قاضی یاسر اورحریت لیڈرسیفٹی ایکٹ کے تحت ہیرانگر جیل منتقل

اننت ناگ//پولیس نے جنوبی کشمیر کے سابق میرواعظ قاضی یاسر اورتحریک حریت کے تحصیل صدر عاشق حسین نارژورپر سیفٹی ایکٹ عائد کرکے اُنہیں جیل منتقل کیا ہے۔ انہیں پولیس نے گذشتہ مہینے گرفتار کیا تھا۔قاضی یاسر کو کئی ہفتے قبل گھر سے اُس وقت پولیس نے گرفتار کیا تھا جب انہوں نے ریڈونی کولگام میں نئے فوجی کیمپ ہٹانے کے لئے ایک پروگرام تشکیل دیا تھااورپولیس نے اُنہیں گرفتار کرلیا تھا اوراب سیفٹی ایکٹ کے تحت جیل منتقل کیا ہے ۔قاضی یاسر اُمت اسلامیہ کے سربراہ اور میر واعظ جنوبی کشمیر تھے تاہم گذشتہ ہفتے سوشل میڈیا پر اُن کی غیر اخلاقی تصاویر اور ویڈیو وائرل ہوئے تھے جس کے بعد موصوف کو تمام عہدوں سے برطرف کیا گیا۔ عاشق حسین نارژور تحریک حریت کے تحصیل صدر اننت ناگ ہیں اور وہ حال ہی میں رہا ہوئے تھے لیکن پولیس نے اُن کو ایک بار پھر گرفتار کرکے سیفٹی ایکٹ کے تحت ہیرا نگر جیل منتقل کیا ہے ۔ اُدھر قاضی گنڈ میں پولیس نے دوران شب تین نوجوانوں کو مبینہ سنگ بازی کے الزام کے تحت گرفتار کیا ہے ۔پولیس نے درین اور پانزتھ قاضی گنڈ سے محمد اقبال شیخ،فیاض احمد شیخ اور فاروق احمد شیخ افراد کو سنگ بازی کے الزام میں گرفتار کیا ہے ۔