لاک ڈائون کا25واں دن

سرینگر// لاک ڈائون کے 25ویں روز بھی شہر سرینگر سمیت وادی بھر میں ہر طرح کا کاروبار اور ہر طرح کی سرگرمیاں مکمل بند ہیں، لوگ بدستور محصور ہیں اور شمال و جنوب میں نظام زندگی مکمل طور پر ٹھپ ہے۔سرینگر کا دیگر اضلاع کیساتھ زمینی رابطہ معطل ہے کیونکہ بین ضلعی ٹرانسپورٹ پر بھی پابندی عائد ہے جبکہ پولیس امتناعی  احکامات پرسختی کیساتھ عملدر آمدکر رہی ہے پائین اور سیول لائنز علاقوں میں ریڈ زون مقامات کی سخت ترین ناکہ بندی کر کے سیل کردیا گیا ہے۔ امتناعی احکامات کی خلاف ورزی کرنے والوں کیساتھ کوئی نرمی نہیں برتی جارہی ہے اور انکے خلاف کیس درج کرنے کا عمل بھی جاری ہے۔ شہر اور وادی کے دیگر قصبوں اور دیہات میںصرف پولیس کی گاڑیاں نظر آرہی ہیں۔ سرینگر شہر میں ہر سو خاموشی ہے، کہیں گاڑیوں کا شور نہیں نہ لوگوں کی آمد و رفت کی کوئی دور دور تک بھی چہل پہل دکھائی دیتی ہے۔پابندیوں کی وجہ سے دیہات اور قصبوں میں بھی ہو کا عالم ہے، پابندیوں کا اطلاق سخت کیا گیا ہے اور یہ صورتحال وادی کے ہر قصبہ اور ہر گائوں میں دکھائی دیتی ہے۔ بدھ کوشہر سرینگر کے سیول لائنز علاقوں میں صبح 9بجے تک سبزی ، دودھ اور میوہ فروشوں کو دکانیں کھولنے کی اجازت دی گئی۔لیکن 10بجے کے بعد یہ دکانیں بھی بند کردی گئیں۔دس بجے کے بعد سبزی یا میوہ فروش بھی نظر نہیں آرہے تھے۔ کسی بھی دکاندار کو دکان کھولنے کی اجازت نہیں گئی حتیٰ کہ گوشت مکمل طور پر نایاب ہوچکا ہے کیونکہ کسی بھی قصاب کو دکان کھولنے کی اجازت نہیں، سڑکوں پر جو بھی نانوائی کی دکانیں تھیں وہ سبھی بند پڑی ہیں ۔منگل کو سیول لائنز علاقوں میں نجی گاڑیوں کی آمد و رفت صبح دیکھی گئی، جو دو روز تک بہت کم رہی۔وادی کے دیگر قصبوں اور علاقوں میں مکمل طور پر سڑکوں کی تار بندی کر کے عام آمد و رفت بند کردیا گیا ہے۔

 

۔3مئی تک لاک ڈاون سختی سے عملایاجائے

مرکزی کابینہ سیکریٹری کی چیف سیکریٹریوں سے تلقین 

نیوز ڈیسک
 
جموں//مرکزی حکومت نے تمام ریاستوں اور مرکزی کے زیر اِنتظام علاقوں کی حکومتوں سے کہا کہ وزیر اعظم کے اعلان کے عین مطابق 3؍مئی 2020ء تک لاک ڈاون کی مکمل عمل آوری کو یقینی بنائیں تاکہ ملک میں کووِڈ ۔19 کے پھیلائو پر قابو پایا جاسکے ۔حکومت نے صورتحال کا جائزہ لینے کے بعد 20؍ اپریل کے بعد جُزوی راحت دینے کا فیصلہ لیا ہے۔اِس بات کا اِظہار کابینہ سیکرٹری راجیو گابا نے تمام ریاستوں اور یوٹیز کے چیف سیکرٹریوں اور پولیس سربراہوں کے ساتھ ایک ویڈیو کانفرنسنگ کے دوران کیا۔میٹنگ میں وزیر اعظم کے پرنسپل سیکرٹری ڈاکٹر پی کے مشرا ، سیکرٹری صحت پریتی سودن ، سیکرٹری داخلہ اجے کمار بھلہ اور متعلقہ وزارتوں کے سیکرٹریوں نے شرکت کی۔جموں وکشمیر کے چیف سیکرٹری بی وی آر سبھرامنیم ، پولیس سربراہ دِلباغ سنگھ ، فائنانشل کمشنر صحت اَتل ڈولو ، پرنسپل سیکرٹری داخلہ شالین کابرا ، پرنسپل سیکرٹری مکانات و شہری ترقی دھیرج گپتا ، پرنسپل سیکرٹری منصوبہ بندی روہت کنسل ، کمشنر سیکرٹری صنعت و حرفت منوج دِویدی اور سیکرٹری خوراک و امور صارفین نے ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے میٹنگ میں شرکت کی۔اَفسرا ن کے ساتھ تبادلہ خیال کرتے ہوئے کابینہ سیکرٹری نے کہاکہ ملک گیر لاک ڈاون کی مؤثر عمل آوری میں ہم سب کو اپنا رول ادا کرنا ہوگا۔اُنہوں نے چیف سیکرٹریوں کو ہدایت دی کہ وہ صورتحال پر کڑی نگاہ رکھیں۔کابینہ سیکرٹری نے ریاستوں اور یوٹیز کو ہدایت دی کہ وہ ریڈ زُونز میں وائر س کے پھیلائو کو روکنے کے لئے مناسب لائحہ عمل اپنائیں۔اُنہوں نے اِس سلسلے میں ڈپٹی کمشنروں اور فیلڈ اَفسروں کو ضروری ہدایات دینے کے لئے کہا تاکہ لاک ڈاون سے مطلوبہ نتائج حاصل کئے جاسکیں۔کابینہ سیکرٹری نے کہا کہ لوگوں کی مشکلات دُور کرنے کے لئے مرکزی حکومت نے اِضافی اقدامات اُٹھانے کا فیصلہ کیا ہے۔اُنہوںنے کہا کہ جامع رہنما خطوط جاری کئے گئے ہیں اور لاک ڈاون کی مؤثر عمل آوری کو یقینی بنایا  جائے گا۔دیہی اِقتصادیات کے بارے میں کابینہ سیکرٹری نے کہا کہ ریاستوں اور یوٹیز کی حکومتوں کو یہ بات یقینی بنانی ہوگی کہ دیہات میں محدود طریقے پر زرعی اور باغبانی سرگرمیاں جاری رہیں۔وزارتِ صحت نے بھی وائرس کے روکتھام کے لئے بامعنی اِقدامات کئے ہیں۔جموں وکشمیرکی صورتحال کے بارے میں کابینہ سیکرٹری کو جانکاری دیتے ہوئے چیف سیکرٹری بی وی آر سبھرامنیم نے کہا کہ جموںوکشمیر میں مرکزی حکومت کی ہدایات پر من و عن عمل جاری ہے ۔اُنہوں نے کہا کہ جموںوکشمیر کے مختلف اَضلاع میں تمام ریڈ زُونز نامزد کر کے اُن پر کڑی نگا ہ رکھی جارہی ہے۔ اُنہوں نے کہا کہ جموںوکشمیر میں کورونا وائرس کے پھیلائو کو روکنے کے لئے ہر طرح کے ضروری اِقدامات کئے جارہے ہیں۔