لکھیم پور تشدد

نئی دہلی//سپریم کورٹ نے مرکزی وزیر مملکت برائے داخلہ اجے مشرا اور لکھیم پور کھیری تشدد معاملے کے اہم ملزم آشیش مشرا کی الہ آباد ہائی کورٹ سے دی گئی ضمانت کو منسوخ کرنے کی درخواستوں پر پیر کو اپنا فیصلہ محفوظ کر لیا۔ چیف جسٹس این جسٹس وی رمنا اور جسٹس سوریہ کانت اور ہیما کوہلی کی بنچ نے فریقین کے دلائل سننے کے بعد فیصلہ محفوظ کر لیا۔اتر پردیش حکومت اور متوفی کسانوں کے اہل خانہ کے دلائل سننے کے بعد جسٹس رمنا نے کہا کہ ہم اس پر فیصلہ سنائیں گے ۔ریاستی حکومت کا موقف پیش کررہے وکیل مہیش جیٹھ ملانی نے بنچ کے سامنے دلیل دی کہ کیس سے متعلق گواہوں کو مکمل تحفظ فراہم کیا جا رہا ہے ، کسی کو کوئی خطرہ نہیں ہے ۔انہوں نے کہا کہ تشدد کیس میں عدالت عظمیٰ کی طرف سے قائم کردہ خصوصی تفتیشی ٹیم (ایس آئی ٹی) نے گواہوں پر خطرے کے خدشے کی وجہ سے آشیش کو ہائی کورٹ سے ملی ضمانت کے خلاف اپیل دائر کرنے کی سفارش کی تھی۔
 
 

لالو یادو کو سپریم کورٹ کا نوٹس

نئی دہلی// سپریم کورٹ نے بہار کے سابق وزیر اعلی اور راشٹریہ جنتا دل (آر جے ڈی) کے صدر لالو پرساد یادو کو چارہ گھوٹالہ کے دو معاملوں میں دی گئی ضمانت کو چیلنج کرنے والی جھارکھنڈ حکومت کی عرضی پر پیر کے ان سے جواب طلب کیا۔جسٹس ایل ناگیشور راؤ اور جسٹس بی آر گوائی کی بنچ نے نوٹس جاری کیا اور لالو یادو کو ضمانت دینے کے جھارکھنڈ ہائی کورٹ کے حکم کو چیلنج کرنے والی ریاستی حکومت کی درخواست پر جواب طلب کیا۔ یہ معاملہ ہائی کورٹ کے مورخہ 17 اپریل 2021 اور 9 اکتوبر 2020 کے احکامات سے متعلق ہے (دمکا اور چائی باسا ٹریژری کیسز سے متعلق)۔