محبوبہ مفتی کے بیان پر کانگریس کا احتجاج

 سرینگر//حزبِ اختلاف کی جماعت کانگریس نے وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی کے بظاہر حریت رہنماؤں اور کارکنوں کی گرفتاری کے تناظر میں دیے گئے بیان پربی جے پی سے وضاحت طلب کرلی ہے۔ نئی دہلی میں  وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کے اس بیان پر کانگریس نے متنازع خطے کی بگڑتی صورتحال پر بی جے پی اور پی ڈی پی کی مخلوط حکومت کو بھی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ ’’وہ ہر سطح پر ناکام ہوچکے ہیں‘‘۔کانگریس کے ترجمان پون کھیرا کا کہنا تھا کہ’’بی جے پی کو بہت سے سوالوں کے جواب دینے ہیں، انہوں نے پی ڈی پی سے اتحاد کیا، اب وہ ان کے اتحادی اور ساتھی ہیں، بی جے پی بتائے اب اْس کی پوزیشن کیا ہے ۔ترجمان کے مطابق وادی میں کشیدگی کا ذمہ دار پاکستان ہے جبکہ سیاسی ناکامی بھی کشمیر میں جاری صورتحال کی اہم وجہ ہے۔دوسری جانب محبوبہ مفتی نے اپنے بیان میں مطالبہ کیا تھا کہ پا کستانی زیر انتظام کشمیر کے تمام راستوں کو دوبارہ کھولا جائے تاکہ قید کشمیری آزاد ہوسکیں۔انہوں نے خبردار کیا تھا کہ راستوں کی بندش سنگین صورتحال کا سبب بن سکتی ہے، ’’میرے والد کہتے ہیں کہ کشمیریوں کو پنجرے میں بند کرکے رکھا ہوا ہے، کشمیریوں کو آزاد کرو۔محبوبہ مفتی نے سفر اور تجارت کی حد کو وسعت دینے کی درخواست بھی کی اور مطالبہ کیا کہ تقسیمی سرحد کے آر پار طالب علموں، پیشہ ورانہ ماہرین اور دیگر کے گروپس کی آمد و رفت ہونی چاہیے تاکہ وہ ایک دوسرے کو بہتر انداز میں جان سکیں۔ان کا مزید کہنا تھا کہ وہ اوڑی مظفرآباد کا تجارتی راستہ بند نہیں کرنے دیں گی۔