ماگام ہندوارہ میں بورویل خراب ہندوارہ کے ایک درجن سے زیادہ دیہات پینے کے پانی سے محروم

اشرف چراغ

کپوارہ// ماگام ہندوارہ کی وسیع آ بادی گزشتہ دو ہفتو ں سے پینے کے پانی سے محروم ہے جس کی وجہ سے علاقہ کے لوگو ں کو سخت مشکلات کا سامنا ہے ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ ماگام کے دانستان کے مقام پر کئی سال قبل ایک بور ویل کھوداگیا جس کے ذریعے ماگام کے 6سو گھرانوں کو پینے کا پانی فراہم کیا جاتا تھا ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ مذکورہ بور ویل گزشتہ دو ہفتو ں سے خراب ہو گیا ہے جس کی وجہ سے علاقہ ماگام میں پینے کے پانی کی سپلائی متاثر ہوئی ہے اور لوگ سردیو ں کے ان ایام میں پینے کے پانی کی ایک ایک وند کیلئے ترس رہے ہیں۔لوگو ں کا کہنا ہے کہ صورتحال کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ بورویل خراب ہونے کے بعد مقامی لوگو ں ٹریکٹرو ں سے خرید کر پانی حاصل کرتے ہیں لیکن ا سکے باجود بھی ان کی ضروریات پورا نہیں ہو پارہی ہیں ۔مقامی لوگو ں نے کہا کہ پینے کے پانی کی عدم دستیابی کی وجہ سے انہیں سخت مشکلات کا سامنا ہے ۔لوگو ں نے بتایا کہ بورویل کی خرابی کے حوالہ سے کئی بار متعلقہ محکمہ کی نو ٹس میں لایا لیکن ابھی تک بورویل کی مرمت کے لئے کچھ بھی نہیں کیا گیا ۔مقامی لوگو ں نے انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ ماگام علاقہ کو پینے کا پانی فراہم کرنے والا خراب شدہ بورویل کو فوری طور ٹھیک کیا جائے تاکہ لوگو ں کو پینے کے پانی کے حوالہ سے در در کی ٹھوکریں نہیں کھانے پڑیں گے ۔دریں اثناء ایگزیکٹیو انجینئر جل شکتی محکمہ ہندواڑہ نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ وہ بور ویل جس سے پورے ماگام کو پانی ملتا ہے سوکھ گیا ہے۔ انہوں نے مزید کہا’’ہم نے وہاں ایک اور بور ویل کھودا ہے لیکن پانی پینے کیلئے موزوں نہیں ہے۔ جب تک مسئلہ حل نہیں ہو جاتا، ہم انہیں ٹینکروں کے ذریعے پانی فراہم کرتے رہیں گے‘‘۔