لوک سبھا انتخابات 2024|| بی جے پی کے ممکنہ5امیدواروں کے پینل کو منظوری دی گئی اعلیٰ سطحی میٹنگ میں امیدواروں کے ناموں پر مشاورت کی گئی:چگھ

 عظمیٰ نیوز سروس

سرینگر//جموں و کشمیر بی جے پی نے کشمیر کی تین اہم نشستوں کیلئے امیدواروں کے پینل کو حتمی شکل دے دی ہے کیونکہ ممکنہ امیدواروں کی فہرست ہیڈ آفس کو بھیج دی گئی ہے جہاں پارٹی کا پارلیمانی امور کا پینل جلد ہی حتمی فیصلہ کرے گا۔ خبر رساں ایجنسی کشمیر نیوز آبزرور نے بتایا کہ بی جے پی نے وسطی کشمیر کی پارلیمانی نشست کے لیے درخشاں اندرابی، الطاف ٹھاکر، اشوک بٹ اور عارف راجہ کو شارٹ لسٹ کیا ہے جب کہ شمالی کشمیر کی نشست کے لیے تین ممکنہ امیدوار انور خان، سریندر امباردار اور فقیر محمد خان ہیں۔اننت ناگ-راجوری حلقہ کیلئے، بی جے پی صدر رویندر رینا نے خود لڑنے کی خواہش ظاہر کی ہے جبکہ نیشنل کانفرنس کے سابق ایم ایل سی شہاز گنائی، جو حال ہی میں بی جے پی میں شامل ہوئی ہیں، بھی پینل میں شامل ہیں۔ بی جے پی کے ایک ذریعہ نے کہا، اس بات کا پورا امکان ہے کہ شہناز گنائی کو اننت ناگ-راجوری حلقہ کے لیے ان کے والد کی میراث اور زبردست مداحوں کی وجہ سے پارٹی ٹکٹ دیا جائے گا۔جموں و کشمیر میں پارٹی قیادت نئی دہلی میں بی جے پی قیادت کے ساتھ مسلسل رابطے میں ہے۔ بی جے پی کے ایک سینئر لیڈر نے کہا، امیدواروں کی فہرست بی جے پی کے پارلیمانی پینل کو بھیج دی گئی ہے اور جلد ہی حتمی فیصلہ متوقع ہے تاکہ امیدواروں کو مہم چلانے کا وقت دیا جائے۔انہوں نے کہا کہ بی جے پی کو کشمیر میں تینوں سیٹیں جیتنے کا یقین ہے۔ لیڈر نے کہا کہ “نمایاں چہروں کی شمولیت نے پارٹی کو ایک نیا حوصلہ دیا ہے اور آنے والے دنوں میں پارٹی میں شامل ہونے کے لیے مزید بااثر مخالف افراد فہرست میں شامل ہیں۔”جموں میں دو سیٹوں کے لیے ناموں کو حتمی شکل دی جا رہی ہے اور جلد ہی نئی دہلی میں بی جے پی کے پارلیمانی امور کے پینل کو بھیجے جائیں گے۔ کٹھوعہ-ادھم پور لوک سبھا سیٹ کے لیے ڈاکٹر جتیندرا سنگھ کو سیٹ کے لیے دہرایا جانا طے ہے جب کہ جموں سیٹ کے لیے، موجودہ ایم پی جگل کشور کو تبدیل کرنے کا امکان ہے۔ بی جے پی ذرائع نے بتایا کہ سابق جموں و کشمیر اسمبلی اسپیکر کویندر گپتا اور دیویندر سنگھ رانا سیٹ کے لیے دو اہم دعویدار ہیں۔ادھربھارتیہ جنتاپارٹی کی ایک اعلیٰ سطحی میٹنگ جموں میں منعقد ہوئی جس میں آنے والے پارلیمانی انتخابات کے حوالے سے امیدواروں کے ناموں پر غور وغوض ہوا۔میٹنگ کے بعد قومی جنرل سیکریٹری ترون چگھ نے کہاکہ ماضی میں جموں وکشمیر کو ٹیررازم دارلخلافہ کے طورپر جانا جاتا تھا لیکن آج یہ ٹورازم دارلخلافہ کے طور پر ابھر کر سامنے آیا ہے۔انہوں نے کہاکہ تین خاندان عبداللہ ، مفتی ، گاندھی نہرو نے جموں وکشمیر کو تباہی کے دہانے پر پہنچایا۔ان کے مطابق ان کے دور میں یہاں نوجوانوں کا خون بہایا جارہا تھا ۔پانچ پارلیمانی نشستوں پر امیدواروں کے ناموںکے بارے میں پوچھے گئے سوال کے جواب میں جنرل سیکریٹری نے کہاکہ اس حوالے سے تبادلہ خیال ہو رہا ہے۔وزیر اعظم مودی کی سری نگر آمد کے بارے میں پوچھے گئے ایک اور سوال کے جواب میں بی جے پی لیڈر نے کہاکہ اس حوالے سے سرکاری طورپر جلد بیان سامنے آئے گا۔انہوں نے کہاکہ مودی کو اس وقت کشمیر سے لے کر کنیاکماری تک لوگوں کا آشیرواد حاصل ہے اور ملک کے لوگوں نے ٹھان لی ہے کہ مودی جی ہی تیسری مرتبہ وزیر اعظم بنیں گے۔