد میں آب وتاب سے حق وصداقت کے لئے بر سر پیکار ہیں۔ اجلاس میں محمد یوسف کلو، جہانگیر سلیم، محمد شفیع میر، محمد یوسف گلکار ،شفیق سوپوری اور فردوس ثاقب نے بھی شمولیت کی۔ تحرےک کشمےر کے صدر جنرل محمد موسیٰ نے حضرت حسینؓ کو خراج عقےدت ادا کرتے ہوئے کہا کہ حق ےہ نہےں کہ آپ اپنے حصہ کے حصول کے لئے جدو جہد کرےں بلکہ حق تو ےہ ہے کہ آپ بنی نوعِ انسانی کی فلاح ،بہبودی اور کامرانی کے لئے خود کو وقف کرےں۔