لاشوں کو مسخ کرنا غیر انسانی طرز عمل:مزاحمتی خیمہ

سرینگر // حریت (گ)چیئرمین سید علی گیلانی نے ترال جھڑپ میںجاں بحق ہوئے جنگجوئوں کوخراج عقیدت ادا کرتے ہوئے کہا ہے کہ’ ہمارے یہ سرفروش قوم کی آزادی کیلئے اپنے آج کو قربان کررہے ہیں‘۔ حریت رہنما نے کہا کہ بھارت کے حکمرانوں کی ضد اور ہٹ دھرمی والی پالیسی کی وجہ سے جموں کشمیر میں قیمتی انسانی زندگیاں بھینٹ چڑھ رہی ہیں۔ گیلانی نے اپنے اس موقف کو دہرایا کہ جموں کشمیر میں جو بھی تشدد اور خون خرابہ ہورہا ہے یہ بھارتی حکمرانوں کی ہٹ دھرمی اور غلط پالیسیوں کا ہی نتیجہ ہے جو مسئلہ کشمیر کو صرف بندوق اور ملٹری مائیٹ کے ذریعے سے حل کرانے پر بضد ہے اور کشمیر میں آج جس طرح کی بھی صورتحال درپیش ہے، اس کی ذمہ داری بھارت کے حکمرانوں پر عائد ہوتی ہے۔ تحریک حریت چیئرمین محمد اشرف صحرائی نے خراج عقیدت ادا کرتے ہوئے کہا کہ نعشوں کو مسخ کرنا اور کیمائی مادے سے جلانا غیر انسانی ،غیر اخلاقی اور غیر قانونی ہے۔ صحرائی نے جنگ کے اصول و ضوابط کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ میدان جنگ میں مارے جانے والوں کا احترام لازمی ہے لیکن بھارت کی فورسز سبھی قواعد و ضوابط کو بالائے طاق رکھ کر انسانی لاشوں کو مسخ کرنے سے پس و پیش نہیں کرتے بلکہ انتقامی جذبے کے تحت مرے ہوئے لوگوں کو نذر آتش کرتے ہیں یا صورتیں مسخ کرتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ کسی بھی شخص کی موت کے بعد دشمنی ختم ہوجاتی ہے اور دینا کے مسلمہ قواعدو ضوابط کے مطابق موت کے ساتھ ہی مخاصمت کاجذبہ بھی ختم ہوجاتا ہے ۔ صحرائی نے ترال میں پیش آئے اس غیر انسانی طرز عمل کی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ایک طرف انسانی لاشوں کو مسخ کیا جاتا ہے اور دوسری طرف رہائشی مکانات کو دھماکوں سے اڑایاجاتاہے اور اہل خانہ کی عمر بھر کی پونجی آناََ فاناََ خاک میں تبدیل کی جاتی ہے ۔انہوں نے کہا کہ زمین کے کسی بھی خطے میں مسائل کو تشدد یا دھونس دبائو سے نہیںبلکہ بات چیت اور افہام و تفہیم سے حل کرنے کی سعی کی جاتی ہے لیکن جموں کشمیر کے دیرینہ مسئلہ کے حوالے سے بھارت صرف ملٹری مائٹ پر انحصار کرتاہے ۔صحرائی نے حالیہ ایام میں تحریک حریت سے وابستہ ذمہ داروں اور کارکنان بلال احمد میر ، شکیل احمد بٹ ، محمد مقبول گنائی ،غلام رسول کار، غلام محمد مسگر،عبدا لحمید ماگرے ،منظور احمد گنائی ،محمد یوسف گنائی (گاندربل) جہانگیر احمد آہنگر،شوکت احمد ڈار( حاجن ) ، عبدالاحدبٹ کی گرفتاری کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اُن کی گرفتاری کو غیر ضروری طول دیا جارہا ہے ۔انہوں نے تمام سیاسی نظر بندوں کی فوری رہائی پر زور دیا ۔مسلم لیگ کے جنرل سیکریٹری محمد رفیق گنائی نے خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان سرفروشوں نے دنیاوی عیش و عشرت کو پائے حقارت سے ٹھکرا کر جس طرح قوم کی سربلندی و افتخار کے لئے عظیمت کاراستہ اختیار کیا وہ باعث فخر ہے۔انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کی قراردادوں میں ہی تنازعہ کشمیر کا پائیدار اور مستقل حل مضمر ہے۔ پیروان ولایت نے ترال جھڑپ میں جاں بحق ہوئے جنگجوئوں کوخراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ قوم کے ان بہادر جوانوں کی قربانیوں کو کسی بھی صورت میں فراموش نہیں کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر کی تحریک آزادی کو دبانے کیلئے بھارت مختلف مذموم حربے اور ہتھکنڈے آزمارہا ہے۔انہوں نے انسانی حقوق کی عالمی تنظیموں سے مطالبہ کیا کہ وہ کشمیر میں جاری زیادتیوںپر روک لگانے کیلئے مثبت کردار اداکریں ۔اسلامی تنظیم آزادی نے خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ حقِ خودارادیت کی جدوجہد تب تک جاری وساری رہے گی جب تک ہم اپنا بنیادی اور پیدائشی حق حاصل نہیںکریں گے۔