لاک ڈاون فیصلہ میں توسیع کا خیر مقدم

سرینگر//پیپلزڈیموکریٹک فرنٹ کے چیئرمین حکیم یاسین نے کروناوائرس کی روکتھام کیلئے ملک میں جاری لاک ڈائون کی مدت میں توسیع کرنے کے وزیراعظم کے فیصلے کودرست قراردیتے ہوئے کہاکہ یہ عوام کے بہترین مفاد میں ہے۔ایک بیان میں حکیم یاسین نے کہا کہ دنیا بھر میں دیکھاگیا ہے کہ مہلک کوروناوائرس کی روکتھام کیلئے ابھی کوئی ویکسین تیار نہیں ہوا ہے اور فی الحال سماجی دوریاں اور لاک ڈائون ہی اس مہلک وباء کوروکنے کاواحد ہتھیار ہے۔انہوں نے لوگوں سے اپیل کی کہ وہ اپنے اور اپنے عزیزوں کی بقاء کیلئے کوروناوائرس کیخلاف جنگ میں حکومت کو اپنا بھرپور تعاون فراہم کریں ۔حکیم یاسین نے مختلف ریاستوں میں درماندہ جموں کشمیرکے سینکڑوں طلبہ،مزدوروں اورزائرین کاذکر کرتے ہوئے کہا کہ انہیں گھر واپس لانے کیلئے اقدام کئے جانے چاہیے ۔انہوں نے کہا کہ پردیس میں یہ لوگ بھوک مری کاشکار ہیں کیونکہ اُن کے پاس خرچ کرنے کیلئے سب کچھ نہیں بچاہے ۔
 
 

پسماندہ اور مفلوک الحال کی مدد کی جائے: عمر عبداللہ 

مرکز درماندہ شہریوں کی گھرواپسی یقینی بنائے: التجا مفتی 

یو این آئی

سرینگر// نیشنل کانفرنس کے نائب صدر و سابق وزیر اعلیٰ عمر عبداللہ اور پیلز ڈیموکریٹک پارٹی کی صدرمحبوبہ مفتی کی دخترالتجاء مفتی نے کورونا وائرس کے پیش نظرملک میں نافذ لاک ڈاؤن میں 3 مئی تک توسیع کو ضروری قدم قرار دیتے ہوئے کہا کہ ہمیں حکام کو تمام تر تعاون فراہم کرنا چاہئے تاکہ لاک ڈاؤن میں مزید توسیع نہ ہوجائے۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے کورنا وائرس کے بڑھتے ہوئے خطرات کے پیش نظر ملک گیر لاک ڈاؤن میں 3 مئی تک توسیع کی ہے۔عمر عبداللہ نے اپنے ایک ٹوئٹ میں کہا،’’لاک ڈاؤن میں 3 مئی تک توسیع ہم بالکل نہیں چاہتے ہیں لیکن کورونا وائرس کے خطرات کے پیش نظر یہ ضروری اقدام ہے۔ چلو ہم حکام کو تمام تر تعاون فراہم کرتے ہیں تاکہ لاک ڈاؤن میں مزید توسیع نہ کی جاسکے‘‘۔انہوں نے اپنے ایک اور ٹوئٹ میں کہا،’’ہماری ذمہ داری بنتی ہے کہ اس مشکل گھڑی میں سماج کے تمام پسماندہ اور مفلوک الحال لوگوں کو معاشی او دیگر طریقوں سے مدد کریں، حکومت کو آگے بڑھنا چاہئے لیکن یہ صرف ان کی ذمہ داری نہیں ہے‘‘۔دریں اثنا التجا مفتی نے لاک ڈاؤن میں توسیع کے بارے میں اپنے ایک ٹوئٹ میں کہا،’’لاک ڈاؤن میں توسیع ضروری ہے لیکن لاک ڈاؤن کے اچانک اعلان کئے جانے کے بعد سے ملک کے مختلف حصوں میں ہزاروں طلبا، مزدور اور دیگر لوگ پھنسے ہوئے ہیں، امید ہے کہ مرکزی حکومت ان لوگوں کی گھر واپسی کے لئے ضروری اقدام کرے گی خاص کر ان لوگوں کے لئے جنہوں نے قرنطینہ عرصہ بھی مکمل کیا ہو‘‘۔قابل ذکر ہے کہ جموں وکشمیر میں کورونا وائرس کے پیش نظر گذشتہ قریب چار ہفتوں سے مکمل لاک ڈاؤن جاری ہے۔ 
 
 

قوم کی اُمنگ کی بازگشت:درخشان اندرابی

 سرینگر// بھارتیہ جنتاپارٹی کی ترجمان اور وزارت اقلیتی امور کی وقف ڈیولپمنٹ کمیٹی کی چیئرپرسن ڈاکٹر درخشان اندرابی نے وزیراعظم نریندرمودی کی طرف سے ملک میں جاری لاک ڈائون میں3مئی تک توسیع کئے جانے کے فیصلے کاخیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ یہ فیصلہ مہلک کوروناوائرس  سے لڑنے کی قوم کی اُمنگ کی بازگشت ہے۔ڈاکٹر اندرابی نے کہا کہ ہم سب کو پہلے کی نسبت پابندیوں پر زیادہ سختی سے عمل کرنے کی ضرورت ہے کیونکہ اب یہ لڑائی ایک نازک مرحلے میں داخل ہوچکی ہے ،جوقوم کی تقدیر کافیصلہ کرے گی۔انہوں نے وزیراعظم کی طرف سے کی جانے والی سات اپیلوں کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ ہم سب کو ان اپیلوں کی سختی سے پیروی کرنے کی ضرورت ہے ۔انہوں نے لوگوں سے اپیل کی کہ وہ اروگیہ ایپ کوڈائون لوڈ کریں تاکہ وہ کوروناوائرس سے متعلق جانکاریوں سے باخبررہیں۔
 
 

لوگوں کے مفاد میں  کشمیرٹریڈ الائنس

سرینگر// کوروناوائرس کی عالمگیر وبا ء کی روکتھام کیلئے لاک ڈائون میں توسیع کا خیر مقدم کرتے ہوئے کشمیر ٹریڈ الائنس نے کہا کہ اس مہلک بیماری سے محفوظ رہنے کیلئے بندشوں میں توسیع لوگوں کے مفاد میں ہے۔جے کے این ایس کے مطابق حکومت کی طرف سے کرونا وائرس کی زنجیر کو توڑنے کیلئے جاری لاک ڈائون میں3مئی تک کی توسیع کا خیر مقدم کرتے ہوئے کشمیر ٹریڈ الائنس کے صدر اعجاز احمد شہدار نے کہا کہ فیصلہ لوگوں کے مفاد میں ہیں اور لوگوں کو بھی چاہے کہ وہ اپنے،اپنے اہل و عیال اور سماج کی حفاظت کیلئے اس طرح کے فیصلوں کو زمینی سطح پر عملائے،تاکہ کورونا وائرس کی زنجیر کو توڑا جاسکے۔اعجاز شہدار نے تاجروں اور لوگوں کو اس لاک ڈائون کو سخت بنانے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ اپنی زندگیوں کو تحفظ فراہم کرنے کیلئے اس طرح کے اقدامات اٹھانا ضروری ہے۔انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ وہ اس لاک ڈائون کے دوران مفلوک الحال لوگوں اور خط افلاس سے نیچے زندگی بسر کرنے والوں لوگوں کی بھر پور مدد کریں تاکہ وہ نان شبینہ کے محتاج نہ بنے۔ اعجاز احمد شہدار جو کہ کشمیر اکنامک الائنس کے نائب صدر بھی ہے،نے سماجی،فلاحی،مذہبی اور رضاکار انجمنوں سے بھی اپیل کی کہ اس نازک موڑ پر  مفلوک الحال کنبوں کی مدد کیلئے اپنا کام جاری رکھے۔ انہوں نے وادی سے تعلق رکھنے والے تجارتی طبقے بالخصوص چھوٹے تاجروں اور دکانداروں کے قرضوں کے سود کومعاف کرنے کا بھی مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ برس بھی نامساعد حالات کے نتیجے میں ان چھوٹے دکانداروں کو5ماہ تک سخت صورتحال کا سامنا کرنا پڑا۔