لکھیم پوری کھیری تشدد | سپریم کورٹ کی یوپی حکومت کی سرزنش،باتوں کے بجائے کارروائی کرنے کی تلقین

نئی دہلی//یو این آئی// سپریم کورٹ نے لکھیم پور کھیری تشدد معاملے کی جانچ میں اترپردیش حکومت اور وہاں کی پولیس کے رویہ پر گہری ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے جمعہ کو کہا کہ صرف باتوں سے کام نہیں چلے گا، ملزمین کے خلاف فوری طورپر کارروائی کریں۔چیف جسٹس این وی رمن، جج سوریہ کانت اور جج ہیما کوہلی پر مشتمل بنچ نے تشدد میں چار کسانوں سمیت آٹھ لوگوں کے مارے جانے کے واقعہ کو ‘وحشیانہ قتل’ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس معاملہ کی مکمل حساسیت، سنجیدگی اور فوری طورپر جانچ کی جائے ۔اترپردیش حکومت کاموقف رکھتے ہوئے سینئر وکیل ہریش سالوے نے کہاکہ اس معاملہ میں ایک دودن کے اندر مکمل کارروائی کی جائے گی۔ اس معاملہ میں ملزم آشیش مشرا (مرکزی وزیر مملکت برائے داخلہ اجے مشرا) کو سمن جاری کرکے آج دوپہر گیارہ بجے پیش ہونے کے لئے کہا گیا ہے ۔اترپردیش حکومت کی اس دلیل پر ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے عدالت عظمی نے کہاکہ کیا دیگر ملزمین کے معاملہ میں بھی پولیس اسی طریقہ سے پیش آتی ہے ۔ عدالت نے کہاکہ اس طرح کی کارروائی کرکے آپ (حکومت) کیا پیغام دینا چاہتے ہیں۔ عدالت نے کہاکہ آٹھ لوگوں کو وحشیانہ طورپر قتل کیا گیا ہے ۔