لیفٹیننٹ گورنر کا ماہانہ ریڈیو پروگرام ’’ عوام کی آواز‘‘ | جموںوکشمیر روشن مستقبل کی راہ پر

نیوز ڈیسک
جموں//لیفٹیننٹ گورنر منوج سِنہا نے ماہانہ ریڈیو پروگرام ’’ عوام کی آواز ‘‘ میںلوگوں سے کہاکہ وہ اَپنا اہم کردار اَدا کریں اور ایک ترقی یافتہ اور خوشحال نئے جموںوکشمیر کی تعمیر کے لئے حکومت کی کوششوں کی تکمیل کریں۔اُنہوں نے کہا کہ ہم غریبوں ، پسماندہ اور معاشرے کے کمزور طبقات کی فلاح و بہبود کے لئے پُر عزم ہیں۔لیفٹیننٹ گورنر نے مزید کہا،’’ مختلف نئے اقدامات نے ایک عام آدمی کے خوابوں کو پورا کیا ہے۔ جموںوکشمیر ایک روشن مستقبل کی راہ پر گامزن ہے۔‘‘اُنہوں نے کہا کہ جموںوکشمیر یوٹی اِنتظامیہ نے تمام اَضلاع میں Geriatric and Palliative  کیئر سہولیات کو یقینی بنایا ہے۔ اُنہوں نے مزید کہا کہ اس کے علاوہ محکمہ سماجی بہبود کو مخصوص ہدایات جاری کی گئی ہیں تاکہ ہمارے بزرگ اولڈ ایج پنشن سکیموں اور دیگر فلاحی پروگراموں کے تحت فوائد حاصل کریں۔لیفٹیننٹ گورنر نے خواتین کی تہہ دل سے تعریف کی جنہوں نے اپنی بے لوث خدمات اور مضبوط قوت ارادی سے امن، خوشحالی اور سماجی تعاون کو آگے بڑھانے میں کامیابیاں حاصل کی ہیں۔لیفٹیننٹ گورنر نے خواتین کو بااِختیار بنانے کے لئے مسلسل کوششیں کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔ اُنہوں نے کہا کہ جموںوکشمیر یوٹی حکومت اَپنی پالیسی اِصلاحات اور ہینڈ ہولڈنگ سکیموں سے جموں و کشمیر میں خواتین کی سماجی، اقتصادی اور تعلیمی حالت میں تیزی سے نمایاں تبدیلیاں لائے گی۔اُنہوں نے مزید کہا کہ ہم ایک مساوی معاشرے کے قیام کے لئے پُرعزم ہیں جہاں ہر شہری کو جموں و کشمیر کی خوشحالی کے فوائد حاصل ہوں۔ لیفٹیننٹ گورنر نے یاد دِلایا کہ وزیر اعظم نریندر مودی کے گڈ گورننس اور جامع ترقی کے نظرئیے سے کام کرتے ہوئے گذشتہ ڈیڑھ برس میں روزگار کے مقامات اور لوگوں کی آمدنی میں اضافہ کرنے کے لئے بہت سے اقدامات کئے ہیں۔گذشتہ برس ہی کاریگروں کی مالی مدد اور ہنر مندی کی فراہمی کے لئے کار خانہ دار سکیم شروع کی گئی تھی جس نے دستکاری سے متعلقہ دیہی اور کاٹیج صنعتوں کو کافی حوصلہ دیا ہے ۔کھادی ولیج اِنڈسٹریز کمیشن کی طرف سے گذشتہ ایک برس میں 3,254 پروجیکٹوں کی مدد کی گئی جس سے 26,281 افراد کو براہ راست روزگار ملا۔ اسی طرح کھادی ولیج انڈسٹریز بورڈ نے ایک برس میں 8,500 مختلف پروجیکٹوں پر کام کیا تھا اور تقریباً 46,000 لوگوں کو 190 کروڑ روپے کی مالی امداد فراہم کرکے براہ راست فائدہ پہنچایا گیا ہے۔ اس کے علاوہ جموں اور کشمیرصوبوں کے ڈائریکٹوریٹ آف انڈسٹریز نے 6,299 پروجیکٹوں کو 131 کروڑ روپے کی مالی امداد دی ہے اور چھوٹے کاروبار سے وابستہ تقریباً 15,000 لوگوں کو براہ راست فائدہ پہنچا ہے۔لیفٹیننٹ گورنر نے کہا کہ صرف ایک سکیم کے تحت 386 کروڑ روپے کا فائدہ دے کر 88,170 لوگوں کے لئے فائدہ بخش ثابت ہوئی ہے۔ایس ایف یو آر ٹی آئی کے تحت دیہی اور کاٹیج صنعتوں کے کلسٹر قائم کرنے کی ہدایات پہلے ہی جاری کی جاچکی ہیں جس پر تیزی سے کام جاری ہے۔اُنہوں نے مزید کہا کہ اب تک جموںوکشمیر یوٹی میں 8 کلسٹر بنائے گئے ہیں۔لیفٹیننٹ گورنر نے سینٹر فار ڈ سٹرکٹ یوتھ ٹریننگ اینڈ امپاور منٹ ( ڈی وائی ٹی اِی۔ سی ) کو بلاک کی سطح تک لے جانے کا بھی ذکر کیا تاکہ طلباء کو اِمتحان کی تیاری ، ضروری کتابوں کی دستیابی ، اساتذہ ، کھیلوں اور جسمانی تربیت کی سہولیات فراہم کی جاسکیں تاکہ طلباء کو مزید سہولیات فراہم کی جاسکیں۔ اسی طرح تمام 4,290 پنچایتوں میں یوتھ کلب قائم کئے گئے ہیں۔لیفٹیننٹ گورنر یہ بھی مشاہدہ کیاکہ وزیر اعظم نریندر مودی اس ماہ پنچایتی راج ڈے کے موقعہ پر جموں وکشمیر آرہے ہیں تاکہ ملک بھر میں ’’ گرام سوراج‘‘ قائم کرنے کے مرکزی حکومت کے عزم کو بانٹ سکیں۔لیفٹیننٹ گورنر نے مزید کہا کہ مجھے اُمید ہے کہ اِس تاریخی موقعہ پر جموںوکشمیر کی تمام 4,290 پنچایتوں کے عوامی نمائندے اور ہر شہری خود اِنحصاری ، ترقی اور امن کے راستے پر چلنے کے اَپنے عزم کا اعادہ کریں گے۔