متعدددیہات کو جوڑنے والا کنگوٹہ پل پانچ سالوں سے مرمت کا منتظر عوام متاثر ،پل کی مرمت، نئے بریج کی تعمیر کا منصوبہ پلان میں شامل: انتظامیہ

سمت بھارگو

راجوری//راجوری کے بدھل علاقے کی کیول ترون پنچایت میں تین مختلف گائوں بشمول کنگوٹہ کو جوڑنے والے کنگوٹہ پل کے نام سے ایک فٹ برج پچھلے پانچ سالوں سے مرمت کا منتظر ہے اور اس پر سے گزرتے ہوئے ہزاروں لوگوں کو اپنی جان خطرے میں ڈالنی پڑتی ہے۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ یہ پل کئی دہائیوں قبل تعمیر کیا گیا تھا اور یہ لوہے کا پل ہے لیکن اسے 2018 کے سیلاب میں بڑے پیمانے پر نقصان پہنچا تھا اور اُسکے بعداس اہم پل کی مرمت کا انتظام نہیں کیا گیا ۔ان کا کہنا تھا کہ یہ اہم پل کنگوٹا گاؤں سمیت مختلف علاقوں کو جوڑتا ہے اور روزانہ کی بنیاد پر طلباء سمیت بڑی تعداد میں لوگ اس پل پر سے گزرتے ہیں۔مقامی سرپنچ محمد فاروق انقلابی نے کہا کہ ’یہ ایک اہم پل ہے لیکن اس کی حالت انتہائی خراب ہے اور لوگوں کو اس پر سے گزرتے ہوئے اپنی جانیں خطرے میں ڈالنی پڑتی ہیں۔انہوں نے کہا کہ اس پل کی مرمت کا مطالبہ گزشتہ پانچ سالوں سے حکومت کے سامنے کیا جا رہا ہے لیکن کوئی کارروائی نہیں کی گئی اور اس اہم پل کی ضروری مرمت کا ابھی تک انتظار ہے۔کنگوٹا راجوری ضلع کے کوٹرنکہ سب ڈویژن میں بدھل کا ایک گاؤں ہے جو پہاڑی اور دشوار گزار علاقہ ہے اور اس علاقے میں رہنے والے لوگ سخت زندگی گزارتے ہیں اور علاقہ سڑک سے منسلک نہیں ہے جس سے لوگوں کی پریشانی میں مزید اضافہ ہوتا ہے۔علاقے کے سرپنچ نے راجوری میں حکومت کی جانب سے پیر کے روز منعقدہ عوامی کیمپ پر بھی انتظامیہ کے ساتھ معاملہ اٹھایا جس کی سربراہی محکمہ تعمیرات عامہ کے سکریٹری شیلندر کمار کر رہے تھے۔سرپنچ نے کہا کہ علاقے کے لوگوں سے پل کی مرمت کے کئی بار وعدے کئے گئے لیکن ابھی تک کوئی نتیجہ نہیں نکلا۔ڈپٹی کمشنر راجوری، وکاس کنڈل نے اس دوران بتایا کہ اس مسئلہ کو ترجیحی بنیادوں پر اٹھایا گیا ہے۔انہوں نے کہاکہ ’’ہم نے موجودہ پل کی مرمت کے ساتھ ساتھ ایک اضافی پل کی بھی منصوبہ بندی کی ہے۔