قرآن کی تعلیمات کو اپنالیں تو انسانیت کی کایاپلٹ ہوسکتی ہے ۔مولانا اصغر امام مہدی سلفی

نئی دہلی،30جولائی(یو این آئی)اگرہم قرآن کی تعلیمات کوصحیح معنوں میں اپنالیں توانسانیت کی کایا پلٹ ہو سکتی ہے او رپوری انسانیت اس کی برکتوں سے مستفید ہوسکتی ہے ۔ گوکہ قرآن کریم کی تلاوت کرنا یااس کو حفظ کرلیناسعادت کی بات ہے مگر اس کو اپنی رگ وپے میں بسانے اور اس کی تعلیمات کے مطابق زندگی گزارنے ہی سے اس کا حق ادا ہوسکتاہے ۔ان خیالات کا اظہار مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے امیر مولانا اصغر علی امام مہدی سلفی نے اٹھارہویں آل انڈیا مسابقہ حفظ تجویدوتفسیر قرآن کریم کے اختتامی اجلاس سے خطاب میں کیا۔ انہوں نے کہا کہ قرآن اس کی انسانیت نواز تعلیمات اور امن وشانتی کے پیغام کو پوری انسانیت کے سامنے پیش کرنے کی ضرورت ہے ۔کیونکہ اس کا پیغام اورتعلیمات کسی خاص قوم ونسل یا خطہ ارضی کے باشندوں کے ساتھ مخصوص نہیں ہیں بلکہ پوری انسانیت کے لیے عام ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ مسلم قوم اگرقرآن کریم کی تعلیمات کی نشرواشاعت کا فرض منصبی کما حقہ ادا کردے اور اس کی عملی تفسیرلوگوں کے سامنے پیش کردے تواس خطئہ ارضی پر رہنے والے ہرفرد بشر ہی نہیں بلکہ ہرذی روح کی مشکلات دور اورکائنات کوامن وسکون حاصل ہوسکتاہے ۔مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے ناظم عمومی مولانا محمد ہارون سنابلی نے کہا کہ مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند یہ مسابقہ علماء اورعوام کے اندر حوصلہ وجذبہ پیدا کرنے کے لئے منعقد کرتی رہی ہے ۔انہوں نے قرآن کی روشنی میں زندگی سنوارنے کی اپیل کرتے ہوئے کہا کہ اس دورمیں جب لوگوں کے اندر مختلف قسم کی غلط فہمیاں پھیلی ہوئی ہیں اوردشمنان اسلام ماحول کو مزیدخراب کرنے کی کوشش کررہے ہیں ایسے میں قرآن کریم کا تعارف کرانے اور اس کی تعلیمات کو پھیلانے اوران کو اپنی زندگیوں میں نافذ کرنے کی شدیدضرورت ہے ۔شاہ ولی اللہ انسٹی ٹیوٹ کے صدرمولانا عطاء الرحمن قاسمی نے مسابقہ کے انعقاد پر مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ اس وقت روئے زمین پر قرآن ہی ایک ایسی کتاب ہے جو لفظی اورمعنوی اعتبار سے محفو ظ ہے ۔جماعت اسلامی ہند کے سیکریٹری مولانا رفیق احمد قاسمی نے کہا کہ حفاظ قرآن کی ذمہ داری ہے کہ وہ قرآن جاننے والوں کو نہ جاننے والوں او رنہ پڑھنے والوں کو سکھائیں۔انہوں نے قرآن کی عملی تفسیر کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ قرآن سے وابستہ نہ ہونے کی وجہ سے آج ہماری کوئی وقعت نہیں ہے ۔دہلی اقلیتی کمیشن کے چے ئرمین ڈاکٹر ظفرالاسلام نے کہا کہ قرآن پر عمل کرنے والے دنیا میں ممتاز انسان ہیں۔ انہوں نے کہا کہ قرآن کے حفظ کے ساتھ ہی ساتھ اس پر عمل کرنا اورکرانا سب سے بڑا مقصد ہے تبھی قرآن کا حق ادا ہوگا۔ہمالیہ ڈرگس کے چے ئرمین سیدفاروق نے کہا کہ یہ قرآن کا امتیاز ہی ہے کہ جتنا قرآن کے حفظ کا رواج وچلن ہے اتنا دنیا کی کسی بھی کتاب کانہیں ہے ۔انہوں نے قرآن کے معجزات کا تذکرہ کرتے ہوئے سائنس کی بعض تحقیقات کا حوالہ بھی دیا۔انجمن منہاج رسول کے صدرسیداطہر حسین دہلوی نے کہا کہ اگر قرآن وسنت سے وابستگی رہے گی توآخرت میں کامیابی ضرورملے گی اوربھٹکنے کی صورت میں ناکامی ہی ناکامی ہے ۔دہلی حج کمیٹی کے ایگزیکیٹو اشفاق احمد عارفی نے اس طرح کے پروگرام کے انعقاد پر ہرطرح کے تعاون کی یقین دہانی کرائی۔مسلم مجلس مشاورت کے صدر نوید حامد نے کہا کہ اگرہم قرآن کے پیغام کوہرفرد تک پہنچانے کو اپنا مشن بنالیں توہم کبھی گمراہ نہیں ہوسکتے ۔مسابقہ میں امتیازی پوزیشن لانے والے سبھی چھ زمروں کے جملہ شرکاء کو تشجیعی نقدانعام، کتابوں کا تحفہ اورتوصیفی اسناد سے نوازاگیا۔ اس مسابقہ میں ہندوستان کے طول وعرض سے تقریباآٹھوسو طلبہ متعدد اداروں کی نمائندگی کرتے ہوئے شریک ہوئے ۔یواین آئی