لنگیٹ میں بیشتر آبی ذخائر منجمد

کپوارہ//نگیٹ ہندوارہ میں آ بائی ذخائر منجمد ہونے کے نتیجے میں پینے کے پانی کی سپلائی بری طرح متاثر ہوئی ہے جبکہ اکثر مقامات پر پانی کی سپلائی کرنے والی پایپوں میں پانی جم جانے کے نتیجے میں درجنوں دیہات پینے کے پانی کی بوند بوند کے لئے ترس رہے ہیں۔لنگیٹ کے کرالہ گنڈ ،لالبگ ،اودھی پورہ ،گناہ پورہ ،لوکی پورہ ،چھتر وال ،ملہ باغ ،اجرو ،خانو با با گنڈ ،بٹہ گنڈ ،شانو ،تیرانہ اور شاٹھ گنڈ علاقوں کو ماور واٹر سپلائی سکیم کے تحت پینے کا پانی فراہم کیا جاتا ہے تاہم مقامی لوگو ں کا کہنا ہے کہ بھاری برف باری کی وجہ سے متعد مقامات پر پینے کا پانی سپلائی کر نی والی پایپوں کو نقصان پہنچ چکا جبکہ چلہ کلان کی سخت سردی کے پیش نظر پانی سپلائی کر نے والی پایپو ں میں جمع شدہ پانی جم گیا ہے اور ان پایپو ں سے پانی کی فراہمی رک گئی ہے جس کے نتیجے میں لوگ پینے کے پانی کی ایک ایک بوند کے لئے ترس رہے ہیں۔اس حوالہ سے ایگزیکٹیوانجینئر محکمہ صحت عامہ ہندوارہ ڈویژن نے بتا یا کہ چلہ کلان کی سخت سردیو ں کی وجہ سے پایپو ں میں پانی جم جانے سے پانی کی سپلائی متاثر ہوئی اور محکمہ کے عملہ نے متعدد مقامات پر ان پایپو ں کو ٹھیک کیا تاہم بھاری برف باری اور منفی درجہ حرارت کی وجہ سے پایپو ں کو نقصان پہنچ چکا ہے لیکن محکمہ ان پایپو ں کی مرمت کر کے جلدی لوگو ں کو پانی کی سپلائی فراہم کر نے کی کوشش میں ہے۔