قاضی گنڈ میں دوسرے روز بھی آپریشن

  قاضی گنڈ+کولگام//کنڈقاضی گنڈمیں فوجی آپریشن دوسرے بھی جاری رہا ہے ۔اس بیچ فوج نے حزب المجاہدین سے وابستہ دو جنگجوں کو اسلحہ سمیت گرفتار کیا ۔ادھر کولگام کے کئی علاقوں میں یاری پورہ کے مارے گئے جنگجو کی یاد میں تعزیتی ہڑتال کی گئی۔کنڈ قاضی گنڈ میںفوج نے علاقہ میں تلاشی کارروائی دوسرے روز بھی جاری رکھی۔فوج کو شبہ تھا کہ معرکہ آرائی میں بھاگے جنگجو گائوں میں ہی چھپے ہیں ۔فوج نے گائوں کا چپہ چپہ چھان مارا جبکہ نزدیکی جنگل میں بھی تلاشی کارروائی جاری رکھی گئی ۔بدھ کی صبح علاقے سے گولیاں چلنے کی اطلاع بھی موصول ہوئی۔تاہم یہ واضح نہیں ہوسکا کہ یہ دوطرفہ فائرنگ تھی یا فورسز نے وارننگ کے بطور گولیاں چلائیں۔فوج نے حزب المجاہدین سے وابستہ عاقب اقبال ساکن دمحال ہانجی پورہ کو زخمی حالت میں گرفتار کیا ۔جبکہ تنظیم سے وابستہ شمس الوقار ساکن گنجی پورہلارم کو ہتھیاروں سمیت ریلوے اسٹیشن قاضی گنڈ کے نزدیک حراست میں لیا ۔اس بیچ کنڈ کے مقامی لوگوں نے فوج پر مبینہ زیادتیوں کا الزام عائد کیا ہے ۔ان میںمارچ کے مہینے میں عسکری صفوں میں شامل ہونے والاایک جنگجو اُبھرتا ہواکرکٹر تھا اور اس کی ایک کرکٹ اسٹیڈیم میں اے کے رائفل کے ساتھ کھینچی گئی تصویر گزشتہ دنوں سوشل میڈیا پر وائر ل ہوئی تھی۔ وقار عرف ابو ثاقب نے مارچ2017 میں لشکر طیبہ میں شمولیت اختیار کی تھی اور جنگجو بننے میں سے پہلے وہ دلی پبلک اسکول سنگم میں زیر تعلیم تھا۔وہ ایک معروف اور اُبھرتا ہوا کرکٹر تھا اور اننت ناگ کے کرکٹ اسٹیڈیم میں اکثر اوقات کرکٹ کھیلا کرتا تھا۔ اسٹیڈیم میں اے کے رائفل کے ساتھ لی گئی وقار کی تصویر حال ہی میں سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تھی۔ پولیس ذرائع نے  بتایا کہ عاقب احمد ساکن رنگتھ نور آباد نامی جنگجو کو ایک طبی مرکز پر چھاپے کے دوران حراست میں لیا گیا جہاں وہ علاج کروارہا تھا۔بتایاجاتا ہے کہ مذکورہ جنگجو گزشتہ روز کنڈ علاقے میں فورسز کے ساتھ تصادم کے دوران زخمی ہوا تھا۔دریں اثناء یاری پورہ، کولگام، کیموہ، کھڈونی اور دیگر ملحقہ علاقوں میں بدھ کو یاری پورہ کے جنگجو کی یاد میں مکمل ہڑتال کی گئی۔اس دوران کاروباری و تجارتی ادارے بند رہے اور ٹریفک میں خلل پڑا۔ادھر سرحدی ضلع کپوارہ کے زچلڈارہ ہندوارہ میں دو روز قبل پولیس کی گشتی پارٹی پر جنگجوئو ں کی جانب سے حملہ کے بعد ضلع کے دور دراز علاقوں میں فوج اور پولیس کو چوکنا کر دیا گیا ہے جبکہ کئی علاقوں میں جنگجوئو ں کی موجودگی کے پیش نظر کریک ڈائون اور گھر گھر تلاشیوں کا سلسلہ بھی جاری ہے ۔ لولاب وادی کے کئی علاقوں کے بعد فوج اور پولیس نے کانٹھ پورہ علاقہ کو محاصرے میں لیکر وہا ں دن بھر تلاشی کاروائی انجام دی ۔ فوج کی 28راشٹریہ رائفلز اور سپیشل آ پریشن گروپ لولاب نے کا نٹھ پورہ علاقہ کو بدھ کی صبح محاصرے میں لیا اور گھر گھر تلاشی کارروائی کی ۔