لکھیم پور کھیری تشدد

مہلوک کسانوں کو 45۔45 لاکھ روپئے کا معاوضہ اور سرکاری نوکری دینے کا اعلان

لکھیم پور// اترپردیش کے ضلع لکھیم پور کھیری کے تکونیا علاقے میں اتوار کو پیش آئے تشدد میں مارے گئے چار کسانوں کے اہل خانہ کو ریاستی حکومت 45۔45لاکھ روپئے کا معاوضہ اور ایک رکن کو سرکاری نوکری دے گی۔ علاوہ ازیں شدید طور سے زخمی 8 کسانوں کو 10-10 لاکھ روپئے کی مالی مدد دی جائے گی، ساتھ ہی پورے معاملے کی جوڈیشیل انکوائری کرائی جائے گی۔ کسان لیڈر راکیش ٹکیٹ اور حکومت کی جانب سے اڈیشنل ڈائرکٹر جنرل آف پولیس (نظم ونسق) پرشانت کمار اور دیگر اعلی افسران کے درمیان ہوئی بات چت میں یہ رضامندی ہوئی ہے کہ حکومت اس تشددمیں جاں بحق ہونے والے کسانوں کے اہل خانہ کو 45۔45لاکھ روپئے کا معاوضہ دے گی۔ اس کے ساتھ ہی مرنے والوں کے اہل خانہ کے ایک رکن کو سرکاری نوکری دی جائے گی۔  انہوں نے بتایا کہ تشدد کی وجوہات کی عدالتی جانچ کی جائے گی جسے الہ آباد ہائی کورٹ کے ریٹائرڈ یا موجود جج کریں گے۔ 
 
 

مرکزی وزیرکے بیٹے سمیت 14 افرادکے خلاف مقدمہ درج

لکھنؤ//یواین آئی// اترپردیش پولیس کے اسپیشل ٹاسک فورس(ایس ٹی ایف) نے لکھیم پور کھیری تشدد معاملے میں مرکزی وزیر اجئے مشرا کے بیٹے سمیت 14 افراد کے خلاف مقدمہ درج کیا ہے ۔ اتوار کو ہوئے اس تشدد میں چار کسانوں اور ایک میڈیا نمائندے سمیت نو افراد کی موت ہوگئی تھی۔اڈیشنل ڈائرکٹر جنرل آف پولیس(نظم ونسق)پرشانت کمار نے پیر کو ایس ٹی ایف کو جانچ کے لئے کہا ہے ۔ اس معاملے میں شامل تقریبا دودرجن افراد پولیس کے رڈار پر ہیں جن کی شناخت کا واقعہ کے وائرل ویڈیو سے کی گئی ہے ۔ اب تک پولیس نے چھ لوگوں کو حراست میں لیا ہے جبکہ دیگر کے جلد گرفتار کئے جانے کے امکانات ہیں۔ پولیس نے مرکزی مملکتی وزیر اجئے مشرا ٹینی کے بیٹے آشیش مشرا سمیت14افراد کے خلاف قتل، مجرمانہ سازش اور بلوہ سمیت کئی دفعات میں ایف آئی آر درج کی ہے ۔اتوار کو تین ایس یو او سے کچلنے سے چار کسانوں کی موت ہوگئی تھی۔ چشم دیدوں کے مطابق ان میں سے ایک ایس یو وی مرکزی وزیر اجئے مشر ٹینی کا بیٹا آشیش چلا رہا تھا۔ حالانکہ مسٹر مشر نے آشیش کی موجودگی کو سرے سے خارج کرتے ہوئے دعوی کیا کہ ان کے ڈرائیور کو پتھر لگا تھا جس سے اس کے ہاتھوں سے گاڑی بے قابو ہوگئی اور یہ واقعہ کا اصل وجہ بنا۔مشتعل بھیڑ نے ڈرائیور اور دیگر تین بی جے پی کارکنوں کاپیٹ پیٹ کر قتل کردیا تھا اور گاڑی کو آگے کے حوالے کردیا تھا۔تشدد کے بعد کشیدگی کے پیش نظر ضلع انتظامیہ نے انٹرنیٹ خدمات کو منسوخ کردیا تھا اور تعلیمی ادارے کو آج بند رکھنے کی ہدایت دی تھی۔ وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے واقعہ کی اعلی سطحی جانچ کا حکم دیا ہے ۔
 

پرینکا گاندھی حراست میں 

سیتا پور/ لکھیم پور کھیری// کانگریس کی جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی واڈرا اور دیگر پارٹی رہنماؤں کو سیتاپور میں رات بھر ہونے والے ڈرامے کے بعد پولیس نے بالاآخر حراست میں لے لیا۔ پولیس نے پرینکا گاندھی کو لکھنؤ سے لکھیم پور کھیری جانے والے کئی مقامات پر روکنے کی کوشش کی۔پولیس نے پرینکا گاندھی واڈرا کے ساتھ اترپردیش کانگریس کے صدر اجے کمار للو اور ایوان بالا راجیہ سبھا کے رکن دیپندرسنگھ ہڈا کو بھی حراست میں لے لیا۔